- الإعلانات -

عقل کا استعمال

ایک مرتبہ کا ذکر ہے کہ ایک ملاح تھا، دریا کے کنارے اس کا خوبصورت سا مکان تھا۔ اس کے پاس ایک نہایت ذہین طوطا تھا
وہ نہ صرف خوبصورت تھا بلکہ لوگوں کو ان کی پریشانیوں کا حل بھی بتاتا تھا۔ اس کی شہرت دور دور تک پھیل گئی تھی۔ایک دل ملاح مچھلیاں پکڑ رہا تھا کہ اچانک اس کے جال میں ایک نہایت خوبصورت سنہری مچھلی آگئی،
fisherman-01.jpg

جب ملاح اسے کاٹنے لگا تو اچانک مچھلی بولنے لگی مجھے چھوڑ دو، مجھے چھوڑ دو۔ یوں عام انسان کی طرح مچھلی کو بات کرتے دیکھ کر ملاح حیران رہ گیا۔ ملاح چونکہ بنیادی طور پر رحم دل انسان تھا، اِس لیے اسے سنہری مچھلی پربہت رحم آیا اور اس نے پانی میں چھوڑ دیا، دیکھتے ہی دیکھتے مچھلی اچانک پری کی شکل میں تبدیل ہوگئی اور اس نے ملاح کاشکریہ ادا کیا اور اسے بتایا کہ مجھے ایک جن نے اپنے جادو کے زور سے سنہری مچھلی بنا دیا تھا اور کہا تھا کہ تیری قسمت ہے اگر کسی نے تجھے پکڑ لیا اور کاٹ کر کھا جائے یا چھوڑ دے، اچھا ہوا کہ میں ایک نیک انسان کے ہاتھ لگی۔ شاید کوئی اور ہوتا تو وہ مجھے کاٹ کر کھا جاتا، اگر میں زندگی میں تمھارے کسی کام آسکوں تو مجھے یاد کرلینا۔ میں تمھاری مدد کروں گی۔ یہ کہہ
کر وہ اڑ گئی۔
Baby-Angel-Wallpaper.gif