- الإعلانات -

متحدہ عرب امارات کا قومی دن

کسی بھی قوم کی ترقی اور اس ملک کو مضبوط بنیادوں پر استوارکرنے میں اسکی قیادت کا اخلاص اور ملک اور عوام سے غیر مشروط وفاداری اور اپنے عوام کی بے لوث خدمت کاجزبہ بنیادی شرائط ہیں جن کے بغیر کوئی قوم ہجوم تو ہو سکتی ہے قوم نہیں اس کی ایک عمدہ مثال ہمارا پیارا ملک پاکستان ہے جسے اب تک کوئی لی کوان یو کوئی ماؤزے تنگ کوئی ڈینگ سیاؤ پنگ کوئی مہاثیر محمد کوئی شیخ زاید بن سلطان آل نہیان اور شیخ راشد بن سعید آل مکتوم نہیں مل سکا جو ملک کے وجود میں آنے کے بعد اس کی ترقی اور استحکام کو آسمان کی رفعتوں تک لے جائے آج شیخ زاید بن سلطان آل نہیان علیہ رحمت اور شیخ راشد بن سعید آل مکتوم علیہ رحمہ کے متحدہ عرب امارات 45واں یوم تاسیس ہے جو ہر لحاظ سے دنیا کے انتہائی مضبوط اور مستحکم ملکوں میں سے ایک ہے اس خیرو اتحاد اور سخاوت کا سفر آج سے 45 سال پہلے 2 دسمبر 1971 کو شروع ہوا جب شیخ زاید بن سلطان آل نہیان کی قیادت و شیخ راشد بن سعید آل مکتوم کی سیادت میں سات ریاستوں ابو ظبی دبی شارجہ عجمان ام القیوین فجیرہ اور راس الخیمہ کا اتحاد عمل میں آیا تب یہ ملک بنیادی سہولیات تو کسی حد تک میسر تھیں جو محض بنیادی حد تک ہی محدود تھیں تب یہاں کوئی جامعہ نہیں تھی چند مدارس ہی تھے جو غیر ملکی سفارتی مشنوں کے زیر اہتمام ان ملکوں کے باشندوں کے بچوں کی تعلیم تک محدودتھے ایک عربی مدرسہ "مدرسہ الاحمدیہ” کے نام سے دیرہ دبی میں قائم تھا جہاں سے فارغ التحصیل طلاب امارات کے کامیاب تاجر اور اعلی حکومتی عہدوں پر فائز ہوئے شیوخ کے بچوں کی بنیادی تعلیم بھی انہیں مدارس میں ہوئی اللہ تبارک و تعالی کا امارات پر احسان خاص یہ ہوا کہ یہاں پٹرول نکل آیا اس کے بعد ترقی کا نیا دور شروع ہوا نئی سڑکوں کی تعمیر شروع ہوئی جو ابتدا میں محض دو رویہ سڑک کے ذریعے ابو ظبی کا دبئی سے رابطہ تھا دبی اور العین کے درمیان کوئی سڑک نہیں تھی العین میں جامعہ الامارات العربیہ المتحدہ کے نام سے پہلی جامعہ کا قیام عمل مین لایا گیا اب مسئلہ ان طالب علموں کے لئے تھا جو دبی اور شمالی امارات میں مقیم تھے جن کو پہلے ابو ظبی اور پھر العین جانا پڑتا جو تقریبا 300 کلومیٹر سے زیادہ طویل تھا تو فوراً ایک شارع تعمیر کردی گئی یوں العین اور دبئی کا فاصلہ محض 110 کلومیٹر رہ گیا الامارات کی اس پہلی یونیورسٹی سے فارغ التحصیل افراد متحدہ عرب امارات کے اعلی عہدوں پر فائز ہوئے کئی استاد بنے کئی پولیس اور فوج کے اعلی افسران بنے اسی میں سے بعض منصب وزارت پر بھی فائز ہوئے وکلا اور نظام عدل کا حصہ بنے فوج کو نئے سرے سے منظم کیا گیا اس میں نئے میراج ہوائی جہاز اور ہیلکاپترون اور ٹرانسپورٹ جہازوں کا اضافہ کیا گیا دنیا کے بہترین ٹینک توپیں اور دیگر ہتھیار شامل کئے اور ایک مضبوط او متحرک بحریہ کی بنیاد رکھی دفاع مضبوط کیاگیا نئی سڑکوں کی تعمیر و توسیع کی گئی مدارس اور طبی مراکز کا جال بچھا دیا گیا شہریوں کے لئینئے گاؤں