- الإعلانات -

سا نحہ کا ر سا ز و کلفٹن اور ڈرا مے

سا نحہ کا ر سا ز کی دو با دہ تحقیقا ت کیلئے سا بق صدر پا کستا ن آ صف علی زردا ری نے وزیر اعلیٰ سند ھ مر اد علی شاہ کو ہد ایت کی ہے۔سا نحہ کا ر سا ز میں بینظیر بھٹو کے قا فلے پر حملے میں تقر یباً 170جیالے ما رے گئے ۔ در جنو ں زخمی ہو ئے ! محتر مہ بینظیر بھٹواس حملے میں با ل با ل بچی تھیں ! بر سو ں پہلے اس حملے کی واردا ت میں کن لو گو ں کو ملز م بنا یا گیا ؟مد عی کو ن بنا ؟ معلو م نہیں کتنے لو گ گر فتا ر ہو ئے ؟ کتنوں کو اس دہشت گر دی میں سزا ہوئی ؟ اور کتنے دہشت گر د اس جر م میں پھا نسی لگے ؟ یہ توآ صف علی زرداری ، بلا و ل زر داری ، اور وزیر اعلیٰ سند ھ مر اد علی شا ہ اور سا بق وزیر اعلیٰ سید قا ئم علی شا ہ ہی بتا سکتے ہیں ۔کیو نکہ وہی مقتولین کے سیا سی وارث ہیں اس واقعے کی دو بارہ تحقیقا ت ضر و ر ہو نی چا ہئیں ! اگر سا بقہ تحقیقات میں کو ئی کو تا ہی بر تی گئی بلکہ اس کی تحقیقات کیلئے مختلف خفیہ ایجنسیو ں کے اعلیٰ پا ئے کے ذمہ دارا ن پر مشتمل افراد کی کمیٹی ہو ۔ جسکی نگرانی سپر یم کو رٹ کا جج کر ے ! مگر سا نحہ کا ر سا ز کے سا تھ !سا نحہ کلفٹن کر اچی ! سا نحہ راولپنڈی ! جن میں میر مر تضیٰ بھٹو ، کلفٹن کر اچی میں بینظیر بھٹو کے پہلے دو رِ وزارت عظمیٰ میں اپنے گھر کے قر یب ما رے گئے ! اور بینظیر بھٹو سا بق وزیر اوعظم پاکستان راولپنڈی میں لیا قت با غ سٹیڈیم کے سامنے نا معلو م افراد کی دہشت گر دی میں قتل ہوئیں۔ان دو نو ں واقعا ت کی تحقیقا ت بھی ہو نی چا ہیے ! اور جن لو گو ں نے پہلے نا قص تحقیقا ت کر کے دہشت گر دو ں کو فا ئد ہ پہنچا یا ہے ۔ا ن کے خلاف دہشت گر دو ں کے معا و نین کے جر م کے تحت کا رروا ئی ہو نی چاہیے ! میر مر تضیٰ بھٹو بینظیر بھٹو کے دو ر اقتدار میں گھر کے سا منے قتل ہو ئے ہیں اوران کے قتل کے ذمہ داران کا تعین ہو ا بھی تھا کہ نہیں ؟ ان کے قتل کے ذمہ دارا ن کے خلا ف کیا کار را ئی ہو ئی ؟کیا وزیر اعظم کے بھا ئی کے قاتلو ں کوحوا لے قا نون کیا گیا ؟ اسی طر ح بینظیر بھٹو جس دہشت گر دانہ حملہ میں ما ر ی گئیں ۔ ان کے قتل کے بعد بلا ول زرداری کے والد آ صف علی زرداری نے دو ر صد ارت پا کستا ن گز ا را ہے۔یوسف رضا گیلا نی اور را جہ پر و یز اشر ف نے وزار ت عظمیٰ کے مز ے لو ٹے اور بلا و ل کے اتحا دی معا و ن انکل نو از شر یف د و دفعہ وزار ت عظمیٰ کا مز ہ چکھ چکے ہیں ۔ بلا و ل صا حب بھی سانحہ کار سا ز کے مقتو لین پر سیا ست نہ کر یں ! زرداری صا حب جن مقتو لین کو آ پ اپنی دو ر صدار ت میں انصا ف نہ دے سکے ! جن کو قا ئم علی شا ہ کی ڈبل دو ر وزار ت اعلیٰ حق نہ ملا آ ج دو با رہ ان کی قبر یں کھو د کر ان کے ورثا ء کے زخمو ں پر نمک پا شی نہ کریں۔ بلکہ آج جسطر ح آپ مقتولین کے اشتہا ر شا ئع کر ا رہے ہیں قبل ازیں آپ نے ان مقتو لین کو یا د تک نہ کیا ۔ اب الیکشن مہم شر وع ہونے والی ہے۔ اسلئے آپ پر وا نو ں کے خون اور قر با نی کو کیش کر انا چا ہتے ہیں جو جیالوں کے سا تھ دھو کہ ہے جیا لے بھٹو کے ہو ں یا نو از شر یف ! کے یا عمر ان خان کے ! ان کا کام پر وانے کی طر ح شمع پر جلنا ہے ۔ شمع سے مفا دات اٹھانے والے رانا ثنا ء اللہ ، پر و یز رشید کی طر ح یا ماروی میمن ،شرجیل میمن کی طر ح اپنی اپنی جھولیاں بھر بھرملکی خزا نہ لو ٹنے اور ذاتی تجوریا ں بھر تے رہیں گے اور شمع پر جل کر مر نے والے شمع کی تکر یم بڑ ھا تے رہیں گے ! بلا و ل زرداری صاحب سا نحہ کا ر سا ز کو کتنا عر صہ بیت چکا ہے ؟ اس گز شتہ دس 10سا لو ں میں آپ نے مر حو مین کے ورثا ء والد ین یا اولا دو ں کو کیا دیا ؟ آ پ نے سا نحہ کا ر سا ز کے مقتو لین کے کیس کو آ صف علی زرداری کے دور صدارت میں کیو ں نہ زند کیا؟ بلاول صا حب سا نحہ کا ر سا ز کے بعد کیا آپ اب مر اد علی شا ہ کے دو ر میں سند ھ کی حکو مت سنبھا لنے والے بنے ہیں ؟ بلا ول صا حب آ پ اپنے والد سے پو چھیں کہ سا نحہ کا ر سا ز کے مقتو لین کے سا تھ نا انصا فی اور اربا ب رحیم کی سا ز ش کا آ پ کو آ ج علم ہو ا ہے ؟ یقیناًسا نحہ کا ر سا ز کے حقیقی ملز مو ں کی نشا ند ہی گر فتا ری اور سزا ضر ور ہو نی چا ہیے۔ مگر بلاول جی یہ وقت کا ر سا ز کے مقتو لین کو رو نے کا نہ ہے ! آپ کے با با فر ما تے ہیں کہ بی بی نے ڈکٹیٹر شپ اور انتہا پسند مو لو یو ں کے خلا ف قر با نی دی ہے ۔ مگر بلا و ل جی آ پ کے با با اورحضر ت مو لا نا فضل الر حمن ایک ہی کشتی میں سوار ہوکر اقتدا ر کے مز ے لو ٹتے رہے ہیں اور ڈکٹیٹر پر و یز مشر ف کے سا تھ شریک اقتدا ر رہے ہیں ۔ بلا ول جی ۔ اب بھی وقت ہے کہ آ پ عو ام دو ست پا لیسیاں بنا کر اپنی سا کھ بحا ل کر کے عو ام کے دلو ں پر ر اج کر سکتے ہیں ! ابھی بھی وقت ہے کہ آُ پ ملک اور قوم سے وفا داری کا حلف لیکراپنا مقا م پید ا کر سکتے ہیں آ ج بھی سند ھ کے حکمر ان آ پ ہیں اور سندھ ہی ملک کی ریڑ ھ کی ہڈ ی ہے ۔ا س صو بے کے عوام کی خد مت اور اس علا قے سے دہشتگردوں ، بھتہ خو رو ں ، ٹا ر گٹ کلر ز ۔ اور قبضہ ما فیا کا خا تمہ کر کے اپنا وقا ر بڑ ھا سکتے ہیں ۔آپ دنیا جہا ں کی ہر سہو لت کے مز ے لو ٹ رہے ہیں ۔ اس ملک کی عوام اور سا نحہ کا ر سا ز کے مر حو مین کے و ر ثا ء کو دنیا کی تما م سہو لیتں آسا ئشیں میسر نہ کر یں ۔ مگر ان کو ضر ور یا ت زند گی تو آ سا ن شر ائط پر فر اہم کر یں۔ لو گو ں کو انصا ف تعلیم صحت اور روز گا ر فر اہم کر نے کیلئے تو منصو بہ بندی کر یں۔ ور نہ یہ دھو کے یہ فرا ڈ حکمرا نو ں کے اب کسی کا م نہ آ ئیں گے ! عوا م یہ پو چھنے میں حق بجا نب ہیں کہ آ پ تو ہر سہو لت سے لطف اند وز ہو ں مگر عو ام ضر و ر یا ت زند گی سے بھی محروم کیو ں ؟ اب سا نحہ کا ر سا ز ہو کہ! سا نحہ کلفٹن !یا لیا قت با غ !ان کا نا م لیکر �آپ عو ام کو مز ید بیوقوف نہیں بنا سکتے ! ان سا نحات کے بعد آپ کے والد محتر م نے ملک کا صد ر رہ کر اور سند ھ کا حکمر ان بن کر آ پ اقتدار کے مز ے لو ٹ چکے ۔ مگر تب آپ نے مر حو مین سا نحہ کا ر سا ز یا لیا قت باغ کی مقتولہ کے قا تلین کی گر فتا ری کیلئے کو ئی عملی قد م نہ اٹھا یا ۔ اب آپ دو با رہ اقتدا ر کے چکر میں ہیں تو آ پ کو سا نحہ کا ر سا ز اور لیا قت با غ کے مر حومین کا غم کھا ئے جا رہا ہے۔

خداوندہ۔۔۔ شوکت کاظمی
انہیں تو شوق ہے اس ملک پر بس حکمرانی کا
انہیں کار ریاست کے علاوہ کچھ نہیں آتا
خدا وندہ انہیں توفیق دے تعمیرِ ملت کی
جنہیں شوق سیاست کے علاوہ کچھ نہیں آتا