- الإعلانات -

درخت لگانا صدقہ جاریہ ہے

وزیر اعظم عمران خان کی مختلف جماعتوں کے تعاون کی حکومت نے مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کے مظلو م ونہتے کشمیریوں پرظلم وستم اور دہشت گردی کی مذمت کی ہے اور مظلوم ونہتے کشمیریوں کی بھارتی تسلط سے آزادی کی جدوجہد جاری رکھی ہے اور مقبوضہ کشمیر سے ہی آنے والے دریائے چناب کاپانی بھی بھارت نے مقبوضہ کشمیر میں بگلیہارڈیم پر روک رکھا ہے جس کی وجہ سے دریائے چناب کا ستانوے فیصد سے زائد حصہ کم پانی کی وجہ سے خشک ہوچکا ہے اور سیالکوٹ سے نکلنے والا نہر نظام مرالہ راوی لنک اور اپرچناب کے کم پانی کی وجہ سے تباہ ہوا ہے جہاں کاشتکار اور کسان ٹیوب ویلوں کا پانی فصلوں کو لگانے پر مجبور ہیں اور زراعت کا اربوں روپے کا نقصان پہنچ چکا ہے لیکن 1960ء میں سابق صدر جنرل ایوب خان کے دور اقتدار میں بھارت کے ساتھ سندھ طاس معاہدہ کی کھلی خلاف ورزی بھارت کی طرف سے جاری ہے اور پانی کی مقدار کم ہوکر 29ہزار تین سو سنتالیس کیوسک رہ گئی ہے حالانکہ سندھ طاس معاہدہ کے تحت بھارت دریائے چناب میں ہر لمحہ 55ہزار کیوسک پانی چھوڑنے کا پابند ہے لیکن بھارت نے سندھ طاس معاہدہ کی بھی خلاف ورزی کرکے پانی روکا ااور پاکستان کو نقصان پہنچایا ،مقبوضہ کشمیر سے آنے والے دو دریاءوں دریائے مناور توی میں پانی کی آمد ایک ہزار چھ سو باون کیوسک اور دریائے جموں توی میں پانی کی آمد دو ہزار چار سو پندرہ کیوسک رہی ، بھارت کی طرف سے ہمیشہ پاکستان میں شامل ہونے والے دریاءوں کا پانی روکا جاتارہا ہے اور اس وجہ سے پاکستان کے لاکھوں ایکٹر زرعی رقبے پر کاشت شدہ فصلوں کو بھی نقصان پہنچ چکا ہے اور پاکستان کے احتجاج کے باوجود بھارت نے سندھ طاس معاہدہ کی کھلی خلاف ورزی کی ہے ،زمینداروں محمد نواز ، برکت علی ، بشارت احمد اور منصور احمد کے مطابق فصلوں کیلئے پانی انتہائی اہمیت کا حامل ہوتا ہے اور دریاکا پانی بہت زیادہ فائدہ مند ہوتا ہے لیکن مخالف ملک دریائے چناب کا پانی روک رکھا ہے اور پاکستان کو بڑے پیمانے پر زرعی نقصان پہنچایا گیا ہے اس بدقسمتی سے بھارت جان بوجھ کر سازشیں کرکے خطہ کا امن تباہ کررہا ہے اس لئے اسے دریائے چناب کا پانی فوری کھول دینا چاہیے وگرنہ پاکستان اور بھارت کے درمیان جنگ بھی ہوسکتی ہے اور ورکنگ باءونڈری لائن ومقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج نے دہشت گردی کے ریکارڈ حملے کئے ہیں جن میں انسانی جانوں اور املاک کا نقصان ہوا ، مسلم لیگ (ن) کے سابق وزیر خارجہ ورکن قومی اسمبلی خواجہ محمد آصف کے مطابق بھارت نے ہمیشہ مقبوضہ کشمیر میں مظلوم ونہتے کشمیریوں پر ظلم وستم کئے اور انسانی حقوق کی جتنی خلاف ورزیاں مقبوضہ کشمیر میں ہوئیں اس کی مثال دنیا بھر میں نہیں ملتی ، بھارت کو ہوش کے ناخن لے کر مقبوضہ کشمیر میں مظالم بند کرکے نہتے ومظلوم کشمیریوں کو ان کا حق خودارادیت دے کا فیصلہ کرنے کا ختیار دے ، بھارت مقبوضہ کشمیر پر ناجائز قابض ہوکر ظلم وستم کررہا ہے ،مقبوضہ کشمیر اور پاکستان کا گہرا تعلق ہے اور زمین رابطے ہونے کے باوجود پاکستان کے مقبوضہ کشمیر میں جانے کے راستے بندہیں اور مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کی کھلی خلاف ورزیاں اور مظلوم ونہتے کشمیریوں کی ہلاکتوں وزخمی ہونے کے علاوہ املاک کو نقصان پہنچنے کے واقعات بدترین انسانی تاریخ کی مثالیں ہیں جن کاہرشہری مذمت کرتا ہے ۔