- الإعلانات -

ایرانی سپریم لیڈر کویوکرائنی طیارے کے گرنے کا بتایا گیاتوانہوں نے سب سے پہلا حکم کیادیا؟ جانئے

رائٹرز نے ایرانی خبر رساں ادارے فارس کے حوالے سے بتایا ہے کہ اس معاملے پر اعلیٰ سطحی اجلاس منعقد ہوا جس میں ایرانی سپریم لیڈر کو تحقیقات سے آگاہ کیاگیا۔انہوں نے خبر سنتے ہی حکم دیا کہ اپنی غلطی کو عوامی سطح پر تسلیم کیاجائے۔جس کے بعد ایرانی حکام نے اس پر نہ صرف بیان دیا بلکہ معذرت بھی کی۔

یاد رہے کہ ایران نے اعتراف کیا ہے کہ اس نے یوکرائن کا طیارہ غیر ارادی طور پر مارگرایا۔ایران کے سرکاری ٹی وی کے مطابق ایک بیان میں ایرانی فوج کا کہنا تھا کہ ’یہ ایک انسانی غلطی کی بنا پر اس وقت ہوا جب طیارے نے ایران کے پاسدارانِ انقلاب سے منسلک حساس مقام کے قریب پرواز کی۔ اس حادثے میں ملوث افراد کا احتساب ہو گا۔‘

واضح رہے کہ یوکرائن کی بین الاقوامی فضائی کمپنی کی پرواز پی ایس 752 بدھ کو ایران کے دارالحکومت تہران سے پرواز کے چند ہی منٹ بعد گِر کر تباہ ہو گئی تھی۔ اس حادثے میں طیارے پر سوار مسافروں اور عملے کے اراکین سمیت تمام 176 افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

ایران کے وزیر خارجہ جواد ظریف کا سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر کہنا تھا کہ ’یہ ایک افسوس ناک دن ہے۔ افواج کی اندرونی تحقیقات کے مطابق امریکی جنگی جنون کی وجہ سے اس بحران کے موقع پر یہ انسانی غلطی پیش آئی ہے۔ ہم تمام ممالک کے متاثرین اور ان کے خاندانوں سے معذرت خواہ ہیں اور ان سے تعزیت کرتے ہیں۔‘

ایران کے اعتراف کے بعد عالمی برادری کی جانب سے سخت ردعمل کااظہارکیاجارہاہے،یوکرائن نے مکمل تحقیقات اور ذمہ داران کو سزاد ینے کا مطالبہ کیا ہے