پاکستان

ملکی ترقی کیلئے سب کچھ پرائیویٹ سیکٹر کے حوالے کرناہوگا، وفاقی وزیر خزانہ

ملکی ترقی کیلئے سب کچھ پرائیویٹ سیکٹر کے حوالے کرناہوگا، وفاقی وزیر خزانہ

وفاقی وزیر خزانہ نے کہا ہے کہ ملکی ترقی کے لیے سب کچھ نجی شعبے کے حوالے کیا جائے۔ کمالیہ میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے محمد اورنگزیب نے کہا کہ کسانوں اور تاجروں سے ملاقاتیں کی ہیں، بجٹ پر بات کریں گے۔ کچھ اصولوں اور اصولوں پر بات ہوئی، میں انہیں دہرانا چاہوں گا۔ ٹیکس ٹو جی ڈی پی 9.5 فیصد ہے، یہ پائیدار نہیں ہے، میں بار بار کہتا ہوں کہ سکول، یونیورسٹی اور ہسپتال خیراتی اداروں سے چل سکتے ہیں، ملک صرف ٹیکسوں پر چلتے ہیں، آئیے ٹیکس ٹو جی ڈی پی کو 13.5 فیصد تک لے جائیں۔ وزیر خزانہ نے کہا کہ پورا نظام ٹیکسوں پر چلتا ہے، جی ڈی پی کا انحصار ٹیکس پر ہے، ہمیں ٹیکس چھوٹ کو بتدریج کم کرنا ہوگا، ٹیکس نیٹ بڑھانا ہے، دیگر شعبوں کو بھی ٹیکس نیٹ میں لانا ہے۔ رہے ہیںانہوں نے کہا کہ ٹیکس نہ دینے والوں کو اب ٹیکس دینا ہوگا، ایف بی آر کو بہتر کرنے کے لیے اقدامات کیے جارہے ہیں، ہمیں چیزوں میں توازن رکھنا ہوگا، اداروں کے خسارے کو کم کرنے کے لیے اقدامات کیے جارہے ہیں، جہاں بھی کرپشن ہوتی ہے۔ وہ بند ہو جائیں گے۔محمد اورنگزیب نے کہا کہ ملکی ترقی کے لیے سب کچھ نجی شعبے کے حوالے کرنا ہوگا۔ یہ درست ہے کہ حکومتی اخراجات میں کمی نہیں کی گئی۔ کر رہے ہیں تو راحت کیسے دیں؟انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کو جلد رپورٹ دیں گے کہ کن اداروں کو بند کرنا ہے، ملکی معیشت بہتری کی جانب گامزن ہے، نجی شعبہ ملکی ترقی میں اہم کردار ادا کر سکتا ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

güvenilir kumar siteleri