- الإعلانات -

پنجاب کی ثقافت کو سارا سال فروغ دینے کا عزم

صوبائی وزیر ثقافت میاں خیال احمد کاسترو نے بتایا کہ ثقافت کے فروغ کےلئے ایک جامع پالیسی تیار کی گئی ہے جس کے تحت ملک کے کونے کونے میں موجود با صلاحیت آرٹسٹوں کو مواقع فراہم کئے جائیں گے ۔ محکمہ ثقافت نے صوبہ بھر میں ثقافت کے فروغ کےلئے ایک کیلنڈر تیار کیا ہے جس کے مطابق الحمراء اور پنجاب کی دیگر آرٹس کونسلوں کے زیر اہتمام سارا سال ثقافتی تقریبات منعقد ہوتی رہیں گی ۔ پنجاب میں پہلی بار ایک سرگرم اور فعال نوجوان کو وزیر ثقافت مقرر کیا گیا جو فیصل آباد کے بڑے ممتاز سیاسی رہنما میاں اقبال احمد کاسترو مرحوم کے صاحبزادے ہیں ۔ وہ اعلیٰ تعلیم یافتہ اورمستعد نوجوان ہیں ۔ وزیر ثقافت نے راقم الحروف سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ محکمہ ثقافت کی کاوشوں کی بدولت تین لاکھ ایکٹر سے زائد اراضی واگزار کرائی گئی جس پر قبضہ مافیا نے قبضہ کر رکھا تھا ۔ اس اراضی کی قیمت اربوں روپے ہے ۔ وزیر اعظم عمران خان نے اتنی قیمتی اراضی واگزار کرانے پر صو بائی وزیر ثقافت میاں خیال احمد کاسترو کی کوششوں کو سراہتے ہوئے انہیں شاباش دی اور اسے بہت اچھا کارنامہ قرار دیا ۔ میاں خیال احمد کاسترو ، وزیر اعظم عمران خان کے وژن اور وزیر اعلیٰ سردا رعثمان احمد خان بزدار کی قیادت میں صوبہ کے عوام کو تفریحی سہولتیں فراہم کرنے، ثقافت کے فروغ اور عوامی بھلائی کےلئے فعال کردار ادا کر رہے ہیں ۔ ان کا کہنا ہے کہ وزیر اعظم عمران خان نے جب اقتدار سنبھالا تو سرکاری خزانہ خالی تھا ۔ ملک کے دیوالیہ ہونے کا خدشہ تھا لیکن تحریک انصاف کی حکومت نے وزیر اعظم کے زیر قیادت دن رات کام کر کے نہ صرف معیشت کو سنبھالا بلکہ وطن عزیز کو دیوالیہ ہونے سے بھی بچایا ۔ ن لیگ کی حکومت نے سارے ملک اور پنجاب میں قومی وسائل کی خوب لوٹ مار کی ۔ اللہ کا شکر ہے کہ موجودہ حکومت کے دور میں زرعی اجناس کی پیداوار بہتر ہو رہی ہے ۔ کسانوں کو بلا سود قرضے دیے جا رہے ہیں اور اسی طرح نوجوانوں کونجی کاروبارکےلئے بینکوں کے ذریعے پانچ لاکھ روپے تک بلا سودقرضے کی سہولتیں فراہم کی جا رہی ہےں ۔ سابق حکمرانوں نے دیدہ ودانستہ اس لئے لوٹ مار کی کہ ان کے بعد آنے والی حکومت کو کام چلانے میں مالی مشکلات پیش آئیں ۔ شریفوں اور شاہد خاقان عباسی کی حکومت نے کرپشن کو فروغ دیا ۔ ان کا خیال تھا کہ انتخابات کے نتیجے میں جو بھی حکومت آئے گی وہ وسائل کی کمی کے باعث حکومت چلانے اور وسائل کی عدم دستیابی کے باعث عوام کو سہولیات فراہم نہیں کر سکے گی ۔ تاہم وزیر اعظم عمران خان نے بہتر حکمت عملی سے مالی بحران پر نہ صرف قابو پایا بلکہ مختلف شعبوں کےلئے مطلوبہ فنڈز بھی فراہم کیے ۔ پنجاب میں وزیر اعظم کے سیاسی تدبر اور وسائل کے منصفانہ استعمال کے ذریعے صوبے کے تمام اضلاع میں یکساں طورپر ترقیاتی پروگرام شروع کیا ہے اور یہ وزیر اعلیٰ عثمان احمد خان بزدار کا ایک نہایت اچھا اقدام ہے جس سے پنجاب کے تمام علاقوں کو ترقی کے یکساں مواقع حاصل ہوں گے ۔ وزیر ثقافت خیال احمد کاسترو عوام کے مسائل حل کرنے کےلئے سرگرم ہیں ۔ اس مقصد کےلئے عوام سے مسلسل را بطے میں رہتے ہیں ۔ ان کے دفتر میں جو لوگ آتے ہیں انہیں اپنے ذاتی جیب سے چائے بسکٹ پیش کی جاتی ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ ان سے قبل دفتر میں آنے والوں پر الحمراء کے فنڈ میں سے تقریبا بائیس ہزار روپے ہر ماہ خرچ ہوتے تھے ۔ انہوں نے اپنے سٹاف کو سختی سے منع کر دیا ہے کہ دفتر میں آنے والے افراد کی خدمت اور تواضح کی جائے اور اس کے تمام اخراجات وہ خود برداشت کریں گے ۔ محکمہ ثقافت کے کیلنڈر کے مطابق الحمراء کے زیر اہتمام 10روزہ تھیٹر فیسٹیول کا انعقاد ہو رہا ہے ۔ جس میں ملک کے معروف تھیٹرگروپس اپنے ڈرامے پیش کریں گے ۔ الحمراء تھیٹر فیسٹیول 5تا 14اگست پیش کیا جائے گا ۔ مذکورہ فیسٹیول‘ ڈرامہ کی ترویج میں اہم پیش رفت ہوگا ۔ ایگزیکٹوڈائریکٹر الحمراء محترمہ فرحت جبیں نے اس سلسلے میں کہا کہ تھیٹر فیسٹیول کا مقصد عوام پر کورونا کے نفسیاتی اثرات کو کم کرنا ہے ۔ فیسٹیول سے ڈرامہ کے شائقین کو معیاری تفریج ملے گی ۔ ڈرامہ معاشرتی زندگی کے حسن میں اضافہ کا اہم ذریعہ ہے ۔ انسانی اقدار کے قریب تر موضوعات پر ڈرامے پیش کئے جائیں گے ۔ تھیٹر کا فرو غ الحمراء کے اولین ترجیح ہے اورنوجوان آرٹسٹوں کو اپنے فن کے اظہار کا بہترین موقع میسر آئے گا ۔ الحمرا تھیٹر فیسٹیول میں شرکت کرنے والوں کو کورونا سے بچاوَ بارے احتیاطی تدابیر پر سختی سے عمل درآمد کرایا جائے گا ۔ الحمراء آرٹس کونسل جدت و ندرت کی دنیا میں آرٹ کی ترویج کےلئے مثالی خدمات سر انجام دے رہا ہے ۔ آرٹ کے فن پاروں کا مقصد وطن عزیز کی حفاظت ، نئی نسل میں شجاعت اور بہادری کا جذبہ بیدار کرتا ہے ۔ حال ہی میں الحمراء لاہور میں ڈاکٹر اورنگزیب حافی کے حنوط شدہ عقاب کا مجسمہ ’’کوئین آف ایشیاء ‘‘آرٹ کے شائقین کی توجہ کا مرکز بنا ہوا ہے ۔ اس فن پارے کی نمائش کا افتتاح کرتے ہوئے اقوام متحدہ کے سینئر سٹرئیجک آفیسر شاہ ناصر نے کہا کہ حقیقی حنوط شدہ عقاب کا فن پارہ اپنی ہیبت میں خاص اثر رکھتا ہے ۔ حنوط شدہ عقاب ایک شاہکارفن پارہ ہے جو بہادری اور جرت کے اعلی مرتبے کی عکاسی کرتا ہے ۔ ڈاکٹر اورنگزیب حافی کے فن پارے کا مقصد وطن عزیز کی حفاظت کےلئے نئی نسل میں شجاعت کا جذبہ بیدار کرنا ہے ۔ الحمراء جدت و ندرت کی دْنیا میں آرٹ کی ترویج میں مثالی خدمات نبھا رہا ہے ۔ فن پارہ دیکھنے والوں کی توجہ کا مرکز بن گیا ہے ۔ دْنیا میں اپنی نوعیت کا پہلا حنوط شدہ مجسمہ ہے ۔ راقم الحروف نے وزیر ثقافت کو یہ بھی تجویز دی کہ الحمراء میں اسلامی ثقافت نمایاں کرنے کےلئے بطور خاص توجہ دی جائے ۔ شائقین وزیر ثقافت کی مساعی کو یقینا پسند کریں گے ۔