Home » 2019 » April » 09

Daily Archives: April 9, 2019

کرتارپور راہداری پر پاک بھارت مذاکرات 16 اپریل کو ہوں گے

اسلام آباد: ترجمان دفترخارجہ ڈاکٹرمحمد فیصل نے تصدیق کی ہے کہ بھارت نے کرتارپورراہداری مذاکرات کی حامی بھرلی ہے۔

دفترخارجہ کی جانب سے جاری ہونے والے بیان میں بتایا گیا ہے کہ کرتارپور راہداری پر پاکستان اور بھارت کے درمیان 16 اپریل کو مذاکرت ہوں گے، اور مذاکرات کرتارپور کے مقام پر ٹیکنیکل ماہرین کے درمیان ہوں گے۔

ترجمان دفترخارجہ کے مطابق پاکستان چاہتا ہے کہ باباگرونانک کے 550 ویں جنم دن کے موقع پر راہداری حقیقت کا روپ دھارے، اور پاکستان نے تعمیری رابطوں کے جذبہ کے تحت بھارتی تجویز پر اتفاق کیا ہے، پاکستان بھارت کی طرف سے بھی مثبت رویہ کی توقع رکھتا ہے۔

واضح رہے کہ بھارت نے 2 اپریل کو طے شدہ مذاکرات سے انکار کرتے ہوئے کہا تھا کہ مذاکرات سے قبل ماہرین کی کمیٹی کا ایک اور اجلاس بلایا جائے، جب اس بارے میں پاکستان کا جواب آئے گا اس کے بعد ہی بات چیت کے اگلے دور کے بارے میں بتائیں گے۔

 

حمزہ شہباز کی عبوری ضمانت میں 17 اپریل تک توسیع

لاہور  :  رہنما (ن) لیگ حمزہ شہباز کی عبوری ضمانت میں 17 اپریل تک کی توسیع کردی گئی ہے۔

لاہور ہائی کورٹ میں جسٹس شہزاد احمد خان کی سربراہی میں 2 رکنی بنچ نے حمزہ شہباز کی درخواست ضمانت پر سماعت کی، اس موقع پر رہنما (ن) لیگ حمزہ شہباز اپنے وکلاء کے ہمراہ عدالت میں پیش ہوئے۔ عدالت نے نیب کے وکیل سے استفسار کیا کہ آپ کس کیس میں حمزہ کو گرفتار کرنا چاہتے ہیں، نیب وکیل نے کہا کہ حمزہ شہباز کے خلاف کل 3 کیسز ہیں، آمدن سے زائد اثاثوں کے کیس میں حمزہ شہباز کو گرفتار کرنا ہے جب کہ صاف پانی اور رمضان شوگر مل میں ابھی تک وارنٹ گرفتاری جاری نہیں ہوئے۔

حمزہ شہباز کے وکیل اعظم نذیر تارڑ نے دلائل میں کہا کہ گرفتاری سے پہلے حمزہ شہباز کو آگاہ نہیں کیا گیا، درخواست گزار پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر ہے جب کہ نیب نے بغیر كسی نوٹس كے گرفتار كرنے كی كوشش كی، اگر نیب كے پاس كوئی دستاویزاتی ثبوت ہیں تو پیش كریں ہم جواب دیں گے۔

عدالت نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد حمزہ شہباز کی عبوری ضمانت میں 17 اپریل تک کی توسیع کردی، عدالت نے حمزہ شہباز کو ایک کروڑ روپے کے مچلکے جمع کرانے کا حکم دیا ہے۔

واضح رہے کہ جمعہ اور ہفتے کے روز حمزہ شہباز کو نیب کی جانب سے گرفتار کرنے کی کوشش کی گئی تھی جس کے بعد لاہور ہائیکورٹ نے حمزہ شہباز کو 8 اپریل تک گرفتار نہ کرنے کا حکم دیا تھا۔

غربت کا خاتمہ میری اولین ترجیح میں شامل ہے، وزیراعظم

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ احساس پروگرام کے تحت عدم مساوات کے خاتمے، عوام پر سرمایہ کاری اور نظر انداز کئے گئے اضلاع پر کام کیا جائے گا۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے ٹوئٹ میں  وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ احساس پروگرام پر اپنا پالیسی بیان دیتے ہوئے خوشی محسوس کررہا ہوں، غربت کا خاتمہ میری اولین ترجیحات میں شامل ہے۔

