- الإعلانات -

پنجاب میں نیابلدیاتی نظام،تعلیم اورصحت میں اصلاحات لانے کافیصلہ

adaria

وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت منعقدہ پنجاب کابینہ کا اجلاس بڑی اہمیت کاحامل قرارپایا اس اجلاس میں کئی اہم فیصلے سامنے آئے جن میں پنجاب میں نیابلدیاتی نظام ،تعلیم اورصحت کے محکموں میں اصلاحات اوربدعنوانی کے خاتمے کیلئے اقدامات ۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ 100 دن کے اندر صحت اور تعلیم میں تبدیلی کا پلان واضح کر دیں گے۔ عمران خان نے سبسڈی پر چلنے والے منصوبوں کے فوری آڈٹ کروانے اور پنجاب میں بلدیاتی نظام کو فوری تبدیل کرنے کی ہدایات جاری کرتے ہوئے کہا کہ تمام وزرا اپنے اپنے محکموں میں سادگی کو فروغ دیں۔پنجاب کابینہ کے اجلاس میں کسی بھی سرکاری افسر کو بھاری تنخواہوں پر بھرتی نہ کرنے اور پنجاب پولیس کو سیاسی اثر و رسوخ سے آزاد کرانے کا اعلان بھی کیا گیا۔وزیراعظم نے پنجاب کابینہ کے اراکین کو اپنے محکمے سنبھالنے پر مبارکباد دی اور ان سے کہا کہ آپ کے کندھوں پر بڑی ذمہ داری ہے، پنجاب حکومت کی کارکردگی باقی صوبوں کیلئے ٹرینڈ سیٹر ہونی چاہیے۔ پنجاب میں بدعنوانی کا خاتمہ سب سے بڑا چیلنج ہے، کابینہ اراکین کی پہلی ترجیح بدعنوانی کا سدباب ہونا چاہیے، گزشتہ روز وزیراعظم پاکستان نے گرین پاکستان مہم کا آغاز کر دیا، ایوان وزیراعلی لاہور میں مہم کا افتتاح کرتے ہوئے عمران خان اور وزیراعلیٰ پنجاب نے ایک ایک پودا لگایا۔وزیراعظم نے سی ایم سیکرٹریٹ لاہور میں پنجاب کابینہ کے ممبران سے ملا قات کی ہے ۔اس موقع پر وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے صوبائی کابینہ کی جانب سے وزیراعظم عمران خان کا والہانہ استقبال کیا اور اس عزم کا اعادہ کیا کہ نئے پاکستان کے لیے تحریک انصاف کی جانب سے اصلاحات اور ترقی کے ایجنڈے پر قائم ہیں ۔انہوں نے پنجاب اور خاص طور پر لاہور میں قبضہ مافیہ اور انکروچمنٹ کے حوالے سے اپنے تحفظات کا اظہار کیا ۔ قبضہ مافیہ اور انکروچمنٹ میں ملوث لوگوں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے ۔ اس دوران عمران خان نے صوبائی کابینہ کو سادگی اختیار کرنے پر زور دیا اور کہا کہ آپ کو مثال قائم کرنی ہے اور حکومتی اخراجات کم کر کے لوگوں پر پیسہ خرچ کرنا ہے۔عمران خان نے 100دن کے ایجنڈے کے حصول کے لیے صوبائی کابینہ کو سخت محنت کرنے کی ہدایت کی تاکہ لوگوں کی زندگیوں میں حقیقی تبدیلی لائی جاسکے ،میں صوبے کے دورے کر کے 100دن کے ایجنڈے پر عملد رآمد کے حوالے سے نظر رکھوں گا ۔وزیراعظم عمران خان نے پنجاب کابینہ کے اجلاس سے خطاب میں جس عزم کااعادہ کیا ہے وہ عوام کی امنگوں کاترجمان دکھائی دیتا ہے تاہم ضرورت اس امر کی ہے کہ سودن کے ایجنڈے پرکابینہ کے ارکان کو عملدرآمدیقینی بنانے کیلئے سخت محنت کی ضرورت ہے ، پنجاب پولیس اور محکمہ تعلیم میں اصلاحات انتہائی ضروری ہیں ساتھ ہی محکمہ مال میں بھی اصلاحات کی ضرورت ہے ۔اس وقت عوام کی نگاہیں سوروزہ ایجنڈے پرلگی ہوئی ہیں دیکھنا یہ ہے کہ حکومت اس ایجنڈے کوکم وقت میں کس طرح پایہ تکمیل تک پہنچاتی ہے ، عوام کے مسائل کے ادراک کیلئے حکومت کو ٹھوس اقدامات کرنا ہوں گے کمزور معیشت کو سہارا دینے کیلئے بھی زرعی شعبے میں اصلاحات لانی ہونگی عوام کامعیار زندگی بلند کرنے کے ساتھ ساتھ بے روزگاری اور مہنگائی کے خاتمے کیلئے بھی فوری اقدامات کی ضرورت ہے۔ سیاسی استحکام بھی حکومت کی اولین ترجیح ہونی چاہیے اس کے بغیر جمہوریت مضبوط نہیں ہوسکتی ،بدعنوانی کاخاتمہ وقت کی ضرورت ہے صوبائی کابینہ کے اراکین کو اس سلسلے میں اپنی ذمہ داریوں کو بروئے کارلاناہوگا اور کرپشن کی روک تھام کیلئے فوری اقدامات کرنے ہونگے۔وزیراعظم