Home » 2019 » July » 02

Daily Archives: July 2, 2019

اے این ایف نے رانا ثنااللہ کو گرفتار کرلیا

لاہور: اے این ایف ہیڈ کوارٹر راولپنڈی حکام نے رانا ثناء اللہ کی گرفتاری کی تصدیق کردی۔ 

اینٹی نارکوٹکس فورس (اے این ایف) نے مسلم لیگ (ن) پنجاب کے صدر اوررکن قومی اسمبلی رانا ثنااللہ کو منشیات رکھنے کے جرم میں گرفتار کرلیا۔

اے این ایف حکام کے مطابق موٹروے پر سکھیکی کے قریب رانا ثنااللہ کی گاڑی روک کر تلاشی لی گئی تو اس سے بھاری مقدار میں منشیات برآمد ہوئی، جس پر انہیں گرفتار کرکے لاہور منتقل کر دیا گیا، رانا ثنااللہ کو گرفتار کرتے وقت ان کے گارڈزنے مزاحمت کی جس پر قانون ہاتھ میں لینے کی کوشش پر گارڈز گرفتار کرلیا گیا۔

این ایف ترجمان کے مطابق رانا ثنا اللہ کے خلاف اینٹی نارکوٹکس ایکٹ کے تحت مقدمہ درج کیاجائے گا جب کہ ریمانڈ کے لیے انہیں کل صبح انسداد منشیات کی عدالت میں پیش کیا جائے گا۔

دوسری جانب مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز نے رانا ثنااللہ کی گرفتاری کی خبروں پر ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ اس سے ذیادہ مضحکہ خیز بات کیا ہو سکتی ہے کہ اے این ایف رانا ثنااللہ کو گرفتار کرے، اے این ایف کا رانا ثنااللہ سے کیا لینا دینا ہے،  انہیں دلیرانہ موقف کی وجہ سے گرفتارکیا گیا جب کہ رانا ثنااللہ کی گرفتاری کے پیچھے عمران خان ہے، جعلی اعظم چھوٹے ذہن کا مالک ہے۔

رانا ثنا اللہ کی گرفتاری؛ شہباز شریف نے ہنگامی اجلاس طلب کرلیا

لاہور: پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف نے لیگی رہنما اور رکن قومی اسمبلی رانا ثنا اللہ  کی گرفتاری پر کل ہنگامی اجلاس طلب کرلیا۔

پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف نے رانا ثنا اللہ کی گرفتاری پر پارٹی کا ہنگامی اجلاس کل لاہور میں طلب کرلیا جس میں رانا ثنا اللہ کی گرفتاری اور آئندہ کی حکمت عملی کے حوالے سے غور کیا جائے گا۔ ذرائع کے مطابق شہباز شریف نے پارٹی کی اعلیٰ سطح کی قیادت کو فوری لاہور پہنچنے کی ہدایت کی ہے۔

علاوہ ازیں رانا ثنا اللہ کی گرفتاری پر اپنے ویڈیو بیان میں شہباز شریف نے کہا ہے کہ رانا ثنا اللہ کی بلا جواز اور بغیر کسی ٹھوس الزامات کے گرفتاری کی شدید مذمت کرتے ہیں، اس ریاست گردی کی سربراہی سلیکٹڈ وزیر اعظم خود کررہے ہیں اور اپوزیشن کو دیوار سے لگانے کے لئے بد ترین اوچھے ہتھکنڈے استعمال کررہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ رانا ثنا اللہ ایک جمہوری پسند آدمی ہیں اور انہوں نے میرے ساتھ پنجاب میں 10 سال کام کیا ہے، وہ جمہوریت کے داعی اورجمہوری نظام کو تقویت دینے کے لئے ہمہ وقت کوشاں رہتے ہیں اور اگر پی ٹی آئی کی حکومت اور عمران خان اس کی سزا دینا چاہتے ہیں تو وہ غلط فہمی کا شکار ہیں، رانا ثنا اللہ کو فی الفور عدالت میں پیش کیا جائے اور بھونڈے الزامات قوم کے سامنے لائے جائیں۔

شہباز شریف نے کہا کہ میں ہمیشہ کہتا تھا کہ پی ٹی آئی اورنیب آپس میں ملے ہوئے ہیں اور اس کے ثبوت سامنے آرہے ہیں، میں قوم کو بتانا چاہتا ہوں مسلم لیگ (ن) بطور اپوزیشن جماعت بالکل یکسو ہے، پاکستان کی عظمت اور مسائل کے حل کے لئے ہم دن رات کوشاں ہیں، لیکن پی ٹی آئی کی حکومت نے پاکستان کی معیشت کا بیڑہ غرق کردیا ہے اور اس لائقی اورناکامی سے توجہ ہٹانے کے لئے جو کچھ کیا جارہا ہے، قوم اس کو ہضم نہیں کرسکتی اور مسلم لیگ (ن) بھی اسے ہضم نہیں کرے گی، عمران خان ہوش کے ناخن لیں اور ان اقدامات سے پرہیز کریں ورنہ وہ وقت دور نہیں جب قوم آپ سے ایک ایک بات کا حساب لے گی۔

ایمنسٹی اسکیم سے مستفید ہونے کا ایک اور موقع

حکومت نے ایمنسٹی اسکیم میں عوام کی سہولت کو درپیش رکھتے ہوئے بدھ 3 جولائی تک توسیع کردی ہے تاکہ اگر کسی شخص کو اس اسکیم سے فائدہ اٹھانے میں تاخیر ہوگئی ہو تو وہ اس سے مستفید ہوسکے ۔ نیز حکومت نے یہ بھی واضح کیا کہ وہ عوام کو قطار دراندرقطار سے بھی بچانا چاہتی ہے ۔ مشیر خزانہ ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ ، وزیر مملکت حماد اظہر، مشیر اطلاعات فردوس عاشق اعوان اور چیئرمین ایف بی آر شبر زیدی نے مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ حکومت کی مالیاتی ٹیم نے اثاثے ظاہر کرنے کی اسکیم کی مدت میں 3جولائی تک توسیع کردی ہے تاکہ تمام شہری اس اسکیم سے بھرپورفائدہ اٹھائیں اگر اسکیم سے فائدہ نہ اٹھایا گیا تو یکم جولائی سے بے نامی قانون کا اطلاق ہو جائے گا اس مقصد کے لئے کمیشن بھی بنایا گیا ہے یہ کمیشن اثاثے اورجائیدادیں ظاہر نہ کرنے والوں کاتعاقب کرے گا،ایمنسٹی اسکیم سے فائدہ اٹھانے کیلئے ایک لاکھ کے لگ بھگ درخواستیں آئی ہیں ، اگست کے بعد قومی شناختی کارڈ نمبر این ٹی این بن جائے گالگژری آءٹم پر ٹیکس بڑھایا جائے گامعیشت کی بہتری کے لیے سخت سے سخت اقدامات سے گریز نہیں کیا جائے گا،امیر طبقوں سے ٹیکس لینے کے سوا حکومت کے پاس کوئی چارہ نہیں ، برآمدی صنعت پر کوئی نیا ٹیکس لگایا گیاٹیکس نیٹ میں اضافہ تک بہتری نہیں آئے گی ۔ مشیرخزانہ عبدالحفیظ شیخ وزیرمملکت محصولات حماد اظہرچیئرمین ایف بی آرشبرزیدی نے پوسٹ بجٹ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ حکومت کی کوشش ہے عوام سے سچ بولا جائے اور اقتصادی صورت حال کو بغیر چھپائے پیش کیا جائے ۔ بجٹ کا محور پاکستان کے عوام ہیں کرنٹ اکاءونٹ خسارے کو ساڑھے 13سے گرا کر 7ملین ڈالر کرنے کا ہدف ہے ،کفایت شعاری مہم کے تحت اخراجات کو کم سے کم سطح پر لانے کیلئے بھی کوشاں ہیں ،بجٹ میں حکومتی اخراجات 50 ارب روپے کم کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے جو ٹیکسز اکٹھا ہوتے ہیں ان میں سے 56فیصد صوبوں کا حصہ دینا ہے ،ہم سب نے مل کر ملک کی معیشت کو بہتر بنانا ہے حکومت صرف کمزور طبقے پر پیسہ خرچ کرے گی، صنعت کاروں کو بجلی، گیس اور قرضوں کیلئے حکومت سبسڈی فراہم کرے گی ۔ مقررہ مدت گزرنے کے بعد اگر کسی نے اس سے فائدہ نہ اٹھایا تو وہ قانون کے سخت شکنجے میں آئے گا اس میں کوئی دوسری رائے نہیں کہ حکومت نے وقت دیدیا ہے ، متعلقہ لوگوں کو اس سے فائدہ اٹھانا چاہیے، ملکی معیشت کی بہتری کیلئے یہ انتہائی ضروری ہے کہ ٹیکس ادائیگی کے ساتھ ساتھ بے نامی اثاثوں کا بھی اظہار کیا جائے تاکہ ملک کو مضبوط قدموں پر کھڑا کیا جاسکے ، اس کیلئے عوامی تعاون انتہائی ضروری ہے ساتھ ساتھ عنان حکمرانی میں بیٹھے ہوئے افراد کیلئے بھی لازمی ہے کہ وہ بھی اس اسکیم میں شامل ہوں اور اگر اس سلسلے میں کسی قسم کا بھی احتساب کا سلسلہ شروع کیا جائے تو وہ اوپر سے کیا جانا چاہیے تاکہ عوام کے سامنے ایک مثال قائم ہوسکے کہ قانون کی نظر میں سب برابر ہیں ۔

مہنگائی کے ہوشربا طوفان کو کنٹرول کرنے کی ضرورت

ملک بھر میں مہنگائی کا ویسے ہی شورشرابا ہے، ہر چیز مہنگی ہے ، گو کہ وزیراعظم نے اس سلسلے میں نوٹس لیا مگر ساتھ ہی اشیائے خوردونوش کے ساتھ ساتھ بجلی مہنگی ہوگئی، گیس مہنگی ہونے کا نوٹیفکیشن جاری کردیا گیا ، رہی سہی کسر سی این جی سیکٹر کیلئے بھی گیس مہنگی کردی گئی ہے ۔ گھریلو،کمرشل صارفین اور سی این جی سیکٹر کیلئے گیس مہنگی کا اطلاق ہوگیا ہے جس کاباقاعدہ نوٹیفکیشن جاری کردیاگیا، ماہانہ 100مکعب میٹر گیس استعمال کرنےوالے گھریلوں صارفین کیلئے قیمت 127سے بڑھا کر300روپے ہوگئی، سی این جی کی قیمت میں بھی 22روپے فی کلوتک اضافہ ہوگیاہے ۔ نوٹیفکیشن کے مطابق ماہانہ 200 مکعب میٹر گیس استعمال کرنے والوں کے لیے گیس کی قیمت 264 روپے سے بڑھا کر 553 روپے جب کہ ماہانہ 300 مکعب میٹر گیس استعمال کرنے والوں کیلئے 275 روپے سے بڑھا کر 738 روپے کی گئی ہے ۔ اسی طرح ماہانہ 400 مکعب میٹر گیس استعمال کرنے والوں کیلئے گیس کی قیمت 780 روپے سے بڑھا کر 1107 روپے، ماہانہ 400مکعب میٹر گیس سے زائد گیس استعمال پر گیس کی قیمت 1460 روپے برقرار رکھی گئی ہے ۔ نوٹیفکیشن کے مطابق کھاد کارخانوں کے لیے بطور فیڈ گیس کی قیمت میں 61 فیصد جب کہ بجلی کارخانوں ، سی این جی اور جنرل انڈسٹری کیلئے تمام شعبوں میں گیس کی قیمت 31 فیصد بڑھائی گئی ۔ آخر اس مہنگائی میں غریب عوام دو وقت کی روٹی کیونکر پوری کرسکے گی ۔ اتنی تاریخی مہنگائی کو روکنے کیلئے حکومت کی جانب سے فوری اقدامات ضروری ہیں ۔

چیئرمین سینیٹ کا معاملہ، حکومت ڈٹ گئی

چیئرمین سینیٹ کی تبدیلی کے معاملے پر حکومت اور اتحادی ڈٹ گئے ہیں ، ادھر بلوچستان کے وزیراعلیٰ جام کمال بھی متحرک ہوگئے ہیں ، چونکہ اپوزیشن پورا زور لگا رہی ہے کہ کم ازکم وہ چیئرمین سینیٹ کو ہی تبدیل کراکے اپنی خفت کو مٹا سکے کیونکہ آل پارٹیز کانفرنس میں اپوزیشن کو کوئی خاطر خواہ کامیابی حاصل نہیں ہوسکی اور اپوزیشن کے 12 ویں کھلاڑی کی تجاویز کو اکثریتی تعداد نے مسترد کردیا، مولانا فضل الرحمن چاہتے تھے کہ ایوان سے استعفے دے دئیے جائیں پھر انہوں اور بھی دیگر معاملات اٹھائے لیکن بلاول بھٹو زرداری نے سب کو مسترد کردیا ۔ اگر یہ کہا جائے کہ اے پی سی قطعی طورپر ناکام ہوگئی تو غلط نہ ہوگا، اب اسی طرح سینیٹ کی چیئرمین کی تبدیلی کے معاملے پر اپوزیشن کو ناکامی کا ہی منہ دیکھنا پڑے گا ۔ وزیراعظم سے ن لیگ کے ممبران اسمبلی نے ملاقات کی اور اپنے تحفظات سے آگاہ کیا ۔ اس کے بعد ن لیگ جُزبُز ہونا شروع ہوگئی اور احسن اقبال نے تو یہاں تک کہہ دیا کہ اگر کسی فلور کراسنگ کی تو وہ سمجھ لے کہ وہ اپنے سیاسی ڈیتھ وارنٹ پردستخط کردئیے ہیں ، ابھی تو یہ ابتداء ہے ہماری اطلاعات کے مطابق ابھی مزید ارکان بھی ن لیگ سے روانگی سے پر تول رہے ہیں اور وہ بھی جلد وزیراعظم سے ملاقات کرینگے ، اس لحاظ سے کپتان کی سیاست بالکل صحیح زاویے پر جارہی ہے بس اگر وہ مہنگائی اور ڈالر کو کنٹرول کرجاتے ہیں تو پھر تمام کامیابیوں کے دروازے ان کے سامنے وا ہیں ۔

ایس کے نیازی کی خبر سچ ثابت ہوئی

پاکستان گروپ آف نیوز پیپرز اور روز نیوز کا ہمیشہ سے یہ خاصا رہا ہے کہ اس نے اپنے قارئین اور ناظرین کرام کو بروقت ، قبل ازوقت باخبر رکھنے کا اعزاز برقراررکھا اسی سلسلے میں پاکستان گروپ آف نیوز پیپرز کے چیف ایڈیٹر اور روز نیوز کے چیئرمین ایس کے نیازی نے 25 جون کو اپنے قارئین اور ناظرین کو اس بات سے آگاہ کیا تھا کہ ایمنسٹی اسکیم کی تاریخ میں توسیع کردی جائے گی اور حکومت نے گزشتہ روز باقاعدہ اس کا اعلان کیا ، اس اعتبار سے ایس کے نیازی کی خبر سچ ثابت ہوئی جس میں انہوں نے کہہ دیا تھا کہ اس اسکیم کی تاریخ بڑھا دی جائے گی تاکہ رہ جانے والے لوگ اس سے فائدہ اٹھاسکیں ۔ یہ صر ف ایک ایمنسٹی اسکیم کی ہی بات نہیں بلکہ ماضی کو دیکھا جائے تو اکثر و بیشتر ایس کے نیازی واضح طورپر اور بین السطور ایسی اہم خبروں سے قبل ازوقت آگاہی کرادیتے ہیں جن کے بارے میں با اختیار ایوانوں میں فیصلے ہورہے ہوتے ہیں ۔

کابل میں خودکش حملہ، 16 افراد ہلاک اور 100 زخمی

کابل: افغانستان میں وزارت دفاع اور فٹبال فیڈریشن کی عمارتوں کے نزدیک خود کش حملے میں 16 افراد ہلاک اور 100 زخمی ہوگئے جبکہ جوابی کارروائی میں 2 حملہ آور بھی مارے گئے۔  

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق دارالحکومت کابل میں واقع وزارت دفاع کی عمارت اور افغان فٹبال فیڈریشن کے دفتر کے قریب خود کش بمبار نے بارود سے بھرا ٹرک دیوار سے ٹکرا دیا جس کے نتیجے میں 16 افراد ہلاک اور 100 زخمی ہوگئے۔

زورد دار دھماکا گنجان آباد اور مصروف ترین علاقے میں کیا گیا جس میں اسکول کی 5 عمارتیں بری طرح متاثر ہوئیں جب کہ وزارت دفاع کے لاجسٹک سینٹر اور افغان فٹبال فیڈریشن کی عمارت کو بھی نقصان پہنچا۔ زخمیوں میں 50 طالب علم اور 18 فٹبال فیڈریشن کے کھلاڑی و اہلکار شامل ہیں۔

خود کش دھماکے کے بعد 2 حملہ آوروں نے قریبی عمارت میں قبضہ کرکے وزارت دفاع کے لاجسٹک سینٹر کو نشانہ بنایا، اس دوران پولیس اور فوج کی بھاری نفری نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا اور سیکیورٹی اہلکاروں کے ساتھ سخت مقابلے میں دونوں حملہ آور مارے گئے۔

گزشتہ روز بھی قندھار میں طالبان جنگجوؤں نے 4 گاڑیوں میں سوار ہو کر سرکاری عمارت پر حملہ کیا تھا جس کے نتیجے میں  11 پولیس اہلکار اور 9 الیکشن کمیشن کے اہلکار ہلاک  جب کہ 30 افراد زخمی ہوئے تھے۔

انتہا پسند ہندووَں کے ہاتھوں مسلمان کی شہادت

بھارت کی انتہا پسند ہندو تنظیم ’بجرنگ دل‘ کا کہنا ہے کہ ہندوستان صرف ہندووَں کا ہے ۔ اس میں مسلمانوں سمیت کسی بھی اقلیت کو رہنے نہیں دیا جائے گا ۔ یہ تنظیم حکمران جماعت بی جے پی کی ہی ایک شاخ ہے جس کا دعویٰ ہے کہ مسلمانوں کی نسل کشی کر کے بھارت کو ہرصورت ہندو ملک بنائے گی ۔ بھارتی ریاست جھاڑکھنڈ کے شہر خرساون میں انتہا پسند ہندووَں نے مسلمان موٹر مکینک نوجوان پر سرعام وحشیانہ تشدد کر کے شہیدکر دیا ۔ گو کہ اس علاقے کے 2 پولیس افسروں کو معطل جبکہ تشدد کے ذمہ دار پپو منڈل سمیت 5 انتہا پسندوں کو حراست میں لے لیا گیا مگرزیر حراست افراد سے وی آئی پی سلوک کیا جا رہا ہے ۔ واقعہ کچھ یوں ہے کہ24 سالہ شسمس تبریز انصاری جو پونا میں ویلڈنگ کا کام کرتا تھا چھٹیوں پر اپنے شہر آیا ۔ انتہا پسند ہندووَں نے آر ایس ایس رہنماؤں کے اشارے پر موٹرسائیکل چوری کا الزام لگا کر پکڑا اور گرین بیلٹ میں لگے کھمبے سے باندھ کر وحشیانہ تشدد کا نشانہ بنایا ۔ انتہا پسند غنڈوں نے تبریز سے اس کا نام پوچھا اور پھر ڈنڈوں چھڑیوں سے مارنا شروع کر دیا ۔ 18 گھنٹے تک اسے اندھا دھند مارا جاتا رہا اور اس سے جے شری رام اور جے ہنومان کے نعرے لگواتے رہے ۔ آخر حالت غیر ہونے پر اسے 18 جون کو پولیس کے حوالے کر دیا ۔ پولیس کے افسر اور علاقے کے سیاسی رہنما اس ہولناک واقعہ کے دوران غائب رہے ۔ شمس تبریز انصاری جب ان کی تحویل میں آیا تو بروقت اور مناسب علاج نہ کرایا ۔ بعد میں پولیس شمس تبریز کو حالت بہت زیادہ خراب ہونے پر جمشید پور کے صدر ہسپتال لیکر آئی جہاں سے اسے ٹاٹا ہسپتال منتقل کیا جا رہا تھا کہ وہ دم توڑ گیا ۔ کوئی دن ایسا نہیں گزرتا جب بھارت کسی نہ کسی ریاست میں کسی مسلمان کی گرفتاری کی خبر نہ چپھے اور یہ اسے دہشت گرد نہ بنا دیا جائے ۔ پاکستانی جاسوس اور نہیں تو کم از کم جعلی کرنسی کا دھندا کرنے والا اور پھر سب کے کیس خصوصی عدالتوں میں چلانے کےلئے بھیج دیے جاتے ہیں ۔ بھارت میں ایسے بے شمار واقعات روزانہ کی بنیاد پر وقوع پذیر ہوتے ہیں کہ جن کا ہدف صرف اور صرف مسلمان ہیں یا کوئی مسلمان کے نام کے طور پر استعمال ہونے والا شخص ہوتا ہے ۔ مخصوص ہندوانہ ذہن اپنی بیمار ذہنیت کو تقویت پہنچانے کےلئے مسلمانوں کو اپنی نفرت کا نشانہ بناتے ہوئے ان پر اپنے ظلم کو بڑھاتے جا رہے ہیں اور اپنی اسی ذہنیت کی بنیاد پر بھارت میں مسلمانوں کےلئے عرصہ حیات کو مزید تنگ تر کرتے جا رہے ہیں کہ وہ یا تو یہ ملک چھوڑ جائیں یا ان کے مکمل باجگزار بن جائیں ۔ بھارت میں صرف پاکستانی شہریوں سے ہی برا سلوک نہیں کیا جاتا بلکہ خود بھارتی مسلمانوں کے ساتھ بھی ناروا سلوک ہوتا ہے ۔ بھارت میں مسلم کش فسادات معمول کی بات ہے ان میں بھارتی درندگی، بربریت اور سفاکی کا بدترین مظاہرہ ہوتا ہے ۔ احمد آباد اور گجرات میں دو ہزار سے زائد لوگوں کو زندہ جلا کر مار ڈالا گیا ۔ سات ہزار بچے یتیم کر دیے گئے اور عورتوں کے ساتھ وہ برتاؤ کیا گیا کہ انہیں اپنے عورت ہونے پر شرم آنے لگی ۔ ایک لاکھ کے قریب رہائشی اور تجارتی مراکز کو تاراج کیا گیا اور تلافی کے نام پر چند سکے متاثرین کو تھما دیے گئے ۔ موت کے اس ننگے ناچ پر سارا عالم چیخ اٹھا ۔ بین الاقوامی سطح پر اس سانحے کی مذمت کی گئی لیکن بھارتی حکمران اس درندگی پر آج بھی نازاں ہیں اور مجرم آزاد پھر رہے ہیں ۔ بھارتی مسلمان آج بھی سہمے ہوئے ہیں ۔ ان کا معاشی اور سماجی بائیکاٹ جاری ہے ۔ کئی انکوائریاں اور تحقیقات ہوئیں لیکن آج تک کسی مجرم کو سزا نہیں ملی، کیونکہ سیاسی اثرو رسوخ رکھنے والے قاتلوں اور فسادیوں کو سزا دیے جانے کی روایات بھارت میں نہیں ہیں ۔ یہ بھارت کے سیکولر اور جمہوریت پسند عناصر کے سوچنے کی بات ہے کہ اگر بھارت میں مسلمان اور دیگر اقلیتوں کے خلاف ہندو انتہا پسندوں کو یونہی چھوٹ دی جاتی رہی تو کیا بھارت کے اتحاد و سلامتی کی ضمانت دی جا سکتی ہے ۔ ہندو بہت مکار ،عیاراور چالاک ہے ۔ وہ بغل میں چھری اور منہ سے رام رام پکارتا ہے ۔ ہندو قطعاً نا قابل اعتماد ہے ۔ اس نے آج تک پاکستان کے وجود کو تسلیم نہیں کیا ۔ ہندو طاقت کے ذریعے پاکستان پر قبضہ نہیں کر سکتالیکن وہ اپنی عیاری اور منافقت کے ذریعے ہمارے وطن عزیزکو اپنے مال کےلئے منڈی بنانا چاہتاہے اور مقبوضہ کشمیر پر بھی اپنا تسلط برقرار رکھنا چاہتا ہے ۔ حالات و واقعات نے یہ بات ثابت کر دی ہے کہ بھارت میں سیکولر ازم نام کی کوئی چیز نہیں ۔ وہاں کا معاشرہ اب بھی انتہاپسندی، ذات پات، تعصب اور درجہ بندی کے ہزاروں سال پرانے نظریات پر قائم ہے ۔ سیکولر بننے کےلئے تحمل، بردباری، برداشت اور دوسرے کے خیالات اور مؤقف کو سمجھنے اور سہنے کی ضرورت ہوتی ہے لیکن ذات پات پر مبنی انسانی استحصال کے معاشرے میں ایسا معیار اب کم ہی دکھائی دیتا ہے ۔ ہندوؤں کی اسی انتہاپسندی اور تعصب نے ایک صدی پہلے ہندوستان کے مسلمانوں کو مجبور کر دیا تھا کہ وہ اپنے لئے الگ وطن کی جدو جہد کا آغاز کریں ۔

پاکستان کو سعودی عرب سے تیل کی فراہمی رواں ماہ سے شروع ہوجائے گی

اسلام آباد: پاکستان کو سعودی عرب سے تیل کی فراہمی رواں ماہ سے مؤخر ادائیگیوں پر شروع ہوجائے گی۔

رواں ماہ سے سعودی عرب کی جانب سے پاکستان کو تیل کی فراہمی مؤخر ادائیگیوں پر شروع کردی جائے گی، سعودی عرب پاکستان کو ماہانہ 275 ملین ڈالر کا تیل فراہم کرے گا جب کہ 3 سال تک ملنے والے تیل کی مجموعی لاگت 9 ارب 90 کروڑ ڈالر ہے۔

دوسری جانب سعودی سفارت خانے کا کہنا ہے کہ سعودی عرب نے گذشتہ اکتوبر میں پاکستان کے لیے معاشی پیکج کا اعلان کیا تھا، تیل کی صورت میں یہ امداد سعودی قیادت کی طرف سے پاکستانی معیشت کے تعاون کے لیے ہے۔

دبئی کے حکمراں کی اہلیہ نے جرمنی پہنچ کر سیاسی پناہ کی درخواست دیدی

ابوظہبی: دبئی کے حکمراں محمد بن راشد المکتوم کی اہلیہ شہزادی حیا بنت الحسین ناراض ہو کر جرمنی پہنچ گئیں اور سیاسی پناہ کی درخواست دے دی۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق متحدہ عرب امارات کے نائب صدر محمد بن راشد المکتوم کی اہلیہ شہزادی حیا بنت الحسین گھر سے ناراض ہو کر اپنی 11 سالہ بیٹی اور 7 سالہ بیٹے کے ہمراہ جرمنی پہنچیں جہاں  انہوں نے دبئی میں اپنی جان کو درپیش خطرے کے باعث سیاسی پناہ کی درخواست بھی دے دی۔

