- الإعلانات -

کورونا پھیلاءو کے خدشات،احتیاطی تدابیرپر عمل لازمی

جیسے جیسے موسم سرما کی آمد میں اضافہ ہورہاہے اس کے ساتھ ہی کوروناوائرس کے خدشات بھی بڑھتے جارہے ہیں اس حوالے سے ڈبلیوایچ او اورحکومت پاکستان نے بھی الرٹ جاری کردیاہے ۔ لیکن اس پراحتیاطی تدابیرپرعمل کرتے ہوئے قابوپایاجاسکتاہے وزیراعظم بھی باربار قوم کو متنبہ کررہے ہیں عیدمیلادالنبیﷺ کے موقع پربھی خصوصی احتیاط اختیارکرنے کے لئے کہاگیا ہے چونکہ اس مرتبہ حکومت پوراہفتہ عیدامیلادالنبیﷺ منائے گی لہًذا عوام کو چاہیے کہ وہ احتیاط کادامن ہاتھ سے نہ چھوڑے کیونکہ اس وباء کے دوبارہ حملہ آورہونے کے واضح خدشات موجودہیں ۔ پاکستان میں کرونا وائرس کے کیسز اور اموات میں ایک مرتبہ پھر اضافہ ہورہا ہے اور فعال کیسز کی تعداد بڑھ گئی ہے ۔ این سی او سی اجلاس کے دوران ملک بھر میں ماسک لازمی قرار دیدیا گیا ، شاپنگ مالز، مارکیٹیں ، ریسٹورنٹس رات 10 ،جبکہ پارکس اور تفریحی مقامات شام 6 بجے بند کرنے کا فیصلہ ہو گیا، مجموعی طور پر اب تک ملک میں 3 لاکھ 30 ہزار 516 افرادمتاثر ہوئے ، جس میں سے 3 لاکھ 11 ہزار 814 صحت یاب جبکہ 6 ہزار 766 انتقال کر چکے ہیں جبکہ وزیراعظم عمرا ن خان نے خدشہ ظاہر کیاہے کہ کوروناکی دوسری لہر ;200; سکتی ہے اور کیسز بڑھنے سے اس کے ;200;ثار بھی نظر ;200;رہے ہیں ۔ مجھے زیادہ خوف ان شہروں کے حوالے سے ہے جہاں پر ;200;لودگی ہے جہاں سموگ زیادہ ہے اگر ہم نے دو مہینے صحیح طریقے سے گزار لئے تو اس کا خدشہ نہیں رہے گا ۔ لاہور میں اب سے نومبر کے ;200;خر تک سموگ ;200;تی ہے ۔ اس میں وائرس ز زیادہ ہوتے ہیں اس لئے ہ میں بڑی احتیاط کرنا پڑے گی ۔ اسی طرح کراچی، گوجرانوالہ، فیصل ;200;باد اور پشاور میں بھی زیادہ خطرات ہیں ۔ میں قوم سے اپیل کرنا چاہتا ہوں کہ اگلے دو مہینے احتیاط سے گزاریں ۔ کیونکہ اس سے ہیلتھ ورکرز پر دباءو پڑتا ہے ۔ این سی او سی نے ہدایات جاری کرتے ہوئے کہا کہ شہری گھروں سے باہر جاتے وقت ماسک کا استعمال لازمی کریں اور سرکاری و نجی دفاتر میں بھی ماسک لازمی طور پر استعمال کیا جائے ۔ بازاروں اور شاپنگ مال وغیرہ میں بھی ماسک کا استعمال لازم ہے ۔ این سی او سی کے مطابق اب تک 11 شہروں میں 4 ہزار 374 لاک ڈاءون نافذ کیے گئے ہیں ۔ نیشنل کمانڈ اینڈ ;200;پریشن سنٹر این سی او سی نے ملک میں کرونا وبا کی دوسری لہر کے پیش نظر تمام شادی ہالز، ریسٹورنٹس شاپنگ مالز، دکانیں اور مارکیٹس رات 10 بجے بند کرنے کی ہدایت جاری کر دی، اعلامیے کے مطابق ملک بھر میں تفریح گاہ اور پبلک پارکس بھی شام 6 بجے بند کر دیئے جائیں گے ۔ ریلوے اسٹیشن بس اسٹینڈ مارکیٹس سمیت ان ڈور سرگرمیوں کے دوران ماسک پہننا لازمی ہو گا ۔ اعلامیے میں کہا گیا کہ مذکورہ ایس او پیز پر اطلاق کا دورانیہ 2 ماہ ہو گا ۔ البتہ ضروری سروسز، ہسپتال میڈیکل سٹورز کلینکس کھلے رہیں گے ۔ کرونا وائرس کی نئی لہر ;200;نے کے بعد پنجاب سکواش کے دو کھلاڑیوں میں کرونا وائرس کی تصدیق کے بعد پنجاب سکواش ایسوسی ایشن نے پنجاب سکواش کمپلیکس کو دو ہفتوں کیلئے بند کر دیا ہے ۔ ایک کھلاڑی کا کہنا تھا کہ وہ دو کھلاڑی کونسے ہیں اس بارے معلوم نہیں تاہم ہ میں بتایا گیا ہے فیصل ;200;باد میڈیکل یونیورسٹی کے 5 طالب علم کرونا سے متاثر ایف ایم یو کی فورتھ ائیر کی کلاس کے سوا دیگر کلاسز کو بند کر دیا گیا جبکہ الائیڈ ہسپتال میں مزیدکرونا کے 10 مشتبہ مریضوں کو ;200;ئسولیشن وارڈ میں داخل کر لیا گیا ۔ رائےونڈ کے تجارتی مراکز میں کرونا وائرس کے بڑھتے ہوئے خدشات اور تاجروں کی جانب سے ایس او پیز کی دھجیاں اڑانے پر اسسٹنٹ کمشنر رائے ونڈ عدنان رشید نے 20 مختلف دکانوں کو سیل کر دیا ۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے اے سی رائے ونڈ کا کہنا تھا کہ وارننگ دی گئی تھی لیکن تاجروں نے انتہائی ڈھٹائی کا مظاہرہ کرتے ایس او پیز کی خلاف ورزی مسلسل جاری رکھی ہوئی تھی ۔ این سی او سی نے کرونا کی زیادہ شرح والے شہروں کراچی، لاہور، اسلام آباد، راولپنڈی، ملتان، حیدرآباد، گلگت، مظفر آباد، میر پور، پشاور اور کوءٹہ میں 29 اکتوبر سے ایس اوپیز کے حوالے سے اقدامات پر سختی سے عملدرآمد کا فیصلہ کیا ہے ۔ کرونا کے حوالے سے ہاٹ سپاٹ ایریاز میں وسیع پیمانے پر سمارٹ لاک ڈاءون کیا جائے گا ۔

