- الإعلانات -

مفتی اعظم کا خطبہ حج

uzairahmedkhan

مفتی اعظم شیخ عبدالعزیز آل شیخ نے خطبہ حج میں امت مسلمہ پر واضح کردیا ہے کہ اسلامی ریاست پر حملہ کرنے والے دائرہ اسلام سے خارج ہیں ۔یہ بات واضح طور پر عیاں ہے کہ اسلام امن اورآشتی کا مذہب ہے ۔بھائی چارے اور محبت کا پیغام دیتا ہے ۔خطبہ حج مسلمانوں کیلئے مشعل راہ ہے اور پھرمفتی اعظم شیخ عبدالعزیز آل شیخ نے خطبہ حج کے دوران تمام تر چیزیں واضح کردی ہیں ۔انہوں نے کہا کہ گمراہ لوگوں نے دہشتگردی کی اورمسجد کو بھی ن چھوڑا،نوجوان فتنہ پرور گروہوں کے ہاتھوں کھلونا نہ بنیں ،تمام مسلمان فتنہ پرور گروہوں اور ظلم کیخلاف متحد ہوجائیں ۔مسجد اقصیٰ آج مسلمانوں کوپکار رہی ہے ،یہودی انتہائی ظالم ہیں ،اسلام کا لبادہ اوڑھ کر مسلمانوں کو تباہ کرنے والوںکا راستہ روکا جائے ۔نوجوان اپنے آپ کو حق پر رکھیں اوردشمنوں کے ناپاک عزائم کو سمجھتے ہوئے ناکام بنائیں،اسلام نے انسانوں کیلئے بہترین ضابطہ ا خلاق دیا ہے،مفتی اعظم کے خطبے کا ایک ایک لفظ اپنے اندر ایک سمندرسموئے ہوئے ہے ۔مسلمانوں کیلئے واضح پیغام موجود ہے کہ کن کن عناصر سے اس وقت اسلام اورمسلمانوں کوخطرات لاحق ہیں ۔انہوں نے یہ بات انتہائی اہم کہی کہ مسجد اقصیٰ مسلمانوں کو پکاررہی ہے ۔کیونکہ یہودیوںنے وہاں پر انتہا کردی ہے ۔گذشتہ دنوں بھی یہودی فوجی مسجد میں جوتوں سمیت داخل ہوئے ۔فلسطینی نمازیوں کو وہاں سے باہر نکالا اورمسجد میں داخل نہ ہونے دیا ۔پھراسی طرح اور بھی مذموم حرکات وسکنات ہوئیں اس حوالے سے ترکی کے وزیراعظم طیب اردگان نے بھی کہا ہے کہ مسجد اقصیٰ کے حوالے سے یہودی جن ا قدامات پر عمل پیرا ہے اس کے انتہائی خطرناک نتائج نکل سکتے ہیں ۔آخر کیا وجہ ہے کہ آج امت مسلمہ تفرقے کا شکار ہے ۔انہی چیزوں کو مدنظر رکھتے ہوئے مفتی اعظم نے کہا کہ مسلمان ان گروہوں کیخلاف متحد ہوجائیں ۔مفتی اعظم نے حجاج کرام کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ مسلمانوں اللہ کا خوف کرو اور انسانوں کے ساتھ عدل و انصاف کرو، مسلم ممالک کے حکمران عوام کا خیال رکھیں اور انہیں سہولتیں فراہم کریں،دشمن عالم اسلام کے خلاف مختلف انداز میں سازشوں میں مصروف ہے، اللہ تعالی ظلم کرنے والی قوموں کو جلد صفحہ ہستی سے مٹا دیتا ہے، اسلام کی اصل طاقت امت کی واحدانیت میں پوشیدہ ہے، مسلمان اسلامی تعلیمات کی روشنی میں چیلنجز سے نمٹیں، تقوی اختیار کریں اور تمام تر توانائیاں اللہ تعالی کی راہ میں صرف کریں۔ انہوں نے کہا کہ جس نے اللہ تعالی کے ساتھ شرک کیا اس کا ٹھکانہ جہنم ہے، مسلمان گمراہ کن قوتوں کے ایجنڈے پر عمل پیرا نہ ہوں اور فساد پھیلانے والے گروہوں اور فتنوں سے دور رہیں، اسلام کے داخلی و خارجی دشمنوں سے باخبر رہنا ہو گا،صحافی اپنی ذمہ داریاں ادا کرتے ہوئے صرف حق اور سچ کی آواز عوام تک پہنچائیں، اسلام کی دعوت اور تبلیغ سب پر لازم ہے، متقی اور پرہیز گار اللہ کے قریب بلند درجے والا ہے، مسلمان اور مسلم حکمران دشمنوں سے نمٹنے کےلئے آپس میں اتحاد پیدا کریں، دعا گو ہوں کہ اللہ تعالی مصیبتوں میں پھنسے ہوئے مسلمانوں کو جلد مشکلات سے نکالے اور تمام حاجیوں کی حاضری کو قبول فرمائے، عرفہ کے دن اللہ تعالیٰ انسانوں کو جہنم سے نکال کر جنت میں ڈالنے کا فیصلہ کرتا ہے، علماءبھی بہتر انداز میں دین کی دعوت دیں، دنیا عمل کی جگہ ہے اور آخرت میں اس کا حساب دیا جائے گا۔انہوں نے اسلامی ریاستوں میں دہشت گردی اور فتنہ پھیلانے والے گروہوںکے خلاف مسلمانوں کو متحد ہونے کی تلقین کرتے ہوئے کہا کہ اسلام امن کا دین ہے، تباہ خیالات والے اسلام کا چہرہ مسخ کر رہے ہیں،گمراہ لوگوں نے دہشت گردی کی اور مسجد کو بھی نہ چھوڑا، نوجوان فتنہ پرور گروہوں کے ہاتھوں کھلونا نہ بنیں، مسلمان حکمران اپنی رعایاکا خیال رکھیں، تمام مسلمان فتنہ پرور گروہوں اور ظلمکے خلاف متحد ہو جائیں،اسلامی ریاست پر حملہ کرنے والے دائرہ اسلام سے خارج ہیں، یہودی انتہائی ظالم ہیں، انہوں نے انسانیت کو پامال کر رکھا ہے، یہودی مسلمانوں کے اخلاق اور کردار کو تباہ کرنے کی کوشش کر رہے ہیں، صحافی اپنی ذمہ داری ادا کرتے ہوئے صرف حق کی آواز کو عوام تک پہنچائیں، اسلام کا لبادہ اوڑھ کر مسلمانوں کو تباہ کرنے والوں کا راستہ روکیں، نوجوان اپنے آپ کو حق پر رکھیں اور دشمنوں کے ناپاک عزائم کو سمجھتے ہوئے ناکام بنائیں،اسلام نے انسانوں کےلئے بہترین ضابطہ اخلاق دیا ہے، دشمنان اسلام مختلف انداز میں سازشوں میں مصروف ہیں، دشمن اسلام کا لبادہ اوڑھ کر اسلام کی جڑھ کو کمزور کرنے میں مصروف ہیں، مسلمانوں کےلئے لازم ہے کہ تمام قوتیں اسلام کی سربلندی کےلئے استعمال کریں،داعش اور یمن میں ایک گروہ گمراہ ہے اور امت مسلمہ کو تباہ کر رہا ہے،مسلمان ان گروہوں کے خلاف متحد ہو جائیں۔مفتی اعظم نے جس اتحاد کا درس دیا ہے وہ وقت کی انتہائی اہم ضرورت ہے ۔مسلمانوں کواپنی صفوں میں ان لوگوں کو تلاش کرنا ہوگا جو اسلام کے نام پر دین اسلام کو بدنام کرنے کا سبب بن رہے ہیں ۔تب ہی یہود وہنود اور کفار شکست سے دوچار ہوسکیں گے ۔صحافت کے اعتبار سے بھی مفتی اعظم نے ذکر کرتے ہوئے کہا کہ صحافی صرف حق کی آواز کو عوام تک پہنچائیں اور یہ ایک حقیقت ہے کہ اگر صحافی کسی بھی غیر مصدقہ خبر کو خبر بنا دیں تو پھر ملک میں تو انارکی ہی پھیلے گی ۔