Home » 2019 » August » 05 (page 3)

Daily Archives: August 5, 2019

مزید2سال کیلیے ٹیم حوالے کرو پھر کمال دیکھو؛ آرتھر کی پیشکش

کراچی: کوچ مکی آرتھر نے پی سی بی کو پیشکش کی ہے کہ مزید2 سال کیلیے ٹیم حوالے کرو اور پھر کمال دیکھو۔

مکی آرتھر نے اس دوران کسی پاکستانی کو بطور نائب ساتھ رکھنے کا بھی کہا ہے تاکہ اسے گروم کر سکیں، دوسری جانب قومی کرکٹرز آرتھر سے خوش نہیں اور باہمی اعتماد کا فقدان نظر آتا ہے، ادھر بورڈ حکام سے خاصے قریب ایک سابق کرکٹر نے کوچنگ کیلیے سابق سری لنکن اسٹار مہیلا جے وردنے کا نام پیش کر دیا، البتہ ان کا آئی پی ایل سے بڑا معاہدہ ہے اور پاکستان انھیں اتنی بڑی رقم نہیں دے سکتا۔

تفصیلات کے مطابق مکی آرتھر نے پی سی بی سے کہا ہے کہ انھیں مزید2 سال کیلیے ذمہ داریاں سونپ دی جائیں، اس دوران وہ ٹیم کو بہتر بنا دیں گے، انھوں نے یہ بھی تجویز دی کہ کسی پاکستانی کو ان کا نائب بنایا جائے تاکہ وہ ساتھ رہ کر سیکھتے رہے اور پھر جب وہ جائیں تو کوچنگ سنبھال لے۔

دوسری جانب قومی کرکٹرز آرتھر سے خوش نہیں اور باہمی اعتماد کا فقدان نظر آتا ہے،ان کے مطابق مشکل وقت میں کوچ نظریں پھیر لیتے ہیں اور کام نہیں آتے، کرکٹ بورڈکوچ کے تقرر میں سینئر کرکٹرز سے مشاورت کا بھی سوچ رہا ہے،ایسے میں مکی آرتھر کو زیادہ حمایت ملنا دکھائی نہیں دیتا، اگر ذرائع کی اس بات کو سچ مان لیا جائے کہ کوچ نے نئے کپتان کے تقرر کی تجویز دے دی تو یہ سرفراز احمد کیلیے بہت بڑا دھچکا ہے جنھوں نے ہمیشہ آرتھر کی بات کو مانا اور محاذ آرائی سے گریز کرتے رہے۔

دوسری جانب پاکستان کرکٹ کے معاملات میں ان دنوں خاصے متحرک ایک سابق کرکٹر نے بورڈ کو تجویز دی کہ وہ کسی ایسے کوچ کا تقرر کرے جسے تینوں طرز کی کرکٹ کھیلنے کا تجربہ حاصل ہو،جدید کرکٹ کے تقاضوں کو سمجھنے کی وجہ سے وہ ٹیم کے بہت کام آئے گا،اس حوالے سے سابق سری لنکن اسٹار مہیلا جے وردنے کا نام پیش کردیا گیا،البتہ ان کا آئی پی ایل فرنچائز ممبئی انڈینز سے بہت بڑا معاہدہ ہے، پی سی بی انھیں اتنی بڑی رقم دینے کی پوزیشن میں نہیں لگتا۔

’24 سال کی عمر میں ماں بننا زندگی کا سب سے دانشمندانہ فیصلہ’

بولی وڈ اداکارہ اور سابق مس یونیورس سشمیتا سین نے 24 سال کی عمر میں ماں بننے کو ‘اپنی زندگی کا سب سے دانشمندانہ فیصلہ’ قرار دیا ہے۔

سشمیتا سین نے اس عمر میں 2 بچیوں رینی اور علیشا کو گود لیا تھا اور اب ان کا کہنا ہے ‘اس فیصلے نے میری زندگی کو مستحکم کیا، لوگ سوچتے ہیں کہ یہ فلاحی کام اور بہت اچھا اقدام تھا مگر یہ ذاتی تحفظ کے لیے تھا، اس نے خود مجھے تحفظ فراہم کیا، اپنے دل کے کہنے پر چلنا ہمیشہ اس بات کو یقینی بناتا ہے کہ آپ درست سمت میں گامزن ہیں’۔

