مودی حکومت مسلمانوں کے تحفظ میں ناکام

59

نئی دہلی میں کرفیو کے باوجود انتہاپسندوں کے مسلمانوں اور ان کی املاک پر حملے جاری ہیں ۔ مزید 10 مسلمان شہید ہوگئے ۔ خوف کے شکار مسلمان متاثرہ علاقے سے ہجرت کرنے پر مجبور ہیں ۔ دہلی میں جاری تشدد اور مسلمانوں پر حملے، ان کی عبادت گاہوں ، مکانات اور دکانوں پر حملوں کی اطلاعات بہت پریشان کن بات ہے ۔ کسی بھی ذمے دار حکومت کے سب سے اہم فراءض میں سے بلا امتیاز مذہب و ملت اپنے شہریوں کو تحفظ فراہم کرنا ہے ۔ ہم بھارتی حکومت پر زور دیتے ہیں کہ وہ مسلمانوں اور ان افراد کے تحفظ کےلئے سنجیدہ کوششیں کرے جنہیں ہجوم نشانہ بنا رہے ہیں ۔ پر امن مظاہرین کے خلاف تشدد کو کبھی برداشت نہیں کیا جائے گا ۔ بھارت کی انتہاپسند حکومت نے اقلیتوں کیلئے آواز اٹھانے کی پاداش میں ، بی جے پی لیڈروں پر مقدمہ کرنے کا حکم دینے والے دہلی ہائی کورٹ کے جج جسٹس ایس مورالی دھار کا تبادلہ ہریانہ کی عدالت میں کر دیا ہے ۔ وفاقی حکومت نے یہ حکم نامہ رات 11 بجے جاری کیا ۔ ہندو مسلم فسادات دہلی کے شمالی مشرقی علاقوں میں ہو رہے ہیں جہاں تین مساجد اور ان گنت دکانوں کو نذرآتش کیا گیا ہے ۔ پولیس ہندو انتہاپسندوں کے ساتھ مل کر مسلمانوں پر اندھا دھند فائرنگ کر رہی ہے اور آنسوگیس کا استعمال بھی کیا جا رہا ہے ۔ دلی میں جاری فسادات پر نریندر مودی نے لوگوں سے امن برقرار رکھنے کی اپیل کرتے ہوئے سارا الزام پاکستان کے سر تھوپ دیا ہے ۔ ان کا کہنا ہے کہ بھارت پرامن ملک ہے اور پاکستان یہاں کے امن کو سبو تاژ کرنے کےلئے شرارتیں کر رہا ہے ۔ ;39;امن اور یگانگت ہماری اقدار کا مرکزی نکتہ رہا ہے ۔ وہ اپنے دلی کے بہنوں اور بھائیوں کو امن اور بھائی چار برقرار رکھنے کی اپیل کرتے ہیں ۔ یہ اہم ہے کہ امن اور معمولات کو جلد از جلد بحال کیا جائے ۔ ;39; بھارت میں پڑھے لکھے اور سمجھدار طبقے نے ان فسادات کا ذمہ دار انتہا پسند مودی حکومت اور آر ایس ایس کے ساتھ ساتھ مقامی پولیس کو بھی ٹھہرایا جس پر بھارتی میڈیا نے انہیں پاکستانی ایجنٹ ہونے کا طعنہ دے دیا ۔ ابھی حال ہی میں مسلمانوں کے حق میں بولنے والی بالی ووڈ اداکارہ سوارا بھاسکر کو بھارتیوں نے دہلی میں ہونے والے فسادات کا ذمہ دار ٹھہرا دیا ۔ بھارتی اداکارہ سوارا بھاسکرنے مسلمانوں کے حق میں دو لفظ کیابول دیے ، وہ انتہا پسند میڈیا کے نشانے پر آگئیں ۔ نئی دہلی کے وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال کا کہنا ہے کہ فسادات کے دوران جن افراد کے گھروں کو نذر آتش کیا گیا، انہیں پچیس ہزار روپے فی کس امداد اور رہائش کیلئے نو عارضی کیمپس بنائے جائیں گے ۔ اس کے برعکس نئی دلی مسلم فسادات پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ آج ہم جوہری صلاحیت کی حامل 1 ارب سے زائد انسانوں پر مشتمل ریاست بھارت کو نازی ازم کی وارث آر ایس ایس کے ہاتھوں میں گرتا دیکھ رہے ہیں ۔ نفرت کی بنیاد پر نسل پرستانہ نظریات کا حامل گروہ جب بھی غالب آتا ہے، قتل و غارت گری اور خونریزی کے دروازے کھل جاتے ہیں ۔ انہوں نے پاکستانیوں کو خبردار کرتے ہوئے کہا کہ ملک کے اندر موجود اقلیتوں کی طرف کوئی بری نظر ڈالنے کی کوشش نہ کرے ۔ آگاہ رہو! پاکستان میں اگر کسی نے بھی غیر مسلم شہریوں پر ہاتھ اٹھانے کی کوشش کی یا کسی عبادت گاہ کی جانب بری نظر سے دیکھا تو نہایت سختی سے پیش آئیں گے ۔ انھوں نے یاد دلایا کہ گزشتہ برس اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے اپنے خطاب میں انھوں نے پیش گوئی کی تھی کہ ایک مرتبہ جن بوتل سے نکل آیا تو خونریزی میں شدت آئے گی ۔ کشمیر آغاز تھا ۔ آج ہندوستان میں مقیم بیس کروڑ مسلمان نشانے پر ہیں ۔ عالمی برادری کیلے کچھ کرنے کا بلاشبہ یہی وقت ہے ۔ ترک صدر رجب طیب اردگان نے بھارت میں مسلم کش فسادات کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ بھارت ایسا ملک بن چکا ہے جہاں پر مسلمانوں کا قتل عام کیا جارہا ہے ۔ بھارتی دارالحکومت نئی دہلی میں مسلم کش فسادات کے بعد سے حالات بدستور کشیدہ ہیں ۔ مسلم کش فسادات کے نتیجے میں اب تک ہلاکتوں کی تعداد 42 ہوگئی ہے جبکہ 350 سے زائد افراد زخمی ہیں ۔ متاثرہ علاقوں میں پولیس اور پیرا ملٹری فورسز کی بھاری نفری تعینات ہے ۔ اب تک فسادات میں ملوث چھے سو تیس سے زائد افراد کو گرفتار کیا جاچکا ہے ۔