3,117

یکم جنوری 1990 کو پیدا ہونے والا مرد 29 جنوری 2064 کو مرے گا، سائنسدانوں نے انسان کی عمر کا پیمانہ بنالیا، آپ کی کتنی سانسیں باقی ہیں؟ جانئے

 زندگی اور موت اللہ کے ہاتھ میں ہے اور اس پر ہر مسلمان کا اتنا ہی یقین ہے جتنا سورج کے مشرق سے طلوع ہونے کا ، باقی مذاہب کے ماننے والے لوگ بھی اپنے حساب سے زندگی اور موت کا اختیار اللہ کے ہاتھ میں ہی سمجھتے ہیں لیکن سائنسدان انسانی زندگی کو بہتر بنانے کیلئے مختلف تجربات کرتے رہتے ہیں

سائنسدانوں نے ایسے ہی تجربے کی بنیاد پر ایک کیلکولیٹر تخلیق کیا ہے جس سے یہ اندازہ لگایا جاسکتا ہے کہ کسی بھی انسان کی موت کب واقع ہوگی۔ اس کیلکولیٹر کے اعداد و شمار کے ذریعے کسی کی زندگی اور موت کی حتمی رائے قائم نہیں کی جاسکتی ، یہ دنیا بھر میں لوگوں کی اوسط عمر کو مد نظر رکھ کر تخلیق کیا گیا ہے۔

ورلڈ  ڈیٹا لیب کے اس کیلکولیٹر کے مطابق یکم جنوری 1990 کو پاکستان میں پیدا ہونے والا مرد دنیا کے 49 فیصد لوگوں سے عمر میں بڑا ہے ،جبکہ وہ پاکستان کے 62 فیصد لوگوں سے بڑا ہے۔یعنی اس وقت دنیا میں مجموعی طور پر اس سے کم عمر کے 3 ارب 75 کروڑ 94 لاکھ34 ہزار لوگ ہیں جبکہ اس سے بڑی عمر کے 3 ارب 95 کروڑ 77 لاکھ 50 ہزار لوگ موجود ہیں

یکم جنوری 1990 کو پاکستان میں پیدا ہونے والے آدمی کی پاکستان میں رہتے ہوئے 29 جنوری 2064 کو موت واقع ہوسکتی ہے، اگر وہ شخص کسی ترقی یافتہ ملک کی طرف ہجرت کرجائے تو اس کی عمر میں 4 سال کا اضافہ ہوسکتا ہے اور اس کی موت یکم دسمبر 2068 کو واقع ہوگی۔

یہ کیلکولیٹر اوسط عمر کی بنیاد پر بنایا گیا ہے جس میں اوسط عمر کو مد نظر رکھا گیا ہے۔ پاکستان میں مردوں کی اوسط عمر ساڑھے 74 سال ہے جبکہ دنیا میں مردوں کی اوسط عمر 79.4 سال ہے۔ یعنی آپ اگر پاکستانی شہری ہیں تو آپ کی عمر کے 44.1 سال باقی ہیں اور اگر آپ کسی ترقی یافتہ ملک کے شہری ہیں تو آپ کی زندگی کی 49 بہاریں ابھی باقی ہیں۔
یہاں ہم ورلڈ پاپولیشن کے عمر جانچنے والے اس کیلکولیٹر کا لنک دے رہے ہیں جو آپ یہاں کلک کرکے کھول کر اپنی عمر کے حوالے سے تجربے کرسکتے ہیں۔ اس کیلکولیٹر میں آپ اپنی تاریخ پیدائش درج کرکے GO پر کلک کریں گے تو آپ عمر کا تخمینہ سامنے آجائے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں