- الإعلانات -

امریکہ نے ایران پر 17 نئی معاشی پابندیاں عائد کر دیں

نجی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق امریکی وزیرخارجہ مائیک پومپیو اور وزیر خزانہ اسٹیو منچن نے وائٹ ہاو¿س میں مشترکہ پریس کانفرنس میں نئی پابندیوں کا اعلان کیا۔امریکا کی جانب سے ایران پر 17 نئی معاشی پابندیاں لگائی گئی ہیں جس میں تعمیرات، پیداواری شعبہ، ٹیسکٹائل، کان کنی، اسٹیل اور لوہے کی صنعت پر لگائی گئی ہیں۔

امریکی وزیرخارجہ مائیک پومپیو کا کہنا تھا کہ عراق میں امریکی فوجی اڈوں پر میزائل حملوں میں ملوث 8 ایرانی عہدیداروں پر بھی پابندی عائد کی گئی ہیں اور یہ تمام پابندیاں فوری نافذ العمل ہیں۔انہوں نے کہا کہ یہ ایرانی عہدیدار امریکیوں پر حملے اورمشرق وسطیٰ میں عدم استحکام کی سرگرمیوں میں ملوث ہیں۔امریکی وزیرخارجہ نے قاسم سلیمانی پر حملے کے حوالے سے بتایا کہ ’میں نہیں جانتا کہ قاسم سلیمانی کب اور کیسے اپنے منصوبوں کی تکمیل کرتا لیکن یہ سب واضح ہے کہ وہ امریکی مفادات، سفارتخانوں، ملٹری بیسز اور خطے میں امریکی تنصیبات کو ہدف بنانے میں مصروف تھا۔

امریکی وزیرخزانہ اسٹیو منچن کا کہنا تھا کہ امریکی صدر نے واضح اعلان کیا تھا کہ ایران کی دہشت گردانہ سرگرمیوں کے خاتمے اور ایٹم بم نہ بنانے کے وعدے تک معاشی پابندیاں لگاتے رہیں گے۔انہوں نے کہا کہ صدر ٹرمپ نئی معاشی پابندیوں کے حوالے سے ایگزیکٹو آرڈر جلد جاری کریں گے جبکہ اسٹیل اور لوہے کی صنعت پر الگ سے پابندیاں عائد کی جائیں گی۔

یاد رہے کہ عراق میں امریکی فوجی اڈوں پر ایرانی میزائل حملوں کے بعد قوم سے خطاب میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ایران پر مزید نئی معاشی پابندیاں عائد کرنے کا اعلان کیا تھا۔