Home » Author Archives: Admin (page 4)

Author Archives: Admin

‘گیم آف تھرونز’ کا ایمی ایوارڈز کی 32 نامزدگیاں حاصل کرنے کا ریکارڈ

ٹیلی ویژن انڈسٹری کے سب سے مقبول ایوارڈ ایمی نے اپنی نامزدگیوں کا اعلان کردیا جس میں ایچ بی او کی کامیاب سیریز ‘گیم آف تھرونز’ نے ریکارڈ توڑ نامزدگیاں اپنے نام کرلی۔

ایچ بی او سیریز ‘گیم آف تھرونز’ کے 8ویں سیزن نے ایمی ایوارڈز میں 32 ایوارڈز کے لیے نامزدگیاں حاصل کرکے نیا ریکارڈ قائم کردیا۔

اس سے قبل 1994 کی سیریز ‘ٹوٹل ایکلپس’ نے 27 ایمی ایوارڈز کی نامزدگیاں حاصل کی تھی۔

یاد رہے کہ گیم آف تھرونز کے ماضی میں ریلیز ہوئے سیزنز کو اس سے قبل 3 بہترین سیریز کے ایمی ایوارڈ مل چکے ہیں اور اگر اس بار بھی اسے ایمی ایوارڈ ملا تو یہ ‘ہل اسٹریٹ بلوز’، ‘ایل اے لاز’، ‘دی ویسٹ ونگ’ اور ‘میڈ مین’ جیسے کامیاب ڈراموں کی فہرست میں شامل ہوجائے گا۔

اس سال کی نامزدگیوں کو ماضی کی نامزدگیوں سے جوڑا جائے تو اب تک شو کے نام 161 نامزدگیاں ہوچکی ہیں اور یہ بھی ایک بڑا ریکارڈ ہے۔

اس سال ایمی ایوارڈز میں گیم آف تھرونز کو بہترین سیریز، اداکارہ، اداکار، ہدایت کار اور دیگر کئی تکنیکی ایوارڈز کے لیے نوازا گیا۔

71ویں ایمی ایوارڈز کی تقریب رواں سال ستمبر منعقد ہوگی، جس کی نشریات 22 ستمبر کو فاکس چینل پر دکھائی جائے گی۔

شو کے میزبان کا اعلان تاحال نہیں کیا گیا۔

نوجوان بولی وڈ اداکار اپنے بڑھاپے کی تصاویر کیوں شیئر کررہے ہیں؟

کیا آپ نے کبھی سوچا ہے کہ آپ 50 یا 60 سال کی عمر میں کیسے نظر آئیں گے؟ اگر نہیں تو ایک نئی دلچسپ ایپلیکیشن سامنے آئی ہے جس سے نوجوانی میں آپ اپنے بڑھاپے کے انداز کو دیکھ سکتے ہیں اور اس ایپ کا استعمال بولی وڈ کے نوجوان اداکار بھی کررہے ہیں۔

اداکار ورن دھون نے اپنے سوشل میڈیا اکاؤنٹس پر اس ہی ایپ کا استعمال کرتے ہوئے چند تصاویر شیئر کی جس میں وہ قریب 60 سال کی عمر نظر آرہے ہیں۔

اس تصویر میں ورن دھون بوڑھے تو ضرور نظر آرہے ہیں، البتہ فٹ وہ اتنے ہی ہیں جتنے آج نظر آتے ہیں۔

ورن دھون نے اپنی ان تصاویر میں یہ بھی لکھا کہ کئی مداحوں کو ایسا لگتا ہے کہ 62 سالہ بولی وڈ اداکار انیل کپور 100 سال کی عمر میں ایسے نظر آئیں گے۔

اداکار کی ان تصاویر کو سوناکشی سنہا اور آیوشمان کھرانہ نے بھی پسند کیا، جنہوں نے کمنٹ کرکے اداکار کے انداز کو سراہا۔

ورن دھون کے علاوہ ارجن کپور نے بھی اس ایپ کا استعمال کرتے ہوئے اپنی تصویر انسٹاگرام پر شیئر کیں۔

