- الإعلانات -

شیل گیس کے ذخائرکی تلاش میں حکومت کی عدم دلچسپی

اسلام آباد: ملک میں شیل گیس کے وسیع ذخائر کی موجودگی کے باوجود حکومت کی جانب سے گزشتہ کئی سال کے دوران اس شعبے میں کوئی بڑی سرمایہ کاری نہ لائی جا سکی اوجی ڈی سی ایل اور پی پی ایل کی جانب شیل گیس کی تلاش کا پائلٹ پروجیکٹ بھی تاخیر کا شکارہے۔

ذرائع کے مطا بق امریکی ادارے آئی اے ا ی اے کی جانب سے پاکستان میں شیل گیس کے بڑے ذخائر کی موجودگی کی رپورٹس آنے کے بعد گزشتہ دورحکومت میں شیل گیس پالیسی منظور کرائی گئی تاہم اس شعبے میں کوئی سرمایہ کار ی نہ لائی جا سکی۔ موجودہ حکومت نے برسراقتدار آنے کے بعد شیل گیس کے دریافت کے حوالے سے اقدامات شروع کیے تھے اور اس وقت کے وزیر پٹرولیم شاہد خاقان عباسی نے شیل گیس کی دریافت کے لیے پائلٹ پروجیکٹ شروع کرنے کی ہدایات جاری کی تھیں تاہم یہ منصوبہ نامعلوم وجوہا ت کی بنا پر تاخیر کا شکار ہے۔

ذرائع نے بتایا کہ ملک میں شیل گیس کی دریافت کے لیے اوجی ڈی سی ایل اور پی پی ایل نے مفاہمت کی ایک یادداشت پر دستخط کیے تھے تاہم ابھی تک اس سمت میں کوئی بڑی پیش رفت دیکھنے میں نہیں آئی۔ ذرائع نے بتایاکہ شیل گیس کے ذخائر کی دریافت کے لیے ملک میں جدید ترین ٹیکنالوجی دستیاب نہیں ہے جس سے ملک میںشیل گیس کے ذخائرکی کمرشل بنیادوں پر کام شروع نہیں کیا جاسکا۔ شیل گیس کی دریافت کے لیے امریکن کمپنیوں کے پاس جدید ترین ٹیکنالوجی موجود ہے اوراس کے ساتھ ساتھ امریکی کمپنیاں شیل گیس کی دریافت کے سلسلے میں مہارت بھی رکھتی ہیں تاہم حکو مت اس شعبے میں مراعات دے کر غیر ملکی کمپنیوں کو بھی راغب کر سکتی ہے۔