انہوں نے مزید کہا ‘ہاں یہ سچ ہے کہ 24 سال کی عمر میں ایسا کرنا کافی مشکل تھا کیونکہ اس وقت میں کیرئیر کے عروج پر تھی، ایک اداکارہ کے طور پر یہ چیلنجنگ کام تھا، اس وقت آپ خود میں گم ہوتے ہیں اور کامیابی کی وجہ سے خود پر غرور بھی ہوتا ہے۔ مگر مجھے اپنی 24 سال کی ذات پر فخر ہے کیونکہ میں چاہتی تھی تو بچیوں کو گود لینے کے عمل کو التوا میں ڈال سکتی تھی اور نظر انداز کرسکتی تھی، مگر میں نے ایسا نہیں کیا، اس کا کریڈٹ میں لیتی ہوں’۔

سشمیتا سین کا کہنا تھا کہ وہ ایسی ہی ماں ہیں جو بچوں کو جنم دیتی ہے ‘قدتی پیدائش میں ماں اور بچہ ایک دوسرے سے جڑے ہوتے ہیں، مگر گود لینے پر ماں اور بچے ایک زیادہ بڑی طاقت سے جڑ جاتے ہیں، وہ تعلق جو آپ کاٹ نہیں سکتے۔ مجھے یہ تجربہ دو بار ہوا اور مجھے ایک دن بھی ماں کی زندگی کے لطف سے محروم نہیں ہونا پڑا’۔

خیال رہے کہ سشمیتا سین نے اگرچہ شادی نہیں کی، تاہم انہوں نے 2 بچوں کو گود لے رکھا ہے، انہوں نے سب سے پہلے 2000 میں ایک بچی اور بعد ازاں 2010 میں دوسری بچی کو گود لیا۔

سشمیتا سین نے 1996 میں فلم ’دستک’ سے بولی وڈ کیریئر کا آغاز کیا، اب تک وہ 40 کے قریب فلموں میں نظر آ چکی ہیں۔

انہوں نے فلم فیئر، آئیفا، اسٹار اسکرین اور زی سائنے سمیت متعدد ایوارڈ اپنے نام کیے ہیں۔

سشمیتا سین نے 1994 میں مس انڈیا کا اعزاز اپنے نام کیا تھا، جس کے بعد وہ اسی برس مس یونیورس بھی منتخب ہوئی تھیں۔

آرمی چیف کا یوم شہداء کے موقع پر پولیس کو خراج عقیدت

راولپنڈی: آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے یوم شہداء کے موقع پر پولیس اور ان کے خاندانوں کو خراج عقیدت پیش کیا ہے۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق یوم شہداء کے موقع پر پولیس اور ان کے خاندانوں کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا کہ گزرتے وقت کے ساتھ پولیس نے ایک مضبوط فورس ہونے کاثبوت دیا ہے جب کہ انسداد دہشت گردی آپریشنز کے دوران پولیس نے سیکیورٹی فورسز کے ساتھ قربانیاں دی ہیں۔

‘ٹک ٹاک’ پر پابندی کیلئے لاہور ہائیکورٹ سے رجوع

لاہور کے ایک وکیل نے ملک میں مبینہ طور پر فحاشی اور پورنوگرافی کو فروغ دینے کا باعث بننے والی سوشل میڈیا ویڈیو ایپ ‘ٹک ٹاک’ پر پابندی کے لیے اعلیٰ عدلیہ سے رجوع کرلیا۔

ایڈووکیٹ ندیم سورو نے لاہور ہائیکورٹ میں دائر اپنی درخواست میں کہا کہ ‘ٹک ٹاک حالیہ دور کا بہت بڑا فتنہ ہے، یہ نوجوان نسل کو تباہ کررہا ہے اور غیر اخلاقی سرگرمیوں کو فروغ دے رہا ہے’۔

درخواست گزار نے اپنی پٹیشن میں وفاقی وزارت قانون، پاکستان ٹیلی کمیونیکشن اتھارٹی (پی ٹی اے) اور پاکستان الیکٹرانک میڈیا ریگولیٹری اتھارٹی (پیمرا) کو فریق بنایا ہے۔

درخواست میں عدالت کو بتایا گیا کہ مذکورہ ایپ چائینیز کمپنی نے بنائی ہے اور اسے گزشتہ سال دنیا بھر میں استعمال کے لیے پیش کیا گیا تھا۔

وکیل نے استدعا کی کہ مذکورہ ایپ کے باعث ملک میں منفی معاشرتی اثرات مرتب ہورہے ہیں، اس کے علاوہ یہ وقت، توانائی اور رقم کا زیاں ہے اور اس سے فحاشی پھیل رہی ہے جبکہ یہ ایپ ہراساں اور بلیک میل کرنے کے ذرائع کے طور پر بھی استعمال ہورہی ہے۔

درخواست گزار کا مزید کہنا تھا کہ مذکورہ ایپ پر اس کے نامناسب مواد، پورنوگرافی اور لوگوں کا مزاق اٹھانے کے باعث بنگلہ دیش اور ملائیشیا میں پابندی عائد ہے۔

انہوں نے استدعا کی کہ پاکستان ایک اسلامی ریاست ہے اور یہ ریاست کی ذمہ داری ہے کہ وہ یہاں رہنے والے مسلمان شہریوں کی زندگیوں کو اسلام کے نظریات کے مطابق ڈھالنے کے لیے اقدامات کرے۔

انہوں نے بتایا کہ متعدد بلیک میلنگ کے واقعات سامنے آئے ہیں جن میں لوگوں نے خفیہ طور پر ویڈیوز بنائیں اور بعد ازاں انہیں ٹک ٹاک پر وائرل کردیا گیا۔

درخواست میں دعویٰ کیا گیا کہ دوست کی جانب سے کلاس روم میں ڈانس کی ویڈیو ریکارڈ کیے جانے اور بعد ازاں یہ ویڈیو مذکورہ ایپ پر وائرل ہونے کے بعد ایک لڑکی نے اہل خانہ کے رد عمل کے خوف سے خود کشی کرلی تھی۔

انہوں نے عدالت سے استدعا کی کہ ایسے مزید واقعات کی روک تھام کے لیے حکومت فوری اور لازمی طور پر ٹک ٹاک ایپ پر پابندی عائد کرے۔

وکیل نے عدالت سے درخواست کی کہ وہ فریقین کو حکم دیں کہ پاکستان میں ثقافت کو نقصان پہنچانے اور پورنوگرافی کی حوصلہ افزائی کرنے پر ٹک ٹاک پر مکمل پابندی لگائی جائے۔

اس کے علاوہ انہوں نے عدالت سے درخواست کی کہ وہ وزارت قانون کو ہدایت دے کہ ملک میں بچوں کی آن لائن پرائیویسی سے متعلق قانون سازی کے لیے اقدامات کریں، انہوں نے درخواست کی کہ پیمرا کو حکم دیا جائے کہ وہ اس بات کو یقینی بنائیں کہ ٹک ٹاک پر شیئر کی جانے والی ویڈیوز ٹی وی چینلز پر نہ نشر کی جائیں۔

پنیر بوٹی ذیابیطس کے مرض میں مؤثر ثابت

سنگاپور: پاکستان اور ہندوستان میں عام استعمال کی جانے والی ایک بوٹی کے بارے میں سائنسی ثبوت ملے ہیں کہ وہ ذیابیطس کنٹرول کرنے میں بہت مددگار ثابت ہوتی ہے۔

اسے پنیربوٹی یا پنیر ڈوڈی کہا جاتا ہے اور اس کا سائنسی نام Withania coagulans ہے۔ سینکڑوں برس سے یہ بوٹی روایتی ادویہ میں استعمال ہوتی رہی ہے۔ تاہم سائنسدانوں نے کہا ہے کہ اگر اس بوٹی کا سفوف کیپسول کی صورت میں کھایا جائے تو اس کے زیادہ فوائد سامنے آتے ہیں۔ اسے تخمِ حیات بھی کہا جاتا ہے۔

سنگاپور میں واقع ننیانگ یونیورسٹی آف ٹیکنالوجی کے ماہرین نے کہا ہے کہ پنیربوٹی کے پھلوں سے ایک خاص اسٹیرائیڈ ملا ہے جسے چوہوں پر آزمایا گیا ہے۔ تجربہ گاہ میں ٹیسٹ کے دوران جب اسے چوہوں کے لبلبے کے زندہ خلیات پر آزمایا گیا تو وہاں سے انسولین کے اخراج میں اضافہ ہوا۔ ہم جانتے ہیں کہ انسولین ہی خون میں شکر کی مقدار کو قابو رکھنے میں اہم کردار ادا کرتی ہے۔