آج جشن عیدمیلادالنبیﷺ

سرکاردوعالمﷺ کی آج آمدکادن ہے دراصل امت مسلمہ کی اصل عیداورخوشی کا دن یہی ہوتا ہے جس روز دوجہانوں کے سرکارﷺ اوررحمت الا العالمین کی اس دنیا میں تشریف آوری ہوئی ملک بھر میں اس موقع پرقرآن خوانی اورنعتیہ محافل کا انعقاد کیاجائے گا آج کادن ہ میں اس بات کی یاددلاتاہے کہ امت مسلمہ اللہ اوراس کے رسول ﷺ اورقرآن پاک میں دیئے گئے احکامات کے مطابق زندگی گزاریں آج امت مسلمہ محض اسی وجہ سے راندہ درگاہے کہ وہ اللہ اور اس کے رسولﷺ کے احکامات پرعمل نہیں کررہے نیزقرآن کریم جوایک مکمل ضابطہ حیات ہے اسے بھی سمجھ کرتلاوت نہیں کی جاتی پوری دنیامادیت پرستی کاشکارہوچکی ہے اگرہم اپنی آخرت میں بقاء اوراللہ کریم کی رحمت چاہتے ہیں تو ہ میں اپنی زندگی میں رسول کریمﷺ کے اسوہ حسنہ کو اپناناہوگا ۔ آج جمعہ کونبی ;200;خرالزماں حضرت محمدﷺ کا جشن ولادت مذہبی عقیدت و احترام کے ساتھ منایا جائے گا ۔ اس دن کی مناسبت سے ملک بھر میں درود و سلام اور نعت خوانی کی محافل منعقد کی جائیں گی ۔ سیمینارز اور کانفرنسز منعقد ہوں گی جن میں نبی کریم حضرت محمدﷺ کی سیرت اور اسلام کی سر بلندی کیلئے کی جانےوالی عظیم کوششوں کو موضوع بنایا جائے گا ۔ جشن عید میلاد النبی کے سلسلہ میں ملک بھر کے گلی، محلوں اور بازاروں کو خوبصورت روشنیوں ، برقی قمقموں اور سبز جھنڈیوں سے سجا دیا گیا ہے جبکہ سرکاری و نجی عمارتوں پر بھی چراغاں کیا گیا ہے ۔ امسال ملک بھر میں بھی جشن عید میلادالنبی اس عہد کی تجدید کے ساتھ منائی جارہی ہے کہ تحفظ ناموس رسالت و ختم نبوت کیلئے کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کیا جائیگا ۔ حکومت نے ملک بھر میں 12 ربیع الاول سے 17 ربیع الاول تک ہفتہ عشق رسول منانے کا فیصلہ کیا ہے ۔ جشن میلاد النبیﷺ کے حوالے سے شہر کے مختلف علاقوں میں سٹالز لگائے گئے ہیں جہاں شہری بڑی تعداد میں جشن ولادت کے حوالے سے جھنڈے، بیجز، لاءٹیں ، اور دیگر آرائشی اشیا کی خریداری کررہے ہیں ۔

آرمی چیف کا اپر دیر مالاکنڈ کا دورہ

آئی ایس پی آر کے مطابق جنرل قمرجاوید باجوہ نے اپر دیر مالاکنڈ ڈویژن کا دورہ کیا ۔ آرمی چیف کو آپریشنز کے تسلسل و استحکام اور بارڈر مینجمنٹ پر بریفنگ دی گئی ۔ آرمی چیف نے سنگلاخ اور دشوار گزار علاقے میں بارڈر فینسنگ پر ٹروپس کی کارکردگی کو سراہا ۔ سرحدوں کی حفاظت اور بارڈر مینجمنٹ سسٹم پاکستان کے امن کے عزم کی حقیقی عکاس ہیں ۔ آرمی چیف نے جوانوں کو علاقے میں امن کے قیام کیلئے کی گئی کوششوں پر زبردست خراجِ تحسین پیش کیا ۔ چیف آف آرمی سٹاف نے شر پسند عناصر کی جانب سے حالیہ دہشت گردی کے واقعات کے تناظر میں جوانوں کو چوکنا رہنے کی ہدایت کی ۔ چیف آف آرمی سٹاف نے لیڈی ریڈنگ ہسپتال پشاور میں مدرسہ دھماکے میں زخمی ہونے والے بچوں اور دیگر افراد کی عیادت بھی کی اور ان کی صحت کے بارے میں دریافت کیا ۔ اس موقع پر چیف آف آرمی سٹاف نے کہا کہ 16 دسمبر 2014 کو اے پی ایس پشاور میں معصوم بچوں کو ٹارگٹ کیا گیا ۔ ان بچوں میں افغان مہاجرین کے بچوں کی بڑی تعداد بھی شامل تھی ۔ کل بھی پور ی قوم نے دہشتگردوں کے بیانیے کو مسترد کرتے ہوئے بے مثال یکجہتی کا مظاہرہ کیا تھا اور آج بھی ہم اس جذبے کے تحت ایک ہیں ۔ ہمارا دکھ کل بھی مشترک تھا اورآج بھی ۔ دشمن کل بھی وہی تھا ۔ دشمن آج بھی وہی ہے ۔ کل بھی قوم نے دشمن کو مسترد کیا اور دہشت گرد نظریے کو شکست دی ۔ آج بھی ہم متحد ہیں اور مل کر اس کا مقابلہ کریں گے ۔ اس وقت تک چین سے نہیں بیٹھیں گے جب تک ہم دہشت گردوں اور ان کے سہولت کاروں کو کیفرکردار تک نہ پہنچائیں ۔ مدرسے پر حملہ دراصل اسلام دشمنی ہے ۔ سانحے میں شہید ہونےوالے بچے پاکستان کے بچے ہیں ، دشمن کے مذموم عزائم کبھی پورے نہیں ہونگے ۔ معصوم بچوں کونشانہ بنانے والے انسان کہلانے کے بھی مستحق نہیں ہیں ۔ پاکستان نے پہلے بھی سازشوں کا ڈٹ کر مقابلہ کیا اورآئندہ بھی کسی قربانی سے دریغ نہیں کریگا ۔