- الإعلانات -

جنتا کرفیو کے باوجود بھارت میں کورونا پھیل رہا ہے

بھارت میں کورونا وائرس سے متاثرہ افراد اور ہلاک ہونےوالوں کی تعداد میں مسلسل اضافے کے تناظر میں وزیر اعظم نریندر مودی نے 21 روزہ لاک ڈاوَن میں توسیع کرتے ہوئے اسے 3 مئی تک بڑھانے کا اعلان کیا ہے ۔ مودی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم تمام لوگوں کو 3 مئی تک لاک ڈاوَن میں رہنا ہو گا ۔ بھارت میں کورونا کی تباہ کاریاں بڑھ گئیں ۔ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران بھارت میں کورونا کے 941 مریض سامنے آئے ہیں جس کے بعد کورونا کے مریضوں کی مجموعی تعداد 13420 ہو گئی ہے جبکہ بھارت میں کورونا وائرس سے 448 ہلاکتیں ہو چکی ہیں ۔ بھارتی وزارت صحت کے مطابق بھارت کی مختلف ریاستوں میں کورونا کے مریضوں میں 76 غیر ملکی بھی شامل ہیں جبکہ 1489 مریض صحت یاب بھی ہو چکے ہیں ۔ کورونا 32 ریاستوں میں پھیل چکا ہے ۔ بھارت میں کورونا کے مریضوں میں بڑی تیزی کے ساتھ اضافہ ہو رہا ہے ۔ بھارتی وزارت صحت کے تازہ اعداد وشمار کے مطابق ملک میں کورونا وائرس کے کیسز کی تعداد 11 ہزار 906 ہوچکی ہے جبکہ 480 افراد ہلاک ہوئے ۔ بھارتی فوج کے اہلکاروں میں بھی کورونا کی تشخیص ہوئی ہے جس کی وجہ سے بھارتی فوج میں خوف کی فضا ہے ۔ بھارت کی وزارت دفاع کے عہدیداروں کا کہنا ہے کہ ممبئی کے مغربی علاقے میں قائم نیول بیس میں کورونا وائرس پھیل گیا ہے ۔ بھارتی نیوی کی ویسٹرن کمانڈ فورس کے مرکز آئی این ایس آنگرے میں 21 اہلکاروں میں کوروناوائرس کی تشخیص ہوئی ہے ۔ جس کے بعد بحریہ میں وائرس پھیلنے کا خدشہ ظاہر کیا جارہا ہے ۔ تاہم فورس کا کہنا ہے کہ کسی جہاز میں یا آبدوز کے حوالے سے اس طرح کی کوئی رپورٹ نہیں ہے ۔ فوجیوں کے کیسز رپورٹ ہونے کے بعد نیوی اہلکار شدید خوف زدہ ہیں ۔ اہلکاروں میں کورونا کی تصدیق ہونے کے بعد دیگر فوجیوں کے ٹیسٹ ہنگامی بنیادوں پر کیے جارہے ہیں تاکہ فوری طور پر غیرمرئی وائرس کو روکا جاسکے ۔ کہا جا رہا ہے کہ جن اہلکاروں کے کورونا ٹیسٹ مثبت آئے انہیں علامات ظاہر نہیں ہوئی تھیں اور وہ معمول کے مطابق اپنے امور انجام دے رہے تھے مگر وہ کورونا زدہ تھے ۔ کورونا کی تشخیص کے بعد حکام نے اْن اہلکاروں اور افسران کی تلاش شروع کردی جو مذکورہ اہلکاروں کے ساتھ رابطے میں تھے یا اْن سے ملاقات کی تھی ۔ نیوی نے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات کرتے ہوئے ہاسٹل کو قرنطینہ سینٹر میں منتقل کیا اور تمام ملازمین کو وہیں قیام کرنے کے احکامات دیے ہیں ۔ بھارت کی بحریہ فورس کے چیف نے کچھ روز قبل نیوی کے اسٹاف سے اپنے خطاب میں کہا تھا کہ ہ میں اپنے عسکری اثاثوں کو فعال رکھتے ہوئے انہیں کورونا سے پاک رکھنا ہے ۔ ایسا کرنا انتہائی مشکل ہے تاہم موجودہ وقت کا یہی چیلنج ہے ۔ ہ میں اپنے بحری جنگی جہاز اور آبدوزیں ہر حالت میں فعال رکھنا ہیں ۔ بھارتی فوج میں بھی دو ڈاکٹروں سمیت 8 فوجیوں میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوچکی ہے ۔ ایک متاثرہ فوجی کے والد نے حال ہی میں ایران کا سفر کیا تھا ۔ لداخ سکاوٹ کے جوان میں کورونا وائرس کی علامت دیکھے جانے کے بعد اس کی جانچ کرائی گئی جو مثبت آئی ۔ بھارتی فوجی کو جہاں ہسپتال بھیج دیا گیا ہے وہیں اس کی بہن اور اہلیہ کو بھی آئیسولیٹ کر دیا گیا ہے ۔ بھارتی فوج میں یہ پہلا کیس سامنے آیا ۔ لیہہ کے چوہوٹ گاوں کا رہنے والا یہ بھارتی فوجی اپنے والد کے رابطہ میں آیا جو پہلے سے ہی انفیکشن کا شکار ہو چکے تھے ۔ ان کے والد 20 فروری کو ایران سے تیرتھ یاترا پر لوٹے تھے اور 29 فروری سے لداخ ہارٹ فاونڈیشن میں آئسولیشن میں ہیں ۔ دہلی میں بھارتی فوج کے ایک لیفٹیننٹ کرنل ڈاکٹر میں کورونا کی تشخیص ہوئی ہے ۔ اس اہلکار سے جتنے افراد کی ملاقات یا رابطہ ہوا تھا سب کو قرنطائن کر دیا گیا ہے ۔ کورونا زدہ ڈاکٹر نے بیرون ملک کا سفر بھی نہیں کیا اور یہی چیز پوری بھارتی فوج کےلئے تشویشناک ہے کہ چند چھپے ہوئے فوجی کورونا پھیلا رہے ہیں ۔ کورونا کی تشخیص کے بعد اسے ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے ۔ اس سے قبل 29 مارچ کو کولکتہ میں ایک فوجی ڈاکٹر جو کرنل رینک کا ہے اور ایک جے سی او میں کورونا کی تشخیص ہوئی تھی، لداخ میں تعینات کچھ اہلکاروں میں بھی کورونا کا ٹیسٹ مثبت آیا تھا ۔ بھارتی فوج نے اپنے اہلکاروں کو کورونا سے بچاوَکےلئے ہدایات بھی جاری کر رکھی ہیں ۔ بھارتی فوج کے افسر میں کورونا وائرس کی تشخیص ہونے پر فوج کی اعلیٰ قیادت سمیت ہر رینک میں کھلبلی مچ گئی ۔ کرنل کی پوری یونٹ کے ٹیسٹ کروانے کی تجویز دی گئی ہے جس پر پوری یونٹ کے ٹیسٹ ہوں گے ۔ اس کے علاوہ کرنل کی کن کن افراد سے ملاقات ہوئی تھی اس پر بھی کام جاری ہے سب کے ٹیسٹ کروائے جائینگے ۔ بھارتی آرمی چیف نے بھارتی فوج کے آفیسرز اور سپاہیوں کو ایک ہفتے کےلئے قرنطینہ میں رکھنے کا فیصلہ کیا ہے ۔