Home » 2018

Yearly Archives: 2018

احتساب عدالت نے فلیگ شپ ریفرنس کا تفصیلی فیصلہ جاری کردیا

 اسلام آباد: احتساب عدالت نے فلیگ شپ ریفرنس کا تفصیلی فیصلہ جاری کردیا جس میں نواز شریف کو بری کیا گیا ہے۔

احتساب عدالت اسلام آباد نے فلیگ شپ ریفرنس کا تفصیلی فیصلہ جاری کردیا ہے جو 80 سے زائد صفحات پر مشتمل ہے۔ احتساب عدالت کے جج ارشد ملک نے فیصلے میں کہا کہ قومی احتساب بیورو (نیب) نواز شریف کے خلاف فلیگ شپ ریفرنس میں جرم ثابت نہیں کرسکا اور نیب کی طرف سے پیش کی گئی دستاویزات نامکمل ہیں۔

رواں ماہ اسلام آباد کی احتساب عدالت کی جانب سے سابق وزیر اعظم میاں نواز شریف کو العزیزیہ اسٹیل ملز ریفرنس میں 7 سال قید اور جرمانے کی سزا سنا دی گئی جب کہ فلیگ شپ ریفرنس میں  بری کر دیا گیا ہے۔

اس سے قبل جولائی میں ایون فیلڈ ریفرنس میں نواز شریف کو 10، مریم نواز کو 7 جب کہ کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کو ایک سال قید کی سزا سنائی گئی تھی۔

پی ٹی آئی کا سندھ اسمبلی میں 89 اراکین اسمبلی کی حمایت کا دعویٰ

کراچی: پاکستان تحریک انصاف نے سندھ اسمبلی میں  89 اراکین اسمبلی کی حمایت کا دعویٰ کیا ہے۔

سندھ اسمبلی میں تحریک انصاف نے وزیراعلیٰ مراد علی شاہ کے خلاف تحریک عدم اعتماد لا نے کے لیے کوششیں تیز کردی ہیں جس کے لیے پی ٹی آئی نے 89 اراکین کی حمایت کا دعویٰ کیا ہے۔ ذرائع تحریک انصاف کے مطابق پیپلزپارٹی کے متعدد اراکین سندھ اسمبلی رابطے میں ہیں۔

سندھ اسمبلی میں پیپلزپارٹی کے اراکین  کی تعداد 99 ہے، تحریک انصاف کی 30، ایم کیو ایم کی 21، جی ڈی اے کی 14، تحریک لبیک کی 3 اور ایم ایم اے کی ایک نشست ہے۔

دوسری جانب وفاق کی طرح سندھ میں بھی ایم کیو ایم کے ووٹ اہمیت اختیار کرگئے ہیں، وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کے خلاف تحریک عدم اعتماد لانے کے لیے سندھ اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر فردوس شمیم نقوی نے ایم کیو ایم رہنماؤں سے ملاقات کی۔

ذرائع ایم کیو ایم پاکستان کا کہنا ہے کہ قیادت سے مشاورت کے بعد تحریک انصاف کی حمایت کا فیصلہ کیا جائے گا، جو سندھ اور شہری علاقوں کے مفاد میں ہوگا وہی فیصلہ کیا جائے گا۔

بلاول بھٹو کی گرفتاری سے ملک افراتفری کا شکار ہوجائے گا، خورشید شاہ

لاہور: رہنما پیپلزپارٹی خورشید شاہ کا کہنا ہے کہ بلاول بھٹو زرداری کی گرفتاری خطرناک کھیل ہوگا جس سے ملک افراتفری کا شکار ہوجائے گا۔

لاہور میں میڈیا سے گفتگو میں رہنما پیپلز پارٹی خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ بلاول بھٹو کی گرفتاری کے لیے دل اور گردہ چاہیے، ان کی گرفتاری خطرناک کھیل ہوگا جس سے  ملک افراتفری کا شکار ہو گا، بلاول کو گرفتار کرنا ممکن نہیں لیکن حکومت سے کچھ بعید بھی نہیں۔

خورشید شاہ نے کہا کہ سندھ میں گورنر راج لگانا ممکن نہیں، کیونکہ آئین اور قانون میں اس کی کوئی گنجائش نہیں، لیکن سویلین مارشل لاء کے ذریعے آئین ختم کر کے گورنر راج لگایا جا سکتا ہے، آئین ختم کرنے کی کوشش کامیاب نہیں ہوگی اور گورنر راج کا نفاذ ملک کے لیے بہتر نہیں ہوگا۔ ان کا کہنا تھا کہ آئین کو چھیڑا گیا تو پاکستان کی سالمیت کو خطرہ لاحق ہوگا، وفاق کو چھیڑنا خطرناک کھیل ہوگا جب کہ سندھ میں ان ہاؤس تبدیلی کی ضرورت نہیں، مفروضوں پر کیسز بنائے گئے۔

