- الإعلانات -

آخر کار بھارتی وزیر اعظم مودی نے اپنی اوقات دکھا دی

گزشتہ روز بھارت کے یوم آزادی کے موقع پر منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی نے بھارت کی ہندووانہ سوچ ظاہر کر دی اور پاکستان کے خلاف خوب زہر اگلا۔بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی نے بلوچستان،گلگت بلتستان اور آزاد کشمیر میں پاکستانی حکمرانی پر سوال اٹھائے ہیں۔میں بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کی تقریر سن رہا تھا اور حیرانی کے ساتھ ساتھ دل میں ہنسی بھی آ رہی تھی کہ یہ دنیا کی سب سے بڑی جمہوریت کے دعویدار ملک کا وزیر اعظم کی تقریر ہے جو تعصب سے بھری ہوئی ہے اور وزیر اعظم نریندر مودی بے بس انسان کی حیثیت سے نظر آ رہا تھا۔جس کے پاس اپنے ملک کے عوام کیلئے کوئی ایجنڈا نہیں ماسوائے اس کے کہ اس نے پاکستان کو برا بھلا کہ کر بھارتی کینہ پرور ہندووں کا ووٹ اپنی مٹھی میں رکھنا ہے۔بھارتی وزیر اعظم کی تقریر نے ثابت کر دیا کہ وہ ایک چائے والے کا بیٹا ہے اور اس کی سوچ آج بھی ملکی قیادت کی نہیں بلکہ ایک چائے بیچنے والے کی ہے یہی وجہ تو تھی کہ گجرات میں اس ہندو کو مسلمانوں کے قتل عام کے علاوہ کوئی اور راستہ نظر نہیں آیا۔یہی چھوٹی سوچ ہی تو ہے جس کے باعث مودی دوسرے ممالک کے سربراہان سے زبردستی گلے ملتے ہیں اور پھر اس کوشش میں شرمندگی کے سوا انہیں کچھ حاصل نہیں ہوتا۔مودی کی چھوٹی اور گھٹیا ذہنیت ہی تو ہے جودوسرے سربراہان مملکت کے ساتھ تصاویر کھنچوا کر فخر محسوس کرتے ہیں،مودی کی یہ گھٹیا سوچ ہی تو ہے جس کے باعث بھارت کے یوم آزادی کے موقع پر مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کے ظلم کا ذکر تک نہیں کیا جس میں گزشتہ ایک ماہ میں 85افراد کو شہید اور 5000سے زائد افراد کو زخمی کر دیا گیا ہے ۔گزشتہ 3عشروں سے بھارتی فوج معصوم کشمیریوں پر ڈائریکٹ فائرنگ کر رہی ہے لیکن اس بھارتی ظلم و بربریت کے باوجود کشمیری اپنی جدوجہد آزادی سے پیچھے نہیں ہٹ رہے۔بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کی یہ گھٹیا سوچ ہی تو ہے کہ بھارت میں ہندو مسلمانوں کو سرعام قتل اور غیر ملکیوں کو ظلم کا نشانہ بنا رہے ہیں اور حکومت انتہا پسند ہندﺅوںکیخلاف کچھ نہیں کر رہی۔یہ بھارتی وزیر اعظم کی گھٹیا سوچ ہی تو ہے جس کے باعث بھارت میں ہر ڈھائی منٹ کے بعد ایک لڑکی کی عصمت دری کی جارہی ہے (یہ اعدادو شمار رپورٹ کئے جانے والے اعدادوشمار ہے۔جن کیسز کو درج نہیں کرایا جاتا ان کی بھی بڑی تعداد ہے)۔بھارتی عوام کے لئے ایجنڈا نہ رکھنے والے ہندوستانی وزیر اعظم نریندر مودی کی یہ گھٹیا سوچ ہی تو ہے جس کے باعث بھارت کی 10کروڑ کی آبادی کے پاس ٹوائلٹ کی سہولت میسر نہیں۔