جبکہ ارجن کپور کی سوتیلی بہن جھانوی کپور نے اداکار کو ان کے اس انداز پر خوب سراہا۔

جبکہ کئی افراد نے ارجن کپور کو اداکار شرت سکسینا سے بھی مشابہہ کیا۔

کئی مداحوں نے بولی وڈ کی کامیاب جوڑی رنویر سنگھ اور دپیکا پڈوکون کی ایک تصویر کو بھی اس ایپ کے ذریعے تبدیل کرکے انسٹاگرام پر شیئر کیا۔

یہ تصویر رنویر اور دپیکا کی شادی کے استقبالیہ کی ہے جسے مداحوں نے اس ایپ سے تبدیل کیا۔

یہ فیس ایپ سوشل میڈیا پر بہت مقبول ہورہی ہے جسے بولی وڈ اداکاروں کے ساتھ ساتھ ہر کوئی استعمال کررہا ہے۔

عید الاضحی کا چاند کب نکال رہے ہیں؟ آرمی چیف کا فواد چوہدری سے دلچسپ مکالمہ

راولپنڈی: آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ اور وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چوہدری کے درمیان دلچسپ مکالمہ ہوا جس پر حاضرین مجلس کھلکھلا کر ہنس پڑے۔

ترجمان وزارت سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کے مطابق وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے جی ایچ کیو میں دفاعی پیداوار کے سیمینار میں شرکت کی۔ اس موقع پر آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے فواد چوہدری سے دلچسپ سوال کیا۔

آرمی چیف نے پوچھا کہ فواد چوہدری صاحب، بقرہ عید کب ہوگی؟ آپ چاند کب نکال رہے ہیں؟۔ آرمی چیف کی اس شگفتہ مزاجی پر جی ایچ کیو کا سینیما ہال قہقوں سے گونج اٹھا۔

واضح رہے کہ عید الاضحی کا چاند دیکھنے کے لیے رویت ہلال کمیٹی کا اجلاس اگست میں ہوگا اور وفاقی وزیر فواد چوہدری نے رویت ہلال کمیٹی کو ختم کرنے کی سفارش کی ہے۔

امریکی کانگریس میں سعودی عرب کو اسلحہ کی فروخت کے خلاف قرارداد منظور

واشنگٹن: امریکی کانگریس نے سعودی عرب کو اسلحہ فروخت کرنے کے خلاف قرارداد منظور کرلی۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکی کانگریس میں سعودی عرب کو اسلحہ فروخت کرنے کے خلاف قرارداد منظور کرلی گئی ہے جب کہ ایوان نمائندگان سے قبل امریکی سینیٹ بھی قرارداد منظور کرچکی۔

دوسری جانب ذرائع وائٹ ہاؤس کا کہنا ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کانگریس کی سعودی عرب کو اسلحہ فروخت کے خلاف قرارداد کو ویٹو کردیں گے۔

واضح رہے کہ ٹرمپ حکومت نے سعودی عرب کو 8.1 ارب ڈالر کا اسلحہ دینے کا اعلان کیا تھا۔

ٹائٹینک میں ہیرو کی موت پر لیونارڈو ڈی کیپریو کا پہلی بار ردعمل

اگر آپ فلم ہولی وڈ فلم ٹائٹینک دیکھی ہو تو اس کا اختتام ضرور یاد ہوگا جس میں ہیروئین ایک لکڑی کے تختے پر چڑھ کر بچ جاتی ہے جبکہ ہیرو اس تکتکے کو پکڑ کر تیرتے وہئے ٹھنڈ سے مرجاتا ہے۔

1997 میں ریلیز ہونے والی فلم کو اب 22 سال مکمل ہورہے ہیں مگر اب بھی مداحوں کی جانب سے اکثر یہ سوال سامنے آتا ہے کہ جب روز (ہیروئین) کو بچایا جاسکتا تھا تو جیک (ہیرو) کو اس تختے پر جگہ دیکر زندہ کیوں نہیں رکھا گیا؟

عرصے سے مداح اس فلم سے جڑے افراد سے یہ سوال کررہے ہیں اور اب پہلی بار جیک کا کردار ادا کرنے والے لیونارڈو ڈی کیپریو نے اس بارے میں بات کی ہے۔

