Home » 2019 » March » 13 (page 4)

Daily Archives: March 13, 2019

احمد شہزاد کا آسٹریلیا کیخلاف قومی ٹیم کی سلیکشن پر اعتراض

 کراچی: ٹیسٹ کرکٹر احمد شہزاد نے آسٹریلیا کے خلاف ون ڈے سیریز کے لیے پاکستان کرکٹ ٹیم کی سلیکشن پر کئی سوالات اٹھاتے ہوئے کہا ہے کہ پی سی بی کی جانب سے آسٹریلیا کے خلاف سیریز کے اعلان میں جلد بازی کا مظاہرہ کیا گیا۔

فارم واپس آتے ہی انداز بھی بدلنے والے احمد شہزاد نے نیشنل اسٹیڈیم میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سلیکشن کمیٹی کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ سلیکٹرز کو ٹیم کا اعلان کرنے سے پہلے پی ایس ایل ختم ہونے کا انتظار کرنا چاہیئے تھا، پی ایس ایل فورکے اہم میچز سے پہلے قومی ٹیم کا اعلان غلط ہے۔

احمد شہزاد نے پاکستان ٹیم کے ہیڈکوچ مکی آرتھر کو بھی آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ مکی آرتھر کو معلوم ہونا چاہیئے کہ پی ایس ایل سے اچھے بلے باز نہیں ملتے،بہترین بولرز تو مل سکتے ہیں مگر اچھے بیٹسمین ڈومیسٹک کے چار روزہ میچز سے ہی ملتے ہیں، ڈومیسٹک کی کارکردگی کو نظر انداز کرنا غلط عمل ہے۔

احمد شہزاد کا مزید کہنا تھا کہ کہ ورلڈکپ میں پاکستان کی نمائندگی کرنا چاہتا ہوں اور میگاایونٹ میں اپنے ملک کے لیے منفرد کارکردگی دکھانےکی خواہش ہے

فلم ’’جنونِ عشق‘‘ پاکستان کے 100 سے زائد سنیماؤں میں ریلیز کی جائے گی

ممبئی: رومانوی کہانی پر مبنی فلم ’جنونِ عشق‘ پاکستان کے 100 سے زائد سنیماؤں میں ریلیز کی جائے گی۔

پاکستان فلم انڈسٹری طویل عرصے کے بعد ایک بار پھر کامیابی کے سفر چل پڑی ہے اور ایک کے بعد ایک مختلف موضوعات پر مبنی  فلمیں ریلیز کی جارہی ہیں جو فلم بینوں کے معیار پر بھی پوری اتر رہی ہیں اور اب رومانوی کہانی پر مبنی فلم ’جنونِ عشق‘ بھی اگلے ماہ سنیما گھروں کی زینت بننے جارہی ہے جس میں دو نئے چہرے عدنان خان اور ماہی خان کے ساتھ معروف اداکار مصطفیٰ قریشی کے بیٹے عامر قریشی بھی اداکاری کے جوہر دکھاتے نظر آئیں گے۔

فلم کی عکسبندی پاکستان کے خوبصورت ترین مقامات ناران اور کاغان اور باقی  بینکاک اور برطانیہ میں کی گئی ہے جب کہ فلم میں  راحت فتح علی خان کی آواز میں گائے ہوئے کچھ گیت بھی شامل کئے گئے ہیں۔

30 سے زائد فلموں میں ہدایت کاری کے فرائض انجام دینے والے نسیم حیدر شاہ نے اپنی  فلم ’جنونِ عشق‘ کے حوالے سے خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ فلم کو پاکستان بھر میں سو سے زائد سنیماؤں میں ریلیز کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے اور اس ضمن میں تمام سنیما مالکان کو تفصیلات بھی مہیا کردی گئی ہیں جب کہ لاہور کے کئی سنیما فلم کی ریلیز کی تیاری میں مصروف عمل ہیں۔

نسیم حیدر شاہ نے کہا کہ یہ دیکھ کر بہت خوشی ہوئی ہے کہ تمام پاکستانیوں نے مشترکہ طور پر بھارتی فلموں کی نمائش پر پابندی عائد کرنے کی حمایت کی ہے اور اب مجھے اُمید ہے کہ ہماری فلمیں کامیابی حاصل کریں گی۔

