- الإعلانات -

لیڈی ہیلتھ ورکرز یونین لیڈر سمیت سات ملازمین کی جبری برطرفی کا معاملہ تول پکڑ گیا

لاہور (قاسم علی سے) لیڈی ہیلتھ ورکرز یونین لیڈر سمیت سات ملازمین کی جبری برطرفی کا معاملہ تول پکڑ گیا لیڈی ہیلتھ سپروائزر یونین کی صدر کا 16 دسمبر کو ہونے والی پولیو مہم کا بائیکاٹ کرنے کا اعلان کردیا نشنل پروگرام ایمپلائز یونین کی صدر کا کہنا ہے کے محکمہ صحت کا نشنل پروگرام ملازمین کا رزق چھننے لگا پروگرام ڈائریکٹر مختار شاہ ریٹائرڈ ہونے کے باوجود سیٹ پر براجمان ہے حقوق کی جنگ لڑنے والوں کو برطرف کیا جارہا ہے ملازمین بحال نہ کیے گئے تو ڈی جی ہیلتھ آفس لاہور کے باہر احتجاج کریں گئےیونین عہدیداروں کو سوچی سمجھی سازش کے تحت انتقامی کاروائیوں کا نشانہ بنایا جارہا یاد رہے کے رخسانہ انور نے لیڈی ہیلتھ ورکرز کے حقوق کے لیے ساتھیوں سمیت مال روڈ کے باہر دھرنا بھی دیا تھا نشنل پروگرام کے ملازمین کی بحالی تک پولیو مہم کے بائیکاٹ کریں گئے جبکہ پروگرام ڈائریکٹر نشنل پروگرام پنجاب ڈاکٹر مختار شاہ نے رخسانہ انور اور دیگر یونین عہدیدراروں کو برطرف کیا
تھا لیڈی ہیلتھ ورکرز کی ہڑتال کے باعث صوبہ بھر میں پولیو مہم متاثر ہونےکا خدشہ ہے