- الإعلانات -

استاد محترم۔۔۔!

نیب کے مقدمات سے گلو خلاصی کیلئے میاں نواز شریف کو سابق صدر آصف علی زرداری کی شاگردی کا مشورہ !سابق وزیراعظم باکمال آدمی ہیں کہاں لوہے کی بھٹی اور کہاں تین دفعہ وزات عظمیٰ کا تخت ! مگر ہر دفعہ معراج عظمیٰ پر پہنچ کر واپس زمین پر پٹخ دیا گیا میاں صاحب محنتی بھی ہیں اور قسمت کے بھی دھنی ضدی بھی صدر اسحاق سے بھی زخم کھایا اور پھر اسحاق کو بھی کھا گئے مشرف سے جنگ میں جیل او ر قلع اٹک اور جلاوطنی کاٹی مگر پھر اسے ملک سے بھاگنے پر مجبور کیا نہ جانے محمد خان جونیجو کو کس کے اشارے پر زہر دیاتھا کیونکہ کہ میاں صاحب کے رابطے اپنی ضرورت کے ہمیشہ بڑے بڑوں سے رہے ہیں ویسے بھی کاروباری آدمی ہیں جس شخص چیز کو منافع بخش سمجھتے ہیں بڑی بولی لگا کار خریدنے کا فن بھی جاتے ہیں۔ جیسا کہ حضرت مولانا فضل الرحمن جیسے معتبر مذہبی سیاسی راہنما کووزارتیں مشاوت دے کر اپنے قریب کر رکھا ہے اسی لیے انھوں نے سابق وزیرا عظم کو مشورہ دیا ہے کہ وہ اپنے مقد مات کے خاتمہ کے لیے سابق صدر آصف علی زرداری کی شاگردی اختیار کریں مولانا صاحب کو پتہ ہے میں صاحب لوگوں کی جب تک حکومت ہوگی مولانا صاحب کی انگلیاں گھی میں اور سر کڑاہی میں ہوگا۔اسی لیے مولانا صاحب نے میاں نوازشریف کو مشورہ دیا ہے زرداری صاحب کے تابعدار بنیں ویسے آنے والے الیکشن بھی قریب ہیں اور دونوں حضرات قومی مفاد کے پیشے نظر نیک نیتی سے ملک اور قوم کی خاطر اتحاد کر کے الیکشن لڑیں تو عمران خان اور جماعت اسلامی جیسے بدعنوان اور بد مزاج لوگ ڈھونڈ نے سے بھی نہیں ملیں گے ۔مولانا صاحب آپ صاحب علم انسان ہیں آپ خود ہمت کریں اور دونوں معصوم حضرات اپنی موجود گی میں اپنے سامنے بٹھا کر دعائے خیر پڑھیں فتح بھی یقینی ہوگی۔ آصف علی زرداری ملک کے دوبارہ صدر اور میاں نواز شریف سے ملک کے وزیراعظم یا بادشاہ بن جائیں گے ! آپ کے بھی ہر طرف اور ہر طرح کے مزے ہوں گے۔ KPK ۔ سندھ ۔ بلوچستان اور پنجاب میں جہاں چاہیں گے آپ کو اور آپ کے بھائی کو وزارتیں۔ مشاورتیں اور آپ کے ساتھیوں کو بہت کچھ میسر آئے گا۔آپ میں یہ خوبی ہے کہ دشمن کے ساتھ بھی گزارہ کرلیتے ہیں۔ آپ ایم ایم اے اتحاد کی بجائےZ FM اتحاد کی کوشش کریں ۔ اوراس اتحاد سے فضل الراحمن ،میاں ، زرداری ، کے مسائل حل ہو جائیں گے ! باقی معاملات الگ ٹھیک ہو جائیں گے۔ مولانا صاحب احباب پوچھتے ہیں کے آپ کس کے شاگرد رہے ہیں ؟ کیا آپ اپنے استاد کا نام بتا نا پسند فرمائیں گے؟کیا آپ میاں صاحب کو اپنے استاد کا شاگرد نہیں بنواسکتے ؟ تاکہ میاں صاحب بھی آپ کے ہم خیال اور ہم جماعت اور ہم استاد ہوجائیں؟مولانا صاحب کیسے ہوں گے۔ آپ کے استاد محترم ؟ کتنے گرو و ھوں گے وہ ؟ کیا آپ کے علاوہ بھی انہوں نے کوئی شاگرد بنایا تھا ؟ کیا آپ جتنا ہی کوئی ان کا کامیاب و کامران شاگرد ٹھیرا؟ میرا خیال ہے کہ آپ نہ تواپنے استاد کا پتہ دیں گے اور نہ ہی کسی دوسرے کو اپنے استاد کی شاگردی کرنے دیں گے! کیونکہ وہ بھی پھر آپ جیسا کامیاب سیاستدان بن جائے گا۔ خیرجو بھی ہے آپ نے کا استاد محترم کو کسی انتہائی محفوظ اور مخصوص کمرے میں بند کر رکھا ہوگا۔ ! آپ نے پرویز مشرف کے ساتھ وقت اچھے طریقے سے گزارہ حالانکہ آ پ مذہبی راہنما ہیں وہ سیکولر مزاج کے انسان تھے! آپ جمہوریت میں رہ کر ہرمقدار کے ساتھ رہے اور وہ ایک امرتھے اسی طرح آپ نے آصف علی زرداری کے ساتھ بھی اتحاد کیئے رکھا ۔دنیا کا خیال ہے کہ اگر کل عمران خان جیسے آپ کے سخت مخالف کی حکومت قائم ہوجاتی ہے تو آپ ان کے ساتھ شراکت داری پر راضی ہو جائیں گے۔ ساری طاقت اپنے خواجوؤں کے سپرد کرنے کی بجائے ہر کسی کو اپنی اپنی طاقت اپنے پاس رکھنے پر راضی کیا جاسکے! تب نہ اختیارات اورنہ مال وزر کے جھگڑے پیدا ہوں گے! نہ شخصی تصادم کا خطرہ ہوگا۔ اورنہ لوٹ مار ہوسکے گی!اورنہ نیب میں مقدمات بنیں گے۔ اورنہ ہی کوئی عدالت آپ کو نااہل کریگی! نہ کوئی آرمی چیف آپ کو معزول کریگااورنہ ہی کوئی صدر آپ کی حکومت کو توڑے گا! ۔