- الإعلانات -

گھوڑے ہر وقت تیار رکھیں

پاک فوج نے کنٹرول لائن کے چکوٹھی سیکٹر میں بھارتی فوج کے ایک جاسوس ڈرون (کواڈ کاپٹر)مار گرایا ہے ۔ آئی ایس پی آر کے مطابق یہ کواڈ کاپٹر کنٹرول لائن پر پاکستان کے حدود کے پانچ سو میٹر تک اندر گھس آیا تھا ۔ پاک فوج کے ہاتھوں نشانہ بننے والا یہ گیارہواں بھارتی کوارڈ کاپٹر ہے ۔ روزنامہ پاکستان کی خبر کے مطابق چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے زور دیا ہے کہ ابھرتے ہوئے سٹریٹجک اور علاقائی ماحول کے پیش نظر جنگی تیاریوں کی سطح میں اضافہ کیا جائے ۔ انہوں نے اس بات کا اعادہ کیا کہ پاکستان مخالف عناصر کی طرف سے ہمارے اہم مفادات کیخلاف ففتھ جنریشن وار فئیر اور ہائی برڈ تراکیب بروئے کار لائی جا رہی ہیں ۔ حکومت کی پالیسیوں کے ساتھ ہم آہنگی کے ذریعہ ان مفادات کا تحفظ کیا جانا چاہئے ۔ کور کمانڈرز کانفرنس نے نوٹ کیا کہ کنٹرول لائن پر بھارت کی طرف سے جنگ معاہدہ کی مسلسل خلاف ورزیاں ، بھارتی فوج کی جانب سے سویلین آبادی کو جان بوجھ کر نشانہ بنانا اور جموں و کشمیر، جس پر بھارت نے ناجائز قبضہ کر رکھا ہے وہاں انسانی حقوق کی کھلی خلاف ورزیاں ، خطہ کے امن و استحکام کیلئے تشویش کی بڑی وجہ ہیں ۔ فورم نے مقبوضہ جموں و کشمیر کے اندر کی صورتحال، افغانستان کے حالات اور پاکستان کی سلامتی پر اس کے مرتب ہونے والے ممکنہ اثرات پر پر مفصل غور کیا ۔ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے اپنے خطاب میں اس ضرورت پر زور دیا کہ ابھرتے ہوئے سٹریٹجک اور علاقائی ماحول کے پیش نظر حربی تیاریوں کی سطح میں اضافہ کیا جائے ۔ آرمی چیف نے فوجی فارمیشنوں کی آپریشنل تیاریوں ، محرم کے دوران داخلی سلامتی اور سیلاب کے موقع پر سول انتظامیہ کی معاونت کیلئے پائیدار کوششوں کی تعریف کی ۔ انہوں نے آرمی کے اعلیٰ مورال کی تعریف کرتے ہوئے کمانڈروں کو ہدایت کی کہ وہ آپریشنل یا داخلی سلامتی کی طویل دورانیہ کی تعیناتیوں کے دوران فوجیوں کے بہبود کو یقینی بنائیں ۔ روزنامہ پاکستان کی رپورٹ کے مطابق پاکستان مخالف ففتھ جنریشن وار فیئر اور ہائی بریڈ ہتھکنڈوں سے حکومتی پالیسی کے مطابق نمٹنا ہوگا ۔ ایم ایم عالم کے کارنامہ قوم کو اب تک یاد ہیں کہ اس عظیم ہوا باز نے پہلے تیس سیکنڈ میں سرگودھا کی فضاءوں میں تین بھارتی جہاز مارگرائے اور اگلے تیس سیکنڈ میں باقی ماندہ دو بھارتی جہازوں کا تعاقب کر کے انہیں بھی راکھ کے ڈھیر میں تبدیل کر دیا ۔ ایم ایم عالم کا یہ کارنامہ گنیز بک آف ریکارڈ کا حصہ بنا کیونکہ فضائی جنگوں کی تاریخ میں اس ریکارڈ کو مات نہیں کیا جا سکا اورنہ ایسا ریکارڈ کوئی اور ہوا باز بنا سکاہے ایم ایم عالم کا نام سن کر ہمارے بچوں کی آنکھوں میں ایک الوہی سی چمک پید اہو جاتی ہے اور دشمن پر ہیبت طاری ہو جاتی ہے دور کیوں جائیں پچھلے سال ستائیس فروری کی صبح توآپ کو بخوبی یاد ہو گی جب ہمارے بے خوف ہوا باز بھارتی سرجیکل اسٹرائیک کابدلہ لینے کےلئے کنٹرول لائن کے پار گئے اور انہوں نے دشمن کے پانچ نشانوں کو لاک کیا ۔ لاک کرنے سے دشمن کو پتہ چل جاتا ہے کہ تباہی اس پر نازل ہو چکی مگر ہمارے ہوا بازوں نے احتیاط برتی اور جنگ کا دائرہ محدود رکھنے کےلئے اردگرد راکٹ اور میزائل گر ادئے ۔ شومی قسمت سے دو بھارتی طیاروں نے ہمارے ہوا بازوں کا تعاقب کیا ۔ جنہیں چشم زدن میں ہمارے دو ہوا بازوں نے مار گرایا، ایک بھارتی جہاز کا ملبہ کنٹرول لائن کے پار گرا اوراس کا پائلٹ بھی ساتھ ہی بھسم ہوگیا، کشمیریوں نے اس الاءو کے گرد کھڑے ہو کر خوشی سے ر قص کیا اور پاکستان زندہ باد کے نعرے لگائے ۔ بھارت کا دوسرا طیارہ ہمارے علاقے میں گرا ا ور اس کا ہو اباز ابھی نندن زندہ پکڑا گیا، اسے مرہم پٹی کر کے چائے پلائی گئی اور پھر واہگہ کے راستے واپس بھجوا دیا گیا سن چھیاسی کے وہ لمحات بھی ہمارے ذہنوں سے محو نہیں ہوئے ہیں جب جموں کشمیر ایئرپورٹ پر اسرائیلی طیارے جمع ہو گئے تھے کہ کہوٹہ کو اسی طرح ختم کر دیں جیسے انہوں نے عراق کے ایٹمی پلانٹ کی اینٹ سے اینٹ بجا دی تھی مگر پاک فضائیہ مقابلے کےلئے چوکس تھی، اس کے جنگی جہازوں نے کئی روز تک کہوٹہ کی فضاءوں میں پہرہ دیا اور یوں اسرائیلی طیارے بے نیل ومرام واپس جانے پر مجبورپر گئے ۔ ممبئی سانحے کے بعد بھارت بپھرا ہوا تھا ۔ اس نے ارادہ کیا کہ وہ پاکستان کے اندر سرجیکل اسٹرائیک کر کے لاہور میں چوبرجی مرکز قادسیہ اورمرید کے سنٹر راکھ بنا دے ۔ بڑی طاقتوں نے بھی پاکستان پر دباءو ڈالا کہ بھارتی فضائیہ کو اپنے عوام کے اطمینان قلب کےلئے کسی ریگستان میں دو چار بم گرا لینے دیں مگر پاکستان نے اپنے شہبازوں کو فضاءوں میں بلند کر ادیا اہل لاہور بھی جانتے ہیں کہ چار دن تک ہمہ وقت ہمارے جیٹ طیارے فضاءوں میں گرجتے رہے اور بھارتی طیاروں کا ا نتظار ہی کرتے رہ گئے ۔ بزدل دشمن کو وار کر نے کی ہمت نہ ہو ئی ۔ پاک فضائیہ نے ہر دور میں بھارت کے دانت کھٹے کئے ۔ اب بھارت کو زعم ہے کہ اس کے پاس پانچ رافیل آ گئے ہیں ، افواج پاکستان کے ترجمان نے جواب میں کہا ہے کہ پانچ سو رافیل بھی لے آءو ۔ تمہیں میدان سے دم دبا کے بھاگنا پڑے گا دنیا کی کوئی لڑائی اسلحے کے زور پر نہیں ہوتی ۔ دیکھا یہ جاتا ہے کہ اسلحے کے پیچھے بیٹھا کون ہے، پینسٹھ میں بھارتی فضائیہ کو عددی برتری تھی مگر اسے منہ کی کھانا پڑی اور پاک فضایۃ نے اسے گھس کے مارا ۔ کارگل کی مختصر سی جنگ میں بھی بھارت نے اپنے جہاز ہمارے ماہر ہوابازوں کے ہاتھوں گنوائے ۔ اتنا کچھ ہوجانے کے باوجود بھارت ہوش کے ناخن نہیں لے رہا ہے اور ہائبرڈ وار فئیر کا سہارا لیتے ہوئے سوشل میڈیا کے ذریعے ملک میں فرقہ واریت اور لسانی تفرقات کو بھی ہوا دینا چاہتا ہے اس کے ریٹائرڈ فوجی افسران کے متعدد انٹرویوز سے یہ امر مزید واضح ہو چلا ہے غالبا اسی جانب اشارہ کرتے ہوئے آرمی چیف نے ہائبرڈ وار فئیر سے نمٹنے کا عندیہ دیا ہے اس وقت ایک طرف بھارت ایل او سی پر شہریوں کو نشانہ بنا رہا ہے تو دوسری طرف اس کے جاسوس طیاروں کی جانب سے سرحدی خلاف ورزی بھی معمول بن چکی ہے کرونا وائرس سے بوکھلایا ہوا بھارت سرحدوں پر بھی ہواس باختگی کا شکار ہے اس بات کا اندازہ اس امر سے لگایا جا سکتا ہے کہ رواں سال بھارت اب تک 21 سو بانوے بار سے زیادہ سیز فائر معاہدے کی خلاف ورزی کرچکاجبکہ سرحدوں پر بلا اشتعال گولہ باری میں بھاری ہتھیاروں کا استعمال بھی کیا گیا اب تک سینکڑوں معصوم شہری بھارت کی بربریت کا شکار ہو چکے ہیں اس سارے منظر نامے میں آرمی چیف کا یہ بیان قابل غور ہے کہ خطے کی موجودہ صورتحال کے تناظر میں جنگی تیاریاں بڑھانا ہوں گی ۔