Home » 2019 » April » 13

Daily Archives: April 13, 2019

کوئٹہ کی سبزی منڈی میں دھماکے سے 20 افراد جاں بحق، 48 زخمی

کوئٹہ: نواحی علاقے ہزارگنجی میں بم دھماکے سے 20 افراد جاں بحق جب کہ 48 زخمی ہوگئے۔

کوئٹہ کے نواحی علاقے ہزارگنجی کی سبزی منڈی میں دھماکے سے 20 افراد جاں بحق جب کہ 4 ایف سی اہلکاروں سمیت 48 افراد زخمی ہوئے۔ دھماکہ اتنا شدید تھا کہ قریبی عمارتوں کوبھی نقصان پہنچا۔ صوبائی وزیر داخلہ ضیا لانگو نے بتایا کہ دھماکا خود کش تھا۔

ڈی آئی جی کوئٹہ کا کہنا ہے کہ جاں بحق 8 افراد کا تعلق ہزارہ کمیونٹی سے ہے، دھماکے میں جاں بحق اورزخمی افراد ہزارگنجی کی منڈی سے سبزی اورفروٹ خریدنے آئے تھے۔

لاشوں اورزخمیوں کو بولان میڈیکل کمپلیکس اورسول اسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔ سیکیورٹی فورسز کی جانب سے علاقے کوگھیرے میں لے کر سرچ آپریشن بھی کیا گیا۔ جائے وقوعہ پربم ڈسپوزل اسکواڈ کو بھی طلب کیا گیا جس نے شواہد اکٹھے کیے۔

دوسری جانب وزیراعظم عمران خان، صدرپاکستان عارف علوی، اپوزیشن لیڈر شہباز شریف، وزیرمملکت برائے داخلہ شہریار آفریدی، وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال اوروزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدارسمیت دیگرسیاسی رہنماؤں نے دہشت گردی کے اس حملے کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔

مسلم لیگ(ق) اور گورنر پنجاب کے درمیان اختلافات میں شدت آگئی

لاہور: پنجاب میں تحریک انصاف کی اتحادی مسلم لیگ(ق) اور گورنر پنجاب چوہدری محمد سروس کے درمیان اختلافات میں شدت آگئی۔

اسپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الہیٰ نے گور نر کے ’’آب پاک اتھارٹی‘‘ کے پٹیرن انچیف بننے کی مخالفت کر دی ہے، اسپیکر نے 29 دن سے پنجاب اسمبلی سے منظور ہونے والے ’’آب پاک اتھارٹی‘‘ کا بل  روک رکھا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ گور نر ہاؤس کے 5 سے زائد بار رابطے کے باوجود اسپیکر نے بل حتمی منظوری کے لیے گورنر کو نہیں بجھوایا جس کے بعد بل گورنر ہاؤس منگوانے کے لیے وزارت قانون سے رابطہ کرنے اور دیگرقانونی آپشنز استعمال کر نے پر غور کیا جارہا ہے۔

ذرائع نے بتایا کہ مذکورہ بل وزیر اعظم عمران خان اور پنجاب کابینہ کی منظوری کے بعد پنجاب اسمبلی میں منظوری کے لیے آیا تھا اور  بل روکے جانے کا معاملہ وزیر اعظم عمران خان کے علم بھی آچکا ہے۔

ذرائع  کا مزید کہنا ہے کہ(ق) لیگ وعدے کے باوجود چوہدری مونس الہیٰ کو وفاقی وزیر نہ بنانے پر بھی تحر یک انصاف سے ناراض ہے۔

کٹھ پتلی وزیراعظم نے اٹھارہویں ترمیم ختم کرنے کی کوشش کی تو دمادم مست قلندر ہوگا، بلاول

گھوٹکی: چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ کٹھ پتلی وزیراعظم نےاٹھارہویں ترمیم ختم کرنے کی کوشش کی تو دمادم مست قلندر ہوگا۔

