- الإعلانات -

پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں بڑھتے ہی مہنگائی میں اضافہ

پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے ساتھ اشیائے ضروریہ کی قیمتیں بھی بڑھ گئیں۔

26 جون کو وزیراعظم عمران خان کی منظوری کے بعد پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں 25 روپے فی لیٹر تک اضافہ کردیا گیا تھا تاہم ایک ہفتے بعد ہی پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے اثرات سامنے آنا شروع ہوگئے ہیں۔

ادارہ شماریات نے مہنگائی کے حوالے سے ہفتہ وار رپورٹ جاری کردی جس کے مطابق مہنگائی میں 2 اعشاریہ 29 فیصد کا اضافہ ہوگیا-

سونا اور ڈالر دونوں کی قیمتوں میں کمی
ملک میں مہنگائی میں اضافہ، جون میں شرح 8.59 تک پہنچ گئی
ایک ہفتے کے دوران پیٹرول 33.97 فیصد، ڈیزل 26.21 فیصد، ایل پی 5.54 فیصد، ٹماٹر 19.23 اور پیاز کی قیمتوں میں 2.37 فیصد اضافہ ہوا جو مہنگائی بڑھنے کی بڑی وجوہات ہیں۔

ادارہ شماریات کے مطابق حالیہ ہفتے میں 18 اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں اضافہ ہوا ، چینی کی قیمت میں 24 پیسے فی کلو کا اضافہ ہوا جس کے بعد چینی کی قیمت 80.58 روپے سے بڑھ کر 80.82 روپے فی کلو ہوگئیْ

اسی طرح سرخ مرچ 19 روپے اور ٹماٹر 11 روپے فی کلو مہنگے ہوئے جب کہ ایک ہفتے میں انڈے ڈھائی روپے فی درجن، مرغی کا گوشت ساڑھے 4 روپے، دال ماش ایک روپے، 20 کلو آٹے کا تھیلا 6 روپے اور ایل پی جی کا گھریلو سیلنڈر 68 روپے مہنگاہوا، اس کے علاوہ چاول، پیاز اور چھوٹا گوشت کی قیمت میں بھی اضافہ ہوگیا۔

ادارہ شماریات کے مطابق حالیہ ہفتے میں 7 اشیاء کی قیمتوں میں کمی اور 26 اشیاء کی قیمتوں میں استحکام رہا۔