تاہم پنیربوٹی بہت کڑوی ہوتی ہے اور اسے کھانا محال ہوتا ہے۔ اگر کوئی ہمت کرکے اسے کھا بھی لے تب بھی اس کے اہم اجزا ہاضمے کے عمل میں ضائع ہوجائیں گے اور معدے کے تیزابیت اس کی تاثیر ختم کردے گی۔

اسی لیے ماہرین نے ایک سمندری مخلوق کے خول سے بنے نینو ذرات استعمال کیئے ہیں اور ان کے اندر دوا کو رکھا ہے۔ اس طرح پنیر بوٹی کے اجزا جسم کے اندر گہرائی تک پہنچتے ہیں اور وہاں جاکر شفا دینے والے اسٹیرائیڈز خارج کرتے ہیں۔

اس کے بعد کیپسول کو ذیابیطس کے مریض چوہوں کو دیا گیا جس سے خون میں گلوکوز کی شرح میں 40 فیصد تک کمی دیکھی گئی۔ شاید اس کی وجہ یہ ہے کہ چوہوں کا لبلبہ انسولین بنانے لگا تھا۔ یہ تحقیق اے سی ایس اومیگا میں شائع ہوئی ہے۔

امریکی ریاست ٹیکساس کے بعد اوہائیو میں بھی فائرنگ، 9 افراد ہلاک

اوہائیو: امریکی ریاست اوہائیو میں فائرنگ کے ایک واقعے میں 9 افراد ہلاک اور 16 زخمی ہوگئے جب کہ حملہ آور بھی مارا گیا۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکی ریاست اوہائیو کے شہر ڈیٹن میں ایک بار کے نزدیک فائرنگ میں 9 افراد ہلاک اور 16 زخمی ہوگئے ہیں۔ ہلاک ہونے والوں میں حملہ آور بھی شامل ہے۔

عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ مسلح شخص نے بار کے نزدیک اندھا دھند فائرنگ کردی اور فرار ہوگیا، فائرنگ سے خوف و ہراس پھیل گیا اور بھگڈر مچ گئی۔ ریسکیو اہلکاروں نے ہلاک اور زخمی ہونے والوں کو اسپتال منتقل کیا۔

دوسری جانب فائرنگ کی اطلاع ملتے ہی ڈیٹن پولیس نے الرٹ جاری کردیا اور کسی بھی شخص کو جائے وقوعہ کا رخ نہ کرنے کی ہدایت جاری کردی۔ پولیس کا کہنا ہے کہ حملہ آور بھی ہلاک ہونے والوں شامل ہیں۔

واضح رہے کہ آج ہی الپاسو کے ایک شاپنگ سینٹر میں بھی مسلح نوجوان نے اندھا دھند فائرنگ کی تھی جس کے نتیجے میں 20 افراد ہلاک اور 40 زخمی ہوگئے تھے جس کے چند گھنٹوں بعد ہی اوہائیو میں فائرنگ کا دوسرا واقعہ رونما ہوا ہے۔