رہنما پیپلزپارٹی کا کہنا تھا کہ نظر آتا ہے جیسے سویلین مارشل لاء لگانے کی کوشش کی جارہی ہے، اس قسم کی سیاست سے ایک پارٹی کو مضبوط اور باقیوں کو کمزور کیا جا رہا ہے، حکمران سیاسی جماعتوں کو ایسے ختم کرنے میں کامیاب نہیں ہوں گے، اس کھیل کے اثرات کے ذمہ دار یہ لوگ ہوں گے، ایسے غیر قانونی اقدام سے یہ آئین اور قانون کے کٹہرے میں کھڑے ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان عوامی مینڈیٹ کے ذریعے اقتدار میں نہیں آئے، انہیں جیسے لایا گیا سب جانتے ہیں، عمران خان اپنی ناکامی چھپانے کے لیے اوچھے ہتھکنڈے اپنانے کی کوشش کر رہے ہیں، ملک میں بحران اور غیر یقینی صورتحال پیدا کر رہے ہیں۔

خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ عمران خان نے سیاستدانوں کی گرفتاری کے سوا کچھ نہیں کیا، سیاستدانوں سے جیلیں بھرنا پاکستان کے لیے اچھا نہیں ہے، عمران خان سے وہ کام کرائے جا رہے ہیں جو کوئی سیاستدان نہ کرتا۔ انہوں نے کہا کہ 40 سال ملک میں آمریت رہی، ان سے کوئی پوچھنے والا نہیں ہے، اسٹیبلشمنٹ کو سوچنا چاہیے کہ ملک کے ساتھ کیا ہو رہا ہے، آمروں نے 4 دریا بیچ دیے اور آج پانی کے مسائل کا سامنا ہے۔

جعلی بنک اکاؤنٹس کیس؛ آصف زرداری اور بلاول سپریم کورٹ میں پیش نہیں ہوں گے

اسلام آباد: آصف زرداری اور بلاول بھٹو زرداری جعلی بنک اکاؤنٹس کیس میں کل سپریم کورٹ میں پیش نہیں ہوں گے۔

جعلی بنک اکاؤنٹس کیس کی سماعت چیف جسٹس ثاقب نثار اور جسٹس اعجازالااحسن پر مشتمل بینچ کل کرے گا جس کے لیے سابق صدر آصف زرداری اور چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری کو نوٹس جاری کردیے گئے ہیں تاہم آصف زرداری ،بلاول بھٹو زرداری اور فریال تالپور کی جانب سے جواب ابھی تک جمع نہیں کروایا گیا ہے۔

پیپلز پارٹی کی جانب سے جے آئی ٹی رپورٹ کی سماعت کے موقع پر حکمت عملی تیار کرلی گئی ہے، ذرائع پیپلزپارٹی کے مطابق پیپلز پارٹی کے تمام اہم رہنما سماعت کے وقت وکلا کے ہمراہ سپریم کورٹ اسلام آباد میں ہوں گے تاہم آصف زرداری، بلاول بھٹو، فریال تالپور اور وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ سپریم کورٹ نہیں جائیں گے۔

لطیف کھوسہ کا کہنا تھا کہ عدالت نے آصف زرداری یا چیئر مین بلاول بھٹو کو طلب نہیں کیا، فاروق ایچ نائیک اور دیگر وکلا ہی عدالت جائیں گے اور جے آئی ٹی رپورٹ پر اپنا موقف پیش کریں گے۔

دوسری جانب مرتضی وہاب نے کہا کہ وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ عدالت جائیں گے نہ ان کے وکیل پیش ہوں گے، وزیراعلیٰ کو عدالت کی جانب سے کسی قسم کا کوئی نوٹس موصول نہیں ہوا ہے۔

وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ مستعفی ہوجائیں، فواد چوہدری

لاہور: وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ پر مستعفی ہونے کے لیے زور دیا ہے۔

تحریک انصاف کی قیادت نے وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ پر مستعفی ہونے کے لئے دباؤ بڑھانے کا فیصلہ کرلیا۔ اس سلسلے میں وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری کل پیر سے سندھ کا تین روزہ دورہ شروع کریں گے۔ فواد چوہدری کے سندھ میں اپنے اتحادیوں سے رابطے جاری ہیں اور ملاقاتیں طے پا گئی ہیں۔

وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے کہا کہ وہ کراچی، بدین، سکھر اور لاڑکانہ کا دورہ کریں گے جس کے دوران پیر پگاڑا، لیاقت جتوئی، ذوالفقار مرزا ، فہمیدہ مرزا، ایاز پلیجو اور دیگر رہنماؤں سے ملاقاتیں کریں گے۔

فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ دورہ سندھ میں اتحادیوں کے ساتھ مشاورت میں سندھ کے معاملات پر اتفاق رائے پیدا کروں گا، پیپلز پارٹی کسی اور کو وزیر اعلیٰ بنالے تو کوئی اعتراض نہیں ہوگا،  وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ جعلی اکاؤنٹس کیس اور منی لانڈرنگ کی تحقیقات کرنے والی جے آئی ٹی میں مرکزی ملزم ہیں اس لیے وہ مستعفی ہوجائیں۔

مقبوضہ وادی میں بھارتی بربریت جاری، 4 شہید

مقبوضہ کشمیر میں بھارت کی ریاستی دہشت گردی جاری ہے اورگزشتہ روز4کشمیری نوجوانوں کو شہید کردیا گیا۔کشمیری نوجوانوں کو ضلع پلوامہ کے علاقوں ہانجن پائین اور راج پورہ میں سرچ آپریشن اور محاصرے کے دوران شہید کیا گیا۔ بھارتی فورسز نے مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے پیلٹ گنز اور آنسو گیس کے شیل فائر کیے اورضلع بھرمیں انٹرنیٹ سروس بھی معطل کردی گئی۔کشمیررواں ماہ 22 دسمبر کو بھی قابض بھارتی فوج نے ضلع پلوامہ میں گھر گھر تلاشی کے دوران 6 کشمیری نوجوانوں کو شہید کردیا تھا۔یہ حقیقت ہے کہ جنوبی ایشیاء میں پائیدار امن اور اقتصادی ترقی مسئلہ کشمیر کے پر امن حل سے مشروط ہے۔ برصغیر میں امن کے قیام کو یقینی بنانے کیلئے مسئلہ کشمیر کا حل ناگزیر ہے اور اس سلسلے میں ہندوستان اور پاکستان کی حکومتوں کو باہمی طور پر ٹھوس پیش رفت کرنی ہوگی۔ دنیا میں دہشت گردی کے خاتمے کیلئے اقوام متحدہ بااثر کردار ادا کررہا ہے جبکہ غربت ، عالمی معیشت کی بہتری کے علاوہ عالمی منڈی میں ہو رہی تبدیلیوں کے حوالے سے بھی اقوام متحدہ اپنی تمام ترتوجہ ان مسائل کے حل کی جانب مرکوز کئے ہوئے ہے۔ دنیا میں ابھی بھی تنازعات موجود ہیں جس کے نتیجے میں تشدد برپا ہوتا ہے۔ برصغیر میں ہندوستان اور پاکستان کے درمیان کشیدگی اقوام متحدہ کیلئے باعث تشویش ہے لیکن دونوں ممالک کو عالمی امن کے مفاد کیلئے صبر و تحمل سے کام لینا ہوگا۔ مسئلہ کشمیر کے مسئلے کے حل کیلئے دونوں ممالک کو اپنی کوششیں تیز کرنی ہونگی اور باہمی طور پر ہی اگر وہ اس مسئلے کو حل کرنے میں کامیاب ہو گئے تو یہ عالمی امن کیلئے بھی نیک شگون ہوگا۔ اقوام متحدہ تنازعہ کشمیر کے حل کیلئے دونوں ممالک کو مدد دینے کیلئے ہمیشہ سے ہی تیار ہے اور اس سلسلے میں کئی بار پیش کش بھی کی گئی ہے۔ تاہم جب تک دونوں ممالک اس بات کیلئے آمادہ نہیں ہوتے اقوام متحدہ براہ راست مداخلت نہیں کر سکتا ہے۔ دونوں ممالک تنازعہ کشمیر کے حل کیلئے ٹھوس اور مثبت کوششیں کریں گے تاکہ برصغیر میں کشیدگی کا عنصر ہمیشہ کیلئے ختم ہو کر رہ جائیگا۔پاکستان کی خاتون سفیر نے اس ضمن میں اقوام متحدہ جنرل اسمبلی کے اجلاس میں تنازعہ کشمیر کو کشمیری عوام کی خواہشات کے عین مطابق اور اقوام متحدہ قراردادوں کی روشنی میں حل کرنے کی ضرورت پر زور دیا تھا۔ اس مسئلے کے پر امن حل کیلئے کشمیریوں کے ساتھ مشاورت کا عمل جاری رکھا جائے ۔ ملیحہ لودھی کا کہنا تھا کہ سلامتی کونسل کی قراردادوں میں یہ بات واضح طور پر درج ہے کہ کشمیر خطے کے لوگوں کو اپنے مستقبل کا تعین کرنے کیلئے اقوام متحدہ کی نگرانی میں آزدانہ اور غیر جانبدارانہ جمہوری عمل کے ذریعے رائے شماری کا حق دیا جائے گا۔تاہم انہوں نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا”ان قراردادوں کو پاکستان، بھارت اور بین الاقوامی برادری کی حمایت حاصل ہونے کے باوجود آج تک عملی جامہ نہیں پہنایا گیا”۔ملیحہ لودھی کا مزید کہنا تھا”کشمیریوں نے نسل در نسل ٹوٹے ہوئے وعدے اور مسلسل جبرو زیادتیاں دیکھی ہیں ، وہاں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کا سلسلہ بڑے پیمانے پر جاری ہے۔ حق خود ارادیت کی جدوجہد میں ایک لاکھ سے زیادہ لوگ مارے گئے ہیں ، کشمیری بچوں ،خواتین اور مردوں کو بدستور درپیش مصائب و مشکلات سے دوچار ہیں۔ پاکستان نے کشمیر سے متعلق سلامتی کونسل کی قراردادوں کی عدم عمل آوری کو قانون اور اخلاقیات کا مذاق قرار دیکر کہا ہے کہ کشمیری بچوں اور مردوزن کو درپیش مصائب عالمی برادری کا اجتماعی ضمیر جھنجوڑنے کیلئے کافی ہیں اور حق خودارادیت کی جدوجہد کو دہشت گردی کے ساتھ نہیں جوڑا جاسکتا۔ خود ارادیت کا حق کشمیری عوام کا بنیادی اور ناقابل تنسیخ حق ہے اور اس ضمن میں اقوام متحدہ سلامتی کونسل کی طرف سے منظور کی گئی قراردادوں کو فوری طور عملی جامہ پہنانے کی ضرورت ہے تاکہ کشمیری عوام کے ساتھ اس عالمی ادارے کی طرف سے کئے گئے وعدوں کو پورا کیا جاسکے۔حق خودارادیت کا استعمال جبر و زیادتی کے بغیر آزادانہ ماحول میں کیا جانا چاہئے۔ مثال کے طور پر غیر ملکی قبضے کی صورت میں ،اس بنیادی حق کی خاطرلوگوں کی جائز اور مبنی برحق جدوجہد کو اندھیرے میں یا ایک طرف رکھ کر جان بوجھ کر دہشت گردی کے ساتھ جوڑنے کی کوشش نہیں کی جانی چاہئے۔ جنوبی ایشیاء میں کئی دہائیوں پرانے جموں کشمیر کے مسئلے کو انہی بنیادی اور بین الاقوامی اصولوں کے تحت حل کرنے کی فوری ضرورت ہے ۔ جنوب ایشیائی خطے میں پائیدار قیام امن کیلئے تنازعہ کشمیر کو مزید تاخیر کے بغیر حل کرنا انتہائی ناگزیر ہے۔ دنیا کے امن کو لاحق خطرے سے بچانے کے لیے عالمی برداری بھارت پر دباؤ ڈال کر کشمیرکا مسئلہ کشمیری عوام کی امنگوں کے عین مطابق حل کرنے پر مجبور کرے۔بھارت کے مقبوضہ کشمیر میں المناک مظالم جو امن عالم کے حوالے سے عالمی برادری کے سامنے ایک سوالیہ نشان بنے ہوئے ہیں۔ مقبوضہ کشمیر کے مظلوم عوام کے حق خود ارادیت کے حوالے سے اقوامِ متحدہ کی منظور کردہ قرار داد مسلسل عدم توجہی کا شکار ہے ۔پاکستانی حکمرانوں کو چاہیے بھارت ،اقوام متحدہ اور عالمی برادری کو اس حقیقت سے آگاہ کروائے کہ مسئلہ کشمیر میں اقوام متحدہ کا کردار ثالث کا نہیں بلکہ عمل درآمد کرانے والے فریق کا ہے ۔ثالثی تو اس وقت کرائی جاتی ہے جب فیصلہ کرانا ہو فیصلہ تو ہو چکا کہ مسئلہ کشمیر کا حل رائے شماری ہے۔