گھوٹکی میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے بلاول بھٹو نے کہا کہ پی ٹی آئی جیسی کوئی حکومت نہیں دیکھی جو سال میں تین بجٹ پیش کرتی اور ہر بجٹ کے بعد مہنگائی کا طوفان لےآتی  ہے، یہ غربت نہیں غریب کو ختم کررہے ہیں، ان سے ملک نہیں سنبھالا جارہا، ان کا ہر وعدہ اور ہرنعرہ جھوٹا نکلا، اس کٹھ پتلی نے کہا تھا کہ وہ قرض نہیں لیں گے کیونکہ اس سے ملک کی سلامتی گروی ہوجاتی ہے مگر اب یہ ہر در پر بھیک مانگنے جاتے ہیں، انہوں نے کہا تھا کہ خودکشی کرلوں گا لیکن آئی ایم ایف کے پاس نہیں جاؤں گا مگر ہراب آئی ایم ایف کی عوام دشمن شرائط پوری کرکے ڈالر، بجلی اور پیٹرول کی قیمتوں میں اضافہ کردیا۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ ایک کروڑ نوکریاں اور 50 لاکھ گھر بنانے کا وعدہ کرنے والوں نےغریبوں کے گھرتجاوزات کے نام پر مسمار کردیے آج نوجوان بے روزگاری کا رونا رو رہے ہیں ،یہ اٹھارویں ترمیم ختم کرکے صوبوں کے حقوق پر قبضہ کرنا چاہتے ہیں ، یہ ون یونٹ بنا کر وفاق کو کمزور کرنا چاہتے ہیں،ون یونٹ سےپہلے بھی  ملک ٹوٹا تھا اور کیا یہ اب پھرملک توڑنا چاہتے ہیں۔

چیئرمین پی پی نے کہا کہ میں کٹھ پتلی وزیراعظم کو خبردار کررہا ہوں کہ اٹھارہویں ترمیم ختم کرکے عوام کے حقوق کو غصب کرنے اور ون یونٹ بنانے کی کوشش کی گئی تو دمادم مست قلندر ہوگا۔

بلوچستان کے ضلع چمن میں دھماکا، ایک شخص جاں بحق اور 7 زخمی

چمن: مال روڈ فلسطین چوک پر دھماکے میں ایک شخص جاں بحق اور متعدد افراد زخمی ہوگئے ہیں۔

پاک افغان سرحد کے قریب بلوچستان کے ضلع چمن میں دھماکے سے متعدد افراد زخمی ہوگئے ہیں، پولیس کے مطابق دھماکا مال روڈ فلسطین چوک پر ہوا ہے، یہاں ایک مارکیٹ بھی ہے جہاں عوام کی بڑی تعداد دھماکے کے وقت موجود تھی، جب کہ جائے وقوعہ کے قریب ایک شاہراہ سے فورسز کی گاڑی بھی گزر رہی تھی جو مکمل طور پر تباہ ہوگئی۔

پولیس حکام کے مطابق دھماکے کا ہدف فورسز کی گاڑی ہی ہوسکتی ہے، کیوں کہ سب سے زیادہ نقصان فورسز کی گاڑی کو ہوا، دھماکا اس قدر شدید تھا کہ قریبی دکانیں، گاڑیاں اور موٹرسائیکلیں تباہ ہوگئیں، اور قریبی عمارتوں کو بھی نقصان پہنچا۔

پولیس حکام کا کہنا ہے کہ دھماکے کی خبر سنتے ہی ایف سی، لیویز اور پولیس کے اہلکار جائے وقوعہ پر پہنچ گئے اور علاقے کو گھیرے میں لے لیا، دھماکے میں ایک شخص جاں بحق ہوگیا جب کہ دیگر زخمی ہونے والے افراد کو سول اسپتال منتقل کیا جارہا ہے۔ دھماکے کے حوالے سے پولیس کا کہنا ہے کہ ابھی کچھ بھی کہنا قبل از وقت ہے کہ دھماکا نصب شدہ تھا یا خودکش تھا۔

شمالی کوریا میں کم جونگ اُن دوبارہ سپریم لیڈر منتخب

پیانگ یانگ: شمالی کوریا کی پارلیمنٹ نے ایک بار پھر کم جونگ اُن کو ملک کا سپریم لیڈر منتخب کر لیا جب کہ ملک کے کئی اہم عہدوں پر تبدیلیاں کی گئی ہیں۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق شمالی کوریا میں کئی برسوں کے بعد اعلیٰ قیادت میں تبدیلیاں لائی گئی ہیں۔ شمالی کوریا کی 14 ویں سپریم اسمبلی کے پہلے اجلاس میں کم جونگ اُن کو نظریاتی اقدامات، حکمت و دانائی سے بھر پور فیصلوں اور تجربے کار قیادت کے باعث ایک بار پھر ریاست کا سپریم لیڈر منتخب کر لیا گیا ہے۔