اپنے عطیات ۔ حق داروں تک خود پہنچائیں

دنیا کے بھر ممالک خصوصا مسلم ممالک میں پاکستانیوں کی ایک اہم شناخت یہ بھی بن چکی ہے کہ اس ملک کے عوام اللہ تبارک و تعالیٰ کی خوشنودی اور رضا حاصل کرنے میں اپنے دلوں کو کھول کر مذہبی ایام مثلا رمضان المبارک کے مقدس مہینہ میں مسلمان اپنی سال بھر کی کمائی پر زاکوۃ نکالتے ہیں اپنی جھولیاں بھر بھر کر صدقہ اور خیرات دیتے ہیں مساجد، مدارس، یتیم خانوں بے آسروں کےلئے چھت فراہم کرنے والے اداروں ، ملک کے مختلف شہروں میں مفت علاج معالج کی سہولیات کے اداروں اور غربیوں مسکینوں کو تین وقت کا مفت کھانا فراہم کرنے والے اداروں پر اپنی مختص کی ہوئی رقومات دینے میں بہت آگے ہیں یقین جانئیے جب ہم اپنے ملک کے ان مخیراور سخی دل عوام کے بارے میں سنتے یا پڑھتے ہیں توبحیثیت پاکستانی ہمارے سر فخر سے بلند ہوجاتے ہیں ماہ مبارک رمضان کے ایام میں ہم اور آپ ہر برس نظارہ کرتے ہیں کہیں سینکڑوں ہزاروں غریبوں کو افطاریاں کرائی جا رہی ہیں ، دستر خوان لگائے جا رہے ہیں ، کہیں راشن کی تھیلیاں تقسیم کی جا رہی ہیں ، کہیں زکوٰۃ اور صدقے کی رقوم بانٹی جا رہی ہیں کہیں غریب بچیوں کی شادیاں کرائی جا رہی ہیں ، کہیں بے آسرا بچوں کے سکول کے اخراجات کی ذمہ داری لی جارہی ہے کہیں مفت ایمبولینس سروس اور دیوار مہربانی جیسے نوجوانوں کے اقدامات جن میں پرانے کپڑے، جوتے اور ضرورت کی اشیا غریبوں میں تقسیم کی جاتی ہیں ، کتنے ہی ایسے ادارے اور لوگ پاکستان میں آپ کو مل جائیں گے جو انسانیت کے احساس اور جذبہ خدمت سے لبریز ہیں کچھ جائزوں کے مطابق پاکستانی دنیا میں سب سے زیادہ صدقہ اور خیرات کرنے والے لوگوں میں شامل ہیں رحم دل مخیر حضرات ہمارے پاکستانی عوام اپنا مال اللہ تعالیٰ کے نام پرہرسال کے ہرماہ مبارک کے ایام میں دیتے ہیں ایک طرف اْن کے اس عمل خیر کا بے آسرا اور تنگ دست مفلس مسلمان عوام کو فائدہ پہنچتا ہے اور وہ دینے والوں کے حق میں دعاگو ہوتے ہیں یہاں ایک سوال یہ آن پڑا ہے کہ اللہ تبارک وتعالیٰ کے حکم پر اپنا مال وزر دینے والوں پر اللہ تبارک وتعالیٰ نے ایک بڑی اہم ذمہ داری بھی عائد کی ہے کہ وہ اللہ تعالیٰ کی راہ میں اپنا قیمتی عطیہ جب بھی کسی کو دیں تو ذرا یہ دیکھ لیں تحقیق کرلیں کہ جس شخص یا جس بھی ادارے کو صاحب حیثیت مسلمان اپنا مال وزراللہ تعالیٰ کے نام پر عطیہ کررہے ہیں کیا واقعی وہ اس کا حق دار ہے یانہیں ;238;یا اْس شخص یا ایسے کسی ادارے نے زکواۃ،خیرات، صدقات اور قربانی کی کھالوں کے حصول کےلئے کوئی اور لبادہ تو نہیں اْڑھا ہوا ہے;238;ہم اللہ تعالیٰ کے نام پر زکواۃ، خیرات صدقات اور قربانی کی کھالیں کسی ایسے شخص،گروہ یا تنظیمی ادارے کو تو نہیں دے رہے جو اللہ تبارک وتعالیٰ کے نام پر حاصل کردہ مال و زرکو انسانیت کے خلاف اپنے مذموم مقاصد کی تکمیل کےلئے استعمال کرئے گا یا پہلے بھی کرتا رہا ہے اس کی تصدیق ازحد ضروری ہے اب یہ ذمہ داری ملک بھر کے شہروں کی چھوٹی اور بڑی مساجد کے پیش نمازوں اور خطیبوں پر عائد ہوتی ہے کہ وہ مسلمانوں کی نمازوں کے اجتماعات میں اپنے خطبات کے ذریعے سے یہ آگاہی اور یہ سوچ پیدا کریں کہ اللہ تعالیٰ کے نام پر خیرات کی جانے والی رقم کا ایک ایک پیسہ حق دار تک پہنچنا چاہیئے ناکہ کوئی ناحق شخص یا تنظیمی گروہ اس خیراتی رقم سے اللہ تعالیٰ کے احکام کی کھلی خلاف ورزیاں کرتے پھریں ، معبتر اور مصدقہ ذراءع سے یہ اعدادوشمار ملکی سیکورٹی اداروں تک پہنچے ہیں کہ یہ جو ملک میں گزشتہ کئی برسوں سے کہیں دہشت گردی ہوتی ہے خود کش حملوں کی وارداتیں ہوتی ہیں اس کے پیچھے مالی معاونت کے جو مشکوک ذراءع سامنے آئے ہیں اْن کا ایک بڑا ذریعہ کہیں مساجد کے نام پر چندا اکھٹاکرنا کہیں یتیم بے آسرا بچیوں کی شادیاں کروانا کہیں مفت علاج معالج