سیالکوٹ لاہور موٹر وے کو 30 مارچ کو عام ٹریفک کے لئے کھول دیا جائے گا

89

گجرات( رپورٹ :عامربیگ مرزا سے) سیالکوٹ لاہور موٹر وے کو 30 مارچ کو عام ٹریفک کے لئے کھول دیا جائے گا اور اس کا افتتاح ملک کے اعلیٰ ترین عہدیدار کریں گے۔ لگ بھگ 40 ارب روپے لاگت سے تعمیر اس موٹروے کی لمبائی 91.47 کلومیٹر ہے۔ یہ ہر طرف دو گلیوں پر مشتمل ہے جبکہ کالا شاہ کاکو ، مریدکے ، نارووال ، گوجرانوالہ ، ڈسکہ ، پسرور اور سمبڑیال میں کل 7 تبادلے ہیں۔ محمود بوٹی (رنگ روڈ) سے سیالکوٹ جانے کا سفر کا وقت ایک گھنٹہ ہوگا جس میں محمود بوٹی سے مریدکے تک کا 15 منٹ سفر کا وقت شامل ہے۔ ابھی تک لاہور سے سیالکوٹ جانے میں 3 گھنٹے سے زیادہ کا وقت لگتا ہے لیکن اس موٹر وے پر سفر کرنے والوں کے لئے لاکھوں ایندھن کی لاگت اور 2 گھنٹے سفر کے وقت کی بچت ہوگی جبکہ دونوں شہروں کے درمیان کاروبار میں بھی اضافہ ہوگا اور سیالکوٹ بین الاقوامی ہوائی اڈ Airport کی آمدنی بھی بڑھ جائے گی۔ مسافر لاہور ایئرپورٹ کے بجائے سیالکوٹ انٹرنیشنل ایئرپورٹ کو ترجیح دیں گے۔ ایف ڈبلیو او مقررہ وقت میں موٹر وے کو مکمل کرنے کے لئے دن رات کوشاں ہے۔ اس عظیم پروجیکٹ کی تکمیل کی وجہ سے ، سیالکوٹ کے 2.4 بلین امریکی ڈالر کے برآمد کنندگان ، صنعتکار اور شہری انتہائی خوش ہیں کیونکہ آخر یہ خواب حقیقت بن گیا ہے۔ اس وقت شہر سیالکوٹ کے ہنر مند لوگ اسپورٹس سامان ، سرجیکل آلات ، لیدر ملبوسات ، سواری گیئر ، پولو کے سازوسامان ، بیجز ، موٹر بائک لوازمات سمیت دیگر اشیاءکو برآمد کرکے دنیا بھر کی متعدد صنعتوں کی دیکھ بھال کر رہے ہیں۔نجی سیکٹر سے بنا سیالکوٹ انٹرنیشنل ایئرپورٹ ایک ہفتہ کے اندر اس وقت 58 کے قریب بین الاقوامی مقامات پر اڑ رہا ہے جبکہ 27 رمضان المبارک کو سیالکوٹ کی بزنس کمیونٹی ایئربس کی 3 گھریلو پروازیں شروع کررہی ہے جو پہلے مرحلے میں سیالکوٹ سے کراچی کے لئے چلائے گی – اسلام آباد۔ لاہور – پشاور۔ نجی شعبے میں 3 ایئر بس 200/320 کو لیز پر دینے کا کام شروع کردیا گیا ہے اور اس ایئر لائن کو ایئر سیال کا نام دیا جائے گا۔ ان ایئربس کا رنگ گولڈن + گرین ہوگا اور ہر ائیربس میں 180 مسافروں کے رہنے کی گنجائش ہے۔ بزنس کلاس نشستوں میں ، دوسری نشستیں بھی آرام سے ہوں گی۔ ایئربس کا اندرونی حصہ بھی شاندار ہے۔ نجی سیکٹر سے چلنے والی ایئر لائن کا باضابطہ افتتاح وزیر اعظم پاکستان جناب عمران خان کریں گے