- الإعلانات -

کرپشن ہر صورت ختم ہونی چاہیے

adaria

ملک کو ہیجانی سیاست کی جانب لے جانے سے کچھ حاصل وصول نہیں ہوگا۔ ایک بات پر سب کو اتفاق کرنا چاہیے کہ اگر کسی نے بھی ملک کا خزانہ لوٹا ہے چاہے اس کا تعلق اپوزیشن سے ہو ، اقتدار سے ہو یا کسی اور بھی جماعت سے حتیٰ کہ کوئی سرکار کا ملازم ہو، کوئی اعلیٰ عہدیدار ہو، غرض کہ کسی بھی زندگی کے طبقے سے تعلق رکھتا ہو اس کو قرارواقعی سزا ملنی چاہیے اور یہ کنٹینر والی سیاست کو اب دفن کردینا چاہیے، دنیا کہاں سے کہاں پہنچ رہی ہے اور ہم ہیں کہ ابھی تک ایک دوسرے کے درپے ہیں۔ ہمارا سوال یہ ہے کہ آخر قومی خزانے کو لوٹا ہی کیوں گیا، کیا لوٹتے وقت علم نہیں تھا کہ وقت کا پہیہ اُلٹا بھی گھوم سکتا ہے اور کسی وقت بھی گھیرا تنگ ہوسکتا ہے، ہم تویہاں گزشتہ 30سال کی نہیں بلکہ جب سے پاکستان معرض وجود میں آیا ہے اس دن سے لیکر آج تک کی بات کرتے ہیں ۔سب کا بلا شرکت غیرِ احتساب ہونا چاہیے ویسے بھی گزشتہ دنوں وزیراعظم عمران خان نے واضح اور دوٹوک الفاظ میں کہہ دیا تھا کہ اپوزیشن کی ہر بات تسلیم کرلینگے لیکن احتساب سے کسی صورت پیچھے نہیں ہٹیں گے۔ وزیراعظم کی اس بات سے ہر ذی شعور کو اتفاق کرنا چاہیے کیونکہ یہ وطن ہمارے لئے اللہ تعالیٰ کی ایک نعمت سے کم نہیں اور جمہوریت ایک تحفے سے کم نہیں لیکن ہم اپنے ہی ہاتھوں سے اس کو برباد رکرنے کیلئے کیوں درپے ہیں۔ کبھی کہاجاتا ہے کہ کوئی فیصلہ ایسا آیا تو اپوزیشن یہ کرے گی، فلاں فیصلہ یہ آیا تو فلاں پارٹی ایسے کرے گی، یہ اندھیرے میں ٹامک ٹوئیاں مارنا چھوڑ دینا چاہیے۔ عدلیہ آزاد ہے، اداروں کو خودمختارہونا چاہیے لہذا یہ دیکھنا چاہیے کہ فیصلے حقیقت اور سچائی پرمبنی ہیں، انہیں قبول کرنا چاہیے نہ کہ ان پر شوروغوغا کرنا چاہیے۔ ایسا کرنے سے کچھ بھی حاصل نہ ہوسکے گا، حکومت کی جانب سے کرپشن کے خاتمے کا تہیہ قابل ستائش اقدام ہے اس کی جتنی بھی تعریف کی جائے کم ہے کیونکہ کرپشن ہمارے ملک کا ایسا ناسور ہے کہ جب تک یہ لگا رہے گا ملک تباہ و بربادرہے گا۔ ہم تو یہ کہتے ہیں کہ کرپشن کے ساتھ ساتھ کرپٹ افراد کا بھی عبرتناک احتساب ہونا چاہیے تاکہ آنے والی نسلیں بھی کوئی غلط اقدام اٹھانے سے اجتناب کریں۔ فرض کریں کہ اگر آج کچھ سیاسی جماعتوں کو کوئی بھی آنے والے فیصلے ناپسند آتے ہیں تو اس کا یہ مطلب نہیں کہ ملک کے حالات کو انارکی کی جانب دھکیل دیا جائے۔ عدلیہ آزاد ہے اور وہ قوائد و ضوابط، آئین و قانون کے تحت فیصلے کرتی ہے اس میں کسی کی ذاتی پسند یا ناپسند کی دخل اندازی نہیں ہوتی ۔لہذا ملک کو جمہوریت کی جانب لے کر جانا ہے تو ہمیں عدلیہ کے فیصلوں کا احترام کرنا ہوگا، اداروں کو آزاد حیثیت میں کام کرنے دینا ہوگا۔ جس نے بھی کرپشن کی ہو اگر اسے سزا ہو جائے تو اس کے حق میں آواز اٹھانے سے اختراز کرنا ہوگا۔ ہاں تنقید ضرور کریں مگر یہ برائے تعمیر ہونا چاہیے۔ کرپشن اورکرپٹ افراد کا ساتھ دینے والا بھی ہمارے خیال میں کرپشن کے ہی زمرے میں آتا ہے۔ لہذا ذاتی مفادات کو بالائے طاق رکھ کر ملکی اور قومی مفادات کے تحت سیاست کرنا ہوگی۔ تاریخ میں اگر کرپشن کیخلاف کام شروع ہوہی گیا ہے تو اس کے راستے میں رکاوٹیں حائل نہیں کرنی چاہئیں۔ ماضی میں تو یہ دیکھا گیا کہ کبھی میثاق جمہوریت تو کبھی این آراو غرض کہ کوئی نہ کوئی ایسا راستہ تلاش کرلیا جاتا تھا جس سے سیاستدان اپنے پاؤں جلنے سے بچالیتے تھے مگر اب ایسا ہوتا ہوا نظر نہیں آرہا جو کہ بہت ہی اچھا ہے۔