لیونارڈو اپنی نئی فلم ونس اپون اے ٹائم ان ہولی وڈ کی پروموشن میں مصروف ہیں اور اس حوالے سے انہوں نے بریڈ پٹ اور مارگوٹ روبی کے ساتھ ایم ٹی وی کو انٹرویو دیا۔

اس موقع پر لیونارڈو ڈی کیپریو سے پوچھا گیا کہ کیا جیک کو روز کے ساتھ لکڑی کے تختے پر جگہ دیکر بچایا نہیں جاسکتا تھا تو لیونارڈو ڈی کیپریو نے زمین پر نظریں گاڑتے ہوئے کہا ‘میں اس پر کچھ کہنا نہیں چاہتا’۔

اس موقع پر ونس اپون اے ٹائم ان ہولی وڈ میں ان کے ساتھ کام کرنے والے بریڈ پٹ اور مارگوٹ روبی نے بھی پرمزاح جملے کہے بلکہ بریڈ پٹ نے تو وعدہ کیا کہ وہ واپس جاکر اس فلم کو دیکھ کر فیصلہ کریں گے۔

مارگوٹ روبی نے کہا ‘میرے خیال میں یہ جدید سنیما کا سب سے بڑا تنازع ہے’۔

بریڈ پٹ نے لیونارڈو ڈی کیپریو سے پوچھا ‘کیا تم وہاں گھس نہیں سکتے تھے؟ تم ایسا کرسکتے تھے کیا نہیں کرسکتے تھے’ جبکہ مارگوٹ روبی نے ڈی کیپریو سے پوچھا کہ کیا دروازہ بہت چھوٹا تھا، دونوں کے سوال پر لیونارڈو ڈی کیپریو نے ایک بار پھر کہا کہ وہ اس پر بات نہیں کرنا چاہتے۔

اسکرین شاٹ
اسکرین شاٹ

خیال رہے کہ روز کا کردار ادا کرنے والی کیٹ ونسلیٹ نے 2016 میں ایک ٹی وی انٹرویو کے دوران اس معاملے پر بات کی تھی اور ان کا کہنا تھا بلکہ انہوں نے زور دیا ‘جیک کو اس دروازے میں فٹ کیا جاسکتا تھا’۔

دوسری جانب 2017 میں فلم کے 20 سال مکمل ہونے پر ڈائریکٹر جیمز کیمرون سے جب یہ سوال کیا گیا تو ان کا کہنا تھا کہ جیک کی موت اسکرپٹ میں طے کردی گئی تھی اور تختے میں بیٹھتا یا نہیں، اسے مرنا ہی تھا، کیونکہ فلم کی کہانی موت اور علیحدگی کے بارے میں ہے۔

انہوں نے کہا ‘اس کا جواب بہت سادہ ہے کیونکہ اسکرپٹ کے صفحہ نمبر 147 میں لکھا تھا کہی جیک کو مرنا ہے اور بس، یقیناً یہ ایک آرٹسٹک انتخاب تھا’۔

تاہم انہوں نے یہ بھی کہا کہ وہ دروازہ بس اتنا ہی بڑا تھا جو روز کو سنبھالے رکھتا، اس میں اتنی جگہ نہیں تھی کہ وہ جیک کو بھی سنبھالے رکھتا، یہ بہت مضحکہ خیز ہے کہ 20 سال بعد اس پر بحث کررہے ہیں۔

ٹائٹینک نے دنیا بھر سے 2 ارب ڈالرز کمائے تھے اور کافی عرصے تک وہ اواتار کے بعد سب سے زیادہ کمانے والی دوسری فلم تھی، تاہم اب اس کی جگہ ایوینجرز: اینڈگیم نے لے لی ہے۔