سپریم اسمبلی کے انتخاب کے بعد کم جونگ اُن ریاستی امور کے کمیشن کے ’چیئرمین‘ کے طور پر برقرار رہیں گے تاہم اب اس عہدے کو چیئرمین کے بجائے ’کوریائی عوام کے سپریم نمائندے‘ کا نام دیا گیا ہے۔

سپریم اسمبلی نے ایک اہم تبدیلی ’چوئے ریانگ ہئے کو سپریم پبلک اسمبلی کا صدر نامزد کر کے کی ہے، آئینی طور پر یہ عہدہ بے اختیار سربراہ مملکت کے برابر ہوتا ہے تاہم اب بھی طاقت کا اصل مرکز کم جونگ اُن ہی ہوں گے۔

سپریم اسمبلی نے ملک کا نیا ’پریمیئر‘ بھی منتخب کیا، اس عہدے پر کم جے ریانگ اپنے پیشرو پاک پونگ جو کی جگہ ذمہ داریاں نبھائیں گے۔ کم جے ریانگ ایک عرصے سے حکمراں پارٹی کے اہم عہدوں پر منصب فائز رہے ہیں۔ یہ عہدہ محدود اختیارات کے ساتھ وزیراعظم کے منصب کے برابر ہوتا ہے۔

حکومتی اعتراف۔۔۔مہنگائی کاطوفا ن کب تھمے گا؟

adaria

پاکستان تحریک انصاف کی حکومت کو مسائل درپیش ہونے کا ایک علیحدہ مسئلہ ہے مگر ایک خوبی ضرور ہے اس کی تعریف کی جائے یابرائی مگر سچ بات یہ ہے کہ حکومت کسی نہ کسی طریقے سے سچائی بیان کرہی دیتی ہے، کچھ عرصہ پہلے وزیرخزانہ نے کہاتھا کہ مہنگائی سے تو عوام کی چیخیں نکلیں گی پھرکہاگیاکہ بیان کو سیاق وسباق سے ہٹ کرشائع کیاگیا، مگر حقیقت یہی تھی کہ مہنگائی ہوتی رہی اور اب بھی لگاتار قیمتوں کاارزاں ہوناتو ایک خواب ہی بن گیا ہے ۔گزشتہ روز وزیراعظم کے مشیرعبدالرزاق داؤد نے بھی مہنگائی کا اعتراف کیا اور وزیرمملکت ریونیو حماداظہرنے کہاکہ ابھی ڈیڑھ سال مزید بھاری گزریں گے ،تین ماہ سے وقت آگے گزرتاجارہاہے اب حکومت نے خود ڈیڑھ سال کاکہہ دیاہے سیاسی حالات ویسے ہی پراگندہ ہورہے ہیں جس کے خلاف بھی احتساب کاقدم اٹھایاجاتاہے وہ شورمچاتاہے اور اب سب کے سب اکٹھے ہوتے جارہے ہیں۔مولانافضل الرحمان اس سلسلے میں اہم کردار ادا کررہے ہیں ،نوازشریف اور زرداری کی بھی ملاقات ہونے جارہی ہے مگر حکومت اپنے موقف پر ڈٹی ہوئی ہے یہی اس کی اچھی بات ہے۔مہنگائی کابھی بتادیاگیاہے کہ وہ تو ہوگی کیونکہ ماضی میں جس حالت میں خزانہ ملاوہ خالی تھا۔