کی سہولیات کی فراہمی کا بہانہ کہیں بھیک منگوانے کا نیٹ ورک خاص طور پر رمضان المبارک عید الفطر اور جیسا کہ ایک ہفتہ بعد عیدالضحیٰ قربانی کی عید کے موقع پر قربانی کی کھالیں جمع کرنا ان خیراتی ذراءع کو استعمال کرنے کی اطلاعات جب سامنے آئی ہیں تو ہم پاکستانی مسلمانوں کو پہلی فرصت میں اس جانب توجہ مبذول کرنی ہوگئی ایک ہفتے بعد بڑی عید آنے والی ہے ہاتھوں میں بوگس رسیدیں پکڑے تسبیح پکڑے شکل پر نام نہاد ایمانی ماسک چڑھائے ہر آنے والے پرجلد بازی میں بھروسہ نہ کریں آپ نے تو قربانی اللہ تبارک وتعالیٰ کا قرب اور اْس کی رضا حاصل کرنے کے لئے پیش کی ہے لیکن شعائر اسلامی کی رو سے کھالیں آپ نے کسی انجانے شخص،گروہ یا ادارے کو نہیں دینی دہشت گردوں کا یہ وہ نیٹ ورک ہے جو منشیات کے دھندوں میں ملوث ہے،یہ گروہ اسمگلنگ اورتجارتی برادری کے ممتاز افراد اور اْن کے بچوں کے اغوا کی وارداتوں سے اپنی مالیاتی ضروریات کو پوری کرتے ہیں اللہ کے نام پر بھکاریوں کا نیٹ ورک چلاتے ہیں بعض مقامات پر افسوس سے کہنا پڑتا ہے کہ مقامی پولیس کا انہیں تعاون حاصل رہتا ہے جدید ٹیکنالوجی کے اس تیزفتار عہد میں اس سلسلے میں ہماری ذرا سی بھی بھول چوک بہت مہنگی ثابت ہوسکتی ہے ملک بھر کی ہر اہم مساجد اور عیدگاہوں کے معزز خطیب حضرات پہلے سے متواتر ایسے خطبے دے چکے ہیں جن میں عام مسلمانوں کو بتایا گیا ہے کہ وہ اللہ تعالیٰ کے نام سے دئیے جانے والے عطیات حق داروں تک خود پہنچائیں دوقدم چل کر اْن تک پہنچیں گے تو ہر قدم کے عوض اللہ تعالیٰ اپنے مومن دیندار بندوں کو ہزارہا گنا نیکیاں عنایت فرمائے گا یہاں ہ میں اور آپ کو بغورجائزہ لینا ہوگا کہ پنجاب کے ہر بڑے شہروں کے اہم تجارتی مراکز کی بڑی شاپس پر خبیرپختونخواہ کے دوردراز اور پسماندہ علاقوں میں قائم مدارس یا مساجد کی تعمیر کے نام پر چندے کے ڈبے رکھے گئے ہیں بلوچستان خیبر پختونخواہ اور سندھ کے شہروں کی شاپس پر پنجاب کے گاوں اور دیہاتوں کی مساجد اور مدارس کے نام پر چندا اکھٹا ہوتا ہے اسی طرح سے بلوچستان، پنجاب اور خیبر پختونخواہ کے تجارتی مراکز کی شاپس پر سندھ کی مساجد اور مدارس کی مدد کرنے کی دہائیاں دی جاتی ہیں یہ سب ایک سوچا سمجھا مذموم منصوبہ ہے لوگ سوچتے نہیں جہاں اللہ تعالیٰ کا نام آیا اہل ایمان اپنی آنکھیں بند کرکے ہزاروں لاکھوں روپے ایسوں کو جانے بغیر دیدیتے ہیں اور سمجھتے ہیں اْنہوں نے اللہ تعالیٰ کے نام پر مخلوق خدا کی مدد کرکے اپنا دینی فرض نبھا دیا;238; یہ رقم جب یکجا ہوتی ہے تو لاکھوں کروڑوں میں بن جاتی ہے جو دہشت گردمافیا کے ہاتھوں میں چلی جاتی ہے ان ہی لاکھوں کروڑوں روپے کے عوض یہ دہشت گرد معصوم اور بے گناہ پاکستانی مسلمانوں ، اْن کے سویلین اور ملٹری حساس اداروں کی نگرانی کی چوکیوں کو اپنی دہشت گردی کا نشانہ بناتے ہیں ہم نے سوچ وفکر کی راہ جو ترک کردی;238; اپنی عقلوں کے ساتھ ساتھ اپنی آنکھیں جو بند کرلیں ;238; کون اپنا ہے کون پرایا جو اللہ تعالیٰ کا نام لے رہا ہے اْس کے اندرونی تو کیا بیرونی احوال تک کا ہم نے جائزہ لیا ہی نہیں بلکہ یہ ورق ہی پھاڑ دیا ہے داعش افغانستان پہنچ چکی ہے خیر سے معصوم اور بے گناہ مسلمانوں کی گردنیں اتارنے کے ساتھ ‘‘شریعت اسلامی اور خلافت’’کی بھی وہ دعویدار ہے اب کیا کہیں گے ان کے خلاف جانچ پڑتال کرنے والے ہم پاکستان مسلمان;238; لیکن ہ میں اس سب کے باوجود انسانیت کے ان سفاک دشمنوں کی راہوں ہر صورت روکنا ہوگا ان کےلئے اپنے ملک میں آسانیوں کی کوئی جا باقی نہیں چھوڑنی،ہ میں اپنے اردگرد کے محلہ جاتی ماحول کا بڑی ہوشیاری سے چوکنا ہوکر پہرہ دینا ہے، ایک محفوظ،پْرامن ترقی یافتہ اور خوشحال پاکستان کو یقینی بنانے کےلئے اب ہ میں اپنی بہادر مسلح افواج کے شانہ بشانہ قدم بہ قدم چلنا ہے ۔

