- الإعلانات -

مگر مچھ کے امریکی آ نسو

افغانستان میں امریکی فوج کے سربراہ جان نکلسن نے امریکی فوجی ہیڈ کوارٹر پینٹا گون میں غیر ملکی میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے حقانی نیٹ ورک کو سب سے بڑا خطرہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ پاکستان حقانی نیٹ ورک کیلئے مقدس سرزمین ہے اور حقانی نیٹ ورک پاکستانی سرزمین پر مزے لوٹ رہے ہیں ۔ جنرل نکلسن نے بڑی چالاکی کا مظاہر ہ کرتے ہوئے حقانی نیٹ ورک کو افغانستان میں اتحادی افواج کیلئے سب سے بڑا خطرہ قردیتے ہوئے دنیا کفر کو متحد کرکے پاکستان کے خلاف لڑنے کی ترغیب دی ہے ۔ روسی افواج بیس سال افغانوں کی قتل وغارت و تباہی کے بعدا ب امریکہ دنیا بھر کے کفاری لشکر تربیت دیکر افغانوں مسلمانوں اور پاکستانی قوم کے خلاف نبرد�آزما ہے ۔ روسی انخلاء کے بعد پرامن اور سلامتی کے بہانے کفاری لشکر امریکی کمانڈ میں پر امن افغانستان حکومت پر حملہ ہوگیا پاکستان کی دوست اور برادرحکومت کو افغانستان سے ختم کرکے امریکہ کے افغانوں کی اینٹ سے نہ صرف اینٹ بجائی بلکہ ہمارے نالائق اور غاصب حکمرانوں کو بھی اپنے ساتھ ملا کر پاکستان کو بھی اس جنگ میں گھسیٹ لیا ۔ افغانوں کا تو نقصان ہونا جانی مالی اخلاقی و قومی نقصان تو ہوا ہی تھا امریکی چالاک اور مسلم دشمن حکمرانوں نے پاکستان کو بھی تباہ وبرباد کیا اور آئے روز نیا مطالبہ کرکے نئی مصیبت و مشکل سے دوچار کرلیا اور ہمارے نالائقی کی انتہاء اور بزدلی کی انتہاء دیکھئے کہ ہم ہر نئے امریکی مطالبے کو پورا کرنے میں نئی مشکلات سے دو چار ہوئے جاتے ہیں ۔اور خاموشی سے ہر نئے مطالبے کو پورا کرتے ہیں ۔؟ یوں تو امریکہ افغانستان میں امن کو بہانہ بنا کر دنیائے اسلام کے واحد ایٹمی ملک پاکستان کے پرپر زے کاٹنے کے چکر میں ہے ۔ کیا دنیائے اسلام میں امن و سلامتی کیلئے امریکہ پریشان ہے ۔؟ کیا دنیائے اسلام کو امریکہ پر امن دیکھنا چاہتا ہے ۔ کیا دنیا کے مظلوم مسلمانوں کو امن و تحفظ دینے کے لئے امریکہ فکر مند ہے ۔ کا امریکہ انسانی دشمنوں کے ناطے مسلمانوں کو پر امن زندگی فراہم کرنے کا خواہش مند ہے ۔ یا امریکہ دنیائے اسلام میں افراتفری پھیلا کر اسے تباہ کرنا چاہتے ہیں کیا امریکہ عرب تیل پر قبضہ کرنے کے لئے چالاکیاں تو نیہں کررہا ۔ کیا امریکہ افغانستان کی اسلامی ممالک مین جنگ کا ماحول برپا کرکے اپنا اسلحہ فروکٹ کرنے اور انہیں کمزور کرنے اور ان میں انتشار پھیلانے کی سازشوں میں تو مصروف نہ ہے ۔ پاکستانی قوم اور مسلم امت کو امریکی سازشوں کا مقابلہ کرنے کے لئے لڑنا ہوگا۔ ورنہ دنیائے اسلام ایک طرف افراتفری خانہ جنگی اور امریکی شکنجوں میں جکڑی ہوگی ۔ دنیائے اسلام کے حکمرانوں لیڈروں کو غور کرنا ہوگا کہ امریکہ سے نجات کیلئے ہمیں کیا کرنا ہوگا جب امریکہ جمہوریت اور آزادی کا علمبردار ہے جب امریکہ ظلم و جبر اور ناانصافی کا مخالف ہے ۔ تو کشمیری فلسطینی مسلمانوں کی آزادی کیلئے ہندوستان اور اسرائیل کو مجبور کرے ان مظلوموں کی آزادی کیلئے طاقت کا استعمال کرے ۔ ان کی سلامتی اور تحفظ کیلئے اتحادی افواج کو کشمیر فلسطین میں اتا رکر ان کو آزادی سے ہمکنار کرے ۔ جہاں آئے روز ظلم و تشدد سے نوجوان شہید ہورہے ہیں ۔ اور حریت پسندوں کو جیلوں اور گولیون سے سزاوار کیاجارہا ہے ۔ جان نکلسن افغانستان جیسے تیسے ایک آزاد ملک ہے اس ملک کے حقیقی حکمرانوں کو آپ لوگوں نے معزول کرکے افغانستا ن میں جنگ و جدال کا ماحول پیدا کیا ۔ آپ کا چہرہ افغانستان اور فلسطین میں بے نقاب ہوچکا ہے ۔ آپ دنیا میں امن نہیں اپنا اقتدارو اختیار چاہتے ہیں ۔ آپ کو دنیا کے امن سے کوئی دلچسپی نہ ہے ۔ آپ کو دنیا میں آزادی جمہوریت کی فکر نہ ہے ۔ آپ ظلم و زیادتی کو ختم نہین بلکہ مسلمانوں پر ظلم و زیادتی بڑھانا چاہتے ہیں۔ آپ کی چالاکی و مکاری سے دنیا اسلام آگاہ ہوچکی ہے ۔ آپ دنیا اسلام کو جس جہنم میں گرانا چاہتے ہیں آپ نے وہ کام کردیا ہے اور اب اس جہنم کے ماحول کو برپا رہنا دیکھنا چاہتے ہیں ۔ اسلیے آپ افغانستان اور مشرقی وسطیٰ میں لاکھون فوجی اور آگ برسانے والے طیاروں کے ساتھ مورچہ زن ہیں جرنل نکلسن یقیناًحقانی نیٹ ورک آپ کے لئے بڑا خطرہ ہوسکتا ہے ۔ جو آپ کی دہشت گردی کے آگے حائل ہے ۔ مگر ہم سمجھتے ہیں کہ امریکہ دنیائے اسلام کیلئے بڑا خطرہ ہے جس نے پوری مشرق وسطی میں خانہ جنگی برپا کررکھی ہے ۔ جس نے افغانستان پر قبضہ کرکے پاکستان اور افغانستان میں دہشت گردی کا ماحول پیدا کردیا ہے ۔ امریکہ کے مگر مچھ والے آنسو دنیائے اسلام کیلئے دھوکہ ہیں جنرل نکلسن آپ دھوکہ فراڈ کے ماہر ہیں ۔ رونا جمہوریت اور حریت کا روتے ہیں نعرہ انصاف امن ، کا لگاتے ہیں ۔ لیکن دنیا میں سب سے زیادہ خون بہانے والے اور معصوموں کی جانیں لینے والے امریکی ہیں ۔
*****