- الإعلانات -

نیوزی لینڈ کرکٹ ٹیم واپسی،بھارتی سازش بے نقاب عزیر احمد خان کا تکلف برطرف

دنیا اس وقت گلوبل ویلج کی صورت اختیار کرچکی ہے، ایک کلک پر آپ ساری دنیا میں گھوم جاتے ہیں لیکن المیہ یہ ہے کہ سوشل میڈیا کی روک تھام کچھ نہیں اگر کوئی کر بھی رہا ہے تو اپنے مفادات کی خاطر دشمن ملک کیلئے اس ہتھیار کو تیزی سے استعمال کیا جارہا ہے، یہ درصل ہائبرڈ وار اور ففتھ جنریشن وار کا زمانہ ہے۔ اس میں کون کتنا موثر ہوتا ہے یہ اس کے ٹرینڈ پر منحصر ہے۔ اکثر فیک ٹرینڈ بھارت سے چلتے ہیں اور انہیں جعلی آئی ڈیز کے ذریعے ٹویٹروغیرہ پر اتنا پھیلا جاتا ہے کہ پوری دنیا ہی اسے فالو کرنا شروع کردیتی ہے۔ ایسا ہی کچھ پاکستان کے ساتھ ہوا جب نیوزی لینڈ کی ٹیم یہاں آئی تو بھارت چونکہ خطے میں امن کا دشمن ہے،اس لئے اس نے سوشل میڈیا کے ذریعے اٹیک کیا، قارئین کرام نیوزی لینڈ کرکٹ ٹیم کو دور ہ پاکستان سے روکنے کی دھمکی احسان اللہ احسان کے جعلی فیسبک اکاؤنٹ سے دی گئی جس میں نیوزی لینڈ اور اس کی حکومت سے مطالبہ کیا گیا کہ وہ دورہ پاکستان کو منسوخ کردے کیونکہ ٹیم پر حملے کا منصوبہ بنایا گیا ہے، اس کے بعد 21اگست 2021کو بھارتی ویب سائٹ سنڈے گارڈین ابی نندن میشرا کے بیورو چیف نے ایک آرٹیکل شائع کیا جس میں اس نے لکھا کہ نیوزی لینڈ کی ٹیم پاکستان میں دہشتگردی کا شکار ہوسکتی ہے۔ یہاں ایک بات بہت ہی اہمیت کے حامل ہے کہ ابی نندن میشرا افغانستان کے سابق صدرامراللہ صالح سے بہت قریبی تعلقات ہے اور یہ شخص پاکستان کے دشمنوں کی صف اول میں کھڑا نظر آتا ہے۔ پھر چند دن بعد نیوزی لینڈ کے کھلاڑی مارٹل گپٹل کی اہلیہ کو ای میل موصول ہوتی ہے جس میں اطلاع دی جاتی ہے مارٹل گپٹل کو دورہ پاکستان میں قتل کیا جائیگا۔ اس حوالے سے جب تحقیقات ہوئی تو معلوم ہوا کہ جس ای میل ایڈریس سے مارٹل گپٹل کی اہلیہ کو میل کی گئی وہ کسی بھی سوشل میڈیا نیٹ ورک سے منسلک نہیں تھی، یہ ای میل ایڈریس 24تاریخ رات 5بجے بنایا گیا اور گیارہ بجے ان کی اہلیہ کو ای میل کی گئی، اس میل سے ابھی تک صرف ایک ہی میل جو کہ مارٹل گپٹل کی اہلیہ کو کی گئی وہی ہے۔ دراصل ای سی پروٹون سرور سے کی گئی میل جس کی تفصیلات عام حالات میں دستیاب نہیں ہوتیں اس لئے پاکستان نے انٹر پول سے اس ای میل سے متعلق معلومات طلب کی ہے۔ یہ تمام باتیں وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات فواد چوہدری نے میڈیا کو بتائی، اب اصل نکتہ یہ ہے کہ دشمن یہ سمجھ رہا ہے کہ وہ کرکٹ کے میدانوں کو پاکستان میں ویران کردے گا تو اس کی خام خیالی ہے، ابھی تو ابتدائی کے طور پر بھارتی کلنگ زدہ چہرے کو بے نقاب کیا گیا ہے، آگے چل کر مذید اور ایسی خطر ناک معلومات سامنے آنے والی ہے کہ دنیا بھی انگشت بدانداں رہ جائیگی کہ بھارت کتنا بڑا دہشتگر د اور مکروہ کردار کا مالک ہے، بھارت کیوں کہ مکروہ کردار کا مالک ہو وہاں کا وزیر اعظم ہی دنیا کا سب سے بڑا دہشت گرد ہے، خطے میں جہاں کہیں بھی دہشتگردانہ مذموم کارروائیاں ہورہی ہیں وہاں پر کسی نہ کسی صورت میں اس کی خفیہ ایجنسی”را“ ملوث پائی جاتی ہے۔ پہلے اسی بھارت نے امریکا جو ٹیکنالوجی لی اس کو پاکستان اور چین کیخلاف استعمال کیا وہ یہ سمجھتا ہے کہ اس کی مذموم کارروائیوں کا کسی کو علم نہیں ہوگا، خطے میں ہائبرڈ اور ففتھ جنریشن وار کے ذریعے دنیا کی آنکھوں میں دھول جھونکتا رہے گالیکن اب اس طرح نہیں چلے، گزشتہ روز بھی وزیر اعظم نے کہا تھا کہ وہ دورہ نیوزی لینڈ کے پیچھے ہونے والی سازشوں کو بے نقاب کرینگے تو ابھی تو پاکستان نے یہ پہلا قدم اٹھایا ہے، اس وار میں اب بھارت کو علم ہوجائیگا کہ وہ کس طرح منہ کے بِل گرے گا۔ بھارت نے آج تک جتنی بھی دہشتگردانہ کارروائیاں کیں پاکستان نے اسے ہر لمحے دنیا کے سامنے رکھا، اب بین القوامی برادری کو بھی جان لینا چاہیے کہ اصل دہشتگرد بھارت ہی ہے جس نے تمام حالات کو خراب کر رکھا ہے، حالانکہ بھارت کے اندر سے اس کی اپنی ٹوٹ پھوٹ شروع ہوچکی ہے، شاید وہ اس چیز کو سمجھنے سے قاصر ہے، بہت جلد مودی کے ہوتے ہی بھارت دو ٹکڑوں میں تقسیم ہوگا، آج جس طرح اس کا میڈیا تڑپ رہا ہے وہ اس بات ثبوت ہے کہ بھارت کے اندر آزادی کی تحریکیں بہت زیادہ منہ زور ہوچکی ہیں،حتیٰ کہ بھارتی میڈیا بھی بعض اوقات مودی کو آئینہ دکھاتا ہے لیکن مودی کی دہشتگردتنظیم آر ایس ایس صحافیوں کا منہ بند کردیتی ہے، یا پھر مودی کیخلاف بولنے والوں کی زندگی کا باب ہی بند کردیا جاتاہے، حالیہ سوشل میڈیاپر وائرل ہونے والا کلب جس میں ایک بھارتی صحافی بھونڈا تریں الزام عائد کرتے ہوئے کہتا ہے کہ کابل میں سرینا ہوٹل کی پانچویں منزل پر پاک افواج کے اور آئی ایس آئی اہلکار ٹہرے ہوئے ہیں جبکہ حقیقت یہ ہے کہ وہاں کے سرینا ہوٹل میں پانچویں منزل ہی موجود نہیں۔یہ اسی طرح کا الزام ہے جس طرح بھارت نے پلوامہ حملے کا پروپیگنڈا کیا تھا وہ ہر قدم پر پاکستان سے جواب لے چکا ہے لیکن بھارت اور مودی اتنا نا ہنجار ہیں کہ وہ اپنی جاہلانہ حرکتوں سے باز ہی نہیں آتی۔ جنوری 2016میں پٹھان کوٹ حملے کا بھی ڈرامہ بھارت نے اپنی طرف بھی خوب رچا یا مگر آخر کار اس منہ ہی کالا ہوا، اب بھی دشمن کسی صورت اپنے مذموم مظائم میں کامیاب نہیں ہوگا، وہ دن دور نہیں جب کرکٹ کے ساتھ ساتھ تمام کھیلوں کے میدان آبا د ہونگے،پھر وہ وقت بھی دور نہیں کہ بھارت اس دنیا میں تنہا رہ جائیگا، سویت یونین کی طرح ٹکڑوں میں تقسیم ہوکر اپنے گھناؤنے انجام کو پہنچ جائیگا۔