یہ مودی کی گھٹیا سوچ ہی تو ہے کہ بھارت کی سوا ارب کی آبادی میں 90کروڑ افراد کی یومیہ آمدنی 20روپے ہے جو دو وقت کی روٹی کو ترس رہے ہیں اور بھارت بجٹ کا بڑا حصہ جنگی سازوسامان کی خریداری اور مقبوضہ کشمیر پر قبضہ جمائے رکھنے پر خرچ کر رہا ہے۔بھارت میں آج کے دور جدید میں بھی عوام کے پاس چھت نہیں اور وہ کھلے آسمان تلے سونے پر مجبور ہیں۔بھارت میں آج بھی کرپشن عروج پر ہے ۔بھارت آج بھی زات پات کی سوچ کے محور میں پھنسا ہوا ہے یہی وجہ ہے کہ دلت ظلم کا شکار ہو رہے ہیں۔بھارت میںاس سے بھی کہیں زیادہ مسائل ہیں مگر بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کے پاس اپنے ملک و عوام کے لئے یوم آزادی کے موقع پر سوائے پاکستان کے خلاف بولنے کے کوئی ایجنڈا نہیں۔بھارت وہ واحد ملک ہے جس کی اپنے پڑوسیوں کے ساتھ نہیں بنتی۔بھارت کے چین ،نیپال،پاکستان،سری لنکا اور بنگلہ دیش کے ساتھ سرحدی مسائل رہے اور تاحال ہیں۔بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کو اپنے گریبان میں جھانکنا چاہئے اور پھر دوسروں پر نظر ڈالے۔بھارت کے زیر تسلط کشمیر میں پاکستان کا یوم آزادی بھرپور طریقے سے منایا گیا اور ریلیوں،عمارتوںاور گھروں پر نہ صرف پاکستانی پرچم لہرایا گیا بلکہ پاکستان کا قومی ترانہ بھی پڑھا گیا۔گلگام،اسلام آباد،پلوامہ اور بانڈی پورہ سمیت دیگر اضلاع میںکشمیریوں نے پاکستان کے ساتھ محبت کا اظہار کیا۔70سال سے قابض بھارت آج بھی کشمیریوں کے دل میں گھر نہ کر سکا جس کا وہ خود ذمہ دار ہے۔اگر بھارت مقبوضہ کشمیر کو آزادی دے دے تو کشمیریوں کی نظر میں بھارت کیلئے تھوڑی بہت عزت بن سکتی ہے لیکن عزت لفظ سے بھار ت کا کیا تعلق۔کیونکہ بھارت میں تھوڑی بھی غیرت ہوتی تو نریندر مودی کو پاکستان کے خلاف جھوٹے الزامات سے روک دیا جاتاکیونکہ مقبوضہ کشمیر میں گزشتہ روزبھارت کا یوم آزادی یوم سیاہ کے طورپر منایا گیااور بھارتی پرچم کے بجائے سیاہ پرچم لہرائے گئے۔70سال سے قابض بھارت کو ڈوب مرنا چاہئے کہ آخر کیا وجہ ہے کہ اتنی دہائیوں کے بعد بھی کشمیری بھارتی نہیں بن سکے۔بھارت پاکستان کی طرف دیکھے اور سمجھے کہ یہ پاکستان ہے جس کا یوم آزادی پاکستان کے چپے چپے میں بھرپور ملی جذبے کے تحت منایا گیا۔پاکستان بھارت کیلئے مثال ہے اور مثال بنتا رہے گا۔اور ہاں مجھے یقین ہے کہ بھارت پاکستان کو کبھی مثال نہیں مانے گا کیونکہ بھارت ہمیشہ دھوکہ دیکر جیتنے کی کوشش کرتا رہا ہے جس کی وجہ وہا ں پر بسنے والے ہندوہیں۔ہندوﺅنہ سوچ نے کبھی مسلمانوں کو قریب نہیں آنے دیا اور یہی سوچ ایک دن بھارت کو صفحہ ہستی سے مٹا دیگی۔