واضح رہے کہ اصغر علی کی پروڈکشن میں بننے والی فلم ’جنونِ عشق‘ اگلے ماہ 12 اپریل کو سنیما گھروں کی زینت بنے گی۔

یمن میں فضائی حملے کے دوران 12 بچوں سمیت 22 افراد ہلاک

صنعاء: یمن میں مبینہ سعودی عسکری اتحاد کے فضائی حملے میں 12 بچے اور 10 خواتین ہلاک ہوگئیں۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق اقوام متحدہ کے یمن میں ترجمان نے انکشاف کیا ہے کہ یمن کے شمال میں ایک گاؤں پر سعودی اتحادی افواج نے فضائی بمباری کی جس کے نتیجے میں 10 خواتین اور 12 بچے جاں بحق اور 30 نوجوان زخمی ہو گئے۔

دوسری جانب یمن میں طبی ذرائع نے بھی اقوام متحدہ کی انسانی بنیادوں پر امداد کی رابطہ کار خاتون کے حوالے سے بتایا ہے کہ سعودی عسکری اتحاد کے یہ فضائی حملے یمنی صوبے حجہ کے ضلع کشر میں کیے گئے۔

یمن میں اقوام متحدہ کی انسانی بنیادوں پر امداد کی کوآرڈینیٹر لیزے گرانڈ نے بتایا کہ زخمیوں کی عمریں 17 سے 22 سال کے درمیان ہے جنہیں صنعاء اور دیگر شہروں کے اسپتالوں میں منتقل کیا گیا ہے۔

حوثی باغیوں کے حمایت یافتہ ٹیلی ویژن چینل المسیرہ نے بھی فضائی حملوں میں بچوں اور خواتین کے جاں بحق ہونے کی تصدیق کی ہے جب کہ سعودی اتحادی افواج نے عالمی خبر رساں ادارے کے رابطہ کرنے پر حملے کی تصدیق یا تردید کرنے سے انکار کیا ہے۔

ڈیم فنڈ میں 10 ارب روپے جمع ہوگئے

اسلام آباد: پاکستان میں ڈیموں کی تعمیر اور قلت آب کے مسئلے پر قابو پانے کے لیے عوام دیامیر بھاشا اور مہمند ڈیم فنڈ میں دل کھول کر حصہ لے رہے ہیں جس کے نتیجے میں عطیات کا ذخیرہ 10 ارب سے تجاوز کرگیا ہے۔

وزیراعظم عمران خان نے ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں کہا ہے کہ ڈیم فنڈ میں 10 ارب، 71 لاکھ روپے جمع ہوگئے ہیں۔ عمران خان نے ڈیم فنڈ میں دل کھول کر حصہ لینے پر پاکستان کے عوام کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے سخاوت کی تعریف کی۔

علاوہ ازیں پاکستان تحریک انصاف کے رہنما سینیٹر فیصل جاوید نے ایک بیان میں کہا کہ ڈیم فنڈ میں دل کھول کر حصہ ڈالنے پر پاکستانی قوم زبردست خراج تحسین کی مستحق ہے، جب کہ سپریم کورٹ اور وزیراعظم خصوصی شاباش کے حقدار ہیں۔

فیصل جاوید نے کہا کہ پاکستان دنیا میں خیرات کرنے والی اقوام میں سرفہرست ہے، ہمارے قومی جذبے کو کوئی شکست نہیں دے سکتا، اپنے لوگوں کے عزم صمیم کو خصوصی سلام عقیدت پیش کرتا ہوں۔