وزیراعظم  کا کہنا تھا کہ غربت میں کمی پروگرام میں 4 شعبوں اور 115 پالیسی اقدامات پرتوجہ دی جارہی ہے، احساس پروگرام کامقصدعدم مساوات کاخاتمہ، عوام پرسرمایہ کاری اور پسماندی اضلاع کی ترقی ہے۔

بھارتی وزیراعظم مودی کی زندگی پر بننے والی فلم کی ریلیز کھٹائی میں پڑ گئی

نئی دہلی: بھارتی وزیراعظم نریندری مودی کی زندگی پر بنائی جانے والی فلم ‘نریندرا مودی’ ریلیز سے قبل ہی تنازع کا شکار ہوگئی جس کے باعث اس کی ریلیز ایک مرتبہ پھر روک دی گئی۔

بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کی زندگی پر بنائی جانے والی فلم 5 اپریل کو ریلیز ہونا تھی جس کے بعد ریلیز کی تاریخ 11 اپریل دی گئی اور اب فلم کی ریلیز کھٹائی میں پڑ گئی۔

بھارتی میڈیا کے مطابق فلم نریندرا مودی کے پروڈیوسر سندیپ سنگھ نے اپنے ٹوئٹر پیغام کے ذریعے آگاہ کیا کہ تاحکم ثانی فلم کی ریلیز روک دی گئی ہے اور اس حوالے سے جلد آگاہ کردیا جائے گا۔

فلم میں بالی وڈ اداکار ویویک اوبرائے بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کا کردار ادا کر رہے ہیں اور فلم کا پوسٹر بھی جاری ہوچکا ہے جس میں ویویک اوبرائے کو نریندر مودی کی صورت میں دیکھا جاسکتا ہے۔

اپوزیشن جماعت کانگریس نے فلم کے خلاف الیکشن کمیشن سے رجوع کیا تھا اور اپیل کی تھی کہ فلم کی ریلیز الیکشن کمیشن کے قوانین کی خلاف ورزی ہے اور یہ انتخابات پر اثر انداز ہوسکتی ہے۔

انڈین نیشنل کانگریس نے سپریم کورٹ میں بھی ایک قانونی درخواست دائر کی جس میں عدالت سے استدعا کی کہ وزیراعظم نریندر مودی پر بنائی جانے والی فلم رائے عامہ کو اپنے حق میں کرسکتی ہے اس لیے فلم کی ریلیز پر پابندی لگائی جائے۔

یاد رہے کہ بھارت میں نریندر مودی کے حوالے سے دو رائے پائی جاتی ہیں، ایک رائے انہیں بھارت کا ابھرتا ہوا معاشی چہرہ قرار دیتا ہے جب کہ دوسرا حلقہ انہیں عوام سے جھوٹے وعدے کرنے والا شخص قرار دیتا ہے۔

شریف فیملی کا مبینہ فرنٹ مین دبئی فرار ہوتے ہوئے گرفتار

لاہور: مضان شوگر ملز کے مینیجر کو لاہور سے دبئی فرار ہوتے ہوئے گرفتار کرلیا گیا۔

ا رمضان شوگر مل کے مینجر محمد مشتاق کو لاہور سے دبئی فرار ہونے کٕی کوشش میں گرفتار کیا گیا، ایف آئی اے امیگریشن نے محمد مشتاق کا نام ای سی ایل میں شامل ہونے پر آف لوڈ کرکے اسے نیب کے حوالے کر دیا جو پی آئی اے کی پرواز 203 سے لاہور سے دبئی روانہ ہو رہا تھا، محمد مشتاق کا نام نیب کی درخواست پر ای سی ایل میں شامل کیا گیا تھا،

ذرائع کے مطابق مشتاق چینی شریف فیملی کا فرنٹ مین ہے جو حمزہ شہباز کی ماڈل ٹاؤن میں گرفتاری کے موقع پر انڈر گراؤنڈ ہوگیا تھا، مشتاق نے سلمان شہباز کے اکاؤنٹ میں 60 لاکھ کی ٹرانزکشن کی تھی۔

اس سے قبل قومی احتساب بیورو (نیب) رمضان شوگر ملز کیس میں تحقیقات مکمل کرکے کرپشن ریفرنس میں قائدِ حزب اختلاف شہباز شریف اور حمزہ شہباز کو ملزم نامزد کرتے ہوئے ریفرنس حتمی منظوری کے لیے نیب ہیڈ کوارٹر ارسال کردیے تھے۔

نیب لاہور کے مطابق ہیڈ کوارٹر ارسال کیے گئے کرپشن ریفرنس میں سابق وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف اور ڈائریکٹر رمضان شوگر ملز حمزہ شہباز مرکزی ملزم نامزد کیے گئے ہیں۔

دوسری جانب ترجمان شریف خاندان کا کہنا ہے کہ محمد مشتاق چینی شریف خاندان کی کسی شوگر مل کا مینجر نہیں ہے اور نہ کبھی ملازم رہا ہے۔

واضح رہے ملزمان پر اختیارات کے ناجائز استعمال سے مبینہ طور پر 21 کروڑ روپے کی کرپشن کے الزام میں تحقیقات جاری تھیں۔

بھارت ایک بار پھر پاکستان کا ایف-16 طیارہ گرانے کا دعویٰ ثابت کرنے میں ناکام

نئی دلی: بھارتی فضائیہ ایک بار پھر اپنے صحافیوں کے سامنے پاکستان کے ایف-16 طیارے کو مار گرانے کا دعویٰ ثابت کرنے میں ناکام ہوگئی۔

27 فروری کو پاک فضائیہ کی جانب سے 2 بھارتی طیارے مار گرائے جانے کے بعد بھارت نے بھی پاکستان کا ایف۔16 طیارہ مار گرانے کا دعوی کیا تھا جب کہ بھارت کے اس دعوے کی قلعی عالمی میڈیا وقتاً فوقتاً کھولتا رہا اور حال ہی میں امریکی جریدے نے بھارت کے جھوٹ کا پول کھولتے ہوئے کہا کہ پاکستان نے ایف۔16 طیارے گننے کی پیش کش کی تھی جس پر امریکی حکام نے طیاروں کی تعداد مکمل ہونے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا تھا کہ اسکواڈ میں سے کسی طیارے کے غائب نہ ہونے سے ثابت ہوتا ہے کہ کوئی پاکستانی طیارہ تباہ نہیں ہوا۔

عالمی سطح پر تسلیم کیے گئے شواہد کے بعد بوکھلاہٹ کا شکار بھارت اپنے ملک میں اپنے ہی صحافیوں کو مطمئن کرنے میں ایک بار پھر مکمل طور پر ناکام رہا اور بھارتی فضائیہ کا ایک اور اسکرپٹ ناکام ہو گیا۔

بھارتی فضائیہ کے ایئر وائس مارشل آر جی کے کپور نے پریس کانفرنس میں ریڈار سے حاصل ہونے والی تصاویر دکھاتے ہوئے کہا کہ بھارتی پائلٹ ابھی نندن  کے سامنے پاکستان کے ایف-16 طیاروں کا گروپ موجود تھا اور ایک ہی سکینڈ بعد دیکھا جا سکتا ہے کہ اس گروپ میں سے ایک پاکستانی جہاز غائب ہوجاتا ہے۔

بھارتی ایئر وائس مارشل نے مزید کہا کہ ہمارے پاس پاکستانی طیارے کے تباہ ہونے اور گرنے کی ٹیلی، آڈیو شواہد بھی موجود ہیں تاہم یہ تصاویر اور آڈیو شواہد کو سیکیورٹی وجوہات کی وجہ سے عام نہیں کیا جا سکتا۔

پریس کانفرنس میں اس وقت دلچسپ صورت حال پیدا ہوگی جب ایئر وائس مارشل صحافیوں کو عام سے سوالات کے جوابات دینےمیں ناکام رہے۔ ایئر وائس مارشل پاکستانی طیارے کے ملبے، طیارے کے گرنے مقام اور پاکستانی پائلٹ سے متعلق کسی سوال کا جواب نہ دے سکے۔

’پنکی میم صاحب‘ نے یوکے ایشین فلم فیسٹیول کا ایوارڈ اپنے نام کرلیا

لندن: پاکستانی فلم ’پنکی میم صاحب‘ نے یوکے ایشین فلم فیسٹیول کا ایوارڈ اپنے نام کرلیا۔

