Home » کالم » کشمیریوں کے قتل عام کےلئے مودی حکومت کے نئے منصوبے
riaz-ahmed

کشمیریوں کے قتل عام کےلئے مودی حکومت کے نئے منصوبے

riaz-ahmed

کشمیر کے ہائی ہامہ اور منی گاہ کپواڑہ کے جنگلوں میں مجاہدین کو تلاش کرنے کیلئے پچھلے 17 دنوں سے جاری آپریشن کے دوران سات مرتبہ کشمیری مجاہدین بھارتی فورسز کو چکمہ دے کر فرار ہو چکے ہیں اگرچہ فورسز نے پورے جنگل کو محاصرے میں لے رکھا تھا تاہم ابھی تک عسکریت پسندوں کا سراغ نہیں لگا۔ لہذا وادی میں موجود فوجی افسران نے مرکزی وزارت داخلہ کو آگاہ کیا ہے کہ گھنے جنگلات میں موجود مجاہدین کو قابو کرنے کیلئے ڈرون ٹیکنالوجی اور ہتھیار بچ گیا ہے۔ فورسز اہلکاروں کو تحفظ فراہم کرنے اور جنگلوں میں موجود عسکریت پسندوں کو مار گرانے کیلئے ڈرون ٹیکنالوجی کا استعمال کرنے پر سنجیدگی کے ساتھ غور ہو رہا ہے اور اس سلسلے میں وادی میں تعینات فوج نے وزارت دفاع کو ہری جھنڈی دکھائی ہے اور اب شمالی کشمیر کے جنگلوں میں موجود مجاہدین کے خلاف بھارت ڈرون ٹیکنالوجی کے استعمال پر غور کر رہا ہے۔
بھارت نے مقبوضہ کشمیر میں تحریک آزادی کو کچلنے کے لئے اسرائیل سے جنگی ڈرون خریدنے کا فیصلہ کیا ہے۔ حکومت نے فضائیہ کی درخواست پر 10جدید ترین مسلح ڈرون ہیرون ٹی پی خریدنے کی منظوری دے دی ہے۔ان ڈرونز کو کنٹرول لائن اور ورکنگ باو¿نڈری پر مامور کیا جائے گا۔منصوبے پر 400ملین ڈالر لاگت آئے گی۔2004ءمیں اسرائیل کے ایرو سپیس انڈسٹریز میں تیار کیاجانے والا یہ ڈرون 250 کلو گرام تک وزن اٹھانے اور 370کلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے پرواز کی صلاحیت رکھتاہے۔
مسلح ڈرون ہیرون ٹی پی انتہائی بلندی سے بھی کامیابی سے اپنے ہدف کو نشانہ بناسکتاہے۔ بھارت نے کم بلند ی تک پرواز کرنے والے اسرائیل سے خریدے گئے ڈرون پہلے ہی چینی سرحداورکنٹرول لائن کی جاسوسی کیلئے تعینات کررکھے ہیں لیکن اب پاکستانی ڈرون کے شمالی وزیرستان میں کامیاب کارروائی کے بعد بھارتی حکومت نے بھی مقبوضہ جموں کشمیر میں مجاہدین کیخلاف مسلح ڈرون خریدنے کا فیصلہ کرلیاہے۔ بھارتی وزارت دفاع کے شعبہ پلاننگ کے آرمی آفیسر نے بتایاکہ یہ ڈرون مقبوضہ جموں کشمیر کے دشوار گزاری پہاڑی علاقوں میں مجاہدین کے خفیہ ٹھکانوں کو نشانہ بنانے کیلئے استعمال کیے جائیں گے۔
بھارتی سراغ رساں ادروں نے اس بات کا انکشاف کیا ہے کہ عسکری تنظیم لشکر طیبہ ریاست جموں و کشمیر میں مسافر برادر جہاز اغواہ کرنے کا منصوبہ ترتیب دے رہی ہے تاکہ وہ بدلے میں جیل جیلوں میں بند پڑے اپنے 20 ساتھیوں کو چھڑا سکے۔
ریاست جموں و کشمیر میں قندھار طرز پر جہاز اغواہ کرنے کے خفیہ اطلاعات کے پیش نظر ٹنل کے آر پار زمین سے فضا تک سیکورٹی کے سخت انتظامات کئے جا رہے ہیں جس کے تحت جموں اور سرینگر میں موجود طیران گاہوں کے ساتھ ساتھ سیول سکریٹریٹ، ریلوئے اسٹیشن، فلائی اوروں کے علاوہ اہم سرکاری تنصیبات پر بھی اضافی فورس کے دستوں کا گشت تیز کردیا گیا۔ سرینگر کے بین الاقوامی ہوائی اڈے کے ارد گرد فورسز کے گشت میں تیزی لائی گئی ہے۔جموں اور سرینگر میں موجود سول سیکرٹریٹ، فلائی اوور، پولیس ہیڈ کوارٹر اور دوسری پولیس عمارات اور شہر سرینگر کے تمام پولیس تھانوں کے اردگرد بھی حفاظتی سخت انتظامات سخت کردیئے گئے ہیں اور بینکروں کے اردگرد بھی چوکسی بڑھائی گئی ہے۔
بھارتی افواج نے کشمیر میں داخل ہوکر غاصبانہ قبضہ کرکے معصوم و مظلوم کشمیریوں پرظلم و بربریت کے پہاڑ توڑ ڈالے اور یہ سلسلہ تاحال جاری ہے۔ انتہا پسندانہ سوچ رکھنے والے نریندر مودی کے دور حکومت میں مسئلہ کشمیر کے حل کی جانب مثبت پیش رفت کی توقع رکھنا فضول ہے۔نریندر مودی ہندوستان کو تباہی کی طرف لے کر جارہا ہے۔ نریندر مودی کے نظریات دوسرے مذاہب کے لوگوں کا بھارت میں رہنا ناممکن بنانا ہے۔ وہ مسلمانوں کے خلاف نفرت کے جذبات کو ابھار کر ان کے قتل و غارت کیلئے حالات پیدا کرنا چاہتا ہے۔
مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی پامالی کو اس نے فروغ دیا ہے ہندوستان کی حکومت اور فوج کشمیریوں کے قتل عام میں مصروف ہے۔ لائن آف کنٹرول پر فائرنگ سے اس پار کشمیریوں کو نشانہ بنارہے ہیں تو ہندوستان کی اس پالیسی کو تبدیل کرانے کیلئے اور اس کے اصلی چہرے کو دنیا کے سامنے لانے کیلئے ضروری ہے کہ تمام کشمیری و پاکستانی کمیونٹی ملکر مظاہرہ کریں اور دنیا کو یہ پیغام دیں کہ جب تک بھارت کشمیریوں کی خواہشات کے مطابق مسئلہ کشمیر حل نہیں کرتا یہ پرامن جدوجہد جاری رہے گی۔

About Admin

Google Analytics Alternative