مشیر تجارت عبدالرزاق دا ؤد نے لاہور میں ٹیکسٹائل نمائش کے افتتاح کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مہنگائی میں اضافے کا اعتراف کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس بات میں شک نہیں کہ مہنگائی بڑھ گئی ہے جبکہ مارچ میں برآمدات کم ہوئی ہیں وجوہات کا جائزہ لے رہے ہیں آئندہ دو سال میں برآمدات بڑھ جائیں گی اس کیلئے ہمیں مزید محنت کرنا ہوگی ،ایشین ٹائیگر بننے کیلئے انتھک محنت کی ضرورت ہے، قوم تھوڑا صبر کرے، آئندہ 6 ماہ میں مزید بہتری آئیگی ہے، پاکستان آگے بڑھے گا اور مشکلات جلد دور ہوجائیں گی جبکہ وزیر مملکت برائے ریونیوحماد اظہر کا کہنا ہے کہ مہنگائی میں ضرور اضافہ ہوا ہے اور ہمیں احساس بھی ہے لیکن مہنگائی کی یہ شرح اب بھی اُن کے دور سے کم ہے، گزشتہ حکومتوں نے معیشت کا بیڑہ غرق کیااسے ٹھیک کرنے کیلئے وقت درکار ہے، لیگی دورمیں کونسی دودھ اورشہد کی نہریں بہہ رہی تھیں آصف زرداری ، اومنی اور حمزہ شہبازکے کیس میں زیادہ فرق نہیںیہ جتنا مرضی چیخ لیں این آراو نہیں ملے گا،اگلے ڈیڑھ سال معیشت پر مزید بھاری گز ریں گے ۔موجودہ حکومت کو بہت سے چیلنجز ہیں ہمیں سوچنا ہوگا کہاں سے بہتری آنی چاہئے پاکستان کوایشین ٹائیگربننے کیلئے انتھک محنت کی ضرورت ہے ۔پاکستان کو محنت ضرور کرناچاہیے مگر اس محنت میں حکمرانوں کوخودبھی شامل ہوناہوگا، جب تک حکومتی اخراجات کم نہیں ہوں گے اس وقت مہنگائی کے یہی حالات قائم ودائم رہیں گے۔ کم ازکم اتنے عرصے کے بعد تو ریاست میں کہیں نہ کہیں مدینے جیسی ریاست کی جھلک نظرآناچاہیے تھی مگر ابھی تک تو ہرہفتہ دس دن بعد مہنگائی کی نویدسنادی جاتی ہے ،ڈالر جوہے وہ بے قابو ہے،سٹاک ایکسچینج مندی کاشکار ہے ، صنعتیں بندہورہی ہیں، لوکل سرمایہ دارپریشان حال ہے ان سب کامداوا کس نے کرناہے ،ڈالرکواوقات میں کس نے رکھناہے ، بجلی، پانی گیس کی سستی سہولیات کس نے پہنچانی ہیں ،تعلیم کی جانب دیکھاجائے تووہ بھی زبوں حالت ہے ۔غرض کہ کسی چیزکاکوئی پرسان حال نہیں،اجلاس ہونابہت اچھی بات ہے مگر نشستاً برخاصتاً سے کچھ حاصل نہیں ہوگاعمل کی ضرورت ہے ،فیصلوں کی ضرورت ہے ،سب کچھ حکومت کے ہاتھ میں ہے حکومت کو یہ الفاظ تو استعمال ہی نہیں کرنے چاہئیں کہ یہ ہوناچاہیے وہ کرناچاہیے،آرڈردیں ،عمل کریں ،عوام نتائج چاہتی ہے جس کاوہ بے صبری سے انتظارکررہی ہے۔

