- الإعلانات -

امریکہ طالبان مذاکرات،پاکستان کی جانب سے مثبت اقدام

پاکستان ہمیشہ سے خطے میں امن کاداعی رہاہے اس وجہ سے اس نے جہاں بھی مسائل ہوئے انہیں مذاکرات کے ذریعے سے حل کرنے پرزوردیا۔ چونکہ پاکستان کاامن افغانستان میں قیام امن سے وابستہ ہے اوراسی وجہ سے پاکستان نے طالبان سے مذاکرات کرنے کو ترجیح دی ہے۔ اب جبکہ امریکہ بھی اس منطق کوسمجھ چکا ہے اور اسی وجہ سے گزشتہ دنوں میں امریکی صدرڈونلڈٹرمپ نے باقاعدہ وزیراعظم پاکستان کوافغانستان کے نمائندے اورطالبان سے مذاکرات کے حوالے سے خط بھی لکھا تھا۔اس میں کوئی شک نہیں کہ ان مذاکرات میں پاکستان کااہم کردار ہے اور وہ چاہتا بھی ہے کہ نہ صرف سرحدوں پر بلکہ خطے میں بھی امن قائم ہو۔بھارت کو بھی ہمیشہ مسائل حل کرنے کے لئے مذاکرات کی دعوت دی ہے ۔گزشتہ روز وزیراعظم عمران خان نے ایک ٹویٹ پیغام میں کہا ہے کہ دعا ہے افغانستان میں امن قائم ہو، ہم نے طالبان اور امریکہ کے مابین مذاکرات میں مدد کی ،مستقبل میں بھی ممکنہ اقدامات کرتے رہیں گے ۔ مذاکرات سے افغان عوام کی 3دہائیوں سے جاری مشکلات ختم ہوں گی تین دہائیوں سے بہادر افغان عوام مشکلات کا سامنا کر رہے ہیں۔ پاکستان امن عمل کو آگے بڑھانے کیلئے ہرممکن کوشش کرے گا۔ پاکستان کی معاونت سے متحدہ عرب امارات کے دارالحکومت ابوظہبی میں افغان امن مذاکرات دوسرے روز بھی جاری رہے جس میں طالبان سمیت فریقین نے مذاکراتی عمل جاری رکھنے پر اتفاق کیا۔ یاد رہے کہ پاکستان کی معاونت سے شروع ہونے والے مذاکرات میں امریکہ اور افغان طالبان کے علاوہ اماراتی اور سعودی حکام بھی حصہ تھے۔ امریکی معاون خصوصی زلمے خلیل زاد کی سربراہی میں افغانستان میں امن عمل پر گفتگو کی گئی۔ افغان وزارت خارجہ کے مطابق امریکہ طالبان مذاکرات کرانا افغان امن عمل میں پاکستان کا عملی قدم ہے۔ پاکستانی تعاون فیصلہ کن اہمیت رکھتا ہے۔ ترجمان طالبان ذبیح اللہ مجاہد نے اس تاثر کی نفی کی کہ افغان حکومت کے نمائندوں نے دبئی میں طالبان سے ملاقات کی۔ انہوں نے کہا کہ کابل انتظامیہ سے ملاقات یا ان کے نمائندوں کی اجلاس میں شرکت منصوبے کا حصہ نہیں تھی۔ اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل کے افغان امور سے متعلق خصوصی نمائندے تادامیشی یاماموتو نے عالمی برادری سے اپیل کی ہے کہ وہ افغان حکومت اور طالبان کے درمیان ثالثی میں اپنا کردار ادا کرے۔افغان مسئلے کے تمام فریقین پر تشدد کارروائیوں کو ترک کرتے ہوئے باہمی اعتماد کو فروغ دیں۔علاوہ ازیں وزیراعظم عمران خان سے ڈی جی خان کے ارکان قومی اسمبلی نے ملاقات کی۔ ملاقات میں جنوبی پنجاب میں انتظامی خودمختاری کے امور سے متعلق پیش رفت کا جائزہ لیا گیا۔ وزیراعظم نے جنوبی پنجاب کیلئے روڈ میپ کی تکمیل کے عزم کا اعادہ کیا۔ وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان ہمیشہ کیلئے بدلنے جا رہا ہے ہمارا مقصد پاکستان کو حقیقی فلاحی ریاست بنانا ہے۔ نچلے طبقے کو اوپر لانے کیلئے تمام اقدامات کئے جائیں گے۔ اللہ تعالی نے پاکستان کو معدنی وسائل سے مالا مال کر رکھا ہے ماضی میں ملکی وسائل بروئے کار لانے کی کوشش نہیں کی گئی۔ حکومت جنوبی پنجاب کو ترقی یافتہ بنانے کیلئے پرعزم ہے۔ وزیراعظم نے یہ بھی کہا کہ اندرون ملک اصلاحات اور تبدیلی سے متعلق آگاہی کیلئے بھی بھر پور تعاون فراہم کیا جائے گا ۔ حکومت میڈیا کو پیشہ ورانہ فرائض کی ادائیگی کیلئے ہر ممکن سہولیات فراہم کرے گی۔ پاکستان کا مثبت تاثر پیش کرنے کیلئے حکومت میڈیا کو ہر ممکن تعاون اور وسائل فراہم کرے گی۔یہ بات بالکل درست ہے کہ پاکستان بدل رہا ہے چونکہ پاکستان تحریک انصا ف کانعرہ بھی نیاپاکستان کاتھا جو یقینی طورپرتعمیری تبدیلیاں حکومتی ترجیحات میں شامل ہیں جوکہ وقت کے ساتھ ساتھ سامنے آتی جارہی ہیں اور ملک اس وقت مثبت انداز میں ترقی کی جانب بڑھ رہاہے۔
