- الإعلانات -

رمضان کی برکات اور انفاق فی سبیل اللہ

انسان کے اوپر رب جلیل وکریم کے بے پایاں احسانات ہیں جن کا نہ شمار ہو سکتا ہے اور نہ ہی انسان اس رب رحمان و رحیم کا کماحقہ شکر ادا کر سکتا ہے ان انعاموں میں ایک انعام ماہ رمضان کے روزے ہیں جس سے تزکیہ نفس ہوتا ہے جس کی نفس کی آلائشیں صاف ہوتی ہیں جس سے انسان جو بندہ عاجز ہی ہے اس پر اللہ تبارک و تعالی کی نازل شدہ برکتوں کے طفیل کئی اسرار و رموز سے آشنائی ہوتی ہے اور قرب الا ہی کے امکانات بڑھ جاتے ہیں جو ہماری عبادات اور ریاضت کا ما حصل اور گوہر مطلوب و مقصود ہے اور جسمانی صحت کی بہتری اور تطہیر امراض و الام میں بہت مدد ملتی ہے کہ کہنہ امراض کی شدت کم ہوجاتی ہے اور کئی امراض سے شفایاب ہوتی ہے۔عید کے روز نبی مکرم صل اللہ علیہ وسلم کا معمول تھا کہ آپ علیہ الصلوات و تسلیم عید کی نماز کے لئے نکلنے پہلے کھجور کھاتے کیوں کہ عید کے دن روزہ رکھنا حرام ہے. مقصد یہ اعلان فرمانا ہے کہ رب کریم کے حکم کی تعمیل کرتے ہوئے پورے ایک ماہ تک دن کی روشنی میں کچھ کھایا پیا نہیں اور آج بندے کی روح بھی خوش ہے کہ اس نے اپنے مالک و مختار رب العزت کے حکم اور توفیق سے ایک ماہ تک روزے رکھے اس کے بعد دن کی روشنی میں پہلی مرتبہ کچھ کھایا پیا اور اللہ تعالی کا شکر ادا کیا روزے کا عمل اس کی اہمیت اللہ کے نزدیک اتنی محبوب و مرغوب ہے کہ نماز بھی شاید دکھاوے کے لئے ہو سکتی ہو لیکن روزہ ہے تو ریا نہیں ہو سکتا اور اگر ریا ہے تو پھر روزہ نہیں ہوسکتا رو زے میں اگر آپ کو شائبہ تک ہو جائے کہ حلق میں پانی کا کوئی ایک قطرہ بھی اتر گیا تو آپ تھوک کر اس قطرے کے باہر نکالنے کیلئے کھانستے ہیں اور بہت سنجیدگی کا مظاہرہ کرتے ہیں اسی لئے اس کا خاص اہتمام بھی کرتے کہ ہیں یہ معاملہ آپ اور آپ کے رب کے درمیان ہوتا ہے اسی لئے تو اللہ تبارک و تعالی نے اس کا انعام بھی عظیم ہی دیا ہے ان عظیم انعاموں میں ایک عظیم انعام لیلہ القدر ہے جسے لیلہ الجائزہ(انعام)بھی کہتے ہیں اللہ تعالی فرماتے ہیں روزہ میرے لئے ہے اور میں ہی اس کا اجر اپنے بندے کو دوں گا۔شان ربوبیت تو دیکھئے کہ اللہ نے فرمایا ہے روزہ میرے لئے ہے یہ کہ کر اللہ نے کتنی بڑی شاباش دی ہے عید کی صبح بندہ غسل کرکے اپنے پاس موجود کپڑوں میں سب سے بہتر لباس زیب تن کرکے اور خوشبو لگا کر اپنے قادر مطلق اور کریم رب کی بارگاہ میں سجدہ شکر بجا لانے کیلئے گھر سے نکل کر عید گاہ کی جانب چل پڑتا ہے جہاں رب غفار و کریم کی جانب سے ایک عظیم انعام کا اعلان ہونے والا ہے اسی لئے تو اللہ تبارک و تعالی نے اس کا انعام بھی عظیم ہی دیا ہے۔