‘ ہمیں 2018 میں فیس بک پر ہونے والی پشرفت پر فخر ہے’

فیس بک کے بانی مارک زکربرگ مہینوں سے پرائیویسی تنازعات کی بناءپر مختلف حلقوں کی تنقید کی زد میں ہیں ، مگر اب انہوں نے کہا ہے ‘ ہمیں 2018 میں فیس بک پر ہونے والی پشرفت پر فخر ہے’۔

خیال رہے کہ 2018 مارک زکربرگ اور فیس بک کے لیے سب سے مشکل سال ثابت ہوا ہے جس میں ایک کے بعد ایک تنازع کمپنی کے خلاف سامنے آتا رہا۔

اب مارک زکربرگ نے ایک فیس بک پوسٹ میں لکھا ‘ واضح رہے کہ تمام مسائل پر قابو پانا ایک سال کے چیلنج سے کہیں زیادہ بڑا کام ہے، کچھ مسائل جیسے انتخابی مداخلت یا نفرت انگیز پوسٹس ایسے مسائل ہیں جن پر مکمل طور پر قابو پانا ممکن نہیں’۔

2018 وہ سال تھا جس میں متعدد مواقعوں پر مارک زکربرگ صارفین اور دیگر حلقوں سے معذرت کرتے نظر آئے، امریکی کانگریس میں پیش ہوکر بیان ریکارڈ کرایا۔

اسی بارے میں اپنی فیس بک پوسٹ پر پورے سال کی کوشوں کا ذکر کرتے ہوئے لکھا کہ فیس بک اب ایک تبدیل شدہ کمپنی ہے اور مسائل کے حوالے سے زیادہ بہتر سوچ رکھتی ہے۔

انہوں نے لکھا ‘ہم نے بنیادی طور پر اپنا ڈی این اے بدل کر اپنی سروسز میں نقصان دہ پہلوﺅں پر زیادہ توجہ مرکوز کردی ہے’۔

رواں سال فیس بک کی ساکھ کو شدید دھچکا لگا جبکہ کاروباری لحاظ سے اس کے حصص میں 24 فیصد کی کمی دیکھنے میں آئی۔

خیال رہے کہ 2018 کے آغاز میں مارک زکربرگ نے اپنا سال کا چیلنج فیس بک کے مسائل پر قابو پانا رکھا تھا جس میں وہ ناکام ہی رہے۔

اب نئی پوسٹ میں انہوں نے دعویٰ کیا کہ فیس بک خودکار طور پر 99 فیصد دہشتگردانہ مواد ڈیلیٹ کردیتی ہے مگر یہ نہیں بتایا کہ یہ اعدادوشمار داعش یا القاعدہ تک محدود ہیں۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ کلیئر ہسٹری ٹول پر کام جاری ہے جس کا پہلا اعلان رواں سال مئی میں ہوا تھا مگر اب تک اسے متعارف نہیں کرایا گیا۔

بڑھاپے کی جانب سفر سست کرنے میں مددگار غذائیں

عمر میں اضافہ زندگی کا ایک قدرتی حصہ ہے جس سے بچنا ممکن نہیں۔

مگر کیا آپ کو معلوم ہے کہ جو غذا آپ کھاتے ہیں وہ عمر میں اضافے کے اثرات کی روک تھام میں مددگار ثابت ہوتی ہے؟ یعنی جسم کے اندر اور باہر دونوں جگہ؟

جی ہاں واقعی ہماری غذائی عادات بڑھاپے کے اثرات کو جسم پر مرتب ہونے سے روکنے میں مددگار ثابت ہوتی ہیں۔

بدقسمتی سے ہر لمحہ بڑھتے وقت کو واپس کرنا تو ممکن نہیں مگر غذا کے ذریعے جلد کے افعال میں بہتری لاکر جوان نظر آنے میں مدد حاصل کی جاسکتی ہے۔

یہاں ایسی ہی چند غذاﺅں کا ذکر ہے جو آپ کو بڑھتی عمر میں بھی کم عمر نظر آنے میں مدد فراہم کرتی ہیں۔

ٹماٹر

شٹر اسٹاک فوٹو
شٹر اسٹاک فوٹو

ٹماٹر صحت کے لیے فائدہ مند چیز ہے جو کہ وٹامن اے، وٹامن سی اور فولک ایسڈ سمیت دیگر اجزاء سے بھرپور ہوتا ہے۔تاہم عمر بڑھنے کے اثرات کی رفتار سست کرنے میں اس میں موجود جز لائیکوپین اہم کردار ادا کرتا ہے۔لائیکو پین ایسا اینٹی آکسیڈنٹ ہے جو جلد کو سورج کی شعاعوں کے اثرات سے تحفظ دیتا ہے جبکہ یہ شریانوں کی صحت اور وبائی امراض سے بھی تحفظ دیتا ہے۔

شہد

شٹر اسٹاک فوٹو
شٹر اسٹاک فوٹو

شہد قدرتی طور پر جراثیم کش ہوتا ہے جبکہ اس میں اینٹی آکسیڈنٹس اور متعدد دیگر اجزا موجود ہوتے ہیں، تو یہ حیران کن نہیں کہ یہ جلد کے لیے بہت زیادہ فائدہ مند کیوں سمجھا جاتا ہے۔ اب اسے فیس ماسک کی شکل میں استعمال کیا جائے یا خام حالت میں لگایا جائے، یہ چہرے کا ورم کم کرنے کے ساتھ ساتھ کیل مہاسوں کا علاج کرتا ہے جبکہ خشک جلد کو نمی فراہم کرتا ہے۔ اسے کھانا بھی ایک اچھا خیال ہے خصوصاً اگر آپ دیگر میٹھی اشیا کو بدل کر ان کی جگہ شہد کو دے دیں۔