پرا نے دہلی میں فرقہ وارانہ فسادات

بھارت میں ہونے والے لوک سبھا چناءو میں نریندرامودی ایک بار پھر پانچ برس کےلئے دیش کے وزیر اعظم منتخب ہوئے دنیا کو یہ بتانے کی کوئی ضرورت نہیں ہے کہ اْنہوں یعنی مسٹر مودی;39;بی جے پی اورآرایس ایس سمیت بھارت کی تمام ہندو فرقہ ورانہ علبردار شدت پسند تنطیموں نے ;39;بھارت کو ایک ہندو دیش;39; بنانے کے کیسے کیسے جنونی نعرے نہیں لگائے مسلمانوں کے خلاف انتخابی ریلیوں میں بھارتی نڑاد مسلمانوں اور بالخصوص پاکستان دشمنی میں کیا کیا بڑکیں نہیں ماری گئیں جس کی ابتدا مودی اور اْن کے حواریوں نے عین انتخابات کے آغاز پر بھارتی خفیہ ادارے ;39;را;39; کو استعمال کرکے پلوامہ خود کش حملے کا الزام میں پاکستان کو کیسے ملوث کیا گیا;238; پلوامہ خود کش حملہ کی اب تک شفاف اورغیر جانبدار تحقیقات صرف اس وجہ سے نہیں کرائی جارہی ہیں کہ کہیں نہ کہیں اس حملہ کی مشکوک کڑیاں بھارتی انتظامیہ کے اندر کے یقینا جاملتی ہیں آج یہاں ہمارا مدعا یہ ہے کہ اگلے پانچ برس کے لئے دوبارہ منتخب ہونے والے وزیراعظم مودی نے اب تک ماضی کی غلطیوں سے سبق حاصل نہیں آج بھی دنیا کے غیر متعصب اور غیر جانبدار میڈیا کے ذراءع یہی کہہ رہے ہیں کہ آر ایس ایس ایک کثیر المذاہب;39;کثیر الثقافتی;39;کثیر النسلی اور ذات پات کے غیر انسانی ماحول کے شکنجے میں دبے ہوئے ملک کو;39;ایک ہندو راشٹریہ دیش;39;بنانے کے اپنے مذموم مقاصد کو حاصل کرنے کی دوبارہ سے کیل کانٹوں سے لیس ہوکر کوششیں شروع کردی گئی ہیں ہم پاکستانی اور دنیا کے پْرامن طبقات آج تک نہیں بھولے کہ آرایس ایس کے ایک جنونی قاتل ;39;گوڈسے;39; نے دیش کے سب سے پہلے عدم تشدد کی علامات سمجھنے والے گاندھی جی کو کس بیدردی سے گولی مار کر شہید کردیا گیا تھا حس ہوگئی جناب، گزرے ان انتخابات میں بی جے پی نے بھارت میں بدنام ترین جنونی اور عدالتوں سے ضمانت پر رہا ہونے والی ایک ساگھویہ پرگیہ دیوی کو کو بھی لوک سبھا کا ٹکٹ دیدیا اور جو چناو جیت چکی ہیں جن کا نعرہ یہی ہے کہ بھارت صرف ہندووں کا دیش ہے غیر ہندووں کو بھارت کی سرزمین فورا چھوری دینی چاہیئے یوں تو اس منافرانہ زہریلی سوچ رکھنے والے سبھی جنونی کارسیوک برصغیر کی آزادی سے پہلے ہی اس دیش کو ;39;ہندوراشٹریہ دیش;39;بنانے کے خواب دیکھ رہے تھے لیکن اْن کا یہ خواب آج تک خواب ہی رہا یہ بڑا المیہ ہے کہ دنیا میں مذاہب کی تفریق کے نام پر ابھرنے والے ہر جنونی تشدد کو غیر انسانی رویہ کہہ کر اس کی کھلی مذمت کی جارہی ہے دنیا کے پْرامن طبقات جو عالمی سطح کی سیاسی وسفارتی چوکیداری کرنے میں ہمہ وقت اپنے آپ کو نمایاں رکھتے ہیں وہ نریندرامودی جیسے انتہا پسند جنونی مذہبی منافرت رکھنے والی سوچ کے حامل شخص کے بھارت میں دوبارہ انتخاب جیتنے پر جہاں اْس کی ہلہ شیری کررہے ہیں یا اْسے ;39;مبارک باد;39; دے رہے ہیں اْس سے یہ سوال نہیں کریں گے کہ وہ پاکستان کے مشرقی بارڈر پار اپنے ملک میں مذہبی عدم رواداری کے بڑھتے ہوئے رجحانات کو مزید بڑھاوادے گا یہ ایسے غیر انسانی سانحات اور المیوں سے بھارت کو آئندہ کےلئے محفوظ بنانے کی کوئی اپنی انسانی ذمہ داری نبھائے گا یا نہیں ;238; دنیا کوشش کرلے مگر ہم پاکستانیوں کو اور مقبوضہ جموں وکشمیر کے مسلمانوں کو ایسا ہوتا ہوا دکھائی نہیں دیتا بھارت میں صدیوں سے رہنے والے کروڑوں مسلمان اگلے پانچ برس کےلئے ہونے والے لوک سبھا کے چناءو کے بعد مودی کو دوبارہ وزیراعظم بننے پر شدید خوف وہراس کی کیفیت میں مبتلا ہیں اْس کی کچھ بنیادی وجوہات ہم پاکستانیوں سے زیادہ بھارت میں آباد مسلمان برابر محسوس کررہے ہیں اگلے پانچ برس مودی صاحب کیا اقدامات کریں گے یہ تو وقت بتائے گا کیونکہ اْنہوں نے اپنے گزشتہ پانچ برسوں کے دوران بھارتی مسلمان جو ایک واضح اکثریتی ;39;اقلیت;39; ہے اْن کے ساتھ امتیازی برتاو کتنا برتا جارہا ہے ایک اندازے کے مطابق مودی کی حکومت نے اپنے گزشتہ پانچ برس سب سے پہلے آر ایس ایس سے ہمدردی رکھنے والوں کو اہم عہدوں پر فائز کیا مودی کابینہ میں سادھو اور سادھوی شامل ہوئے;39; بی جے پی نے انڈین کونسل آف ہسٹو ریکل ریسرچ، سیکورٹیز اینڈ ایکسچینج بورڈ آف انڈیا، فلم اینڈٹیلی ویڑن انسٹیٹیوٹ آف انڈیا، جیسے اہم اداروں کے اہم عہدوں کے علاوہ مختلف ریاستوں کے گورنروں کے عہدوں پر سو یم سیوکوں کو فائز کیا گزشتہ پانچ برس کے دوران وزیراعظم کے علاوہ ان کی کابینہ کے سات ارکان ایسے تھے جن کی پوری جوانی آر ایس ایس کے سرگرم سیوک کی حیثیت سے گزری ہے مودی حکومت کی دلچسپی کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ وہ آر ایس ایس کو خوش کرنے کےلئے دریائے سرسوتی کی محکمہ آثار قدیمہ کی مدد سے تلاش کروا رہی ہے جس کا اب تو نام و نشان تک مٹ گیا ہے اس دریا کا ذکرصرف ہندووَں کی کتابوں میں موجود ہے مودی حکومت اپنے گزرے اقتدار کے برسوں میں سب سے پہلے ملک کی 31اسمبلیوں کے منجملہ کم سے کم 20پر قبضہ کرنے کی کوششوں میں رہی اْس وقت 11پر اسکا قبضہ تھا اس کام کو پوراکرنے کیلئے آر ایس ایس کی تمام ذیلی تنظیموں نے اپنے کیڈر کو ضرورت سے زیادہ متحرک کر دیا تھا گزشتہ70برسوں کے دوران پہلی مرتبہ ایسا ہوا ہے کہ ملک میں مسلم ووٹوں کی اہمیت ختم ہوتی جارہی ہے کوئی جماعت اگر مسلمانوں کے ووٹ حاصل کرنا چاہتی ہے تو اس کو اسطرح ظاہر کیا جا رہا ہے کہ وہ اقلیتوں کو خوش کر رہی ہے نتیجہ میں اس پارٹی کو اکثریتی ووٹوں سے محروم ہونے کا خدشہ پیدا ہوجاتا ہے بتایا جاتا ہے کہ اس سلسلے میں آر ایس ایس اور بی جے پی نے دو مرحلوں کی حکمت عملی بھی تیار کی ایک تو قومی سطح پر انتخابات میں کامیابی حاصل کرنا(جو حاصل کی جاچکی ہے)اور دوسرے یہ کہ ریاستوں کی اسمبلیوں پر قبضہ کر کے ایوانِ بالا یعنی راجیہ سبھا میں بھی اکثر یت حاصل کرنا ضروری ہوگا ملک میں سیاسی، سماجی، تہذیبی تبدیلی لانے کےلئے صرف مرکز پر اقتدار کافی نہیں ہے اس کےلئے ریاستوں میں بھی اقتدار پر ہونا ضروری ہے آر ایس ایس کے جنرل سیکرٹری نے راءٹر کو بتایا کہ 2014کی فتح صرف ایک شروعات ہے اور ہمارے طویل مدتی مشن کا نقطہ آغاز بھی ہے جیسے اْوپر بیان ہوا کہ چاہے بھارت کی مرکزی حکومت ہو یا ریاستیں حکومتیں یہ جگہ یہ پوائنٹ بہت سختی سے نوٹ کیا جاتا ہے کہ پولیس کے محکمہ میں کسی مسلمان تو درکنار کسی بھی غیر ہندو اور جو آرایس ایس کی سفارش لائے صرف اْسی کو پولیس اور نیم پیرا ملٹری فورسنز میں بھرتی کیا جائے یہ ہے آرایس ایس کا نیابھارت جہاں اب نئی دہلی سے لیکر واہگہ تک اور واہگہ سے لیکر;39;سیون سسٹر ریاستوں اور بنگال تک اور لداخ سے ممبئی کے ساحلوں تک ایک فرقہ ورانہ ہندو دیش کے قیام کو ممکن بنانے کی مذموم کوشش;238;جس کی ایک تازہ جھلکیاں بطور نمونہ اب آہستہ آہستہ سامنے آنا شروع ہوچکی ہیں نئی دہلی سے منسلک پرانی دہلی کے علاقے لال کنواں محلہ،جامع مسجد محلہ، چاندنی چوک اور ان سے جڑے ہوئے دیگر علاقوں میں گزشتہ ہفتہ سے تادم تحریر ایک بہت ہی معمولی سے اختلاف کو بہانہ بناکر ;39;ہندومسلم کشیدگی;39; پیدا کی گئی جہاں ایک مسلم نوجوان نے 30 جون کی رات اپنی موٹر سائیکل غلط پارک کی جسے وجہ بناکر بجرنگ دل کے غنڈے جو رات گئے تک گلیوں اور چوراہوں پر بیٹھے رہتے ہیں ہر آنے جانے والے مسلمانوں پر جملے کستے ہیں دوہفتے ہونے کو ہیں مقامی پولیس نے اب تک کئی شکایات اْن تک پہنچائی جانے کے باوجود بجرنگ دل کے ہندو غنڈوں کی غنڈہ گردی اور مسلمان نوجوانوں کو تشدد کرنے کی ایف آئی آر تک درج نہیں کی ہے پولیس خاموش تماشائی بنی ہوئی ہے اورلال کنواں سمیت پرانی دہلی کے ان علاقوں کے مسلمان عوام خوف وہراس کے عدم تحفظ کا شکار ہیں اگر دہلی حکام نے یونہی مجرمانہ خاموشی اختیار کئے رکھی اور علاقہ میں کشیدگی اور خوفزدگی کا یہی مہیب ماحول برقرار رہا چونکہ یہاں کا کاروبار ایک ہفتے سے بند ہے اور تنازعہ بڑھا تو علاقہ میں فسادات کی آگ بھڑک سکتی ہے چونکہ اب دوسرے علاقوں سے بھی مسلمان اس علاقہ میں آنا شروع ہوگئے ہیں دونوں اطراف سے پْرجوش مذہبی نعرے بازیاں ہورہی ہیں اور دہلی حکومت کے کانوں پر جوں تک نہیں رینگ رہی جسے وہ بھنگ پئے ہوئے ہو اور;39;مودی زندہ باد ۔ ہندوایکتا زندہ باد;39; کے نعروں کی تپش کے جواب میں کبھی بھی مسلمانوں کے صبر کا پیمانہ چھلک پڑے گا لہٰذا نئی دہلی کی حکومت فوراً ہوش کے ناخن لے کیونکہ پرا نے دہلی میں ایک ;39;فرقہ ورانہ فسادات کے شروع ہونے کےلئے ماحول پوری طرح پک چکا ہے ۔

