- الإعلانات -

یوم الحاق پاکستان ،کشمیریوں کی قربانیاں رنگ لائیں گی

گزشتہ سات دہائیوں سے کشمیری عوام بھارتی تسلط سے اپنی ;200;زادی کی جدوجہدجاری رکھے ہوئے ہیں ، اس مقصدکےلئے اب تک اپنے لاکھوں پیاروں کی جانوں کے نذرانے پیش کر چکے ہیں ۔ بھارت کی ہر حکومت نے ان کی ;200;واز دبانے اور انہیں جدوجہدسے ہٹانے کےلئے ظلم و جبر کا ہر ہتھکنڈہ استعمال کیا مگر کشمیریوں نے اپنے حریت رہنماءوں کی زیر قیادت جدوجہد جاری رکھی ۔ پاکستان نے ہمیشہ کشمیریوں کی سیاسی،اخلاقی اورسفارتی حمایت جاری رکھی ۔ گزشتہ روز دنیابھر میں یوم الحاق پاکستان اس تجدیدعہد کے ساتھ منایاگیاکہ کشمیرپاکستان کاحصہ ہے اوراس کے پاکستان کے الحاق تک جدوجہدجاری رہے گی ۔ دنیا بھر میں کشمیریوں نے یوم الحاق پاکستان منایا ۔ اس موقع پر پاکستان میں حکومت اور اپوزیشن کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کیلئے ایک ہو گئے، دنیا بھر میں مظاہروں اور تقاریب کا اہتمام کیا گیا، مقبوضہ کشمیر میں سرینگر کے نواح میں بھارتی فوجیوں اور مقامی نوجوانوں کے درمیان شدید جھڑپیں ہوئیں ۔ مظفر ;200;باد میں بنک روڈ پر 19 جولائی 1947 کی قرارداد کی توثیق کیلئے کشمیری نوجوانوں اور بزرگوں نے قومی پرچموں پر لہو سے دستخط ثبت کئے ۔ ہندوستان کیخلاف اور آزادی کشمیر کے حق میں پر جوش نعرے بازی کی ۔ پاکستان اور آزاد کشمیر کے قومی ترانے بھی سنے گئے ۔ اس موقع پر بنک روڈ پر شاندار ریلی کا انعقاد بھی کیا گیا ۔ حریت رہنما میر واعظ عمر فاروق نے کہا ہے کہ الحاق پاکستان کا فیصلہ اس بات کا ثبوت ہے کہ کشمیری اپنا مستقبل پاکستان کے ساتھ دیکھتے ہیں ۔ ادھروزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ کشمیریوں کی بھارتی حکومت کے مظالم کےخلاف جدوجہد میں ساتھ دیتے رہیں گے ۔ مظلوم کشمیریوں کو ایک دن ضرور انصاف ملے گا ۔ وزیراعظم عمران خان نے یوم الحاق پاکستان کے موقع پر اپنے پیغام میں کہا کہ کشمیریوں نے پاکستان سے الحاق کی قرارداد منظور کی تھی اور اس کی یاد میں ہم یوم الحاق پاکستان منارہے ہیں ۔ ہم کشمیریوں کی حق خود ارادیت کی جدوجہد میں ساتھ دینے کے عزم کی تجدید کرتے ہیں ۔ کشمیریوں کا حق خودارادیت اقوام متحدہ کی سیکیورٹی کونسل نے تسلیم کررکھا ہے، کشمیری ہندوتوا نظریے والی بھارتی حکومت کے غیرقانونی اور ظالمانہ اقدامات کے خلاف آزادی کی جدوجہد کررہے ہیں ۔ پاکستان کشمیریوں کے ساتھ کھڑا ہے ۔ کشمیریوں کی بھارتی حکومت کے مظالم کے خلاف جدوجہد میں ساتھ دیتے رہیں گے، کشمیریوں کو ایک دن ضرور انصاف ملے گا ۔ صدر عارف علوی نے اپنے پیغام میں کہا کہ وہ دن دور نہیں جب مقبوضہ کشمیر کا پاکستان کے ساتھ الحاق ہوگا ۔ بھارت نے کشمیر پر غاصبانہ قبضہ کر رکھا ہے اور کشمیریوں پر مظالم ڈھا رہا ہے ۔ پاکستان مسلم لیگ(ن)کے صدر اور قائد حزب اختلاف شہبازشریف کا یوم الحاق پاکستان پر کشمیریوں کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ کشمیر کی آزادی اور بھارت کی شکست نوشتہ دیوار ہے ۔ کشمیریوں اور پاکستان کی منزل ایک ہے ۔ اسی لئے قائداعظم نے کشمیر کو پاکستان کی شہہ رگ قرار دیا ۔ کشمیریوں نے قیام پاکستان سے پہلے الحاق پاکستان کا فیصلہ کیا ۔ 19 جولائی 1947 کو سری نگر میں مسلم کانفرنس کے نمائندہ اجلاس میں الحاق پاکستان کی قرارداد متفقہ منظور کی گئی ۔ کشمیری قوم کے حوصلے، عزم واستقلال اور جراَت وبہادری تاریخ کا بے مثل باب بن چکی ہے ۔ پاکستان کشمیریوں کی آزادی تک ان کی جدوجہد میں ان کے شانہ بشانہ رہے گا ۔ چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے اپنے پیغام میں کہا ہے کہ یوم الحاق پاکستان منانا ظاہر کرتا ہے کہ بھارتی تسلط جلد ختم ہونے والا ہے ۔ کشمیریوں کی جدوجہد دبانے کیلئے بھارت وحشیانہ مظالم کر رہا ہے ۔ بھارتی بربریت کشمیریوں کا عزم مزید مضبوط بنائے گی ۔ بربادی اور ذلت بھارت کا مقدر ہے ۔ مسئلہ کشمیر کا حل یو این قراردادوں کے مطابق کرایا جانا چاہئے ۔ وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات سینیٹر شبلی فراز نے کہا کہ کشمیریوں کا پاکستان کے ساتھ الحاق ثبوت ہے کہ ان کے دل میں پاکستان بستا ہے ۔ یہ فیصلہ طاقت اور جبر کے ذریعے زیر کرنے والوں کے منہ پر تاریخ کا زور دار طمانچہ ہے ۔ وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا کہ کئی دہائیوں تک بھارتی تسلط کے باوجود کشمیری عوام کا عزم اور پاکستان کے ساتھ قریبی رشتے پہلے کی طرح مضبوط اور مستحکم ہیں ۔ کشمیری عوام نے اپنی آزادی کےلئے لازوال قربانیاں دی ہیں ، عالمی برادری بھارت کی جانب سے کشمیریوں پر ڈھائے جانے والے مظالم کا نوٹس لے ۔ مسئلہ کشمیر کا حل خطے کے امن اور استحکام کےلے ناگزیر ہے ۔ عالمی برادری مقبوضہ کشمیر میں بھارت کی طرف سے ڈھائے جانے والے مظالم کا نوٹس لے ۔ کشمیریوں نے اپنی شناخت پاکستان سے جوڑی ہوئی ہے ۔ اپنی جان و مال دھرتی ماں پر قربان کرنے کیلئے تیار ہیں ۔ کشمیر میں بھارتی بربریت پر انسانیت شرمندہ ہے ۔ بھارت کشمیریوں پر انسانیت سوز مظالم ڈھا رہا ہے ۔ عالمی ادارے بھارتی ریاستی دہشت گردی پر تماشائی بنے ہوئے ہیں ۔ اقوام عالم کشمیریوں کیلئے آواز بلند کرے ۔ دنیا کے ہر فورم پر مسئلہ کشمیر اٹھایاگیا ۔ مسئلہ کشمیر پر تمام سیاسی جماعتیں متفق ہیں ۔ فاشسٹ مودی کا چہرہ پوری دینا میں بے نقاب کیاگیا ۔ پاکستان کشمیر کے معاملے پر کبھی پیچھے نہیں ہٹے گانہ ہی کشمیر کے معاملے پر سودے بازی ہوگی ۔

نیب کرپشن کے خاتمے کے لئے پُرعزم

چیئرمین قومی احتساب بیورو جسٹس جاوید اقبال نے کہا ہے کہ بدعنوانی تمام برائیوں کی جڑ ہے، نیب واءٹ کالر کرائمز اور میگاکرپشن کیسز کو منطقی انجام تک پہنچانے کےلئے پر عزم ہے ۔ نیب اعلامیے کے مطابق انہوں نے کہا کہ نیب کا ایمان کرپشن فری پاکستان ہے جو کہ اس کی انسداد بدعنوانی کی قومی حکمت عملی، ;200;گاہی تدارک اور انفورسمنٹ پر مبنی ہے ۔ نیب اقوام متحدہ کی بدعنوانی کے خلاف کنونشن (یو این سی اے سی)کے تحت فوکل پرسن ہے جبکہ پاکستان نے یو این سی اے سی پر دستخط کر رکھے ہیں ۔ عالمی اقتصادی فورم، ٹرانسپیرنسی انٹرنیشنل پاکستان، پلڈاٹ اور مشال پاکستان نے بدعنوانی کے خاتمے کےلئے نیب کی کوششوں کی تعریف کی ہے ۔ نیب کی کارکرگی کو مزید بہتر بنانے کےلئے ;200;پریشن، پراسیکیوشن، ہیومن ریسورس ڈویلپمنٹ، ٹریننگ ریسرچ، ;200;گاہی و تدارک کے شعبوں کو فعال بنایا گیا ہے ۔ نیب نے بدعنوانی، منی لانڈرنگ، اختیارات کے ناجائز استعمال، لوگوں سے بڑے پیمانے پر دھوکہ دہی سے لوٹ مار، بینک فراڈ، جان بوجھ کر بینک نادہندگی اور سرکاری فنڈز میں خرد برد پر توجہ مرکوز کر رکھی ہے ۔ نیب کو 2019 میں 53 ہزار 643 شکایات موصول ہوئیں جن میں سے 42 ہزار 760 کو نمٹا دیا گیا ہے جبکہ 2018 میں نیب کو 48 ہزار 591 شکایات موصول ہوئیں جن میں سے 41 ہزار 414 کو نمٹایا گیا ۔ شکایات میں اضافہ سے نیب پر عوام کے اعتماد کا اظہارہوتا ہے ۔ نیب نے 2019کے دوران 1308 شکایات کی جانچ پڑتال کی، 1686 انکوائریوں اور 609 انویسٹی گیشن کو نمٹایا جبکہ 2019 میں بدعنوان عناصر سے 141;46;542 ارب روپے بر;200;مد کرکے قومی خزانے میں جمع کرائے گئے ۔ نیب کے مقدمات میں مجموعی سزا کی شرح 68;46;8 فیصد ہے جو کہ دنیا میں واءٹ کالر کرائمز کے مقدمات میں شاندار کامیابی ہے ۔ نیب نے اپنے قیام سے لے کر اب تک 466;46;069 ارب روپے قومی خزانے میں جمع کرائے ہیں ۔ نیب نے سینئر سپر وائزری افسران کی اجتماعی دانش سے فائدہ اٹھانے کےلئے مشترکہ تحقیقاتی ٹیم کا نظام وضع کیا ہے ۔ یہ ٹیم ڈائریکٹر، ایڈیشنل ڈائریکٹر ، انویسٹی گیشن ;200;فیسر، لیگل کونسل، مالیاتی اور لینڈ ریونیو کے ماہرین پر مشتمل ہے ۔ اس کے علاوہ نیب راولپنڈی میں فرانزک سائنس لیبارٹری قائم کی گئی جس میں ڈیجیٹل فرانزک، سوالیہ دستاویزات اور فنگر پرنٹ کے تجزیئے کی سہولت ہے ۔ 2019 میں 50 مقدمات میں اس لیبارٹری میں 15 ہزار 747 سوالیہ دستاویزات، 300 انگوٹھوں کے نشانات سمیت 74 ڈیجیٹل ڈیوائسز (لیب ٹاپس، موبائل فونز، ہارڈ ڈسک وغیرہ کا تجزیہ کیا گیا ہے ۔ نیب سارک اینٹی کرپشن فورم کا چیئرمین ہے ۔ نیب سارک ممالک کےلئے رول ماڈل کی حیثیت رکھتا ہے ۔ نیب ملک میں انسداد بدعنوانی کا ادارہ ہے جس نے چین کے ساتھ سی پیک کے منصوبوں کے تناظر میں مفاہمت کی یادداشت پر دستخط کیے ہیں ۔ اس سے دونوں ممالک کے درمیان معاشی و تجارتی تعاون میں اضافہ کے پیش نظر بدعنوانی سے پاک ماحول فراہم کرنے میں مدد ملے گی اور بدعنوانی کے خاتمے کےلئے ایک دوسرے کے تجربات سے مستفید ہونے کا موقع ملے گا ۔