- الإعلانات -

کب عالمی مسلم ضمیربیدار ہو گا

دس ماہ ہوچکے مقبوضہ وادی کے محصورکشمیری مسلمانوں پرزندگی کی سانسیں روکنے سے لے کر بھارتی فوجوں نے کون سا ایسا ستم کشمیری مسلمانوں پراب تک نہیں ڈھایا اب تو کشمیری مسلمانوں کے ساتھ بھارت بھر میں آباد کروڑوں مسلمان جنونی انتہا پسند آرایس ایس کے چھوڑے ہوئے مسلح بلاوائیوں کے نرغے میں منتظر ہیں کہ کب عالمی مسلم ضمیربیدار ہو گا ،کب بھارت میں برسراقتدار ہندوتوا کی جنونی سرکار کو دنیا لگام دے سکے گی،ایسے میں اچانک اومان کی شہزادی نے بھارتی اور کشمیری مسلمانوں کی آوازوں کے ساتھ جب اپنی ہمدردی کی آوازملائی تو نئی دہلی کے اوسان خطا ہوگئے، کیونکہ بات صرف اومان تک نہیں محدود نہیں رہی عرب امارات،کویت اور بحرین سے بھی مقبوضہ وادی اور بھارتی مسلمانوں کے حق میں ایسی ہی توانا آوازیں بلند ہونا شروع ہوئیں تو بھارت کی تازہ ترین تلملاہٹ اب دیکھنے کے لائق ہےبہت زیادہ سراسیمگی پھیلتی جارہی ہے ایسے میں اور تو بھارت کچھ کرنہیں پایا لیکن جھوٹ پر مبنی اْس کے پھیلائے ہوئے من گھڑت میڈیا نے فورا واویلا کرنا شروع کردیا ہے کہ’’پاکستان عیسائی اقلیتوں کے رہنے کےلئےایک جہنم ملک بن گیا ہے‘‘اس عنوان سے لکھے گئے ایک طویل مضمون میں ’’را‘‘کے پے رول پر کام کرنےوالے تجزیہ نگاروں اور تبصرہ نگاروں نے جھوٹ کا ایک اور تومار اْس مضمون میں باندھا جو کئی ویب سائیٹس پر دیکھا اور پڑھا جاسکتا ہے ۔ اس کا پہلا پیراگراف پڑھ کر ہی فورا یہ اندازہ لگانے میں دیرنہیں ہوگی کہ ایسے وقت میں بھارتی اور کشمیری مسلمانوں کی آہ وبکا کی یہ صدائیں صدابصحرا ثابت نہیں ہورہی ہیں بلکہ عرب مسلم دنیا سے اْن کا جواب آنے لگا ہے، تو ایسے میں ’’را‘‘متحرک ہوئی کہ کیوں نہ پاکستان کے خلاف اقلیتوں کا نام لے کرمغرب کی توجہ اپنی طرف مبذول کرنے کی غرض سے پروپیگنڈا مہم چلاجائی جائے، سو پاکستان کو ایک ایسے ملک کے طور پرمغربی دنیا یعنی عیسائی دنیا کے سامنے ان دہائیاں کے ساتھ پیش کیا گیا کہ پاکستان میں عیسائیوں پر عرصہ حیات تنگ کیا جانے لگا ہے اندازہ لگالیں نجانے دہلی والوں نے اپنی عقلیں کہاں بیچ کھائیں یہ بھی کوئی بات ہوئی کہ ’’آئی ایم ایف اور ورلڈ بنک‘‘ہمیشہ سے پاکستان کے قرضوں کو راءٹ آف کرانے میں اس کی مدد پرکیوں رضامند ہوجاتے ہیں ;238; جبکہ پاکستان توایک’’عیسائی مخالف‘‘ ملک ہے جہاں عیسائیوں کو مختلف مذہبی الزامات کی آڑ میں ہمیشہ سے ڈرا کے خوفزدہ رکھا جاتا ہے;238;جبکہ عالمی فنڈنگ ادارے عیسائی ادارے ہیں ;238; اْس مضمون کا اصل مدعا یہی تھا کہ پاکستان میں اقلیتیں خصوصا عیسائی روزبروز سمٹتے جارہے ہیں ;238; اور پاکستان کوعیسائی دنیا قرضوں پر قرضے دئیے چلی جارہی ہے‘‘ یہ بھارت کی ازلی وابدی وہ پریشانی ہے جوکبھی ختم ہونے والی نہیں ‘ساتھ ہی بھارت کا یہ ایک اور جھوٹ سنبھال لیں ،لیکن ہ میں ٹھہر کر سنبھل کر یہ سمجھنا ہوگا کہ بھارت پر ایسی افتاد کیا آن پڑی کہ وہ ایکدم سے اپنا پینترہ بدل کر اپنے آپ کو عیسائی دنیا کا بڑاہمدرد ثابت کرنے پرتل گیا‘ جہاں تک عالمی اداروں سے قرضوں کی بات ہے اْس پر زیادہ بات کیا کی جائے یہ عالمی اداروں کے قرضے عالمی ادارے ویسے ہی مفت میں نہیں بانٹتے پھرتے‘یہ ملکوں کا ملکوں کے ساتھ سفارتی اور معاشی مفادات کی وابستگیوں کی بنیادوں پر قرض لینے اور قرض دینے کا ایک عالمی کاروبار ہے ہاں !