- الإعلانات -

بالی وڈ کے بعد پاکستان شوبز انڈسٹری میں بھی اقرباپروری کے خلاف آوازیں اٹھنے لگیں

بالی وڈ انڈسٹری میں اقربا پروری کے بعد پاکستان کی شوبز انڈسٹری میں بھی اس کے کے خلاف آوازیں بلند ہونا شروع ہوگئی ہیں۔

رواں ماہ خودکشی کرنے والے بھارتی اداکار سشانت سنگھ کی موت کے بعد سے بھارت میں بالی وڈ انڈسٹری میں اقرباپروری کے خلاف آواز اٹھائی جارہی ہے اور ناصرف بھارتی فنکار اس کے خلاف بول رہے ہیں بلکہ پاکستانی فنکار بھی بالی وڈ کی کچھ نامور شخصیات کو سشانت کی خودکشی کی وجہ قرار دیتے نظر آرہے ہیں۔

سشانت سنگھ کی خودکشی کا مقدمہ بالی وڈ کی بڑی شخصیات کے خلاف درج
سشانت سنگھ ڈپریشن میں کیوں تھے؟ کنگنا رناوت پھٹ پڑیں
شاہ رخ خان پر ایک بار پھر اقربا پروری کا الزام، مداحوں کی شدید تنقید
کرینہ اور کرشمہ نے فلم نگری میں اقرباء پروری کے الزام کو بے بنیاد قرار دیدیا
ایسے میں پاکستان کی معروف اداکارہ و میزبان عفت عمر کی جانب سے ایک پیغام سامنے آیا ہے جس میں انہوں نے پاکستانی شوبز انڈسٹری میں پائی جانے والی اقرباپروری کے بارے میں بات کی ہے۔

ایک ٹوئٹ میں عفت عمر نے لکھا کہ ’پاکستانی انڈسٹری کے فنکار بھارتی فلم ساز کرن جوہر کے ٹی وی شو ’کافی وِد کرن‘ کی خبریں تو سوشل میڈیا پر شیئر کر رہے ہیں اور ان کے خلاف بول بھی رہے ہیں لیکن آپ کی اپنی انڈسٹری میں ہونے والی اقرباپروری کے بارے میں آپ کا کیا خیال ہے؟‘

عفت عمر نے سوالیہ انداز میں لکھا کہ ’آپ میں سے کسی نے بھی کبھی یہ سوچا ہے کہ ہماری انڈسٹری میں کتنے اداکار ہیں؟‘

یاد رہے کہ رواں ماہ 14جون کو خودکشی کرنے والے بھارتی اداکار سشانت سنگھ کی موت کے واقعے کے بعد سے بھارتی عوام کی جانب سے بالی وڈ انڈسٹری اور دیگر نامور بھارتی شخصیات کو اداکار کی خودکشی کی وجہ قرار دیا جارہا ہے جن میں کرن جوہر ، سلمان خان اور سنجے لیلی بھنسالی جیسی معروف شخصیات شامل ہیں۔

بالی وڈ میں پروڈیوسر کرن جوہر اور سنجے لیلا بھنسالی پر یہ اکثر الزام عائد کیا جاتا ہے کہ وہ اقربا پروری کو ترجیح دیتے ہیں جب کہ سلمان خان اور ان کے بھائیوں کے لیے کہا جاتا ہے کہ ان کی جس سے نہیں بنتی وہ اس کی فلموں اور کیرئیر کو متاثر کرنے کی کوشش کرتے ہیں۔