نظامِ تعلیم اسلام کے اصولوں کے مطابق ہونا چاہیے

مسلما ن ملکوں میں مغرب کی مذہب بیزار نظامِ تعلیم نے اپنی جڑیں گہری کی ہوئی ہیں۔ برصغیر ہند و پاک اور دوسرے ملکوں میں، جہاں جہاں مسلمان عیسائیوں کے غلام رہے ہیں وہاں وہاں لارڈ میکالے کی عیسائی مذہبی سوچ کے مطابق نام نہاد جدیدنظامِِ تعلیم رائج کیا تھا، جو اب بھی جاری و ساری ہے۔لارڈ میکالے نے برطانوی دارلعلوم کے ایک اجلاس میں کہا تھا کہ ’’ہمارے لیے یہ اشد ضروری ہے کہ ہم ہندوستانی نوجوانوں کے اذعان و قلوب کوبدل ڈالنے کی کوشش کریں۔ ہم ان کو ہندوستانی عوام اور اجنبی حکمرانوں کے درمیان رابطہ کے طور پر استعمال کرنا چاہتے ہیں۔ہمیں ان لوگوں کی تربیت اس انداز سے کرناہے کہ نسل و رنگ کے اعتبار سے تو یہ ہندوستانی رہیں، لیکن ان کا ذہنی انداز خالصتاً انگریزی ہونا چاہیے‘‘ مسلمانوں کو اس بات پر غور کرنا چاہیے کہ نام نہاد جدیدنظامِ تعلیم کی ترویج میں پس پردہ عیسائیوں کے مقاصد کس قدر گھناؤنے تھے۔ عیسائیوں (مغرب) نے تعلیم کو روزگار سے جوڑ دیا۔ مغربی نظامِ تعلیم سے مادہ پرست تیار ہو کر نکلتے ہیں۔ جبکہ اسلامی نظامِ تعلیم ان کو انسانیت سے جوڑ نے کی ہدایات دیتا ہے ۔ اسلامی نظامِ تعلیم سے انسان بنتے ہیں ۔جب آدمی انسان بن جائے تو اسے چاہے کسی بھی فیلڈ میں کام کرنا پڑے وہ دوسروں سے انسانیت برتے گا، نہ معاشی جانور بن کر پیٹ کا بندا بن کر رہ جائے گا۔ پاکستان کی بنیاد، قراردادِ پاکستان میں یہ لکھا ہوا ہے کہ ’’انسان کو اس قابل بنایا جائے کہ وہ انفرادی طور پر اپنی زندگی کو اسلامی تعلیمات و مقتضیات کے مطابق جو قرآن مجید اور سنت رسولؐمیں متعین تربیت دے سکیں‘‘ رسول ﷺ کو اللہ تعالیٰ نے جب رسالت پر مبعوث فرمایا تو کہا اللہ کا شکر ادا کرو جس نے انسان کو قلم سے علم سکھایا۔ رسول اللہؐ نے جب نبوت ملنے کے بعد اپنے کام کا آغاز کیا تو لوگوں سے کہا کہ کہو’’ لا الہ الا اللہ محمد رسول اللہ ‘‘ یعنی لوگوں کو تعلیم دی کہ ایک اللہ کے سوا کسی دوسرے کو اپنا اِلٰہ نہ بناؤ۔ اللہ کے سواتمہاراکوئی معبود نہیں۔ اسی کے سامنے اپنی حاجات رکھو، فلاح پاجاؤ گے۔ جب تم خود مانتے ہو کہ زمین، آسمان اور انسان کو اللہ نے پیدا کیا تو پھر اللہ کے سوا غیروں کو کیوں اپنا معبود بناتے ہوں اور کہا کہ میں اللہ کا پیغمبرؐ ہوں۔ اللہ تعالیٰ نے مجھے تمہاری اصلاح کیلئے اپنا پیغمبرؐ منتخب کر بھیجا ہے۔ اس مختصر دعوت میں کہیں بھی مادیت نظر نہیں آتی ، کہ تم مجھے لیڈر بناؤ اور میں تمہارے لیے یہ فلاح بہبود کے کام کروں گا۔