- الإعلانات -

شوہر کے بعد قندیل بلوچ کا ایک بیٹے کی ماں ہونے کا اعتراف

مظفر گڑھ : متنازع ماڈل قندیل بلوچ کے شوہر کے بعد ان کا بیٹا بھی سامنے آگیا اوراس ضمن میں عدالت سے بھی رجوع کرلیا، اداکارہ نے بھی اپنے شادی شدہ ہونے اور ایک بچے کی ماں ہونے کا اعتراف کرلیا۔قندیل کے سابق شوہر کا  کہنا ہے کہ قندیل بلوچ کا اصل نام فوزیہ عظیم ہے اور 2008 میں ان دونوں کی شادی ہوئی جبکہ 2009 میں انکے ہاں بچہ پیدا ہوا ۔ قندیل بلوچ نے اعتراف کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس کے والدین نے زبردستی عاشق حسین کیساتھ اس کی شادی کروائی تھی ۔میڈیا رپورٹس کےمطابق عاشق حسین کا کہنا ہے کہ فوزیہ عظیم المعروف قندیل بلوچ کو کوٹھی، جائیداد اور پیسہ چاہیے تھا جو اس میں دینے کی سکت نہیں تھی اس لئے اپنا بچہ چھوڑ کر چلی گئی۔ کوٹ ادو کے علاقے شیخ عمر کے رہائشی عاشق حسین کا دعویٰ ہے کہ اس کی 2008ءمیں فوزیہ عظیم المعروف قندیل بلوچ سے ہوئی تھی۔قندیل بلوچ کا کہنا ہے کہ اس نے تعلیم حاصل کرنے کیلئے عاشق حسین سے خلاء لیا تھا تاہم اسے اپنے بیٹے کی بہت یاد آتی ہے ۔قندیل کی ڈیرہ غازیخان کے رہائشی شاہد اقبال سے پہلی شادی ہوئی جس سے علیحدگی کے بعد قندیل کے والد عظیم نے اسے زبردستی قندیل سے شادی پر راضی کیا۔ اس کا کہنا تھا کہ قندیل بلوچ اس کی کزن کی بیٹی تھی اور اسی لئے اس سے شادی کی۔ عاشق حسین کا کہنا تھا کہ قندیل بلوچ ڈیڑھ سال تک اس کے ساتھ رہی اس دوران ان کا بیٹا مشال بھی پیدا ہوا۔ قندیل بلوچ اس سے کوٹھی اور پیسہ چاہتی تھی جو وہ اسے نہیں دے سکتا تھا۔

قندیل نے اس کے بچے کو بھی ساتھ لے جانے کی کوشش کی جسے اس نے عدالتی کارروائی کے بعد واپس لے لیا۔ عاشق حسین کا کہنا تھا کہ اس کا آخری مرتبہ قندیل بلوچ سے رابطہ 2010ءکے سیلاب کے دوران فون پر ہوا۔ قندیل نے فون کرکے کہا کہ سیلابی آفت آئی ہوئی ہے اس لئے بچہ لے کر میرے پاس آجاﺅ مگر اس نے جانے سے انکار کردیا اور سیلاب کے دوران ہی اسے فون پر زبانی طلاق بھی دے دی۔

عاشق حسین کا کہنا تھا کہ اب اس کا قندیل سے کوئی تعلق نہیں، وہ جو کچھ بھی کررہی ہے اس کا اپنا عمل ہے۔ عاشق حسین نے قندیل سے علیحدگی کےد و سال بعد دوسری شادی کرلی