بلیو بیریز

شٹر اسٹاک فوٹو
شٹر اسٹاک فوٹو

یہ فلیونوئڈز نامی اینٹی آکسائیڈنٹس سے بھرپور ہوتا ہے جو کہ جسم میں ورم اور مضر اجزاءکے خلاف جدوجہد کرتا ہے، ایک تحقیق کے مطابق موٹاپے، ذیابیطس اور خون کی شریانوں کے امراض جیسی میٹابولک بیماریاں جسم میں ورم کے باعث لاحق ہوتی ہیں، تو بلیو بیریز کا استعمال اس ورم کو قابو میں رکھنے میں مدد دیتا ہے جبکہ میٹابولزم اپنا کام ہموار انداز سے جاری رکھتا ہے۔

سبز چائے

شٹر اسٹاک فوٹو
شٹر اسٹاک فوٹو

یہ گرم مشروب میٹابولزم کی کارکردگی بہتر بنانے کے لیے فائدہ مند ہے جس کی وجہ اس میں موجود ای جی سی جی نامی جز ہے۔ ایک تحقیق کے مطابق سبز چائے میں موجود پولی فینول اور ای جی سی جی اسے دیگر اقسام کی چائے کے مقابلے میں جسمانی ورم یا سوجن کی روک تھام کے لیے زیادہ موثر بناتے ہیں۔ اسی طرح سبز چائے جسمانی وزن کو کنٹرول کرنے میں میں بھی مدد دیت ہے جبکہ بلڈ شوگر بھی کنٹرول میں رہتا ہے۔ پولی فینول جلد میں پائے جانے والے اہم جز کولیگن کا بھی تحفظ کرتا ہے جس سے بڑھتی عمر کے آثار کو کسی حد تک واپس دھکیلا جاسکتا ہے۔

ڈارک چاکلیٹ

شٹر اسٹاک فوٹو
شٹر اسٹاک فوٹو

چاکلیٹ کس کو پسند نہیں ہوتی تاہم کیا آپ کو معلوم ہے کہ ڈارک چاکلیٹ فلیونوئڈز اور اینٹی آکسائیڈنٹس سے بھرپور ہوتی ہے اور یہ دونوں خون کی شریانوں میں لوتھڑے بننے اور سوجن کی روک تھام میں مددگار ثابت ہوتے ہیں۔ مختلف طبی تحقیقی رپورٹس کے مطابق جسمانی سوجن بڑھاپے اور اس سے متعلقہ امراض کا باعث بنتی ہے، لہذا سوجن پر قابو پانے والی غذا طویل زندگی کی کنجی ثابت ہوسکتی ہے۔

ہلدی

شٹر اسٹاک فوٹو
شٹر اسٹاک فوٹو

ہلدی میں موجود اینٹی آکسائیڈنٹ ورم کے خلاف جادوئی اثر رکھتا ہے، جبکہ یہ میٹابولزم کی کارکردگی کو نوجوانی جیسا رکھنے میں بھی مدد دینے والا مصالحہ ہے اور ہاں یہ دماغی تنزلی سے بھی تحفظ دیتی ہے جبکہ جگر کو نقصان پہنچنے، امراض قلب اور جوڑوں کے درد کے خلاف بھی مددگار ثابت ہوسکتی ہے۔

چقندر

شٹر اسٹاک فوٹو
شٹر اسٹاک فوٹو

چقندر کا استعمال برصغیر میں بہت عام ہے، سلاد سے لے کر اس کا جوس کافی پسند کیا جاتا ہے مگر کیا آپ کو معلوم ہے کہ اس ایک جز بیتھین سے بھرپور ہوتا ہے جو سوجن پر قابو پانے کی صلاحیت رکھتا ہے؟ اس طرح یہ متعدد جسمانی امراض سے تحفظ فراہم کرسکتا ہے جبکہ چہرے کو جگمگا کر بڑھاپے کے اثرات کو بھی دور کرتا ہے۔

خام کوکو

شٹر اسٹاک فوٹو
شٹر اسٹاک فوٹو

خام کوکو اس لیے بہترین سمجھا جاتا ہے کیونکہ ایک بہت طاقتور اینٹی آکسائیڈنٹ resveratrol موجود ہوتا ہے جو کہ سورج سے متاثرہ جلد کی مرمت کرتا ہے اور قبل از وقت بڑھاپے کی نشانیوں کی روک تھام کرتا ہے۔ کوکو میگنیشم کے حصول کا بڑا ذریعہ ہے جو کہ جلدی خارش کا امکان کم کرتا ہے۔

انڈے

اے ایف پی فوٹو
اے ایف پی فوٹو

انڈے پروٹین سے بھرپور ہوتے ہیں جو کہ چربی سے پاک مسلز بنانے میں مدد دیتے ہیں جس سے میٹابولزم کی کارکردگی متاثر نہیں ہوتی، اس میں وٹامن ڈی بھی ہوتا ہے جو کہ مجموعی صحت کو بہتر اور ورم کش ہوتا ہے جبکہ یہ چربی گھلانے والے جز کولین سے بھی بھرپور غذا ہے۔

