adaria 29

مسئلہ کشمیر، بین الاقوامی برادری کی خاموشی معنی خیز………

مقبوضہ وادی کی صورتحال انتہائی ابتر ہوچکی ہے، بین الاقوامی میڈیا نے بھی مودی سرکار کے عزائم آشکارا کردئیے ۔ اس کے ظلم و ستم کا بھانڈا اس وقت پھوٹا جب پیلٹ گن کی فائرنگ سے ایک نہتہ کشمیری نوجوان جام شہادت کے رتبے پر فائز ہوا ۔ بھارت کچھ اور شور مچا رہا تھا لیکن بین الاقوامی میڈیا نے واضح بتایا کہ وہ بھارتی ظلم و ستم کی وجہ سے شہید ہوا اسی طرح وہاں پر ہر قسم کی بنیادی سہولیات ناپید ہوچکی ہیں ۔ وزیراعظم پاکستان نے بھی عالمی دنیا کے ضمیر کو جھنجوڑتے ہوئے کہاکہ مقبوضہ وادی کے مظالم پر دنیا کیوں خاموش ہے، جب مسلمانوں پر ظلم ہوتا ہے تو کیا اقوام عالم کی انسانیت مر جاتی ہے، مسلمانوں پر ظلم و ستم کے پہاڑ توڑے جاتے ہیں ، دنیا بھر میں بسنے والے 1;46;3 ارب مسلمانوں کو کیا پیغام دیا جارہا ہے ۔ عمران خان نے ٹویٹ میں کہا ہندو بالا دستی کے نظریے میں فاشسٹ مودی سرکار کے مقبوضہ کشمیر اور بھارت میں مسلمانوں کے قتل عام و نسل کشی کے مکروہ عزائم پوری دنیا کے سامنے آچکے ہیں ، انسانی حقوق سمیت تمام بین الاقوامی قوانین کی بھارت نے پامالی کی ہے، مقبوضہ وادی کے ہسپتالوں میں طبی سہولیات ختم ہوچکی ہیں ، بنیادی اشیائے ضروریہ کی شدید قلت ہے، مواصلات پر پابندی ہے، وادی کے کشمیریوں کی آواز کو دنیا تک پہنچنے میں رکاوٹیں پیدا کی جارہی ہیں ، انہیں اپنے خاندانوں سے کاٹ دیا گیا ہے، وزیراعظم کی یہ بات بالکل درست ہے کہ وہاں پر اتنی خوفناک اور دل ہلا دینے والی کہانیاں ہیں جن کو نامعلوم انسانی حقوق کی علمبردار تنظی میں اس طرح سن اور برداشت کررہی ہیں ۔ دنیا کے خاموش تماشائی بننے کی وجہ سے بھارت مودی کے اکھنڈ بھارت عزائم کو تقویت مل رہی ہے ۔ وقت تقاضا کررہا ہے کہ دنیا آگے بڑھے اور عملی طورپر اپنا کردارادا کرے لیکن ایسا ہوتا دکھائی نہیں دے رہا اسی وجہ سے وزیراعظم پاکستان نے بین الاقوامی برادری سے مطالبہ کیا ہے کہ مسئلہ کشمیر کے حوالے سے وہ اپنی خاموشی توڑے ورنہ مودی کا یہ اکھنڈ بھارت کا مبینہ عزم پوری دنیا کو ایک خطرناک جنگ میں جھونک دے گا اور پھر ہر طرف تباہی ہی تباہی ہوگی ۔ ادھروزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت ایف بی آر کا اجلاس ہوا ۔ اجلاس میں وزیراعظم نے کہاکہ ایف بی آر میں اصلاحات اور بدعنوانی کا خاتمہ اولین ترجیح ہے، عوام کے اعتماد کی بحالی سے ٹیکس نیٹ وسیع کرنے میں مدد ملے گی، ایف بی آر کی تمام ٹی میں کسی بھی شخصی ملاقات کی ریکارڈنگ یقینی بنائیں ۔ چیئرمین ایف بی آر شبر زیدی نے وزیراعظم کو ایک سالہ کارکردگی سے متعلق تفصیلی بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ رواں مالی سال اگست تک 1579 ارب روپے کا ریونیو اکٹھا کیا جا چکا ہے، جمع کیا جانے والا ریونیو پچھلے سال کے مقابلے میں 14;46;65فیصد زیادہ رہا ہے، رواں سال فائلرز کی تعداد میں 7 لاکھ 85ہزار سے زائد افراد کا اضافہ ہوا ہے، اندرونی محصولات میں بھی 28 فیصد اضافہ ہوا ہے ۔ ٹیکس سرٹیفکیٹ اجراء،ریٹرن اور آڈٹ مراحل کو کمپیوٹرائزڈ کیا جا رہا ہے، عوام الناس کی شکایت کے ازالے کےلئے آن لائن نظام کو بھی مزید موثر بنایا گیا ہے، اب تک زیر التواء دس ارب روپے کے ریفنڈز واپس کئے جا چکے ہیں جبکہ ریفنڈ کی مد میں 17 ارب روپے رواں ماہ کے آخر تک جاری کر دیئے جائیں گے،برآمدات آسان سکیم کے تحت برآمدی نظام کو بھی آسان بنایا جا رہا ہے ۔ دوسری جانب 6ستمبر کے حوالے سے اپنے پیغام میں وزیراعظم نے کہاکہ ہم بحیثیت قوم دشمن کی کسی بھی جارحیت کا مقابلہ کرنے کے لئے تیار ہیں ، میں دنیا کو خبردار کرتا ہوں کہ پاکستان جنگ نہیں چاہتا لیکن ہم سلامتی کو لاحق خطرات سے غافل نہیں رہ سکتے، ہ میں اپنے دلوں کو شہدا کی قربانیوں سے سرشار کرنا چاہیئے ،بھارتی حکومت مقبوضہ کشمیر میں ظلم و جبر کے پہاڑ توڑ رہی ہے اور کشمیریوں کے حقِ خودارادیت کو دبانے کے لئے ہر حربہ استعمال کیا جا رہا ہے، عالمی برادری مقبوضہ کشمیر میں ظلم بند کرانے کےلئے اپنا کردار ادا کرے ، کوئی شک نہیں کہ کشمیر پاکستان کی شہ رگ ہے اور اس کی حیثیت میں کوئی بھی تبدیلی پاکستان کی سالمیت کے لئے براہِ راست چیلنج ہے ، پاکستانی حکومت اور عوام اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق کشمیریوں کے حق خود ارادیت کی حمایت جاری رکھیں گے اور کشمیری بھائیوں کو کبھی تنہا نہیں چھوڑیں گے ۔ پاکستان کسی بھی جارحیت کا پوری قوت سے جواب دینے کے لئے تیار ہے اورعالمی برادری جنگ کے تباہ کن اثرات کی ذمہ دار ہوگی ۔ 6 ستمبر ہماری قومی تاریخ میں یکجہتی کی علامت ہے ۔ اس دن ہمارے بہادر سپوتوں نے بے مثال قربانیاں دیں اور افواج نے ثابت کیا کہ پاکستان کا دفاع ناقابلِ تسخیر ہے ۔ 1965 کی جنگ میں پاک فوج نے ثابت کیا کہ عددی برتری کوئی حیثیت نہیں رکھتی اور ;200;ج ہ میں پھر6 ستمبر جیسی صورت حال کا سامنا ہے کیوں کہ ہمارا دشمن لائن ;200;ف کنٹرول کی خلاف ورزیاں کر رہا ہے ۔ مجھے اپنی مسلح افواج کی صلاحیتوں پر پورا اعتماد ہے اور مسلح افواج دشمن کی جارحیت کا منہ توڑ جواب دینے کی بھرپور صلاحیت رکھتی ہیں اور ہماری افواج نے حال ہی میں اعلی پیشہ ورانہ مہارت کا ثبوت دیا ہے ۔ بھارتی حکومت مقبوضہ کشمیر میں ظلم و جبر کے پہاڑ توڑ رہی ہے اور کشمیریوں کے حقِ خودارادیت کو دبانے کےلئے ہر حربہ استعمال کیا جا رہا ہے، عالمی برادری مقبوضہ کشمیر میں ظلم بند کرانے کے لئے اپنا کردار ادا کرے ۔ کوئی شک نہیں کہ کشمیر پاکستان کی شہ رگ ہے اور اس کی حیثیت میں کوئی بھی تبدیلی پاکستان کی سالمیت کے لئے براہِ راست چیلنج ہے ۔ پاکستانی حکومت اور عوام اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق کشمیریوں کے حق خود ارادیت کی حمایت جاری رکھیں گے اور کشمیری بھائیوں کو کبھی تنہا نہیں چھوڑیں گے ۔ اپنے ایک اوربیان میں کہاکہ ;200;ج مودی حکومت کی قابض فورسزکامقبوضہ کشمیر کے محاصرے کا33واں روزہے ، بھارتی فورسز کشمیری مردوں ، خواتین اور بچوں کے ساتھ ظلم کررہی ہیں ، محاصرے کی ;200;ڑ میں کشمیریوں کو قتل و زخمی کیا جارہا ہے ، کشمیریوں کو پکڑ پکڑ کر بھارتی جیلوں میں پھینکا جارہا ہے،بھارتی فورسز نہتے کشمیریوں پر پیلٹ گنز کابے دریغ استعمال کررہی ہیں ۔ ادھرایمنسٹی انڈیا نے مقبوضہ کشمیر میں مواصلاتی رابطوں پر پابندی اور لاک ڈاءون کے ایمنسٹی انڈیاخاتمے کی مہم شروع کردی ۔ ایمنسٹی انٹرنیشنل انڈیا نے مقبوضہ کشمیر کے گورنر ستیاپال ملک کو خط لکھتے ہوئے ریاست سے پابندیاں ختم کرنے کا مطالبہ کیا ہے ۔

آرمی چیف سے سعودی اور اماراتی وزرائے خارجہ کی ملاقات

سعودی اور اماراتی وزرائے خارجہ نے چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ سے ملاقات کی اور اس ملاقات میں انہوں نے مسئلہ کشمیر کے حوالے سے پاکستان کی مکمل حمایت کی یقین دہانی کرائی ۔ انھوں نے بھارتی اقدامات کے بعد پیدا ہونے والی صورتحال کو حل کرنے کیلئے مکمل حمایت کی یقین دہانی کرائی ۔ ;200;رمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کوسعودی عرب اوریواے ای کے ساتھ سٹریٹجک اوربرادرانہ تعلقات پرفخرہے، سعودی اورامارتی وزرائے خارجہ نے خطے میں امن واستحکام کےلئے پاکستانی کوششوں کوسراہا،دونوں وزرائے خارجہ کی کشمیر کی صورتحال سے نمٹنے کےلئے تعاون کی یقین دہانی کرائی ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں