- الإعلانات -

وقت قربانی مانگ رہا ہے

بلاول کا پروٹوکول ننھی بسمہ کی جان لے گیا مگر اس کے باوجود سندھی وڈیرہ ازم نے کوئی سبق نہ سیکھا ،دوسرے روز ایک اوروڈیرے جس کو خورشید شاہ کہتے ہیں ،اپوزیشن لیڈر بھی ہیں کہ صاحبزادے کی شادی خانہ آبادی ہوئی ،کراچی ڈیفنس میں پھر پروٹوکول لگ گیا ،سڑکیں بند ہوگئیں،عوام سخت پریشان رہے ،اگر کل ہی ہونے والی غلطی پر باقاعدہ ایکشن لے لیا جاتا تو آج خورشید شاہ وی آئی پی کلچر کی روایت کو نہ دہراتے ۔ہمارے ملک کا المیہ ہی یہ ہے کہ اگر غریب قانون کی خلاف ورزی کرے تو اسے تختہ دار پر لٹکا دیا جاتا ہے اور اگر امیر سے ایسی بڑی غلطی سرزد ہوجائے تو غریب کو بلا کر اسے سرکاری ملازمت کی پیشکش کرکے منہ بند کرا دیا جاتا ہے ۔عوام جائے بھاڑ میں ان وڈیروں کی قیمتی جانیں بچنا چاہئیں ۔عوام تو پیدا ہی مرنے کیلئے ہوئی ہے اوربلاول تو آیا ہی حکمرانی کیلئے ہے ۔خورشید شاہ بھی اپوزیشن لیڈر ہیں پھر سائیں کی حکومت ہے اب تو زرداری بھی کھل کر سامنے آگئے ہیں ۔چانڈیو نے بھی کہہ دیا کہ چوڑیاں نہیں پہن رکھیں ،ملک پھر انارکی کی جانب باقاعدہ گامزن کیا جارہا ہے ،وقت قربانی مانگ رہا ہے ،اب تو یہ وقت ہی بتائے گا کہ قربانی کا بکرا کون بنتا ہے ۔