میں کامیاب ہو گیا تو تمہیں یہ مراعات ملیں گی۔ تمہارے لیے ندی نالے، سڑکیں ، صحت کیلئے ہسپتال، اسکول اور نوکریوں کیلئے کارخانے بنا دوں گا۔ بلکہ یہ کہا کہ اللہ کے مطلوبہ انسان بن جاؤ تو تمہیں جنت ملے گی اور دنیا کی معاش بھی بہتر انداز میں ملے گی۔کیااللہ تعالیٰ قرآن میں نہیں فرماتا ہے کہ اگر بستیوں کے لوگ ایمان لاتے اور اللہ کے بتائے ہوئے راستوں پر چلتے تو اللہ آسمان سے رزق برساتااورزمین اپنے خزانے اُگل دیتی۔ استاد مربی یعنی تربیت کرنے والا اور مزکی تزکیہ نفس کرنے والا ہوتا ہے۔ رسولؐ مربی اور مزکی تھے۔ جب رسولؐ لوگوں کو تعلیم دیتے تھے تو فرماتے تھے۔ لوگوں جو تعلیم میں تمہیں دے رہا ہوں اس کا مجھے تم سے اس کام کااَجر نہیں چاہیے بلکہ یہ کہا کہ میرا اَجر میرے رب کے پاس محفوظ ہے۔لہٰذا اسلامی تعلیم دینے والے کو دولت کی ہوس میں مبتلا نہیں ہونے چاہئیں۔رسولؐنے جاہل عربوں کو آدمی سے انسان بنایا اور جب عرب رسولؐ کی تعلیم سے انسان بنے تو ترقیوں نے ان کے قدم چومے اور انہوں نے دنیا کو تعلیم وتربیت اور تہذیب سکھائی اور دنیا کے غالب حصے پر حکمران بن گئے۔ بدقسمتی سے پاکستان کے اندر لارڈ میکالے کا جدید نظامِ تعلیم رائج ہے، جو انگریزوں کی ضرورت کے مطابق تھا، جس نے پاکستان میں خودغرضی کی وجہ سے اب طبقاتی شکل بھی اختیار کر لی ہے۔ ایک طرف انگلش میڈیم اسکول ہیں۔ دوسری طرف اُردو میڈیم اسکول ہے۔ تیسری طرف دینی مدارس ہیں۔تینوں کے نصاب الگ الگ ہیں۔کہیں باہر کے ا ے لیول اور اولیول کے نصاب ہیں۔ کہیں درس نظامی کا دینی نصاب ہے۔ انگلش میڈیم سے مسٹر تیار ہو کر نکلتے ہیں ۔ دینی مدارس سے ملا بن کر نکلتے ہیں۔ درمیان میں اُردو میڈیم میں غریب لوگوں کے بچے نہ مسٹر اور نہ ہی مُلا بلکہ درمیان میں معلق رہتے ہیں۔مسٹر حکومت کے مقابلے کے امتحان پاس کر کے نوکر شاہی بن جاتے ہیں۔ دینی مدارس سے فارغ شدہ لوگ مسجدیں سنبھال لیتے ہیں۔ درمیان اُردو میڈیم والے کہیں کلرک لگ جاتے ہیں۔ دوسری طرف عیسائیوں کا بنایاہوا انسانی حقوق کا منشور اور کتابیں ہمارے اسکولوں میں اظہار آزادی اور انسانی حقوق کے منشور کے نام سے رائج ہے۔ جس میں کہا گیا ہے کہ ہر شخص کو مذہب بدلنے کی اجازت اور آزادی ہے۔ہر شخص کو باہمی رضا مندی سے تعلق رکھنے کی اجازت ہے وغیرہ۔یہ پڑھ کر ہمارے نوجوان سیکرلر اور لبرل بن رہے ہیں۔ پھر یہ پوچھتے ہیں مکہ اور مدینہ میں غیر مسلم کیوں نہیں جا سکتے؟۔ہندو اور قادیانی سے شادی کیوں نہیں ہو سکتی؟ ہمارے علما انگریزی سے واقف نہیں اس لیے اس برائی کے خلاف آواز نہیں اُٹھا رہے۔اے لیول اور اولیول کی کتابوں میں اُمہات المومنینؓ کی شان کے خلاف باتیں پڑھائی جا رہی ہیں۔نصاب میں اسلامی تاریخ کو مسخ کیا جارہا ہے ۔ نیک سیرت شہنشاہ اورنگزیب ؒ جو مسلمانوں کا ہیرو ہے اور جو ٹوپیاں سی کراپنا خرچ پورا کرتا تھا۔اسے رعایا،باپ اور بھائیوں کے خلاف ظالم پیش کر کے پڑھایا جا رہا ہے۔حقوق انسانی کا موجد امریکا کو پڑھایا جاتا ہے۔ جبکہ خطبہ حج الوادع میں پیغمبرؐ اسلام کئی صدیاں پہلے انسانی حقوق کا اعلان کیا تھا۔زبان علوم کی ماں ہے۔ لہٰذاسب سے پہلے پاکستان میں تعلیم کو قومی زبان اُردو میں ہونا چاہیے۔ تہذیب یافتہ قوموں نے اپنی اپنی قومی زبانیں رائج کر کے ترقی کی منازل طے کی ہیں۔ پھر ملک میں یہ جو تین نظامِ تعلیم چل رہے ہیں ان کو یکساں ہونا چاہیے۔جب ہم یکساں نظامِ تعلیم کی بات کرتے ہیں تو اس کا طلب ،نصاب، ذریعہ تعلیم، نصابی کتب،تعلیمی سہولتیں،امتحان اور سر ٹیفکیٹس سب یکساں ہونے چاہئیں۔ ملک میں رائج طبقاتی نظامِ تعلیم کو بالکل ختم ہونا چاہیے تاکہ غریب و امیر کا بچہ یکساں طور پر اس سے فائدہ مند ہو سکے۔موجودہ حکومت کے منشور میں یکساں نظامِ تعلیم کا وعدہ کیا ہوا ہے۔اس لئے حکومت کو چاہیے کہ ایک ادارہ قائم کرے جس میں سب اکائیوں کو برابر کی نمائندگی ہو، جویہ کام کرے۔یہ ادارہ نیشنل کری کولم پالیسی فریم ورک تیار کر کے پارلیمنٹ سے منظور کرائے جس کا نفاذ پورے ملک میں لازمی ہو۔ اُستاد جو بچوں کو تعلیم دیتے ہیں پہلے ان کی اسلامی خطوط پر تربیت ہونی چاہیے۔ اُستاد جو مربی اور مزکی ہوتا ہے، اگر وہ تربیت یافتہ نہیں ہے تو وہ بچوں کی کیا خاک تربیت کرے گا۔دینی مدارس جو ملک کی بہت بڑی این جی اوز ہیں۔ یہ ہمارے دین کی چھاؤنیاں ہیں اور مساجد کے مینار میزائلوں کے مظاہر ہیں۔ان ہی کی وجہ سے دین دائم و قائم ہے۔ شاعر اسلام علامہ اقبالؒ بھی دینی مدارس کی بقا کے قائل تھے۔ ان کو بھی عصری تقاضوں کے مطابق ڈھالنا چاہیے۔ ان میں مسالک کی تعلیم سے ہٹ کر اتحاد اتفاق کی تعلیم دینا چاہیے۔ صاحبو! پاکستان کلمہ کی بنیاد پر بنا تھا۔ اس لیے پاکستان کے سارے نظام ،اسلام کی ہدایات کے مطابق ترتیب دینے چاہیے تھے۔ قائد اعظمؒ نے تحریک پاکستان کے دوران برصغیر کے عوام سے پاکستان کو مدینہ کی فلاحی اسلامی ریاست بنانے کا وعدہ کیا تھا۔جب اسلامی ریاست کی بات کی جاتی ہے تو اس کا نظامِ تعلیم بھی اسلام کے آفاقی اصولوں کے مطابق ہونا چاہیے تھا،مگر یہ نہ ہو سکا۔

