- الإعلانات -

خاتون دوست نے بوائے فرینڈ کے ساتھ دیکھ کر گالیاں دیں، تشدد کیا، انگلینڈ کی دوشیزہ

برطانوی ریاست انگلینڈ کے ہونے والے مقابلہ حسن کے فائنل میں پہنچنے والی 21 سالہ دوشیزہ نے دعویٰ کیا ہے کہ ان پر ان کی خاتون دوست نے اس وقت حملہ کردیا جب وہ اپنے بوائے فرینڈ کے ساتھ خوشگوار لمحات گزار رہی تھیں۔

مس انگلینڈ 2018 کے مقابلے کے فائنل میں پہنچنے والی 21 سالہ پروفیشنل گالفر اولیویا کک نے انگلینڈ کی عدالت میں بیان دیتے ہوئے الزام عائد کیا کہ ان پر ان کی خاتون دوست چائنا گولڈ نے حملہ کرنے سے قبل انہیں جنسی نوعیت کی گالیاں دے کر ان کی تضحیک کی۔

برطانوی اخبار ’دی سن‘ کے مطابق دوشیزہ اور پروفیشنل گالفر اولیوا کک پر حملے کا واقعہ 2018 میں پیش آیا تھا جبکہ وہ مذکورہ واقعہ کے بعد 2019 میں ’مس انگلینڈ‘ کے مقابلہ حسن کے فائنل راؤنڈ میں پہنچنے میں کامیاب ہوئی تھیں۔

واقعے میں خاتون دوست کے حملے میں دوشیزہ اولیویا کک زخمی ہوگئی تھیں اور ان کے چہرے پر ٹانکے لگائے گئے تھے، جس کے بعد انہوں نے مذکورہ واقعے کا مقدمہ دائر کروایا جس کی انگلینڈ کی عدالت میں سماعت ہوئی۔تحریر جاری ہے‎

سماعت کے دوران اولیویا کک نے خود پر ہونے والے حملے کو یاد کرتے ہوئے بتایا کہ جس محفل میں ان پر حملہ کیا گیا اس میں وہ اپنے تمام دوستوں کے ساتھ موجود تھیں اور ان پر حملہ کرنے والی خاتون دوست ان کی براہ راست دوست نہیں تھیں بلکہ وہ ان کے دوستوں کے گروپ کا حصہ تھیں۔

اولیویا کک مس انگلینڈ کے مقابلہ حسن کے فائنل راؤنڈ تک پہنچی تھیں—فوٹو: دی سن
اولیویا کک مس انگلینڈ کے مقابلہ حسن کے فائنل راؤنڈ تک پہنچی تھیں—فوٹو: دی سن

اولیویا کک کے مطابق محفل کے دوران وہ اپنے دوستوں کے گروپ میں سے ایک لڑکے کے ساتھ قریب ہوگئیں جس کے بعد چائنا گولڈ نامی لڑکی کا رویہ بدل گیا اور انہوں نے ان کے خلاف نامناسب زبان استعمال کرنا شروع کی۔

اولیویا کک نے عدالت کو بتایا کہ جیسے ہی خاتون دوست نے ان کے خلاف نامناسب زبان استعمال کی تو وہ ان سے دور اپنے بوائے فرینڈ کے ساتھ باہر چلی گئیں مگر خاتون دوست کچھ ہی منٹ بعد وہاں بھی پہنچ گئیں۔

اولیویا کک پروفیشنل گالفر بھی ہیں—فوٹو: دی سن
اولیویا کک پروفیشنل گالفر بھی ہیں—فوٹو: دی سن

دوشیزہ نے عدالت میں دعویٰ کیا کہ خاتون دوست نے انہیں ایک بار پھر جنسی نوعیت کی گالیاں دیں جس کے بعد انہوں نے بھی خاتون کو سخت لہجے میں جوابات دیے تو ان کی دوست کو غصہ آگیا اور انہوں نے ان کی گردن پکڑ کر ان کے چہرے پر شراب سے بھرے گلاس کو متعدد بار مارا جس کی وجہ سے ان کے چہرے اور گالوں پر زخم کے نشانات آگئے اور ان کے گال پھٹ گئے۔

دوشیزہ کا کہنا تھا کہ واقعے کے بعد انہیں ہسپتال لے جایا گیا، جہاں ان کے چہرے پر ٹانکے لگے اور وہ کئی دن تک ہسپتال میں رہیں۔

دوسری جانب دوشیزہ پر حملہ کرنے والی خاتون چائنا گولڈ نے عدالت کو بتایا کہ انہوں نے اپنے دفاع میں ان پر حملہ کیا تھا۔

خاتون کا کہنا تھا کہ ابتدائی طور پر دوشیزہ نے ہی ان پر حملہ کیا تھا اور انہیں گلاس دے مارا تھا جس کے بعد انہوں نے اپنا دفاع کرنے کے لیے ان کے چہرے پر گلاس سے حملہ کیا۔

دوشیزہ پر حملہ کرنے والی چائنا گولڈ نے الزامات کو مسترد کردیا—فوٹو: دی سن
دوشیزہ پر حملہ کرنے والی چائنا گولڈ نے الزامات کو مسترد کردیا—فوٹو: دی سن