پاکستان معیشت و تجارت

زرعی اجناس، اشیائے خورونوش کی کمی نہیں، گندم کا ذخیرہ موجود، این ایف آر سی سی

زرعی اجناس، اشیائے خورونوش کی کمی نہیں، گندم کا ذخیرہ موجود، این ایف آر سی سی

نیشنل فلڈ رسپانس کوارڈینیشن سینٹر (این ایف آر سی سی) نے کہا ہے ملک بھر میں زرعی اجناس اور اشیائے خورونوش کی کمی نہیں، ملک میں آئندہ 6 ماہ کے لیے گندم کا ذخیرہ موجود ہے۔

این ایف آر سی سی رپورٹ میں کہا گیا کہ ملک میں چاول، دالیں، آلو، ٹماٹر، پیاز سب کچھ وافر مقدار میں دستیاب ہے، گندم کا ذخیرہ بھی 6 ماہ کے لیے کافی ہے، مزید 18 لاکھ ٹن گندم بھی پہنچ جائے گی۔

رپورٹ کے مطابق 18 لاکھ ٹن میں سے 6 لاکھ ٹن گندم درآمد کی جا چکی ہے، باقی درآمد کے عمل میں ہے، آلو 42 لاکھ ٹن چاہییں جبکہ گزشتہ سال 75 لاکھ ٹن آلو کی فصل کاشت کی گئی۔

این ایف آر سی سی میں مزید کہا گیا کہ پورے ملک کے لیے دال مسور اور ماش کی طلب 15 لاکھ ٹن ہے، یہ دالیں کینیڈا، آسٹریلیا، اور میانمار سے درآمد کی جائیں گی، جبکہ دال مونگ طلب کے حساب سے ملک میں دستیاب ہے، دسمبر 2022ء تک کے لیے چاولوں کا ذخیرہ موجود ہے، ملک میں چاول کی پیداوار 97 لاکھ ٹن اور طلب 38 لاکھ ٹن ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