گلوبل ٹی ٹوئنٹی کینیڈا کے لیے 5 قومی کرکٹرز کو این او سی جاری

لاہور: گلوبل ٹی ٹوئنٹی کینیڈا ٹورنامنٹ کے لیے 5 قومی کرکٹرز کو این او سی جاری کردیے گئے ہیں۔

قومی ٹیم کے 5 کھلاڑیوں کو گلوبل ٹی ٹوئنٹی کینیڈا ٹورنامنٹ کے لیے این او سی جاری کردیے گئے ہیں۔ ان کرکٹرز میں شعیب ملک، محمد حفیظ، وہاب ریاض، شاداب خان، اورعمر اکمل شامل ہیں۔

ٹی ٹوئنٹی فارمیٹ کی یہ لیگ 25 جولائی سے انٹاریو میں کھیلی جارہی ہے جس کا فائنل 11 اگست کو شیڈول ہے، اس لیگ میں سابق کپتان شاہد آفریدی بھی شرکت کررہے ہیں جن کو پی سی بی کی جانب سے این اوسی کی ضرورت نہیں۔ اوپنر فخر زمان نے بھی این اوسی کے لیے درخواست دی تھی تاہم ان کا کیس بعد میں دیکھاجائے گا۔

پی سی بی ذرائع کے مطابق دوسری لیگز میں قومی کرکٹرز شریک ہوسکیں گے یا نہیں، اس کا فیصلہ بھی بعد میں کیاجائے گا، فی الحال کینیڈا لیگ کے لیے جن کھلاڑیوں نے معاہدے کیے ہیں ان کو کھیلنے کی باقاعدہ اجازت دے دی گئی ہے۔

ڈالر کی قدر گرتے ہی سونے کی فی تولہ قیمت میں 1100 روپے سے زائد کی کمی

کراچی: مقامی صرافہ مارکیٹ میں سونے کی فی تولہ قیمت 1150 روپے کمی کے بعد 82 ہزار 650 روپے کی سطح پر پہنچ گئی۔ 

ایکسپریس نیوز کے مطابق انٹربینک میں ڈالر کی قیمت 23  پیسےکم ہوئی اور انٹرمارکیٹ میں ڈالر 159 روپے 82 پیسے پر بند ہوا، جب کہ اوپن کرنسی مارکیٹ میں بھی ڈالر کی قدر 20 پیسے کی کمی سے 160 روپے30 پیسے کی سطح پر آگئی، دوسری جانب عالمی بلین مارکیٹ میں بھی فی اونس سونے کی قیمت 13 ڈالرکی کمی ہوئی اورعالمی مارکیٹ میں سونے کی فی اونس قیمت 1403 ڈالر کی سطح  پر پہنچ گئی۔

ڈالر کی قدر گرنے اور عالمی مارکیٹ میں سونے کی قیمت کم ہونے کا اثر ملکی صرافہ مارکیٹ میں بھی نظر آیا اور مقامی صرافہ مارکیٹ میں سونے کی فی تولہ اور دس گرام قیمت میں بالترتیب 1150 روپے اور 986 روپے کی کمی واقع ہوئی۔

قیمتوں میں کمی کے بعد کراچی، حیدرآباد، سکھر، ملتان، لاہور، فیصل آباد، راولپنڈی، اسلام آباد، پشاور اور کوئٹہ کی صرافہ مارکیٹوں میں فی تولہ سونے کی قیمت گھٹ کر 82 ہزار 650 روپے اور دس گرام سونے کی قیمت کم ہوکر 70 ہزار 842 روپے  ہوگئی،  اس کے برعکس فی تولہ چاندی کی قیمت بغیر کسی تبدیلی کے 900 روپے اور فی دس گرام چاندی کی قیمت 771 روپے 60 پیسے پرمستحکم رہی۔

 

Google Analytics Alternative