کشمیریوں کی فتح نوشتہ دیوار ہے، شہباز شریف

لاہور: پاکستان مسلم لیگ (ن)کے صدر اور قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف شہباز شریف کا کہنا ہے کہ کشمیریوں کی فتح نوشتہ دیوار ہے۔

مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کی ریاستی دہشت گردی کی شدید مذمت کرتے ہوئے شہباز شریف نے کہا کہ نوجوانوں کی شہادت قابل مذمت ہے، اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گتیریس صورتحال کا فوری نوٹس لیں اور کشمیر میں بے گناہ انسانوں کے قتل عام کو رکوانے کے لیے کردار ادا کریں۔ سلامتی کونسل کے مستقل ارکان سمیت پوری دنیا یا مقبوضہ وادی میں میں بھارتی بھارتی فوج کی بربریت کا فوری نوٹس لیں۔

شہباز شریف نے کہا کہ نریندر مودی ہوش کے ناخن لے اور یاد رکھے کہ بے گناہ انسانوں کا خون ظالم اقوام اور ریاستوں کو کھا جاتا ہے۔ سید علی گلانی، میرواعظ عمر فاروق اور محمد یاسین ملک سمیت تمام کشمیریوں اور ان کی حقیقی قیادت کو یقین دلاتے ہیں کہ ہر پاکستانی ان کی جدوجہد میں ان کے ساتھ ہے۔ اللہ تعالی کے فضل و کرم سے فتح مظلوم کشمیریوں کی ہوگی کیونکہ وہ حق ہر ہیں اور اللہ تعالی ہمیشہ مظلوموں کے ساتھ ہے۔

رہنما (ن) لیگ نے کہا کہ پاکستان کشمیریوں کا وکیل تھا، ہے اور ان کی فتح تک ہمیشہ رہے گا۔ اللہ تعالی نے مسلمانوں کو دنیا کے کسی بھی خطے میں غلام ہو کر رہنا نہیں سکھایا، کشمیریوں کی فتح نوشتہ دیوار ہے۔

Google Analytics Alternative