مسلز بنانے میں مددگار غذائیں

ہر شخص کو اپنے مسلز کو مضبوط اور خوبصورت بنانے کا شوق ہوتا ہے جس کے لیے جسمانی سرگرمیاں ضروری ہوتی ہیں مگر خوراک کی اہمیت سے بھی انکار ممکن نہیں۔

درحقیقت درست غذا حیرت انگیز انداز سے جسم کو بنانے کے ساتھ ساتھ ہارمون کے توازن کو بھی درست رکھتی ہے۔

یہاں ایسی غذاﺅں کا ذکر ہے جو مسلز بنانے میں فائدہ مند ہوتے ہیں۔

سویابین

سویابین پروٹین سے بھرپور ہوتا ہے اور ایک کپ کے اندر 37 گرام پروٹین ہوتا ہے۔ یہ بتانے کی ضرورت نہیں کہ پروٹین مسلز بنانے کے لیے بہت ضروری ہوتا ہے، خواتین کو دن بھر میں 46 جبکہ مردوں کو 5 گرام کی ضرورت ہوتی ہے۔ تاہم اگر آپ مسلز بنانا چاہتے ہیں اور ورک آﺅٹ کرتے ہیں تو جسم کو زیادہ پروٹین کی ضرورت ہوتی ہے تاکہ مسلز کی مرمت کرسکے اور نئے مسلز ٹشو بناسکے۔ تو سویا بین میں پروٹین تو ہوتا ہی ہے اس کے ساتھ میگنیشم بھی ہوتا ہے جو کہ وزن اٹھانے والی ورزشوں سے مسلز بنانے مٰں مدد دیتا ہے۔

امرود

اس مزیدار پھل کے ایک کپ میں 4.2 گرام پروٹین موجود ہوتا ہے اور اس کے علاوہ وٹامن سی بھی موجود ہوتاہ ے جو کہ جلد کی صحت کو بہتر کرتا ہے، وٹامن سی سے بھرپور غذائیں دوران خون بھی بہتر کرتے ہیں جو کہ مسلز بنانے کے لیے ضروری ہوتا ہے۔

مچھلی

مچھلی بھی پروٹین کے حصول کا اچھا ذریعہ ہے جبکہ اس میں موجود اومیگا تھری فیٹی ایسڈز بھی ورزش کرنے والے افراد میں جسمانی چربی کم کرکے مسلز بنانے میں مدد دیتے ہیں۔

بغیر چربی کا قیمہ

قیمے کی کچھ مقدار سے کافی مقدار میں پروٹین کو جسم کا حصہ بنایا جاسکتا ہے جبکہ اس میں آئرن کی مقدار بھی کافی زیادہ ہوتی ہے جو کہ جم میں کارکردگی کو بہتر بناتا ہے۔

گوشت

ماہرینِ طب اگرچہ اس بات پر تو اب تک متفق نہیں ہوسکے کہ گوشت نقصان دہ ہے یا فائدہ مند، مگر ایک بات واضح ہے، گوشت کا استعمال ایک ہارمون ٹیسٹوسٹیرون کی سطح بڑھاتی ہے خاص طور پر اگر کم چربی والا گوشت کھانا اکثر استعمال کریں (روزانہ نہیں)۔

انڈے

انڈے وٹامن ڈی سے بھرپور ہوتے ہیں جو خون میں ٹیسٹوسٹیرون کی سطح معمول پر رکھنے میں مددگار ثابت ہوتا ہے، ایک انڈہ روزانہ آپ کی غذا کا حصہ ہونا چاہیے، تاہم اس سے زیادہ کھانے سے پہلے ڈاکٹر سے مشورہ کرلینا ضروری ہے۔

تربوز

تربوز دوران خون کو بہتر بناتا ہے جس کے دل پر مثبت اثرات مرتب ہوتے ہیں اور کولیسٹرول کی سطح کنٹرول میں رکھنے میں مدد ملتی ہے، بس مسئلہ یہ ہے کہ یہ پھل سال میں ایک مخصوص عرصے میں ہی کھانے کو ملتا ہے۔

گوبھی

گوبھی جسم میں ایسٹروجن (فیمیل ہارمون) کی سطح کم کرتا ہے جبکہ ٹیسٹوسٹیرون کی سطح بڑھاتا ہے، اسے کسی بھی شکل میں کھائیں فائدہ ہوتا ہے۔

شہد

شہد جسمانی دفاعی نظام کو مضبوط کرنے کے لیے بہترین ہے، روزانہ ایک چمچ شہد کا استعمال فائدہ مند ثابت ہوسکتا ہے۔

لہسن

لہسن میں ایک ایسا کیمیکل ہوتا ہے جو تناﺅ میں کمی لاتا ہے جس سے بلاواسطہ طور پر مسلز بنانے میں مدد ملتی ہے۔

انگور

انگور میں موجود اجزاء عمر بڑھنے کے اثرات کو سست کرتے ہیں جبکہ اس سے ٹیسٹوسٹیرون کی سطح بڑھانے میں بھی مدد ملتی ہے، اس کے لیے روزانہ کچھ مقدار میں اس مزیدار پھل کا استعمال فائدہ مند ہوتا ہے۔

