- الإعلانات -

وزارت انسانی حقوق نے ملک میں کوویڈ 19 کے صنفی اثر اور اس کے مضمرات کے بارے میں پالیسی پیپر تیار کر لیا ہے، ڈاکٹر شیریں مزاری

وفاقی وزیر برائے انسانی حقوق ڈاکٹر شیریں مزاری نے کہا ہے کہ وزارت انسانی حقوق نے ملک میں کوویڈ 19 کے صنفی اثر اور اس کے مضمرات کے بارے میں پالیسی پیپر تیار کر لیا ہے تاکہ خواتین کو زیادہ سے زیادہ تحفظ فراہم کیا جا سکے۔ اتوار کو جاری بیان کے مطابق یہ پالیسی پیپر یو این وومن اور این ایس سی ڈبلیو کے اشتراک سے تیار کیا گیا ہے۔ پیپر میں خواتین اور لڑکیوں کو کورونا وائرسے پیدا ہونے والے منفی اثرات پر ایک جامع تجزیہ فراہم کیا گیا ہے جس میں 6 اہم موضوعات تعلیم ، صحت ، افراد قوت کی شرکت ، وقت کا استعمال اور نقل و حرکت، مالی استحکام ، اور صنف پر مبنی تشدد شامل ہیں۔ اس حوالے سے ڈاکٹر شیریں مزاری نے کہا کہ اس پیپر کا مقصد ہے کہ عورتوں پر تشدد روکنا ہے کیونکہ لاک ڈاؤن کے دوران خواتین کو زیادہ خطرہ ہے اور انہیں مدد کے لئے فون کرنا بھی مشکل ہوسکتا ہے۔ وزیر انسانی حقوق نے کہا کہ اس بات کو یقینی بنایا ہے کہ وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لئے مخصوص پروٹوکول کے ساتھ ، ہماری ہیلپ لائن اور خواتین کے بحران سے متعلق پناہ گاہیں بحران کے دوران کام کرتی رہیں