بھارت میں پُرتشدد انتخابات۔۔۔اقلیتوں کی حق تلفی
بھارت میں لوک سبھاکے 17 ویں انتخابات کے پہلے مرحلے میں گزشتہ روز 20 ریاستوں کی 91 نشستوں کیلئے پولنگ کا عمل مکمل ہوگیا جس میں 14 کروڑ 20 افراد نے حق رائے دہی استعمال کیا ، آندھرا پردیش میں پرتشدد واقعات میں 3 افراد ہلاک ہوگئے ۔ ادھر مقبوضہ کشمیر میں بھارتی انتخابات کیخلاف مکمل شٹر ڈاون ہڑتال کی گئی، مقبوضہ وادی میں پولنگ اسٹیشن ویران رہے، بارہمولہ میں بھارتی فوج کی فائرنگ سے 13 سالہ لڑکا شہید ہوگیا جبکہ مقبوضہ کشمیر میں کشمیری رہنماؤں اور 3 سابق وزرائے اعلیٰ کیخلاف بغاوت کے مقدمے بھی درج کرلئے گئے ۔ محبوبہ مفتی نے کہا ہے کہ بھارتی حکومت مقبوضہ کشمیر کو اسرائیل و فلسطین بنانا چاہتی ہے تو حالات کیلئے بھی تیار رہنا چاہئے، بھارتی فورسز نے کشمیریوں کو زبردستی بی جے پی کو ووٹ ڈالنے پر مجبور کیا ۔ فاروق عبداللہ نے کہا کہ لوگوں پر ظلم سے آگ مزید بھڑکے گی جبکہ عمر عبداللہ کا کہنا تھا کہ کشمیر کے لوگ سمجھداری سے انتخاب کریں کہ کون ان کا حکمران ہونا چاہئے ۔ بھارت میں تشدد کے واقعات کوئی نئی بات نہیں ہے آئے روزاس وہاں اقلیتوں سے جوسلوک کیاجاتاہے وہ پوری دنیا دیکھ رہی ہوتی ہے۔ انتہا پسند ہندوؤں کی طرف سے فرقہ وارانہ تشدد میں ملوث ہونے کے واقعات جس تیزی سے بڑھ رہے ہیں اس سے بھارت میں عدم برداشت اور انتہا پسندانہ کارروائیوں کا خطرہ بھی بڑھ گیا ہے۔انتہا پسند ہندوؤں کے مظالم صرف عیسائی نہیں بلکہ تمام اقلیتیں سہہ رہی ہیں۔ نام نہاد سیکولر ازم کے دعویدار بھارت میں اقلیتوں کے ساتھ ذلت آمیز سلوک کیا جا رہا ہے۔بھارت میں کوئی دن ایسا نہیں گزرتا جب کہیں نہ کہیں اقلیتوں سے برا سلوک نہ ہو رہا ہو۔ بھارت کی ہر گلی ہر محلے میں اس طرح کے کردار، اس سے زیادہ خوفناک داستانوں کے ساتھ کثرت سے ملتے ہیں۔ جب سے مودی حکومت میں آئے ہیں، بھارت میں پُرتشدد کارروائیوں میں اضافہ ہوا ہے اور مودی کے دوبارہ اقتدار میں آنے کی صورت میں یہ سلسلہ مزید شدت اختیار کر سکتا ہے۔

پاکستان کے سوالات ،بھارت کے گلے کاپھندابن گئے
بھارت کی تاریخ دیکھی جائے تووہ جھوٹوں کاسردار ہے ،ماضی سے لیکرآج تک کبھی بھی کسی بھی الزام کو وہ ثابت نہیں کرسکا، پلوامہ کانام نہاد خودساختہ حملہ کرایا، اپنے فوجیوں کو خودمروایا اورالزام پاکستان پرعائد کردیا، جب پاکستان کی حکومت اورمسلح افواج نے انہیں دوٹوک اندازمیں جواب دیا ان کی اصلیت دنیا کے سامنے واضح کی بین الاقوامی میڈیا نے دیکھاکہ بالاکوٹ حملے میں ایک ذرابرابربھی حقیقت نہیں تھی اسی طرح مودی سرکارجب پلوامہ سے متعلق سوالات کاجواب نہ دے سکی تو پاکستان نے بھارتی ڈپٹی ہائی کمشنر کو دفتر خارجہ طلب کرکے وضاحت مانگی ۔ دفتر خارجہ ڈاکٹر محمد فیصل کا کہنا تھا کہ چاہتے ہیں بھارت سے پلواما حملے پر قابل عمل معلومات مل جائیں، بھارت کو کچھ نئے سوالات بھیجے ہیں، بھارت نے پہلے بھیجے گئے سوالات کا جواب بھی ابھی تک نہیں دیا ہے۔ پاکستان دوحا میں امریکا طالبان مذاکرات کا حصہ نہیں ہوگا، پلوامہ واقعے پر بھارتی ہائی کمیشن کو مزید سوالات کا ایک سیٹ دیا گیا ہے، امید ہے بھارت پلوامہ واقعے سے متعلق ان سوالات کا جلد جواب دے گا، کشمیر میں بھارتی ظلم و بربریت کا سلسلہ جاری ہے، عالمی برادری کشمیریوں پر بھارتی مظالم رکوانے میں کردار ادا کرے، مقبوضہ کشمیر کی صورتحال مخدوش ہے، مقبوضہ کشمیر میں شب معراج کو مساجد کو تالے لگائے گئے۔ پاکستان ان اقدامات کی مذمت کرتا ہے۔پاکستان اب اس وقت کامنتظر ہے جب بھارت اس کے مزیدسوالوں کاجواب دے گا۔امکانات یہی ہیں کہ اس سلسلے میں بھی بھارت ذلیل وخوارہی ہوگا کیونکہ اس کے پاس دلیل ہے اورنہ ثبوت ۔