مگر جہاں تک پاکستان کو عیسائی دنیا کےلئے جہنم قرار دینے والے بھارت دیش کے موجودہ واویلے کا مکارانہ معاملہ ہے تو بھارت ذراخود اپنے گریبان میں ہی جھانک لے اْس کا اپنا عیسائیوں کے بارے میں کتنا گھناونا کردار رہا عیسائی دنیا اْڑیسہ کے ہندوعیسائی فرقہ وارانہ انسانیت کش واقعات کوشائد کبھی فراموش کرپائے ہندوتوا کے جنونی مسلح دہشت گردوں نے ایک ہی روز میں ریاست اْڑیسہ کے علاقوں میں سترگرجا گھروں کو نذرآتش کردیا تھا اتورا اورکرناٹک میں بھی چھوٹے بڑے ایک درجن کے قریب گرجاگھروں پر مقامی پولیس کی نگرانی میں کئی روز تک حملے جاری رکھے گئے اور کندھمال ضلع میں تو سڑکوں پرلاکر عیسائیوں کو سرعام تشدد کا نشانہ بنایا جاتا رہا جس کے فورا بعد پاپائے روم نے تشویش کا اظہار کیا اوراٹلی کی حکومت نے بھارتی حکومت سے شدید احتجاج کیا تھا ہندونظریاتی تنظیموں نے اس سے پہلے بھی عیسائیوں کواپنے تشدد کا نشانہ بنایاہے ا س سے پہلے اڑیسہ کے علاوہ دیگرریاستوں میں 2007 میں عیسائیوں اور ہندوَں کے درمیان خونریز فسادات ہوئے تھے اور1999 میں آسٹریلین مشنری گراہم سٹین اور انکے دو معصوم بیٹوں کوزندہ جلا دیا گیا تھا، کتنی وحشت زدہ حیوانی ذہنیت کا اظہار کیا گیا اڑیسہ اورکرناٹک میں عیسائیوں کے خلاف تشدد کے حالیہ واقعات کے بعد عیسائی کمیونٹی زبردست تناوَ سے دوچار رہی اپنے آپ کو بھارت بھر میں غیر محفوظ محسوس کرتی رہی آل انڈیا کیتھولک فاوَنڈیشن کے سربراہ جان دیال کا کہنا ہے کہ وشوہندوپریشد نے اْن دنوں جو کچھ بھی کیا وہ ایک سوچی سمجھی سازش تھی بجرنگ دل اور وشو ہندو پریشد اگلے جنرل الیکشن میں بھارتیہ جنتا پارٹی کو جتوانا چاہتی تھی، سو آرایس ایس نے بی جے پی کو2014کا عام چناو جتوادیا مودی دیش کے وزیراعظم بن گئے اور کیا چاہیئے تھا مسٹرجان دیال نے مزید کہا کہ’’ نہ صرف اڑیسہ، بلکہ مدھیہ پردیش، چھتیس گڑھ،جھا ر کھنڈ اورکرناٹک میں بڑی سطح پر عیسائیوں کیخلاف فسادات کے خدشات پائے جاتے رہے ’اوریہ ایک سیاسی سازش تھی‘‘آرایس ایس کی سیاسی سازشیں اپنی جگہ لیکن جب کبھی بھی بھارت پر مشکلات وارد ہوتی ہیں جیسے حال ہی میں امریکی کمیشن برائے تحفظ عالمی مذہبی سینٹر‘‘نے بھارت کی توجہ بھارت میں بڑھتی ہوئی مذہبی عدم رواداری کے پْرتشدد واقعات کا نوٹس لیتے ہوئے مقبوضہ وادی سمیت پوری بھارت میں لاگو ہونے والے متنازعہ شہریت کے ترمیمی بل پر اپنے تحفظات کا اظہار کیا بھارت بھر میں آباد قلیتوں پر روارکھنے جانے والے مرکزی اور ریاستی غیر انسانی سلوک پر سخت احتجاج کیا تو مودی سرکارآئیں بائیں شائیں کرتی رہ گئی، اس موقع پر مودی تو مزید سیخ پا ہوگئے جب اْنہیں بتایا گیا کہ’’یونائیٹڈ اسٹیس کمیشن برائے عالمی مذہبی آزادی‘ ‘ کے کمشنر سام براوَن بیک نے عالمی مذہبی آزادیوں کے سلسلے میں جاری کردہ رپورٹ میں پاکستان کے حوالے سے یہ ریمارکس دئیے ہیں کہ ’’پاکستان کے بارے میں ایک چیز جو ہمارے خیال میں بہت امیدافزا ہے وہ یہ کہ جیسا کہ ہم اپنی رپورٹ میں یہ بات واضح کردی ہے پاکستان کا مقام بھارت سے بہت بلند ہے پاکستان نے اقلیتوں کے سلسلے میں بہت زیادہ مثبت قدم اْٹھائے ہیں بہت نمایاں پیش رفت ہ میں پاکستان میں نظرآئی ہے ۔