- الإعلانات -

ٹیکس حکام نے800 تاجروں کے این ٹی این بلاک کر دیے؛متاثرین کا احتجاج

کراچی:  فیڈرل بورڈ آف ریونیو کے ماتحت ریجنل ٹیکس آفس کراچی نے 800 سے زائد تاجروں کے نیشنل ٹیکس نمبربلاک کرتے ہوئے انہیں غیرمتحرک کردیا ہے۔

متاثرہ تاجروں کا کہنا ہے کہ آرٹی او2، آرٹی او3 اور پاکستان کسٹمزکے درمیان باہمی روابط کے فقدان کی وجہ سے ان کے این ٹی این بلاجواز بلاک کردیے گئے ہیں لیکن آرٹی اوز کے اس یکطرفہ اقدام سے حکومتی محصولات کی وصولیاں بری طرح متاثر ہوگی۔ پاکستان کیمیکلزاینڈ ڈائز مرچنٹس ایسوسی ایشن کے چیئرمین عارف لاکھانی نے بتایا کہ کسٹمزویلیوایشن ڈپارٹمنٹ کے سیکشن81 کے تحت گڈزڈیکلریشنز کی کلیئرنس کے لیے درآمدکنندگان نے اپنے اپنے پے آرڈرز جمع کرارکھے ہیں اور بعض پے آرڈرز 2سال قبل جمع کرائے گئے لیکن اس کے باوجود آرٹی اوز کی جانب سے مذکور درآمدکنندگان کو ریکوری نوٹسز جاری کرکے عدم وصولی پراین ٹی این بلاک کردیے گئے ہیں تاکہ تاجروں پر دوبارہ ادائیگیوں کا دباؤ ڈالا جا سکے۔

انہوں نے بتایا کہ یہ تنازع کسٹمز ویلیوایشن اور آر ٹی اوز کے درمیان مطلوبہ رقوم کی عدم منتقلی کے سبب پیدا ہواہے لیکن اس تنازع میں قربانی کا بکرا تاجروں کو بنایا جارہا ہے اور انہیں ہراساں کیا جا رہا ہے، ضرورت اس امر کی ہے کہ دونوں سرکاری ادارے باہمی روابط اختیار کرتے ہوئے معاملے کو حل کریں کیونکہ محکموں کے اس تنازع سے بندرگاہوں پر درآمدی کنسائمنٹس بھی تعطل کا شکار ہو رہی ہے جس سے درآمدکنندگان کو اضافی اخراجات برداشت کرنا پڑ رہے ہیں۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ 800 سے زائد تاجروں کو جاری کردہ ریکوری نوٹسز واپس لیتے ہوئے ان کے این ٹی اینز کو فعال کیا جائے بصورت دیگر تمام متاثرہ تاجر مزید ٹیکسوں کی ادائیگیوں کو روک دیں گے جس کا دائرہ کارملک بھر کے تاجروں تک پھیل جائے گا۔