- الإعلانات -

ووٹ کو عزت دےنے کا کھےل اور کھلاڑی

غذائی قلت بھی ہو سکتی ہے‘ قرضوں کی ادائےگی مےں مشکلات کا سامنا ہو گا‘ عالمی بےنک نے پاکستان کو خبردار کےا ہے کہ رواں مالی سال پاکستان کی ترقی کی شرح 0;46;5 فےصد سے بھی کم رہنے کی توقع ہے جو پچھلے تےن سالوں مےں چار فےصد تھی‘ عالمی بےنک بےان کرتا ہے کہ آئندہ دو سال کے دوران پاکستان مےں غربت بڑھنے کا امکان ہے ۔ آٹا‘ چےنی‘ بجلی‘ گےس دےگر اشےائے ضرورےہ کی قےمتےں آسمانوں کو چھو رہی ہےں ‘ مہنگائی‘ غربت‘ بھوک بے روزگاری پہلے کےا کم ہے جو مزےد بڑھے گی اور ےہاں ہر شاخ پہ بےٹھے ’’محبِ وطن‘‘ بزداروں کو کےا خبر کہ غرےب عوام کے حالات کےا ہےں اس نئے پاکستان مےں ۔ آڑھتی کہتے ہےں کہ حکومت نے ہمےں گندم خرےدنے نہ دی اور خود درآمد مےں بہت تاخےر کی‘ آلو ٹماٹر کی درآمد بند ہے اور پےاز کی برآمد جاری ہے ۔ ماہرےن کہتے ہےں کہ گندم‘ دالےں ‘ پےاز‘ لہسن اور ادرک سمےت دےگر کئی چےزوں کی درآمد ڈالر سے منسلک ہے انھےں انتظامی طاقت سے کم کرنا ممکن ہی نہےں ۔ رسد و طلب کے اعداد و شمار نظر انداز کرنا‘ فےصلوں مےں تاخےر‘ بدنظمی اور درآمدی غذائی اشےاء مہنگائی کی بنےادی وجوہات ہےں ۔ تبدےلی سرکار کی خدمت مےں عرض ہے کہ اگر کچھ بدلا نہےں ہے تو پھر تبدےلی کےسی ۔ ;238;آڈےٹر جنرل آف پاکستان کی آڈٹ رپورٹ مےں ;758075; کے بلےن ٹری منصوبے مےں 41 کروڑ روپے کی بے قاعدگےوں کا انکشاف ہوا کےا ےہی نےا پاکستان ہے ۔ ;238; جسٹس (ر) وجےہہ الدےن نے کہا ہے کہ ’’پی ٹی آئی حکومت نے ملک کے ساتھ جو کےا وہ دشمن بھی نہےں کر سکتا‘ ان کی کارکردگی صفر ہے عوام کو مہنگائی اور بے روزگاری کے سوا کچھ نہےں ملا‘ معےشت کا بےڑا غرق ہے‘ شوگر مافےا کے سرغنہ جہانگےر ترےن لندن کی ہواءوں کے مزے لے رہے ہےں ‘ حکومت لےنڈ مافےا کے ہاتھوں مےں کھےل رہی ہے‘‘ ۔ اب اگر ہم بات کرےں اپنی اپوزےشن کی تو اپوزےشن کاکام ہوتا ہے مشکلات کی نشاندہی کرنا‘ غرےب عوام کے حق مےں بر حق شہادت دےنا اس نئے پاکستان مےں تبدےلی سرکار کے آگے بالا و اعلیٰ اےوانوں مےں عوامی مسائل کو سامنے لانا لےکن صد افسوس کہ ادھر بھی سارے بنارسی ٹھگ اکٹھے ہو گئے ‘ووٹ کو عزت دو کے زےرِعنوان کرپشن بچاءو مہم کہہ لےں ےہ پھر افلاطون ِ وقت فواد چوہدری کے الفاظ مےں ابو بچاءو مہم ۔ ےہ سلےکٹڈ سلےکٹڈ کی سُر کےا‘ تال کےسی اور تان کےا ہے ہم سب جانتے ہےں ‘ عوام خاص و عام تمام جانتے ہےں اس کھےل کو بھی اور کھلاڑےوں کو بھی ‘ ےہ نواز کی آنےاں جانےاں ‘ ےہ پلےٹ لےٹس اُوپر نےچے کے بہانے ےہ بےماری کے ڈرامے اور تماشے ےہ شوباز کی شوبازےاں اور شعبدہ بازےاں عوام سب جانتے ہےں کہ اگر کپتان سلےکٹڈ ہے تو پھر نواز شرےف سے بڑا سلےکٹڈ کوئی نہےں کےونکہ موصوف 3 بار سلےکٹڈ ہےں وزارتِ اعلیٰ کا بھی دور ڈالےں تو چار بار‘ اگر ان کی بات سچ مان لی جائے تو شہباز شرےف مدتوں وزےر اعلیٰ پنجاب رہے وہ الےکٹڈ تھے کےا ۔ ;238;ےہ کےا بات ہوئی کہ 2013 ;247;ء کے الےکشن شفاف تھے اور 2018 ;247;ء مےں دھاندلی ہو گئی کےونکہ ہم ہار گئے ۔ ہار کو تسلےم کرنا اور حقائق کو مان لےنا ہی اےک اچھے سےاستدان کا شےوہ اور دستور ہوتا ہے ۔ اےک نظرےاتی اور تخلےدو تدبر والا سےاستدان اپنی خامےاں دور کرتا ہے اور آگے کی سوچتا ہے وہ کبھی بھی لکےر نہےں پےٹتا ۔ ےہ تو وہ ہےں جو بنے پھرتے ہےں شےر اور اپنی خالہ بلی سے بھی ڈرتے ہےں ۔ درست فرماےا بابر اعوان نے کہ ےہ اےسے شےر ہےں جو انگلےنڈ سے واپس اپنے گھر آتے ہوئے بھی گھبراتے ہےں ۔ تےن بار وزےرِ اعظم اور وزےر اعلیٰ رہنے والے پر دھان سےاست دانوں کو اےسے بےانیے بناتے اور بولتے ہوئے شرم آنی چاہیے جو خود بھی اسی نظام کے تحت ہی اعلیٰ عہدوں سے چمٹے رہے ہےں ۔ اپوزےشن کاکام ہے ملکی اداروں نہےں بلکہ حکومت پہ تنقےد کرے اور وہ بھی مثبت و تعمےری تنقےد جس سے چہار سو خوشبو پھےلتی ہے اور خوبصورت پھول پھوٹتے ہےں ۔ پچھلے دنوں مےں نے اےک تقرےب مےں کہا تھا کہ افواج پاکستان پوری قوم کی جان اورپاک وطن کی آن بان شان ہےں ‘ سارے عالم مےں ڈنکے بجتے ہےں ‘ پوری دنےا پاک فوج کی خدمات‘ صلاحےتوں ا ور جرا ت و بہادری کی معترف ہے ۔ صاحبان سےاست عسکرےت نہےں بلکہ ملکی و عالمی حالات‘ سےاست و اخلاقےات اور معےشت و معاشرت پہ ہی بات کرےں تو جچتے اور سجتے ہےں ‘ فوج اس قوم کا فخر اوروقار ہے اور ملکی سلامتی و بقا کی ضامن اےک منظم و متحرک و متحد ادارہ ہے ۔ خدارا اہل سےاست اپنے ذاتی معاملات و مفادات و اختلافات کی خاطر پاک بہادر فوج کو سےاست مےں نہ لائےں اور سےاستدان اپنے ’’پوتڑے‘‘ اپنے گندے بدبودار اور داغدار کپڑے فوجی صابن سے نہ دھوئےں ۔ اس سے آگے مےں کچھ نہ بول سکا کےونکہ پاک فوج زندہ باد اور پاکستان پائندہ باد کے نعروں نے مجھے روک لےا‘ چپ کروا دےا اور مےری چپ لگ گئی ۔