برطانیہ میں ’یوکے ایشین فلم فیسٹیول‘ کا 21واں شو ہوا جس میں پاکستان، بھارت، بنگلادیش، نیپال سمیت دیگر ایشیائی ممالک کی شوبز شخصیات نے شرکت کی۔ فیسٹیول میں پاکستانی فلم سمیت ایشیا کے دیگر ممالک کی فلموں کو بھی ایوارڈز سے نوازا گیا جب کہ پاکستانی فلم ’پنکی میم صاحب‘ کو بہترین ایشین فلم 2019 کے ایوارڈ سے نوازا گیا، فلم کو یہ ایوارڈ آڈیئنس چوائس پر دیا گیا۔

’پنکی میم صاحب‘ پاکستانی خاتون فلمساز شازیہ علی خان کی پہلی فیچر فلم تھی جو گزشتہ سال دسمبر میں ریلیز کی گئی تھی جب کہ فلم کی کہانی دبئی میں مقیم خاتون کے گرد گھومتی ہے جو پاکستان کے چھوٹے گاؤں سے آئی ہوتی ہے جب کہ فلم کی لندن میں ’یوکے ایشین فلم فیسٹیول‘ کے دوران بھی خصوصی نمائش کی گئی تھی۔

واضح رہے گزشتہ سال یوکے ایشین فلم فیسٹیول میں پاکستانی فلم ’کیک‘ کو ایوارڈ دیا گیا تھا۔