شان ربوبیت تو دیکھئے کہ اللہ نے فرمایا ہے روزہ میرے لئے ہے یہ کہ کر اللہ نے کتنی بڑی شاباش دی ہے کہ سے میرے بندے تمہارا روزہ ریا اور دکھاوے سے پاک ہے اس لئے اپنے بندے کو خود میں انعام دوں گا جس کی کوئی حد نہیں نہ ہی کوئی پیمانہ ہے اس خالص اور صرف اللہ کیلئے بے ریا عبادت کا اجر جو اللہ خود دے گا جس کا مشاہدہ اور اندازہ بندہ صرف یوم قیامت کو ہی کر سکے گا آخرت میں جو اللہ دے گا سو تو دے گا لیکن اس عمل سے بھی انسان کی روح میں بالیدگی اور طاقت پیدا کردی جا تی ہے کہ سال بھر کیلئے انسان کی بیٹری چارج ہو جاتی ہے اور اسی کو تقویٰ کہتے ہیں ۔رب تعالیٰ نے عید کے دن آپ کو جو ثمرات اور انعامات دئے ہیں وہ رمضان المبارک کی برکات میں سے ہے ان انعامات کا شکر اپنے نیک اعمال کے ذریعے کریں اور تقویٰ کی صورت میں جو طاقت آپ کو اللہ نے مرحمت فرمائی ہے اس کی حفاظت کریں اور اس طاقت سے نہ صرف اپنی اصلاح کریں بلکہ معاشرے اور ماحول کی اصلاح بھی مطلوب و مقصود بھی ہے عید گاہ جانے سے پہلے ہر صاحب ایمان بچہ عورت بزرگ و جوان صدقہ فطر ادا کرے جو آج گندم کے حساب سے کم از کم 100 روپے فی کس بنتا ہے فدیہ صوم 30 دن کا 3000 روپے کنارہ صوم برائے 60 مساکین 6000 روپے اور قسم کا کفارہ 1000 روپے جو کی قیمت کے حساب سے فطرہ 320 روپے فی کس کھجور کے حساب سے فی کس 1600 روپے اور کشمکش کے حساب سے فی کس 1600 ہی بنتا ہے یہ ان مساکین اور نادار مسلمانوں کو دیں تاکہ کم از کم عید کے دن وہ فکر معاش سے آزاد ہوکر عید کی خوشیاں منا سکیں دراصل یہ مال و متاع اللہ کی دین اور کرم ہے اس میں مساکین اور نادار لوگوں کا بھی حق ہے اور یہ صدقہ شمار ہوگا اور اس کے دینا بھی آپ کی عمر مال اور اولاد میں برکت کا باعث ہوگا اللہ تبارک و تعالیٰ کے حضور دعا ہے کہ آپ کی عبادات و ریاضت صدقات قبول فرمائے اور اور اس ضمن میں آپ کی جانب کیا جانے والا انفاق فی سبیل اللہ بھی اللہ کی بارگاہ میں شرف قبولیت پائے اور آپ کے مال واولاد میں برکت کا باعث ہو ابھی یہ کالم سپردقلم کر ہی رہے تھے کہ عجمان سے ایک خاندان ملنے آیا خاتون خانہ تین کم سن نونہال اور خاندان کے سربراہ عمران شہزاد آج سے تین سال قبل یہ متمول خاندان تھا کاروبار میں شدید نقصان اور کسی کی دھوکہ دہی کے سبب سب کچھ ختم ہوگیا اقامے کی معاملات بھی درست نہ رہے خاتون کو سرطان کا مرض لاحق ہوگیا جس کا آپریشن ایرانی ہسپتال اور سعودی جرمن ہسپتال میں ہوا کیموتھراپی باقی ہے مزید علاج کی سکت نہیں رہی مدد کے خواہاں ہیں اگر صاحب دل اور مخیر صاحب یا ادارہ اللہ کی رضا کیلئے ان کی مدد کرنا چاہتے ہوں تو ان سے امارات کے 0559572994 واٹس اپ نمبر پر براہ راست مل کر تسلی کر سکتے ہیں اللہ تعالی نے دس دنیا اور ستر آخرت میں دینے کا وعدہ کر رکھا ہے اللہ اس کی مدد کرتا ہے جو اپنے کسی بھائی کی مدد کرے اللہ ہمیں لوگوں کی مدد کی توفیق عطا فرمائے وطن اور اہل وطن کی حفاظت فرمائے ۔آمین