- الإعلانات -

پاکستان میں غیر ملکی سرمایہ کاری میں رواںمالی سال کے دوران512.9 فیصد اضافہ ہوا، سٹیٹ بینک

رواں مالی سال کے دوران پاکستان میں کی جانے والی غیر ملکی سرمایہ کاری میں 512.9 فیصد اضافہ ہوا ہے ‘ مالی سال میں ابتدائی آٹھ ماہ میں جولائی تا فروری 2019-20ء کے دوران 3.336 ارب ڈالر کی غیر ملکی سرمایہ کاری کی گئی ہے جبکہ گزشتہ مالی سال میں اسی عرصہ کے دوران ملک میں کی جانے والی غیر ملکی سرمایہ کاری کا حجم 650.6 ملین ڈالر رہا تھا۔سٹیٹ بینک آف پاکستان (ایس بی پی) کے مطابق گزشتہ مالی سال کے مقابلہ میں رواں مالی سال کے دوران غیر ملکی سرمایہ کاری کے حجم میں 2.685 ارب ڈالر یعنی 513 فیصد کے قریب اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے ۔ رپورٹ کے مطابق جاری مالی سال کے دوران پاکستان میں ٹریژری بلز اور انویسٹمنٹ بانڈز میں غیر ملکی سرمایہ کاروں نے گہری دلچسپی کا اظہار کیا اور 2.161 ارب ڈالر کی غیر ملکی سرمایہ کاری کی گئی ہے۔ ایس بی پی کے مطابق رواں مالی سال کے دوران پاکستان میں کی جانے والی براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری (ایف ڈی آئی) کی شرح میں بھی 75 فیصد کا اضافہ ہوا اور جولائی تا فروری 2019-20ء کے دوران 1.852 ارب ڈالر کی ایف ڈی آئی کی گئی ہے جبکہ گزشتہ مالی سال کے اسی عرصہ کے دوران 1.05 ارب ڈالر کی برائے راست غیر ملکی سرمایہ کاری کی گئی تھی اس طرح گزشتہ مالی سال کے مقابلہ میں جاری مالی سال کے ابتدائی آٹھ ماہ کے دوران براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری کے حجم میں 793.7 ملین ڈالر یعنی 75 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے ۔ ایس بی پی کے مطابق جاری مالی سال میں چین ‘ ناروے ‘ مالٹا اور ہانگ کانگ بڑے سرمایہ کار ممالک رہے ہیں جن سے بالترتیب 696.5 ملین ڈالر’ 228.5 ملین ڈالر ‘ 148.2 ملین ڈالر اور 105.8 ملین ڈالر کی ایف ڈی آئی کی گئی ہے۔ رپورٹ کے مطابق پاور سیکٹر میں سب سے زیادہ 575.6 ملین ڈالر کی براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری کی گئی ہے جبکہ مواصلات کے شعبہ میں 471.8 ملین ڈالراور الیکٹرکل مشینری کے شعبہ میں 143.4 ملین ڈالر کی ایف ڈی آئی کی گئی ہے