مودی کا جنگی جنون۔۔۔ پاکستان کی بھارت کو سخت وارننگ

adaria

نریندر مودی کا جنگی جنون حد سے بڑھتا جارہا ہے، بھارت میں ہونے والے سیکورٹی کے اجلاس میں مودی نے فوج کو فری ہینڈ دیتے ہوئے کہاکہ میری طرف سے کوئی رکاوٹ نہیں، شاید مودی گزشتہ دنوں ہونے والی سرجیکل سٹرائیک کو بھول گیا ہے اس کے ذہن میں یہ بات نہیں کہ اُس کے سامنے ایک ایسی جرّی فوج اور قوم کھڑی ہے جو وطن اور آزادی کی خاطر اپنے خون کا آخری قطرہ تک بہا دے گی۔ پاکستان نے واضح طورپر اس مرتبہ بھارت کو وارننگ دے دی ہے کہ اگر اس نے کوئی بھی مس ایڈونچر کرنے کی کوشش کی تو اس کو ایسا منہ توڑ جواب دیا جائے گا کہ وہ دوبارہ اٹھنے کے قابل نہیں رہے گا، مگر چونکہ اس وقت مودی کی منزل ایک ہی ہے کہ وہ کسی نہ کسی طرح الیکشن جیت جائے ، دنیا اب مودی کی چال بازیوں سے واقف ہوچکی ہے ، چین نے بھی کہہ دیا ہے کہ وہ اسے مسعود اظہر والا پتہ نہیں کھیلنے دے گا، بھارت ہر ممکن کوشش کررہا ہے کہ کسی نہ کسی طرح سرحدی حالات پاکستان کے ساتھ خراب ہو جائیں جن کو وہ انتخابات میں کیش کراسکے ،اب جو اس نے پاکستان پر حملے کی مذموم منصوبہ بندی کی ہے اس کی ہمارے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے نشاندہی کرتے ہوئے کہا ہے کہ مودی سرکار کے جنگی جنون میں کمی نہیں آئی۔ ہم نے ممکنہ جارحیت سے قبل پی فائیو ممالک کے سفیروں ، عالمی برادری اور پاکستانی قوم کو آگاہ کردیا ہے۔ ہم چاہتے ہیں کہ عالمی برادری اس غیرذمہ دارانہ رویے کا نوٹس لے اور بھارت کو تنبیہ کرے کہ وہ اس راستے پر نہ چلے۔پلوامہ واقعہ پر جیو پو لیٹکس کے تحت کچھ ممالک خاموش رہے۔اگر عالمی برادری ابھی بھی اس مسئلے پر خاموش رہتی ہے تو ساتھ ایشیا کا امن تباہ ہوسکتا ہے۔کچھ نادیدہ قوتیں پاک ایران تعلقات خراب کرنے کی کوششیں کررہی ہیں۔ ہم ان قوتوں کو ناکام کریں گے۔ بھارت پاکستان کے خلاف جارحیت کا نیا منصوبہ بنارہا ہے اور 16 سے 20 اپریل کے درمیان پاکستان پر حملہ کرسکتا ہے اور اس حوالے سے پاکستان کے پاس قابل بھروسہ اطلاعات ہیں کہ بھارت جارحیت کی تیاری کر رہا ہے۔ وزیراعظم سے مشاورت سے فیصلہ کیا کہ اس اطلاع کو عالمی برادری کے ساتھ شیئر کریں اور بھارتی عزائم کو بے نقاب کریں۔ مودی سرکار نے سیاسی مقاصد کیلئے پورے خطے کے امن کو داو پر لگا دیا ہے، جنگ کے بادل اب بھی منڈلا رہے ہیں اور ہمارے پاس مصدقہ انٹیلی جنس معلومات ہیں کہ بھارت ایک اور جارحیت کا منصوبہ بنارہا ہے۔ بھارت بہانے کے طور پر مقبوضہ کشمیر میں پلوامہ جیسا ڈرامہ پھر رچا سکتا ہے جسے بنیاد بنا کر بھارت 16 سے 20 اپریل تک پاکستان پر حملہ کرسکتا ہے، عالمی برادری بھارت کے غیر ذمہ دارانہ رویے کا نوٹس لے۔ دنیا جانتی ہے پاکستان نے ذمہ دارانہ اور بھارت نے غیر ذمہ دارانہ رویہ اپنایا، لائن آف کنٹرول پر مسلسل فائرنگ جاری ہے لیکن پاکستان بردباری سے معاملات کو سلجھانے کی کوشش کررہا ہے۔ ہم زندہ قوم ہیں اور دفاع کا حق رکھتے ہیں، اگر بھارت نے جارحیت کا مظاہرہ کیا تو ملک کا بھرپور دفاع کیا جائے گا۔ بھارتی پائلٹ کو لوٹانے کا مقصد امن کا پیغام دینا اور کشیدگی کم کرنا تھا، پاکستان کل بھی امن کا داعی تھا اور آج بھی ہے، پاکستان نے رواں ماہ 360 بھارتی قیدی رہا کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ابھی بھارت میں انتخابات ہیں، الیکشن کے دوران بھارتی حکومت کی طرف سے ہمت اور جرات کا مظاہرہ مشکل ہے لیکن انتخابات کے بعد کشمیر، پانی، سیاچن، راہداری یہ مسائل بیٹھ کر بات چیت سے حل کیے جاسکتے ہیں، امید ہے بھارت اس اہمیت کو سمجھے گا۔ 71 کے بعد پہلی مرتبہ ایل او سی کو عبور کیا گیا ہے، اس پر دنیا خاموش رہتی ہے، بہت سے ذمہ دار ممالک جانتے ہوئے کہ یہ عالمی قوانین کی خلاف ورزی ہے پھر بھی خاموش رہتے ہیں، یہ خاموشی کیوں ہے، عالمی برادری کو خطے کی حساسیت کو سامنے رکھتے ہوئے خاموشی کو توڑنا چاہیے، انہیں اپنا کردار ادا کرنا ہوگا اور کرنا چاہیے۔ وزیر خارجہ کے مطابق حال ہی میں بھارت کی کابینہ کمیٹی برائے سکیورٹی کا اجلاس منعقد ہوااس اجلاس کی صدارت بھارتی وزیر اعظم مودی کرتے ہیں اور اس اجلاس میں تینوں مسلح افواج کے سربراہان شریک ہوئے اور وہ کہتے ہیں کہ ہم پاکستان پر کارروائی کیلئے تیار ہیں، ہمیں سیاسی اجازت چاہئے۔ اس پر مودی کہتے ہیں میں نے تو آپ کو فری ہینڈ دے رکھا ہے، میں نے آپ کو اجازت دے رکھی ہے۔ یہ قابل تشویش اور قابل غور بات ہے۔ میری نظر میں یہ ایک بہت خطرناک کھیل کھیلا جا رہا ہے ،بھارت نے جارحیت کی کوشش کی تو منہ توڑ جواب دیا جائے گا۔ پاکستان کی جانب سے بھارت کو کسی بھی مس ایڈوانچر کی صورت میں سخت وارننگ دے دی گئی۔