اور شہر قائم کئے گئے جہاں تمام بہترین طبی اور تعلیمی سہولیات فراہم کی گئیں ٹریفک کنٹرول کا بہترین نظام قائم کردیا گیا الامارات بین الاقوامی تجارت کا مرکز بن گیا جہاں سے پورے مشرق وسطی اور اور افریقہ کو ہر قسم کی صنعتی اور غذائی اشیا بھیجی جاتیں پاکستان اور ہندوستان سے غذائی اور تجارت شروع ہوئی جو روز افزوں ہے متحدہ عرب امارات نے مسلمان ملکوں کے علاوہ غیر مسلم قوموں کو انسانی بنیادوں پر ہر قسم کی امداد فراہم کی کئی ملکوں میں وہاں کے عوام کی فلاح کے لئے ہسپتال بنائے گئے اور یہ سلسلہ پاکستان تک دراز ہوا جہاں بہترین ہسپتال بنائے گئے پاکستان کو ایرپورٹ بنا کرتحفتاً دے دئے گئے پاکستان میں حبارہ (تلور) پرتحقیق اور اس کی نسل کی افزودگی کے لئے مرکز قائم کیا گیا فاٹا میں تعمیر و ترقی اور مدارس کے قیام کے لئے فنڈ فراہم کئے گئے پاکستان میں پولیو کے خاتمے کی مہم میں امارات کا خصوصی تعاون شامل ہے پاکستان سے امارات کے ثقافتی تعلقات و روابط مزید گہرے ہوئے جو دن بہ دن مزید گہرے ہو رہے ہیں امارات میں بین الاقوامی ائرلائن بنائی گئیں جہاں پاکستان کا فنی تعاون اور مشاورت شامل حال رہی آج الامارات ائیرلائن ،اتحاد ایرلائن دنیا کی بہترین اور بڑی ائیرلائن شمار ہوتی ہیں اسی طرح ایر عربیہ،فلائی دبئی اور راک ایر کا بہت بڑا نیٹ ورک مشرق وسطی ایشیا اور افریقہ تک پھیلا ہوا ہے یہاں کے ایرپورٹ دنیا کے مصروف ترین اور جدید ترین ایرپورٹ ہیں یہاں ہر منٹ میں یا کوئی پرواز آڑان بھر رہی ہوتی ہے یا اتر رہی ہوتی ہے امارات کی سمندری بندرگاہیں پوری دنیا سے مربوط ہیں اور دنیا بھر سے بھاری تجارت میں اہم کردار ادا کرتی ہے امارات کی امن و امان کی صورتحال دنیا بھر میں بہترین اور محفوظ ترین تسلیم کی جاتی ہیں یہاں کا نظام انصاف اورجیلوں کا نظام انتہائی ترقی یافتہ ہے قانون کی پاسداری کی اہمیت مسلمہ ہے اور عام لوگوں کے مال و اسباب اور زندگیاں انتہائی محفوظ ہیں دوسرے ممالک سے مختلف یہاں ہر سرکاری دفتری کام عموما آن لائن ہیں اور منٹوں میں انجام پاتے ہیں یہاں کی طبی سہولیات دنیا کی بہترین سہولیات ہیں اور دنیا بھر سے لوگ ہر قسم کے علاج کیلئے امارات آتے ہیں سیر و سیاحت کیلئے امارات ایک خوبصورت سیاحتی مقام ہے جہاں آنے کیلئے دنیا بھر سے براہراست پروازیں آتی اور جاتی ہیں دنیا بھر کی تقریبا تمام ایئرلائنز یہاں کے لئے اپنی پروازیں آپریٹ کرتی ہیں غرض یہ کہ امارات دنیا کا ہر لحاظ سے ایک عظیم ملک ہے اس کے حکمران بغیر پروٹوکول کی عام مارکیٹوں اور عام مقامات پر عوام سے گھل مل جاتے ہیں اور لوگ چاہے مقامی ہوں یا باہر سے آئے ہوئے ان سے بے پناہ محبت کرتے ہیں اور حکمرانوں کا دست شفقت سب کے سر پر ہے یہاں رہنے والے لوگ خصوصا پاکستانی اسکو اپنا گھر تسلیم کرتے ہیں اللہ سے دعا ہے امارات اور اس کے عوام دن دوگنی اور رات چوگنی ترقی کرے اور اس کا امن و استقرار قائم ودائم رہے اور حکمران بھی اپنے عوام سے اسی طرح محبت شفقت قائم رکھیں آمین۔