بیج

ہر قسم کے بیج وٹامن ڈی اور پروٹین سے بھرپور ہوتے ہیں، جنھیں سوپ، سلاد، تلنے یا پھر کسی بھی شکل میں کھایا جاسکتا ہے، یہ نہ صرف ٹیسٹوسٹیرون کی سطح برقرار رکھنے میں مددگار ثابت ہوتے ہیں بلکہ دل کو بھی صحت مند رکھتے ہیں۔

دودھ

دودھ وٹامنز سے بھرپور مشروب ہے جو مسلز کو بنانے میں مدد دیتا ہے، اس میں کیلشیئم ہوتا ہے جو ہڈیوں کو مضبوط کرتا ہے جبکہ وٹامن ڈی ٹیسٹوسٹیرون کی سطح بڑھاتا ہے۔

چاکلیٹ

اعلیٰ معیار کی ڈارک چاکلیٹ میں 70 فیصد کوکا ہوتا ہے جو کہ اینٹی آکسائیڈنٹس سے بھرپور ہوتا ہے جو صحت کے لیے فائدہ مند ہوتا ہے، مسلز بنانے کے خواہشمند افراد کے لیے چاکلیٹ کم مقدار میں زیادہ کیلوریز فراہم کرنے والی سوغات ہے، اگر چاکلیٹ پسند نہیں تو چینی سے پاک کوکا پاﺅڈر سے مشروب یا دہی میں شامل کرکے استعمال کرنا بھی فائدہ پہنچاتا ہے۔

خشک پھل

خشک پھل جیسے انناس، چیری اور سیب زیادہ کیلوریز جسم کو فراہم کرتے ہیں جبکہ فائبر اور اینٹی آکسائیڈنٹس بھی جسم کو ملتے ہیں، خشک ہونے پر بھی پھل فائبر سے محروم نہیں ہوتے جبکہ وٹامنز بھی موجود ہوتے ہیں، انہیں ایسے ہی کھالیں یا پروٹین شیک کا حصہ بنالیں یا دہی میں ڈال کر کھالیں۔

گریاں

گریاں اور ان سے بننے والے مکھن بھی مسلز بنانے کے خواہشمند افراد کے لیے فائدہ مند ہیں، گریاں جیسے بادام کیلوریز، پروٹین اور صحت مند چربی سے بھرپور ہوتے ہیں، انہیں ایسے ہی کھالیں یا کھانے کا حصہ بنالیں۔

دالیں

دالیں ایک ایسا خفیہ ہتھیار ہے جو مسلز تیزی سے بڑھانے میں مدد دیتا ہے، یہ ایک سستا، آسان اور تیزی سے تیار کیا جانے والا نسخہ ہے، جن کو آپ چاول کے ساتھ کھا سکتے ہیں، سوپ میں شامل کرسکتے ہیں۔ ایک کپ دال میں 18 گرام پروٹین اور 40 گرام سستی سے ہضم ہونے والا کاربوہائیڈریٹس ہوتا ہے جو بلڈ شوگر لیول کو مستحکم رکھنے میں بھی مدد دیتا ہے جبکہ جسم کو دیرپا توانائی فراہم کرتا ہے۔

انٹربینک مارکیٹ میں ڈالر مہنگا قیمت خرید 138.78 روپے ہو گئی

کراچی: مقامی اوپن کرنسی مارکیٹ میں نئے کاروباری ہفتے کے آغاز پر پیر کو امریکی ڈالر کی قیمت میں استحکام رہا لیکن انٹربینک مارکیٹ میں پاکستانی روپے کے مقابلے میں امریکی ڈالر کی قیمت میں 24 پیسے کا اضافہ ہوگیا۔

فاریکس ایسوسی ایشن آف پاکستان کے مطابق پیرکوانٹربینک مارکیٹ میں پاکستانی روپے کے مقابلے میں امریکی ڈالر کی قیمت میں24 پیسے کا اضافہ ریکارڈ کیاگیا، جس کے نتیجے میں امریکی ڈالر کی قیمت خرید 138.54 روپے سے بڑھ کر 138.78روپے اورقیمت فروخت 138.64روپے سے بڑھ کر138.88روپے ہوگئی۔

Google Analytics Alternative