کرپشن کے خاتمے کیلئے بروقت فیصلوں کی ضرورت
وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ اگر شریف فیملی کو این آراو نہ دیا جاتا تو آج ملک سے منی لانڈرنگ کاخاتمہ ہوچکا ہوتا، ہم اس بات سے متفق ہیں مگر ضرورت اس امر کی ہے کہ شریف فیملی کے ساتھ ساتھ دیگر افراد کیخلاف بھی گھیرا تنگ کیا جائے جنہوں نے پاکستان کے خزانے کو دونوں ہاتھوں سے لوٹا اور اپنے بینک اکاؤنٹس بھرتے رہے، جیسے جیسے وقت گزر رہا ہے ملکی خزانے کو لوٹنے والے مضبوط ہوتے جارہے ہیں، وقت کا تقاضا ہے کہ ان کیخلاف بروقت کارروائی کی جائے ، اگر اس سلسلے میں لیت و لعل ہوا تو پھر حکومت کیلئے مشکل حالات پیدا ہو جائیں گے جبکہ حکومت یہ جانتی ہے کہ کرپٹ افراد کیخلاف جیسے ہی گھیرا تنگ کیا جائے تو ملک کی جمہوریت اور استحکام خطرے میں نظر آنا شروع ہو جاتا ہے جبکہ حقیقت میں ایسی کوئی بات نہیں۔ بروقت اقدامات،بروقت فیصلے کی ضرورت ہے تب ہی ملک سے منی لانڈرنگ، کرپشن اور دیگر ایسے جرائم جس سے ملک کو ناقابل تلافی نقصان پہنچتا ہے انہیں ختم کیاجاسکتا ہے۔ وزیراعظم عمران نے کہا کہ اب تک منی لاندڑنگ سے متعلق تمام کیسز میں حدیبیہ کیس کا ماڈل استعمال کیا گیا، فرنٹ مینوں کے ذریعے پیسہ ملک سے باہر بھیجاگیا اور پھر واپس منگوایا گیا۔ عوام کو گمراہ کرنے والوں کا اصل چہرہ قوم کو دکھایا جائے۔

ادویات کی قیمتوں میں ہوشربا اضافہ، حکومت کیلئے لمحہ فکریہ
مہنگائی میں ہوشربا اضافے کی وجہ سے قوم اس وقت دو وقت کی روٹی کو ترس رہی ہے اوپر سے سونے پر سہاگہ یہ کہ ادویات ساز کمپنیوں نے دوائیوں کی قیمتوں میں اندھا دھند اضافہ کردیا ہے جس کی وجہ سے غریب عوام کی زندگیوں کو خطرہ بھی لاحق ہوگیا ہے، پہلے غریب آدمی کیلئے دو وقت کی روٹی کمانا مشکل تھی پھر علاج مشکل ہوا اور اب ادویات بھی خرید کی پہنچ سے باہر نکل چکی ہیں ، حکومت ایک جانب پاکستان کو فلاحی ریاست بنانے کا عزم کیے ہوئے جبکہ دوسری جانب مہنگائی آسمان تک جا پہنچی ہے، فلاح تو درکنار عوام کا دو وقت کا سکون بھی تباہ ہوگیا ہے۔پاکستان کی تاریخ میں پہلی مرتبہ کسی حکومت نے فارما سیوٹیکل کمپنیوں کو 45 ہزار ادویات کی قیمتیں 15 فیصد تک بڑھانے کی اجازت دے دی جبکہ جان بچانے والی 463 ادویات کی قیمتوں میں 200 فیصد تک اضافہ کردیا گیا ہے جو کہ گزشتہ 40 سالوں میں سب سے زیادہ اضافہ ہے۔ ڈریپ نے ڈالر کے ریٹ بڑھنے پر ان 463 ادویات کی قیمتیں مزید 9 فیصد بڑھانے کی بھی اجازت دے دی۔ اس کا مطلب ہے کہ ڈریپ نے 463 ادویات کی قیمتوں میں اضافے کی منظوری دو مرتبہ ایک ہی وقت میں دی۔

Google Analytics Alternative