پاک فوج کے 4 میجر جنرلز کی لیفٹیننٹ جنرل کے عہدے پر ترقی

راولپنڈی: پاک فوج کے 4 میجر جنرلز کو لیفٹیننٹ جنرل کے عہدے پر ترقی دیدی گئی ہے۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق پاک فوج کے 4 میجر جنرلز کو لیفٹیننٹ جنرل کے عہدے پر ترقی دیدی گئی ہے، ترقی پانے والوں میں میجر جنرل ساحر شمشاد مرزا، نعمان محمود، اظہرعباس اور فیض حمید شامل ہیں۔

میجر جنرل ساحر شمشاد مرزا اس وقت ڈی جی ملٹری آپریشنز کے طور پر فرائض انجام دے رہے ہیں جب کہ اس سے قبل بھی وہ اہم عہدوں پر تعینات رہ چکے ہیں، میجر جنرل اظہرعباس اس وقت کمانڈنٹ انفنٹری کوئٹہ کے طور پر خدمات انجام دے رہے ہیں۔

میجر جنرل فیض حمید اس وقت آئی ایس آئی میں خدمات انجام دے رہے ہیں جب کہ اس سے قبل وہ جی او سی پنو عاقل بھی رہ چکے ہیں، میجر جنرل نعمان محمود بھی اس وقت آئی ایس آئی میں خدمات انجام دے رہے ہیں۔

پاکستان نے نیوکلیئر سیکیورٹی کا موثرترین نظام تشکیل دیا ہے، ترجمان دفترخارجہ

اسلام آباد: ترجمان دفترخارجہ ڈاکٹرمحمد فیصل کا کہنا ہے کہ پاکستان نے نیوکلیئر سیکیورٹی کا مؤثرترین نظام تشکیل دیا، اور اپنے اداروں میں یہ استطاعت بھی پیدا کی ہے کہ وہ نیشنل سکیورٹی کے حوالے سے بین الاقوامی ٹریننگ پروگرامز منعقد کرسکیں۔

دفترخارجہ کی جانب سے جاری بیان میں بتایا گیا ہے کہ اسلام آباد میں عالمی جوہری توانائی ایجنسی اور پاکستان سینٹر فار ایکسیلینس نیوکلیئرسیکیورٹی کے اشتراک سے ورکشاپ کا انعقاد ہوا، جس میں بیلا روس، چین، مصر، انڈونیشیا، اردن، قازقستان، ملائیشیا، نائجیریا، رومانیہ، اسپین، ازبکستان اور ویتنام سمیت 18 ممالک کے نمائندگان نے شرکت کی۔ عالمی جوہری توانائی ایجنسی اور پاکستان سنٹر فار ایکسیلینس نیوکلیئر سکیورٹی نے ورکشاپ کی میزبانی کی۔

پاکستان نیوکلیئر ریگولیٹری اتھارٹی کے سربراہ ظہیر ایوب بیگ نے ورکشاپ کا افتتاح کیا۔ تقریب میں مختلف ممالک کے سفارتخانوں کے حکام اور تھنک ٹینکس کے نمائندگان نے شرکت کی ۔ اختتامی تقریب میں چیئرمین پاکستان اٹامک انرجی کمیشن محمد نعیم شریک ہوئے۔

ترجمان دفترخارجہ ڈاکٹر محمد فیصل کا کہنا تھا کہ ورکشاپ کا مقصد نیوکلیئر فزیکل پروڈکشن سسٹم کا جائزہ لینا تھا، ذمہ دار جوہری ریاست کی حیثیت سے پاکستان نے نیوکلیئر سیکیورٹی کا مؤثرترین نظام تشکیل دیا ہے، پاکستان نے اپنے اداروں میں یہ استطاعت بھی پیدا کی ہے کہ وہ قومی سلامتی کے حوالے سے بین الاقوامی تربیتی پروگرامز کا بھی انعقاد کر سکے۔

Google Analytics Alternative