پاکستان خاص خبریں

ہمارا عزم کبھی کمزور نہیں پڑادشمن کے ساتھ آہنی ہاتھوں سے نمٹیں گی فیلڈ مارشل محمد ایوب خان6 ستمبر کی کچھ یادیں

6 ستمبر کی کچھ یادیں

بھارتی وزیر اعظم لال بہادر شاستری نے کانگریس کے اجلاس میں پاکستا ن کے خلاف مکمل جنگ کا اعلان کر دیا۔
۔ ”ہم حالت جنگ میں ہیں، ہمارے بہادر سپاہی دشمن کا حملہ پسپا کرنے کیلئے آگے بڑھ چکے ہیں۔ہماری مسلح افواج اپنی جرأت اور بہادری ثابت کریں گی۔ ہماری بہادر افواج کا جذبہ ناقابلِ تسخیر ہے اور ہمارا عزم کبھی کمزور نہیں پڑا۔وہ دشمن کے ساتھ آہنی ہاتھوں سے نمٹیں گی“۔ (فیلڈ مارشل محمد ایوب خان)
۔ برطانوی وزیراعظم ہیر الڈولسن نے بھارتی جارحیت کا نوٹس لیتے ہوئے بھارت سے جنگ بندی کی اپیل کر دی۔ جنگ کا منظر نامہ ۔ 6ستمبر1965ء بھارت نے صبح 4بجے کے قریب لاہور پر حملہ کر دیا پاک فوج نے لاہور جسٹر کی طرف سے سیالکوٹ اور فیروز پور کی طرف سے قصور پر کیاگیا بھارتی حملہ ناکام بنا دیا۔۔ واہگہ اوربیدیاں کے دونوں محاذوں پر پاک فوج نے بھاری جانی نقصان پہنچاتے ہوئے بھارتی حملہ پسپا کر دیا۔ بڑی تعداد میں بھارتی فوجی جنگی قیدی بنا لئے گئے۔ لاہور کے محاذ پر متعدد بھارتی ٹینک، بندوقیں اور دوسرا جنگی سازوسامان تباہ کر دیا گیا۔ ۔ جسٹر کے مقام پر گھمسان کی جنگ کے بعد بھارتی فوجوں کو پیچھے دھکیل دیا گیا اور دریائے راوی کا وہ جنوبی علاقہ آزاد کرالیا گیا جس پر بھارتی فوج نے صبح قبضہ کر لیا تھا۔ بازیاب کیا گیا علاقہ تباہ شدہ بھارتی ٹینکوں، گاڑیوں اور فوجیوں کی لاشوں سے اٹا پڑا تھا۔ ۔ لاشوں کی تعداد200گنی گئی جبکہ اصل تعدادتقریباََ800رپورٹ کی گئی ہے۔ ۔ چھمب کے محاذپر بھاری نقصان اٹھانا پڑا اور میلوں کے علاقے میں دشمن کا اسلحہ بکھرا پڑا تھا۔35بھارتی فوجیوں کو جنگی قیدی بنا لیا گیا اور6کی تعداد میں 25پاؤنڈ رفیلڈ گنز بھی قبضہ میں لے لیں گئیں۔
۔ کشمیری مجاہدین نے سرینگر کے قریب 2پُل اور 1سڑک تباہ کر دی۔ راجوڑی اور پونچھ لائن کو بھی شدید نقصان پہنچایا گیا۔ ۔ صبح 6:30پر لاہور پر حملے کی خبر ملتے ہی بحری افواج کو مقررہ اہداف پر قبضہ کرنے کا حکم دے دیا گیا۔ ۔ پاک فضائیہ نے پٹھان کوٹ کے ہوائی اڈے پر کامیاب ترین حملہ کیا۔ پاکستانی فضائیہ نے بھارت کے22جہاز تباہ کر دیے جن میں C119،Mysteres،21ساخت کے طیارے شامل تھے۔ یکMysteresطیارے کو راہوالی کے مقام پر میزائل مار کر گرا دیا گیا۔ قومی حوصلہ ۔ لاہور کے زندہ دلان نے پاک فضائیہ اور انڈین ائیر فورس کے درمیان ہونے والی جنگ کو انتہائی جوش و خروش سے دیکھا۔ ہزار ہا شہری بارڈر کی طرف جانے والی سڑک پر اپنے فوجی جوانوں کے شانہ بشانہ نکل آئے۔ سینکڑوں لوگ خون کے عطیات دینے کے لئے ہسپتالوں کی طرف دوڑتے ہوئے جا رہے تھے۔ پاکستانی قوم بھارتی فضائی حملے کے خطرے کو خاطر میں نہ لاتے ہوئے نعرے لگا کر فوجی جوانوں کا حوصلہ بڑھاتے ہوئے بارڈر کی طرف رواں دواں تھی

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