دلیہ

شٹر اسٹاک فوٹو
شٹر اسٹاک فوٹو

سست روی سے ہضم ہونے والے کاربوہائیڈریٹ جیسے جو کا دلیہ بلڈ شوگر کو مستحکم رکھنے کے لیے بہتر ہوتا ہے جبکہ اس میں موجود وٹامن بی سکس مزاج پر خوشگوار اثرات مرتب کرتا ہے، اسی طرح جو لوگ دلیہ کھانے کو عادت بنالیتے ہیں، ان میں فالج اور ہارٹ اٹیک کا باعث بننے والے نقصان دہ کولیسٹرول کی سطح میں سات فیصد تک کمی آتی ہے۔

مالٹے

شٹر اسٹاک فوٹو
شٹر اسٹاک فوٹو

2 بڑی وجوہات مالٹوں کو صحت کے لیے فائدہ مند بناتے ہیں، ایک تو وٹامن سی کی موجودگی اور پانی کی مقدار۔ پانی جلد کو اندر سے نمی فراہم کرکے کیل مہاسوں سے بچاتا ہے جبکہ وٹامن سی کولیگن بننے میں اہم کردار ادا کرتا ہے۔ یہ جز جلد کو ہموار رکھنے میں مدد دیتا ہے اور جھریوں کی روک تھام کرتا ہے۔

زیتون کا تیل

شٹر اسٹاک فوٹو
شٹر اسٹاک فوٹو

زیتون کا تیل عمر بڑھنے کے ساتھ لاحق ہونے والی متعدد عام بیماریوں کی روک تھام میں مددگار ثابت ہوتا ہے۔ اس کا استعمال بلڈ پریشر کو کم کرتا ہے، امراض قلب کا خطرہ کم کرتا ہے، میٹابولک سینڈروم کی روک تھام کرتا ہے یعنی ذیابیطس اور خون کی شریانوں کے امراض سے تحفظ دیتا ہے اور یہ کینسر کے خلاف جدوجہد کے لیے موثر ثابت ہوتا ہے۔ زیتون کا تیل جلد کو جوان رکھنے کے لیے بھی فائدہ مند ہوتا ہے۔ جانوروں پر ہونے والی طبی تحقیق کے مطابق یہ جلد کے لیے ورم کی روک تھام کرتا ہے اور سورج کی شعاعوں سے ہونے والے نقصان سے بھی بچا سکتا ہے۔ مزید برآں زیتون کے تیل کا 73 فیصد حصہ مونو سچورٹیڈ فیٹ پر مبنی ہوتا ہے جو جلد کی لچک اور مضبوطی کو بڑھاتا ہے۔

دہی

شٹر اسٹاک فوٹو
شٹر اسٹاک فوٹو

اپنا کام صحیح طرح کرنے والا معدہ جسمانی ورم کی روک تھام کے لےی ضروری ہے اور دہی میں اس مقصد کے لیے فائدہ مند بیکٹریا موجود ہوتے ہیں، ایک تحقیق کے مطابق دہی کے ذریعے ان بیکٹریا کو جسم کا حصہ بنانے سے تناﺅ کا باعث بننے والے ہارمون کی سطح میں کمی آتی ہے، تاہم کم شکر والے دہی کا استعمال ہی فائدہ مند ہوتا ہے۔

انار

شٹر اسٹاک فوٹو
شٹر اسٹاک فوٹو

انار کے فوائد کے بارے میں بتانے کی ضرورت نہیں بیشتر افراد سے اس سے واقف ہیں۔تاہم اگر آپ نہیں جانتے تو جان لیں کہ اس میں موجود اینٹی آکسائیڈنٹس کی مقدار سبز چائے سے بھی زیادہ ہوتی ہے۔ انار جسمانی ورم کو کم کرتے ہیں، ہائی بلڈ شوگر لیول سے ہونے والے نقصان کی روک تھام کرتے ہیں اور ہاں آنتوں کے کینسر کے شکار افراد کو اس مرض کے علاج میں بھی مددگار ثابت ہوسکتے ہیں۔ اسی طرح انار جلد کو سورج سے ہونے والے نقصان سے بھی بچانے میں مددگار پھل ہے۔ طبی محققین کے مطابق انار کے مختلف حصے اکھٹے مل کر کام کرتے ہیں اور نقصان زدہ جلد کی مرمت کرکے اس میں کولیگن کی پیداوار میں اضافہ کرتے ہیں۔