غیرملکی سرمایہ کاروں کاپاکستان پراظہاراعتماد
برٹش ایئرویز کی دس سال بعد پاکستان آمدیقینی طورپر حکومت کی بہت بڑی کامیابی ہے اورغیرملکی سرمایہ کاروں کاایک اعتماد کابھی اظہارہے۔اس کاتمام ترکریڈٹ حکومت کی خارجہ اوراندرونی ملکی پالیسیوں کوجاتاہے کہ جب حکومت غیرملکی سرمایہ کاروں کوون ونڈوآپریشن کے تحت ایک چھت کے نیچے تمام سہولیات فراہم کرے گی اورانہیں تحفظ بھی دے گی توسرمایہ دارپاکستان میں سرمایہ کاری کریں گے جس سے ہماری معیشت مضبوط ہوگی، روزگار کے مواقع پیدا ہوں گے اور خوشحالی بھی آئے گی۔انہی مثبت حالات کو دیکھتے ہوئے برٹش ایئرویز نے 10سال بعد پاکستان کیلئے دوبارہ پروازیں بحال کرنے کا اعلان کردیا ہے۔ یہ اعلان برٹش ایئرویز کے نمائندوں نے یہاں وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے سمندر پار پاکستانی زلفی بخاری کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا۔ آئندہ سال جون سے فلائٹ آپریشن شروع ہوگا اور برٹش ایئرویز اسلام آباد سے ہیتھرو کیلئے فلائٹ آپریٹ کرے گی۔ برٹش ایئر ویز ہفتے میں تین فلائٹ آپریٹ کریگی۔ اس موقع پر قائم مقام برطانوی ہائی کمشنر رچرڈ کراوڈر نے کہا کہ برطانیہ پاکستان میں تیسرا بڑا سرمایہ کار ہے۔ دونوں ممالک کے تعلقات بہت خاص ہیں۔ برطانیہ میں 15 لاکھ لوگوں کی آبائی جڑیں پاکستان میں ہیں۔ پاکستان میں سکیورٹی صورتحال بہت بہتر ہو گئی ہے۔ پاکستان کی معیشت ترقی کر رہی ہے۔ پریس کانفرنس کے دوران وزیراعظم کے معاون خصوصی زلفی بخاری نے کہا کہ برٹش ائرویز کی جانب سے پاکستان کیلئے پروازیں دوبارہ بحال کرنے کا خیرمقدم کرتے ہیں اور ہم چاہتے ہیں کہ پاکستان کا رابطہ دنیا بھر سے قائم رہے۔ اس اقدام سے دونوں ممالک کے تجارتی تعلقات مزید مضبوط ہوں گے۔یاد رہے کہ برٹش ایئرویز نے 2008 میں اسلام آباد میں میریٹ ہوٹل پر بم دھماکے کے بعد پاکستان کیلئے فضائی آپریشن بند کردیا تھا۔
ایس کے نیازی کی سچی بات میں دوررس گفتگو
چیف ایڈیٹر پاکستان گروپ آف نیوز پیپرز اور سینئر اینکرپرسن ایس کے نیازی نے روز نیوز کے پروگرام سچی بات میں گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ اپوزیشن نہیں چاہتی عمران خان کی حکومت کامیاب ہو،قانون سازی سے ہی معاملات آگے بڑھیں گے،امریکہ کو دوست سمجھنا بے وقوفی ہو گی۔ نجی ٹی وی کے کیمرہ مین پر تشدد کی مذمت کرتے ہیں،انسان کو انسان سمجھیں،ایک دوسرے کی عزت کریں،گارڈ کی حرکت کے باعث نقصان نواز شریف کا ہوا،ہمیں ایک دوسرے کے وقار کا خیال رکھنا چاہیے،پاکستان افغانستان میں امن کیلئے بھرپور معاونت کررہا ہے، امریکا کو ہماری ضرورت ہے مگر ہم امریکا پر اعتماد نہیں کرسکتے،امریکا کو دوست سمجھنا بے وقوفی ہوگی، پاکستان میں چین اور سی پیک کا وجود امریکا کو چبھتا رہے گا،طالبان کہتے ہیں کہ افغانستان سے افواج نکالی جائیں،مجھے نہیں لگتا کہ امریکا افغانستان سے فوج نکالے گا،برٹش ایئر ویز کا فلائٹ آپریشن بحالی کا اعلان بڑی بات ہے،ہمیشہ کہتا ہوں کہ اسمبلی میں قانون سازی ہونی چاہیے،اسٹاک ایکسچینج میں انویسٹرز جہاں فائدہ دیکھتا ہے وہاں جاتا ہے،آئی ایم ایف کے پاس جانے میں کوئی حرج نہیں،آئی ایم ایف کے پاس بہت کم مدت کیلئے جانا چاہیے،عمران خان کو کام کرنے دیا جائے تو وہ ملک کو پاؤں پر کھڑا کردینگے،آنے والا وقت بہتر ہوگا،حالات بہتری کی طرف جارہے ہیں،اکنامک انٹیلی جنس یونٹ نے پورے سال کی رپورٹ دی ہے۔