25دسمبرکے تقاضے
آج ملک بھرمیں قائداعظمؒ کا یومِ پیدائش منایا جارہا ہے۔قائد اعظم محمد علی جناحؒ کے یوم پیدائش پر ان کی شاندار خدمات کو خراج تحسین پیش کرنے کیلئے خصوصی تقریبات ، مذاکروں، مباحثوں، سیمینارزاور کانفرنسز کا انعقاد کیاجاتاہے۔قائد اعظمؒ کے یوم پیدائش پر حسب روایت تقاریر تو کی جاتی ہیں کہ بابائے قوم پاکستان کو کیسا پاکستان بنانا چاہتے تھے؟ مگر حکمران اسے بھلانے میں ہی عافیت سمجھتے ہیں۔ وطن عزیز جن مشکلات سے گزر رہا ہے اس میں ضرورت اس امر کی ہے کہ ہم قائد کے فرمودات پر عمل کرتے ہوئے اپنی صفوں میں اتحاد ، تنظیم اور جہد مسلسل کو مکمل طورپر رائج کریں تاکہ پاکستان کو قائد کے خوابوں کی حقیقی تعبیر سے روشناس کروایا جاسکے۔قائد اعظم کے زریں اصولوں پر عمل کرکے اپنے وطن کا عظیم ہلالی پرچم دنیا میں سر بلند رکھیں اور آنے والی نسلیں ہماری کارکردگی پر فخر کر سکیں ۔وقت کا تقاضا ہے کہ ہم خلوص دل سے یہ عہد کریں کہ قائد اعظم جس طرح کے ملک اور قوم کی خواہش رکھتے تھے ہم اس نمونے کی قوم بن کر دکھائیں گے ۔نئے یا پرانے پاکستان کی بحث میں الجھنے کی بجائے پاکستان کو قائد کا پاکستان بنایا جائے۔
راولپنڈی کینٹ ،رافع مال میں روز نیوز اسٹوڈیو کا افتتاح
پاکستان گروپ آف نیوز پیپرز کے چیف ایڈیٹر اور روز نیوز کے چیئرمین ایس کے نیازی(ستارہ امتیاز) نے راولپنڈی کینٹ کے علاقے رافع مال میں روز نیوز کے اسٹوڈیو کو کھول کر ایک تاریخی اقدام اٹھایا۔ انہوں نے کہاکہ وہ ملک بھر کے کینٹ کے علاقوں میں پاکستان گروپ آف نیوز پیپرز کے بیورو آفس اور روز نیوز کے اسٹوڈیوز کو کھولاجائے گا تاکہ کینٹ کے علاقوں کی عوام کی آواز مقتدر حلقوں تک موثر انداز میں پہنچ سکے۔ راولپنڈی کینٹ کے علاقے رافع مال میں روز نیوز کے اسٹوڈیو اوربیوروآفس کا افتتاح کرتے ہوئے وفاقی وزیرصحت عامر کیانی اورایم پی اے عمر تنویر نے کہا ہے کہ میڈیا رائے عامہ کو متحرک کر کے کرپشن کے خاتمے میں حکومت کی جانب سے چلائی جانیوالی مہم میں اپنا کردار جاندار طریقے سے ادا کرے ،میڈیا مثبت چیزوں کو اجاگر کرے،روز نیوز کا ضابطہ اخلاق مثالی ہے،روز نیوز سنسنی خیزی نہیں پھیلاتا بلکہ تحقیق کیساتھ خبرنشر کرتا ہے،روز نیوز نے مستند خبروں کو پیش کر کے انتھک محنت اور اچھی قیادت کے باعث کم وقت میں میڈیا میں اپنا ایک خاص مقام بنایا۔تقریب میں چیئرمین روزنیوزستارہ امتیازایس کے نیازی نے خصوصی شرکت کی۔وفاقی وزیرعامرمحمودکیانی نے کہاکہ کینٹ کے علاقے میں پہلا اسٹوڈیو قائم کرنے پر میں چیف ایڈیٹر پاکستان گروپ آف نیوز پیپرز و سینئر اینکرپرسن ایس کے نیازی کو بہت بہت مبارکباد پیش کرتاہوں،اب یہاں کے لوگوں کو ایک پلیٹ فارم مل گیا ہے جس کے باعث لوگوں کے مسائل اجاگر کیے جا سکیں اور یہاں کے لوگوں کی آواز بلند کی جا سکے۔ ایس کے نیازی ڈائنامک شخصیت کے مالک ہیں۔ایس کے نیازی اپنے ٹرسٹ کے ذریعے غریب عوام کی خدمت کر رہے ہیں۔یہی وجہ ہے کہ آج پاکستان گروپ آف نیوز پیپرز کے اخبارات اور روز نیوز ٹی وی چینل کا ایک مقام ہے اور انکی نیوز کو اہمیت دی جاتی ہے۔ دعا ہے اللہ تعالیٰ چیئرمین روز نیوز کو اپنے نیک مشن میں مزید کامیابیاں عطا کرے۔ ایم پی اے عمر تنویر بٹ نے کہا کہ کینٹ کے علاقے میں پہلا اسٹوڈیو کھولنے پر روز نیوز کے سی ای او ایس کے نیازی کو مبارکباد پیش کرتا ہوں۔