45 سالہ شہزادی حیا بنت الحسین کی دبئی سے جرمنی آمد اور سیاسی پناہ کی درخواست دینے کی تاحال جرمن حکومت یا متحدہ عرب امارات کے حکام نے تصدیق نہیں کی ہے تاہم شہزادی حیا اور ان کے بچوں کو رواں برس جنوری کے بعد سے کسی بھی عوامی مقام پر نہیں دیکھا گیا، شہزادی حیا شیخ محمد کی چھٹی بیوی ہیں اور وہ اردن کے موجودہ بادشاہ عبداللہ کی سوتیلی بہن بھی ہیں۔

واضح رہے کہ اس سے قبل شیخ محمد بن راشد المکتوم کی ایک بیٹی بھی گھر سے ناراض ہو کر دبئی سے برطانیہ پہنچی تھیں تاہم برطانیہ نے انہیں واپس بھیج دیا تھا، اسی طرح ایک اور بیٹی شیخ لطیفہ نے بھی بغاوت کی کوشش کی تھی تاہم انہیں بھی بھارتی بحریہ نے گرفتار کرکے واپس دبئی بھیج دیا تھا۔

طیارے کے درمیان میں کاک پٹ والا ناسا کا نیا اورانوکھا سپرسانک جیٹ

پیساڈینا، کیلیفورنیا: جب بھی جدید اور تیز رفتار طیارے کی بات ہو تو انجینیئر عجیب و غریب ڈیزائن پیش کرنے سے بھی نہیں ہچکچاتے۔ حال ہی میں ناسا کے ڈیزائنروں نے ایک ایسے سپرسانک طیارے کا تصور پیش کیا ہے جس میں کاک پٹ درمیان میں لگا ہے اور انتہائی ستواں طیارے کے ڈھانچے کو دیکھ کر اس پر پنسل کا گمان ہوتا ہے۔

اب جب کاک پٹ ہی طیارے کی چونچ سے اتنا دور ہو تو آخر پائلٹ کو سامنے کا منظر کس طرح دکھائی دے گا۔ لیکن ناسا نے اس کا حل پیش کرتے ہوئے ایک فورکے اسکرین لگایا ہے جس پر کئی طرح کے کیمرے لگے ہیں جو پائلٹ کو سارا منظر دیکھنے میں مدد دیں گے۔ اس طیارے کو ایکس 59 کیو یو ای ایس ایس ٹی یا کیوسٹ کا نام دیا گیا ہے۔

طیارے کی نوک پر دو جدید ترین کیمرے نصب ہیں جو مشترکہ طور پر پورا منظر دکھاتے ہیں اور بہت دور نصب کاک پٹ میں موجود پائلٹ عین حقیقی منظر کی طرح پوری علاقے کو دیکھتا ہے۔ ناسا نے اس نظام کو بیرونی بصری نظام یا ایکس وی ایس کا نام دیا ہے۔

طیارے کی دوسری خاص بات یہ ہے کہ یہ جیسے ہی آواز کی رفتار سے آگے جاتا ہے تو اس سے بلند آواز والی  ’صوتی گونج‘ یا سونک بوم پیدا نہیں ہوتی۔ سماعت چیردینے والی یہ آواز بسا اوقات بم گرنے جیسی ہوتی ہے۔ اسی وجہ سے امریکی سرزمین پر سونک بوم والے طیاروں پر پابندی عائد کردی گئی ہے کیونکہ اس کی ہولناک آواز لوگوں کو خوفزدہ کردیتی ہے۔

لیکن انجینیئرکب ہمت ہارتے ہیں اور اس کے تدارک کے لیے انہوں نے جدتوں بھرا نیا طیارہ ڈیزائن کیا ہے۔ فی الحال یہ مسافر بردار نہیں لیکن اس کی تحقیق سے ایسے طیاروں پر پیش رفت ہوسکے گی جو سونک بوم کے بغیر آواز سے تیز رفتاری سے سفر کریں گے اور یوں برق رفتار مسافر طیاروں کی راہ ہموار ہوگی۔

Google Analytics Alternative