- الإعلانات -

گنے والے رہ گئے

uzairahmedkhanکیا خوب وقت میں وزیراعظم نے کسانوں کیلئے تاریخی پیکج کا اعلان کیا ہے ۔ادھر بلدیاتی انتخابات سر پر ہیں ۔اب اس پیکج کو کیا کہا جائے یہ جمہوری رشوت ستانی ہے یا اختیارات کا ناجائز استعمال یا پھر قومی خزانے کا بے دریغ استعمال ،قوم اس وقت عجیب مخمصے کا شکار ہے ۔اربوں روپے کا پیکج تو دیدیا گیا اب دیکھنے اورسوچنے کی بات تو یہ ہے کہ اس میں سے کسانوں کو کیا ملتا ہے۔زراعت توہماری پہلے ہی تباہ حال ہے ایک اہم ایشو جو کہ وزیراعظم کیلئے توجہ طلب تھا لیکن شاید کچھ ناگزیر وجوہات کی وجہ سے وہ اس جانب کچھ نہ کرسکے وہ تھا گنے کے کسانوں کا مطالبہ کہ کیا ان بے چاروں کا تعلق بنگلہ دیش سے تھا ۔ان کا مطالبہ کیوں پس پشت ڈال دیا گیا ۔یہ کیوں کہا گیا کہ اس پر پھر کوئی اعلان کیا جائیگا ۔اس موقع پر اس پیکج کا اعلان کرنا حکومت کے حق میں کوئی خاصا نہیں جاتا ۔اگر اس کو یہ کہا جائے تو غلط نہ ہوگا کہ کسانوں کے ووٹ خریدنے کیلئے یہ اقدام اٹھایا گیا ہے ۔نہیں تو کچھ عرصے پہلے اسی پنجاب کی سڑکوں پر کسانوں کوخوب تختہ مشق بنایاگیا ۔لاٹھی چارج بھی ہوا ،مارکٹائیاں بھی ہوئیں،گرفتاریاں بھی ہوئیں اب جب ووٹ کا موسم آیا تو پھرحکومت کو زرعی پیکج یاد آگیا ۔خدارا عوام کی فلاح کا پیکج دیا جائے ۔ان سیاسی پیکجوں سے تباہی کے علاوہ کچھ حاصل نہ ہوگا ۔