Home » کالم » مودی کی بی جے پی خطرے میں

مودی کی بی جے پی خطرے میں

بھارت پاکستانی طیارہ گرانے کی خواہش میں بہت زیادہ جنونی ہو چکا ہے۔ بھارت نے افغانستان سے درخواست کی تھی کہ وہ کسی طرح پاکستان کا طیارہ گرادیں مگر ہمارے شاہینوں کی پھرتی اور چابکدستی دیکھ کر افغانستان نے انکار کر دیا۔ اب بھارت اپنی بہادری اور فتح کو ثابت کرنے کیلئے کئی ایسے اقدامات کر رہا ہے جو بھارت کی مزید تذلیل کا باعث بن رہے ہیں۔ محاورہ ہے کہ سانپ کا ڈرا ،رسی سے بھی ڈر جاتا ہے ۔ وہی حال آج کا بھارت کا ہورہا ہے۔ بھارت اپنے جہاز گنوانے کے بعد اب غباروں کو میزائلوں سے نشانہ بنا رہا ہے۔ پاکستان سے ہیپی برتھ ڈے کے چند غبارے فضا میں بلند ہو کر ہوا کے زور پر بھارتی سرزمین پہنچ گئے۔ جس پر بھارتی فضائیہ نے اسے پاکستانی جہاز سمجھ کر اپنے سخوئی 30 طیارے فضا میں بھیج دیئے اور ان طیاروں نے بھی ان غباروں کو پاکستانی جہاز سمجھ کر پہلے ان پر گولیاں برسائیں پھر ان پر میزائل داغ دیئے۔ بھارتی پائلٹوں کی مشاقی دیکھیئے کہ وہ چند گولیوں سے ان غباروں کو نشانہ نہ بنا سکے آخر کار لاکھوں ڈالر کا فضا سے فضا میں مارکرنیوالا میزائل ان غباروں پر داغ دیا جس سے غبارے پھٹ گئے۔ بھارتی فضائیہ ان غباروں کو پاکستانی جہاز سمجھ کر خوشی مناتی رہی اور حکومت کو بھی خبر کر دی کہ ہم نے پاکستانی جہاز مار گرایا ہے۔ لیکن بعد میں پتہ چلا کہ وہ پاکستانی جہاز نہیں بلکہ 25 روپے والے ہیپی برتھ ڈے کے غبارے تھے۔ پاک فضائیہ نے بھارت کی نیندیں حرام کرتے ہوئے ایک اور ملکی ساختہ میزائل کا کامیاب تجربہ کیا۔ میزائل کا تجربہ جے ایف 17تھنڈر کے ذریعے کیا گیا۔جے ایف17سے داغے گئے ملکی ساختہ میزائل نے 100فیصد درستگی کیساتھ ہدف کونشانہ بنایا۔ساختہ میزائل طویل فاصلے تک مارکرنے کی صلاحیت رکھتاہے۔جے ایف 17 تھنڈر سے ملکی ساختہ میزائل کا تجربہ عظیم سنگ میل ہے۔ قابل فخرسائنسدانوں ، انجینئرز کی شبانہ روز محنتوں اور صلاحیتوں کی وجہ سے یہ ہدف مکمل ہوا۔پاک فضائیہ کے جے ایف 17 تھنڈرز کو ملکی سطح پر تیار کیے جانے والے جدید میزائل سے لیس کردیا گیا۔ ملکی ساختہ میزائل کے شامل ہونے سے روشنی اور اندھیرے میں اہداف کو ٹھیک نشانہ بنانے کی صلاحیت بھی حاصل ہوگئی۔ میزائل کا ہدف کو درست طریقے سے نشانہ بنانا ماہرین کی صلاحیتوں کا منہ بولتا ثبوت ہے۔ پاکستان ایک امن پسند ملک ہے مگر اگر کسی دشمن ملک نے جارحیت مسلط کرنے کی کوشش بھی کی تو اسے بھرپور اور منہ توڑ جواب دیا جائے گا۔حالیہ فضائی جنگ میں بھارت کے دو طیارے تباہ ہوئے ایک مقبوضہ کشمیر میں گرا اور دوسرا آزاد کشمیر میں۔ اپنے ہاں گرنے والے طیارے کو بھارت نے ایف 16 بنا کر پیش کرتے ہوئے پروپیگنڈہ کیا کہ پاکستانی طیارہ کو ہم نے مار گرایا ہے۔ بھارتی فوجی حکام نے اس طیارے پر پاکستانی پرچم بھی بنا دیا مگر وہ بھول گئے کہ پاک طیاروں پر مکمل پاکستانی پرچم ہمیشہ الٹا اور مکمل پینٹ کیا جاتا ہے جبکہ تباہ شدہ جہاز پر پاک پرچم سیدھا بنا ہوا تھا۔ دوسری غلطی جو بھارتی فوجیوں نے کی وہ اس کا سیریل نمبر تھا جو وہ مٹانا بھول گئے۔ ساری دنیا جانتی ہے کہ بھارتی فضائیہ C کے سیریل نمبر استعمال کرتی ہے۔ تیسری بڑی غلطی جہاز کا انجن تھا ۔ ایف 16 فائٹر جیٹ ایک ڈوئل انجن ایئر کرافٹ ہے جبکہ مگ 21 سنگل انجن پر مشتمل طیارہ ہے۔ بہرحال ان غلطیوں کی وجہ سے بھارتی عوام اور پوری دنیا کو پتہ چل گیا کہ یہ ایف 16 نہیں بلکہ بھارتی مگ 21 کا ملبہ ہے۔ بھارت نے اپنی عوام کو بیوقوف بنانے کی بہت کوشش کی مگر اس کے عسکری ماہرین نے بھونڈے دعوے اور جھوٹ کی قلعی کھول کر رکھ دی۔ اسی وجہ سے عالمی سطح پر جگ ہنسائی کا باعث بن رہا ہے۔ ایک اور خبر بھی گردش کر رہی تھی کہ بھارت نے پاکستان کو بدنام کرنے اور اپنی عوام کو مطمئن کرنے کیلئے افغانستان سے ایف 16 جنگی طیارے کا سکریپ لاکر اسے پاکستانی ایف سولہ بنا کر پیش کرنے کی منصوبہ بندی کر لی ہے۔ ایم این ایس کے سربراہ راج ٹھاکرے نے پٹھان کوٹ اور پلوامہ حملوں کو الیکشن سے جوڑتے ہوئے کہا کہ انتخابات جیتنے کی کوشش میں ایک دو ماہ میں کوئی پلوامہ جیسا واقعہ ہو سکتا ہے اور مودی نیا حملہ کرا سکتے ہیں۔اب جب کہ الیکشن شیڈول آگیا ہے تو یہ حملہ بھی جلد ہونے کا امکان ہے۔بی جے پی کیلئے آئندہ انتخابات میں کامیابی حاصل کرنا ناممکن ہے کیونکہ بالا کوٹ حملہ اور اپنے دو جہاز تباہ کرانے کے بعد مودی سرکار کوہزیمت کا سامنا ہے۔مودی کے سر پر اب بھی جنگی جنون سوار ہے لہٰذا بھارت نے اسرائیل اور فرانس کیساتھ مل کر پاکستان پر پھر سے حملہ کرنے کی منصوبہ بندی شروع کردی ۔ اس سلسلے میں اسرائیلی، فرانسیسی اور بھارتی حکام کے درمیان کئی ملاقاتیں ہو چکی ہیں۔ممالک کے ردعمل اور تعلقات خراب ہونے کے ڈر سے مودی بظاہر اپنے دوست ممالک کے سامنے امن پسند بننے کی کوشش کر رہا ہے۔ اسرائیل کی ملٹری انٹیلی جنس کا پاکستان مخالف سرگرمیوں میں بھارت کا ساتھ دینے کا انکشاف ہوا ہے۔یوں بھی اسرائیل کی ملٹری انٹیلی جنس پاکستان کے خلاف بھارتی افواج کی جارحیت میں معاون کا کردار ادا کر رہی ہے اور ان کے انٹیلی جنس ایڈوائزر پاکستان کے خلاف کارروائیوں میں ایڈوائس اور آن گراؤنڈ سپورٹ فراہم کر رہے ہیں۔اس بات کا بھی انکشاف ہو اہے کہ اسرائیلی ملٹری انٹیلی جنس کا یونٹ 269 بھارتی ملٹری انٹیلی جنس افسران کو ٹریننگ بھی دیتا ہے۔اسرائیل پاکستان کے نیوکلئیر پروگرام کو نقصان پہنچانا چاہتا ہے اور بھارت اس کام کیلئے بہترین کور ہے۔ اسرائیلی ملٹری انٹیلی جنس کا یونٹ 1391 بھی بھارتی ملٹری انٹیلی جنس کی سپیشل ٹریننگ کرتا ہے جس کا فوکس مقبوضہ کشمیر کی جدوجہد آزادی اور پاکستان ہے۔ یہ بھی حقیقت ہے کہ بھارت اور اسرائیل مل کر پاکستان پر حملہ کرنا چاہتے تھے تاہم انٹیلی جنس اطلاعات کی بنیاد پر حملے کو ناکام بنا دیا گیا۔ بھارت کے دو ممکنہ حملے پیشگی اطلاع کی بنیاد پر ناکام بنائے گئے۔ دنیا کی اہم شخصیات پاکستان اور بھارت سے رابطے میں ہیں۔ پاکستان اور بھارت کے درمیان براہ راست رابطہ نہیں ہے تاہم دونوں ممالک کی سیکیورٹی ایجنسیز کا رابطہ برقرار ہے۔

*****

About Admin

Google Analytics Alternative