اسٹرابری

شٹر اسٹاک فوٹو
شٹر اسٹاک فوٹو

اس پھل میں مالٹوں ے زیادہ وٹامن سی ہوتا ہے، جو کہ موسمی نزلہ زکام سے بچانے کے ساتھ یہ ذہنی تناﺅ سے بھی تحفظ دیتا ہے۔ مختلف طبی تحقیقی رپورٹس کے مطابق وٹامن سی کے استعمال سے تناﺅ کا باعث بننے والے ہارمون کورٹیسول کی سطح میں کی آتی ہے، جبکہ بلڈ پریشر بھی تیزی سے کم ہوتا ہے۔

گریاں

شٹر اسٹاک فوٹو
شٹر اسٹاک فوٹو

ایک حالیہ طبی تحقیق کے مطابق روزانہ کچھ مقدار میں نٹس جیسے مونگ پھلی یا اخروٹ وغیرہ کا استعمال کسی فرد کی زندگی کو طویل کرنے میں مدد کرسکتا ہے۔ تحقیق کے مطابق نٹس کے نتیجے میں جان لیوا امراض جیسے ذیابیطس اور کینسر کے نتیجے میں موت کا خطرہ کافی حد تک کم ہوجاتا ہے۔

سرخ شملہ مرچ

شٹر اسٹاک فوٹو
شٹر اسٹاک فوٹو

یہ سرخ مرچ وٹامن سی سے بھرپور ہوتی ہے جس کے فوائد اوپ لکھے جاچکے ہیں مگر اس یں شامل دیگر اجزاءجسم میں موجود مضر صحت اجزاءکے خلاف مزاحمت کرتے ہیں جس سے عمر بڑھنے سے جسمانی تنزلی کی رفتار میں کمی آتی ہے۔

چاول

شٹر اسٹاک فوٹو
شٹر اسٹاک فوٹو

ایک تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ چاول میں نشاستہ کی مزاحمت کرنے والے کاربوہائیڈریٹس موجود ہوتے ہیں جو کہ موٹاپے کو کنٹرول میں رکھنے میں مددگار ثابت ہوتے ہیں، یہ کاربوہائیڈریٹس دیر سے ہضم ہوتے ہیں اور معدے میں فیٹی ایسڈز میں تبدیل ہوجاتے ہیں، جنھیں ہمارا جسم توانائی کے طور پر جلاتا ہے جبکہ چربی گھلتی ہے۔

کیلے

شٹر اسٹاک فوٹو
شٹر اسٹاک فوٹو

پوٹاشیم اور میگنیشم سے بھرپور ہونے کی وجہ سے کیلے اچھی نیند میں مدد دیتے ہیں اور نیند کی کمی جلد بڑھاپے کی سب سے بڑی وجہ مانی جاتی ہے، اسی طرح یہ بلڈ پریشر میں کمی، اضافی وزن سے نجات، خون کی کمی کا خطرہ کم کرنے، نظام ہاضمہ بہتر بنانے، ذہنی تناﺅ میں کمی، وٹامن کی کمی دور کرنے اور جسمانی توانائی بڑھانے والا پھل بھی ہے۔

پالک

شٹر اسٹاک فوٹو
شٹر اسٹاک فوٹو

ایک حالیہ تحقیق میں یہ بات سامنے آئی کہ روزانہ کچھ مقدار میں پالک یا کسی بھی سبز پتوں والی سبزی کا استعمال عمر بڑھنے کے ساتھ دماغی صلاحیتوں میں آنے والی کمی کو روکتا ہے۔ ان سبزیوں میں وٹامن کے کی مقدار کافی زیادہ ہوتی ہے اور جسم کو اضافی فائبر بھی فراہم کرتی ہیں جس سے کھانے کے دوران جلد پیٹ بھرنے کا احساس ہوتا ہے او رموٹاپے کا خطرہ کم ہوجاتا ہے۔

سیب

شٹر اسٹاک فوٹو
شٹر اسٹاک فوٹو

سیب کا استعمال بھی بڑھاپے کے اثرات کو روکنے میں مددگار ثابت ہوتا ہے۔ سیب کے چھلکوں میں ایک ایسا کیمیکل دریافت ہوا جو عمر بڑھنے کے ساتھ پٹھوں میں آنے والی تنزلی کی روک تھام کا کام کرتا ہے۔ عمر بڑھنے کے ساتھ ایک پروٹین اے ٹی ایف 4 پٹھوں یا مسلز میں کمزوری آنے لگتی ہے جس کی وجہ جینز میں آنے والی تبدیلی ہوتی ہے تاہم دو ماہ تک سیب یا سبز ٹماٹر کا استعمال اس کی روک تھام کرتا ہے۔ محققین کا کہنا ہے کہ ان دونوں چیزوں میں پائے جانے والا قدرتی عمر بڑھنے سے مرتب ہونے والے اثرات کی روک تھام کرتے ہیں۔

نوٹ: یہ مضمون عام معلومات کے لیے ہے۔ قارئین اس حوالے سے اپنے معالج سے بھی ضرور مشورہ لیں۔

Google Analytics Alternative