- الإعلانات -

کرونا وائرس کے سبب نماز تراویح اور عید کی نماز۔۔۔مفتی اعظم سعودی عرب نے انتہائی پریشان کن بیان جاری کر دیا

"”عرب نیوز "” کے مطابق سعودی عرب کی وزارت اسلامی امور و دعوت و رہنمائی کی جانب سے بھیجے گئے سوالات کا جواب دیتے ہوئے مفتی اعظم شیخ عبدالعزیز بن عبداللہ آل شیخ نے کہا ہے کہ کورونا وائرس کی وبا جاری ر ہنے کی صورت میں احتیاطی تدبیر کے طور پر رمضان کے دوران تراویح اور عید کی نماز خطبے کے بغیر گھروں پر ادا کی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس کے انسداد کےلیے جاری حفاظتی اقدامات کی وجہ سے اس سال مساجد میں تراویح مشکل ہوگی لہذا سعودی شہری اور مقیم غیرملکی رمضان میں تراویح گھروں میں ادا کریں،رمضان میں تراویح سنت ہے، فرض نہیں،رسول کریم ﷺ رمضان میں تراویح گھر میں بھی پڑھا کرتے تھے۔ایک سوال کے جواب میں کہا کہ اگر کورونا بحران جاری رہا اور عید گاہوں یا مساجد میں عید کی نماز ادا کرنا ممکن نہ ہوا تو ایسی صورت میں سب لوگ خطبہ عید کے بغیر ہی گھروں میں نماز عید ادا کریں ۔سعودی مفتی اعظم شیخ عبدالعزیز بن عبداللہ آل شیخ نے صدقہ فطر کے حوالے سے ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے کہنا تھا کہ جس شہر میں جس وقت عید الفطر کا وقت ختم ہوجاتا ہو اس سے قبل ہی صدقہ فطر ادا کردیا جائے۔  یاد رہے کہ سعودی عرب میں جمعے کو کورونا وائرس کے 762 نئے کیسز سامنے آئے ہیں  جس کے بعد متاثرین کی کل تعداد سات ہزار 142 ہوگئی ہے جبکہ کورونا سے صحت یاب ہونے والے افراد کی تعداد ایک ہزار 49 اور چار مزید اموات کے بعد ہلاکتوں کی کل تعداد 87  ہوگئی ہے۔اعدادوشمار کے مطابق مکہ میں کورونا کے سب سے زیادہ نئے مریض سامنے آئے جن کی تعداد 325 ہے جبکہ مدینہ میں197، جدہ میں 142 اور ریاض میں 24 کیسز رپورٹ ہوئے ہیں۔